لندن (مانیٹرنگ ڈیسک)برطانوی پارلیمنٹ کے 34 ارکان نے پاکستان کوسفری پابندیوں کی ریڈ لسٹ سے نکالنے کیلئے وزیر اعظم بورس جانسن کو خط لکھا ہے ۔ ذرائع کے مطابق مشترکہ خط کے متن میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ پاکستان اور بنگلہ دیش کو ریڈ لسٹ میں رکھنے سے دونوں ممالک سے تعلق رکھنے والے برطانوی شہری متاثر ہونگے ۔ پاکستان کو ریڈ لسٹ میں ڈالنے کا واضح جواز پیش نہیں کیا گیا۔ پاکستان میں عالمی وبا کورونا کا انفکشن ریٹ برطانیہ سے بھی کم ہے ۔ پاکستان میں کورونا مریضوں کی تعداد ایسے ممالک سے کم ہے جو ریڈ لسٹ سے باہر ہیں۔ بتایا جائے کن وجوہات کی بنا پر پاکستان کو ریڈ لسٹ میں ڈالا گیا؟ اور ریڈ لسٹ میں شامل کرنے اور نکالنے کا طریقہ کار کیا ہے ؟ ۔