اسلام آباد(وقائع نگار خصوصی،وقائع نگار ) صدرڈاکٹر عارف علوی نے قومی اسمبلی اور سینٹ کے بجٹ اجلاسوں کے دوران کورونا وبائسے بچائو کیلئے ایس او پیز پر موثر عملدرآمد یقینی بنانے پر زور دیتے ہوئے کہا ہے کہ ایوان بالا اور ایوان زیریں میں احتیاطی تدابیر کو اختیار کیا جائے ۔ اس وبائکا مربوط طریقے سے مقابلہ کیا جا سکتا ہے ۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پارلیمنٹ ہائوس کے دورہ کے موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے کیا۔ پارلیمنٹ ہائوس آمد پر سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے صدر مملکت کا استقبال کیا۔ سیکرٹری قومی اسمبلی نے صدر کو بجٹ اجلاس سے متعلق انتظامات کے بارے میں بریفنگ دی۔ صدر نے کہا کہ قومی اسمبلی بجٹ اجلاس کے دوران کورونا وبائسے بچائو کیلئے احتیاطی تدابیر پر عملدرآمد یقینی بنایا جائے ۔ اراکین کے درمیان سماجی فاصلہ برقرار رکھا جائے ، ماسک پہنے جائیں اور ہاتھوں کو بار بار دھویا جائے ۔ انہوں نے کہاکہ ہمیں اس وبائکا بحیثیت قوم منظم انداز میں مقابلہ کرنے کی ضرورت ہے ۔ انہوں نے کہاکہ ہم نے عوام اور دنیا کو یہ پیغام دینا ہے کہ ہم خود بھی احتیاطی تدابیر پر عمل کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ کے اندر اور باہر بھی ایس او پیز اور احتیاطی تدابیر پر عملدرآمد کیلئے موثر طریقہ کار وضع کیا جائے ۔ بعدازاں صدرعارف علوی نے سینٹ کے ایوان کا بھی دورہ کیا۔ چیئرمین سینٹ صادق سنجرانی اوروفاقی وزیر سینیٹر اعظم سواتی نے صدر کا استقبال کیا۔ چیئرمین سینٹ نے سینٹ کے بجٹ اجلاس سے متعلق انتظامات سے آگاہ کیا۔ صدرنے سینٹ لائبریری کا بھی دورہ کیا۔دریں اثنا صدر مملکت نے گزشتہ شام سیرکے دوران سڑک کنارے کھڑے فوڈچین کے 5ڈیلیوری بوائزسے مختصراً ملاقات کی۔صدر علوی نے ڈیلیوری بوائزکو حفاظتی احتیاطی تدابیر کی اہمیت کے بارے میں آگاہ کیا۔ صدرمملکت نے کورونا کی وجہ سے ڈاکٹر اورنگزیب اور ڈاکٹر محمد اعظم کی وفات پر تعزیت اورلواحقین سے اظہار افسوس کرتے ہوئے اپنے ٹویٹ میں کہاکہ قوم اپنی جانوں کی قربانیاں دینے والے ہیلتھ پروفیشنلز کی شکرگزار ہے ، یہ ہمارے ہیرو ہیں، انکی خدمات کے اعتراف کا ایک طریقہ یہ ہے کہ ہم ایس او پیز پر عمل کریں۔