لاہور (رانا محمد عظیم )کرونا وائرس کی وبا میں سیاستدان سوشل میڈیا پر چلے گئے ۔ اراکین اسمبلی ، ٹکٹ ہولڈرز اور مقامی سیاسی رہنما حلقے کے لوگوں کی آ نکھوں سے اوجھل ہیں۔چیئرمین پی پی بلاول بھٹو ،صدر ن لیگ شہباز شریف ویڈیو لنک اور سوشل میڈیا پر ہی متحرک ہیں جبکہ مولانا فضل الرحمان،محمود اچکزئی ، اسفند یار ولی کوتو چپ لگ گئی ہے ۔موجودہ حالات میں 99فیصد افراد نے لاک ڈاؤن سے بے روزگار ہونے والے افراد میں راشن تقسیم کرنا گواراہ نہیں کیا جبکہ الیکشن میں صرف پبلسٹی اور کھابوں پر کروڑوں روپے لگا دیتے ہیں۔ کئی اراکین اسمبلی نے تو اپنے دفاتر اور ڈیروں کے ساتھ ساتھ موبائل فون بھی بند کر لئے ہیں ۔شہباز شریف وطن واپسی سے اب تک قرنطینہ میں ہیں۔ پارٹی کو سوشل میڈیا اور ویڈیو لنک پر خطاب کے دوران عوام کی خدمت اور کرونا کے خلاف بھرپور کردار ادا کرنے کی ہدایت کی مگر ن لیگ کا ایک بھی ذمہ دار عوام میں نظر نہیں آیا۔شاہد خاقان عباسی ، احسن اقبال ، مریم اورنگ زیب اور دیگر رہنمابھی منظر عام سے غائب ہیں۔ حکومت کی طرف سے وزیر اعظم عمران خان ،وزیر اطلاعات فردوس عاشق اعوان ، اور چند وزرائ، وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار ، وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد ، وزیر اطلاعات فیاض الحسن چوہان ، میاں اسلم اقبال ، راجہ بشارت ، چودھری پرویز الٰہی ،چیف سیکرٹری پنجاب اعظم سلیمان ، سیکرٹری سپیشل ہیلتھ کیپٹن (ر)عثمان ، کمشنر لاہور ، ڈی سی لاہور اور سیکرٹری اطلاعات توانتہائی متحرک ہیں مگر تحریک انصاف کے ٹکٹ ہولڈرز ،اراکین اسمبلی اور پارلیمانی سیکرٹری سوشل میڈیا پر بھی کم نظر آ رہے ہیں، پنجاب میں درجنوں ترجمانوں میں سے نوے فیصد غائب ہیں۔