BN

کالم



آج کے کالم 


  


کالم آرکیو



یہ فصل امیدوں کی ہمدم

جمعه 11 اکتوبر 2019ء
ہارون الرشید
بات ادھوری رہ جاتی ہے ۔ذہن میں موضوع یہ تھا کہ تحریکِ انصاف میں بدنظمی ہمیشہ کیوں مسلط رہی ۔ حصولِ اقتدار کے بعد امیدوں کی فصل کیوں برباد ہوئی ۔ کل انشاء اللہ اس پہ بات کریں گے ، آج تو تصور تمہید میں تمام ہوا۔ یہ 1996ء کا موسمِ گرما تھا ۔ سیاست کے خارزار میں عمران خان اتر چکے تھے ۔ راولپنڈی پریس کلب نے انہیں مدعو کیاتو خان نے خواہش ظاہر کی کہ میں ان کے ساتھ جائوں ۔ چھوٹتے ہی اس نے نواب زادہ نصر اللہ خاں مرحوم کو لوٹا قرار دیا اور کہا
مزید پڑھیے


آبی بحران : سپریم کورٹ کے احکامات اور حکومتی بے حسی

جمعه 11 اکتوبر 2019ء
اداریہ
عدالت عظمیٰ نے زیر زمین پانی کی قلت کے متعلق کیس کی سماعت کرتے ہوئے نہری پانی کی کم قیمت وصول کرنے پر کہا ہے کہ صوبائی حکومتیں سو رہی ہیں۔ اقوام متحدہ کے ترقیاتی پروگرام اور پاکستان کونسل فار ریسرچ ان واٹر کی تحقیقات کے مطابق 2025ء تک پاکستان میں قابل استعمال پانی ختم ہونے کا خدشہ ہے۔ 2005ء میں بھی حکومتی اداروں نے یاد دہانی کروائی تھی کہ پاکستان پانی کی قلت کے شکار ممالک کی فہرست میں پہلے نمبر پرآ چکا ہے۔ بدقسمتی سے ہمارے پالیسی ساز اداروں کی مجرمانہ غفلت کے باعث اس حوالے سے کچھ
مزید پڑھیے


ٹی ٹونٹی سیریز میں قومی ٹیم کی ناقص کارکردگی

جمعه 11 اکتوبر 2019ء
اداریہ
سری لنکا کی بی کلاس کرکٹ ٹیم نے تیسرے اور آخری میچ میں اے کلاس کارکردگی دکھاتے ہوئے پاکستان کو 13 رنز سے شکست دے کر تین میچوں کی سیریز صفر تین سے جیت کر وائٹ واش کر دیا۔ سری لنکا کی ٹیم کے ہاتھوں قومی ٹیم کو پہلی مرتبہ کلین سویپ ہوا ہے جو ایک داغ ہے جسے دھویا نہیں جا سکتا۔ اس میں تو کوئی شبہ نہیں کہ لاہور میں بہترین حفاظتی انتظامات میں تینوں میچ بہترین ہوئے اور شائقین کی بڑی تعداد نے یہ میچ دیکھے ہیں لیکن اس میں تو کوئی دو رائے نہیں کہ تینوں
مزید پڑھیے


تاجر برادری کے تحفظات دور کرنے کی ضرورت

جمعه 11 اکتوبر 2019ء
اداریہ
ٍآل پاکستان انجمن تاجران نے حکومت کی معاشی پالیسیوں اور ٹیکسوں کے خلاف 28اور 29اکتوبر کو ملک گیر شٹر ڈائون ہڑتال کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ شناختی کارڈ دینگے نہ رجسٹریشن کرائیں گے۔ فکس ٹیکس سمیت تمام مطالبات پورے ہونے تک احتجاج ختم نہیں ہو گا۔ حکومت نے اگر ہوش کے ناخن نہ لیے تو پہیہ جام اور لاک ڈائون پر مجبور ہو جائینگے۔ تاجروں، صنعتکاروں اور حکومت کا چولی دامن کا ساتھ ہے۔ درحقیقت یہ دونوں ایک ہی گاڑی کے دو پہیے ہیں۔ بدقسمتی سے اس وقت ایک پہیہ آگے اور دوسرا مخالف سمت میں کھڑا ہے۔ وزیر
مزید پڑھیے


دھرنا اور اس سے متعلق اہم سوالات

جمعه 11 اکتوبر 2019ء
محمد عامر خاکوانی
مولانا فضل الرحمن کے مارچ اور دھرنے کے حوالے سے ہر جگہ بات ہو رہی ہے۔ ٹاک شوز میں بھی یہی معاملہ زیربحث ہے۔ سیاست سے زیادہ دلچسپی نہ رکھنے والے احباب کو یقینا کوفت ہورہی ہوگی، مگر جب ایک اہم واقعہ ہونے لگتا ہے تو اس پر بحث ہونا فطری امر ہے۔ چند سوال ہیں، ان کے جواب ہر کوئی کھوج رہا ہے ۔معلومات، تجزیہ، قیاس، رائے … ان سب کے امتزاج سے کام چلانا پڑے گا۔ مولانا احتجاجی مارچ کیوں کر رہے ہیں؟ یہ بڑا اہم اور بنیادی نوعیت کا سوال ہے کہ مولانا فضل الرحمن آخر کیوں
مزید پڑھیے


یہ لنگر خانے

جمعه 11 اکتوبر 2019ء
ارشاد احمد عارف
پاکستانی سیاست میں حکومت اور اپوزیشن کے مابین قبائلی اورجاگیردارانہ طرز کی مخاصمت نئی بات ہے نہ ایک دوسرے کے ہر فیصلے اور اقدام کو ہدف تنقید بنانے کی روشن انوکھی روائت۔ جمہوری روایات پختہ نہیں اور برداشت کا کلچر عنقا ہے۔ یوں اختلاف اور دشمنی میں حد فاصل کیسے قائم رہے۔ ؟سیلانی لنگر کے ذریعے غریب اور بے آسرا افراد کو کھانا کھلانے پر طعن و تشنیع مگر عمران خان سے دشمنی نہیں ‘اُن خاک نشینوں کی توہین ہے جنہیں ریاست باعزت روزگار فراہم کرنے سے قاصر ہے اور معاشرہ انہیں تین وقت کا کھانا دینے سے معذور۔ عمران
مزید پڑھیے


شاکر شجاع آبادی کا کلام

جمعرات 10 اکتوبر 2019ء
ظہور دھریجہ
وسیب پیار ، محبت ، امن اور شانتی کے رچائو میں رَچی ہوئی ایسی مٹی ہے جہاں محبت و اُلفت اور امن و دوستی کے پیڑ اُگتے ہیں اور ان پیڑوں کی شاخوں پر یادوں کے ایسے حسین پھول کھلتے ہیں جن کی دلکش خوشبو کبھی بابا فریدؒ کے دوہے ، کبھی سلطان باہوؒ کے بیت ، کبھی خواجہ فرید ؒ کی کافی اور کبھی شاکر شجاع آبادی کے دوہڑے کی شکل میں ہماری سانسوں کو مہکا دیتی ہے ، اس مہک اور خوشبو سے وسیب میں بسنے والے سرائیکی سندھی ، پنجابی ، بلوچ پشتون اور دوسری زبانیں
مزید پڑھیے


لنگر خانے بھیک نہیں ہیں

جمعرات 10 اکتوبر 2019ء
قدسیہ ممتاز
ریاست عوام کے نان و نفقہ کی ذمہ دارہے۔ اس کی اولین ذمہ داری ہے کہ اس کی عملداری میں کوئی شہری بھوکا نہ سوئے۔خوف خدا اعلی ترین معیار پہ حاصل ہوجائے تو بحر و بر کی وسعتوں پہ پھیلی اسلامی ریاست کا حاکم خشیت الہیہ سے بوجھل لہجے میں اعلان کرتا ہے کہ اگر فرات کے کنارے کتا بھی بھوکا مر جائے تو عمر اس کا ذمہ دار ہے۔ وقت نے دیکھا کہ جب مدینہ میں قحط پڑا تو خلیفہ وقت نے روغن سے ہاتھ کھینچ لیا کہ یہ اس کی مملکت کے ہر فرد کو میسر نہ تھا۔
مزید پڑھیے


سلام ٹیچر!

جمعرات 10 اکتوبر 2019ء
ناصرخان
باب العلم حضرت علیؓ کے پاس سات یہودی آئے۔ کہنے لگے علم بہتر ہے یا دولت ؟اس کا جواب درکار ہے۔ مگر ہم میں سے ہر ایک کو مختلف جواب درکار ہے۔ آپ نے ساتوں کو مختلف جواب دیئے۔ علم انبیاء کی میراث ہے، دولت فرعون اور ہامان کا ترکہ۔ علم خرچنے سے بڑھتا ہے اور دولت کم ہوتی ہے۔ یہ سات کے سات جوابات باکمال ہیں۔ علم کیا ہوتا ہے؟ اس پر ایک سے زیادہ آراء موجود ہیں۔ ایک سے ایک سو اسّی ڈگری تک۔ کیا علم صرف معلومات کا نام ہے؟ زندگی کے فہم کا نام ہے؟ خالق
مزید پڑھیے


مسئلہ کشمیر۔۔۔پاکستان سفیر اور وکیل ہے یا فریق؟

جمعرات 10 اکتوبر 2019ء
آصف محمود
یہ فقرہ ہم اکثر سنتے ہیں کہ پاکستان کشمیریوں کی سفارتی اور اخلاقی حمایت جاری رکھے گا۔ سوال یہ ہے کہ مسئلہ کشمیر میں پاکستان کی حیثیت محض ایک سفارتی اور اخلاقی معاون کی ہے یا وہ اس مسئلے میں ایک فریق ہے؟ آئیے انٹر نیشنل لاء کی روشنی میں اس سوال کا جواب تلاش کرتے ہیں۔ سلامتی کونسل نے 20 جنوری 1948 ء کو ایک قرارداد پاس کی۔ اس قرارداد ( نمبر 39) میں مسئلہ کشمیر کے حل کے لیے اقوام متحدہ کا ایک کمیشن قائم کیا گیا۔ اس کمیشن کا آفیشنل نام تھا ’’ یونائیٹڈ نیشنز کمیشن فار
مزید پڑھیے


بے بسی وزیر اعظم کی

جمعرات 10 اکتوبر 2019ء
ڈاکٹر طاہر مسعود
محاورہ ہے کہ خدا شکر خورے کو شکر ضرور دیتا ہے۔ ہمارے ملک کو جو بدعنوان حکمرانوں کی بدعنوانی میں عالمگیر شہرت رکھتا ہے، خداوند تعالیٰ نے ایک ایسا حکمران عطا کر دیا ہے جو سارے ضروری کاموں کو چھوڑ چھاڑ کر سابق بدعنوان حکمرانوں کی پکڑ دھکڑ میں اس طرح لگا ہوا ہے کہ امریکہ جائے یا چین یا کسی اور ملک ان بدعنوانوں کا تذکرہ کرنا نہیں بھولتا۔ اس کی گوٹ بدعنوانی پر آ کر اٹک گئی ہے اور وہ ایک ہی بات کی تکرار میں مصروف ہے کہ اے کاش! میں کرپٹ لوگوں کو کسی طرح جیل
مزید پڑھیے


ایک اور پرمغز‘ تاریخِ ’’ناز‘‘ خطاب

جمعرات 10 اکتوبر 2019ء
عبداللہ طارق سہیل
وزیر اعظم نے ایک اور تاریخی خطاب فرما دیا۔ اس بار اعزاز چین کے حصے میں آیا کہ خطاب سازی کی تاریخ کا ایک سنہرا باب اس کی سرزمین پر لکھا گیا۔ وہی چین جس کے سربراہ کو 2014ء میں کسی نے پاکستان کا دورہ کرنے سے روک دیا تھا۔ تاریخی خطاب کی تاریخی بات یہ تاریخی خواہش تھی کہ کاش میں پانچ سو کرپٹ لوگوں کو گرفتار کر سکتا۔ خواہش بہت ہی مبارک اور نیک مطلوب ہے۔ افسوس کہ یہ گنتی پوری نہیں ہو سکتی ۔ اس لئے کہ لے دے کے شریف خاندان کے قابل گرفتار افراد پندرہ بیس
مزید پڑھیے


بیٹا چوٹ تو نہیں لگی

جمعرات 10 اکتوبر 2019ء
ڈاکٹر حسین پراچہ
ہر روز ایک سے ایک دلفگار خبر سن کر ہم بڑے ’’سنگ دل‘‘ ہو گئے ہیں بلکہ ہماری رگ اشکبار پتھر کی ہو چکی ہے۔ تاہم بعض اوقات کوئی دل کو چھید دینے والی خبر نظر سے گزرتی ہے تو سنگ بستہ رگ اشکبار سے بھی لہو رنگ آنسو بہنے لگتے ہیں۔ دو تین روز پہلے ایسی ہی ایک خبر پڑھنے کو ملی جس کے مطابق چارسدہ کی بوڑھی ماں نے پریس کانفرنس میں فریاد کی کہ میرے مرحوم نے 5کنال اراضی میرے نام لکھی تھی۔ میرے اکلوتے بیٹے نے میری مرضی سے وہ فروخت کی جس سے 16کنال اراضی خریدی
مزید پڑھیے


جو اماں ملی تو کہاں ملی!

جمعرات 10 اکتوبر 2019ء
محمد اظہارالحق
بالآخر جاوید احمد غامدی بھی امریکہ منتقل ہو گئے۔ نامساعد حالات میں انہیں پاکستان چھوڑنا پڑا۔ کچھ عرصہ ملائیشیامیں رہے۔ بہت لوگ ان کے مداح ہیں، اختلاف کرنے والے بھی کم نہیں۔ یہ کالم نگار ان کا مداح بھی ہے اور کئی معاملات میں اختلاف بھی ہے۔ بالخصوص ان کے ایک شاگرد ڈاکٹر صاحب جو الیکٹرانک اور سوشل میڈیا کے شہسوار ہیں‘ دل دکھانے والی تقریروں کے ماہرہیں۔ ائمہ اربعہ کا ذکر تخفیف اور تصغیر کے ساتھ کرتے ہیں۔ جیسے وہ ان کے جونیئر ہوں۔ دوسری طرف یہ حضرات اپنے استاد کو’’استاد امام‘‘ کہتے ہیں،گویا چار امام منظور نہیں مگر پانچواں خود
مزید پڑھیے


دنیا ہے نہ دین

جمعرات 10 اکتوبر 2019ء
ہارون الرشید
سطحیت ، کم علمی اور آخری درجے کی بد ذوقی ۔ خدا کے لیے ،خدا کے لیے ! بے دلی ہائے تماشا کہ نہ عبرت ہے نہ ذوق بے دلی ہائے تمنا کہ نہ دنیا ہے نہ دیں 1990ء میںسندھ اور پنجاب کے میدانوں پہ خزاں کا راج تھا ۔بھٹو مخالف اسلامی جمہوری اتحاد کے دفاتر میں مگر یہ بہار کا موسم تھا۔ آتشِ گل سے دہک رہا تھا چمن تمام ۔صدر کے لیے اسٹیبلشمنٹ کا انتخاب نواب زادہ نصر اللہ خاں تھے لیکن صدر کو غیر معمولی اختیارات بخشنے والی آٹھویں ترمیم پر سمجھوتہ کرنے سے بزرگ سیاستدان نے انکار کر
مزید پڑھیے






کالم نگار

اداریہ
اداریہ









سجاد میر
شہر آشوب

مستنصر حسین تارڑ
ہزار داستان

مجاہد بریلوی
شہر ناپرساں


مبشر لقمان
کھرا سچ

عبداللہ طارق سہیل
وغیرہ وغیرہ


بشریٰ رحمان
چادر چاردیواری اور چاندنی

نو شی گیلا نی
کا لم کہا نی


افتخار گیلانی
مکتوب دہلی

خاور نعیم ہاشمی
پردہ اٹھتا ہے


رضا رومی
رومی نامہ

انجم نیاز
یادداشت از امریکا



خاور گھمن
گھمن گھیریاں


سعید خا ور
حر ف درما ں

راوٗ خالد
رولا رپہ



اشرف شریف
شہر نامہ

ایچ اقبال
ایچ اقبال


قدسیہ ممتاز
حرف تازہ




سعود عثمانی
دل سے دل تک

اثر چوہان
سیاست نامہ

عامر متین
عامر متین

ارشاد محمود
بات یہ ہے


ناصرخان
فرنٹ لائن

عدنان عادل
امروزوفردا

ذوالفقار چودھری
تیسری آنکھ

شاہین صہبائی
چلتے چلتے



سعید خاور
حرفِ درماں

رعایت اللہ فاروقی
گفتار و پندار

یوسف سراج
نقش قدم


عمر قاضی
لالہ صحرائ

عبدالرفع رسول
مکتوب سری نگر

احمد اعجاز
کہانی کی کہانی

خالد ایچ لودھی
دل کی باتیں

رحمت علی رازی
درون پردہ

وسی بابا
باتاں


راحیل اظہر
غبارِخاطر

محمد عامر رانا
اقلیم در اقلیم