اسلا م آباد ،لاہور ،چونیاں،کراچی ،پشاور، واشنگٹن (رپورٹنگ ٹیم، نمائندگان، نیوز ایجنسیاں، مانیٹرنگ ڈیسک) کورونا کی مہلک وبا کی تیسری لہر نے پاکستان میں مزید102افرادکی جان لے لی جبکہ اموات کی مجموعی تعداد15026ہو گئی ۔نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر کے مطابق گزشتہ 24گھنٹوں کے دوران ملک میں کورونا ٹیسٹ مثبت آنے کی شرح 9.6فیصدہوگئی۔کوروناکے 4004نئے مریض رپورٹ ہوئے اور کل تعداد700188ہوگئی جبکہ فعال کیسز کی تعداد64373ہو گئی،3769مریضوں کی حالت تشویشناک ہے جبکہ کل620789صحتیاب ہو چکے ۔علاوہ ازیں سابق صدر آصف زرداری کی صاحبزادی بختاور بھٹو زرداری بھی کورونا میں مبتلا ہوگئیں اور خود کوقرنطینہ کرلیا۔ ٹویٹ میں بختاور نے کہا کہ2اپریل کو کورونا ٹیسٹ مثبت آیاتھا اور اب صحت بہتر ہورہی ہے ۔دریں اثنا اسلام آبا د کی احتساب عدالت نمبر ایک کے جج محمد بشیر کا عملہ بھی کورونا میں مبتلا ہوگیا ۔نائب قاصد عبد الماجد کا ٹیسٹ مثبت آ نے پرجج نے عدالت اور چیمبر فوری ڈی انفیکٹ کرنیکا حکم دیدیا ۔ترجمان پرائمری اینڈ سکینڈری ہیلتھ کیئر پنجاب کے مطابق صوبہ میں کورونا کے 2025نئے کیس سامنے آگئے اورمزید56مریضوں کی جان چلی گئی جبکہ اموات کی کل تعداد6731ہوگئی ۔ لاہورمیں1019،قصور 17، شیخوپورہ 8، راولپنڈی 153،گوجرانوالہ 48 ،سیالکوٹ 75، ملتان 97،فیصل آباد 170، سرگودھا 131،اوراوکاڑہ میں26کیس سامنے آئے ۔ لاہور کے مختلف ہسپتالوں میں کورونا کے 1078 مریض زیر علاج ہیں جن میں سے 707کنفرم اور377مشتبہ مریض ہیں۔لاہور کے ہائی ڈیپنڈینسی یونٹس کے 66فیصد بستر اور76فیصد وینٹی لیٹرز بھر گئے ۔ کوٹ خواجہ سعید ہسپتال کے 100فیصد، سر گنگارام ہسپتال کے 45فیصد , سروسز ہسپتال کے 94فیصد، میو ہسپتال کے 95فیصد، پی کے ایل آئی کے 88فیصد، نواز شریف ہسپتال یکی گیٹ کے 80فیصد وینٹی لیٹرز بھر گئے جبکہ جنرل ہسپتال کے 50فیصد، جناح ہسپتال کے 53فیصد اور پنجاب انسٹیٹیوٹ آف نیورو سائنسزکے 50فیصد آئی سی یو بستر بھر گئے ۔پنجاب ہیلتھ کیئر کمیشن کی معاونت کے بعدصوبہ کے 12بڑے شہروں کے 81نجی ہسپتالوں میں کورونا مریضوں کے علاج کیلئے 1394بیڈزاور270وینٹی لیٹرزمیسرہوچکے ۔لا ہو رکے تھانہ ڈیفنس سی میں تعینات ڈرائیور کانسٹیبل محمد اختر کورونا کے باعث شہید ہو گیا،وہ نواحی گائوں گھونڈی خوشحال سنگھ کا رہائشی تھا۔سی سی پی او لاہور ایڈیشنل آئی جی غلام محمود ڈوگر نے کانسٹیبل محمد اخترکی شہادت پراسکے اہلخانہ سے تعزیت کا اظہار کیا اورکہا کہ لاہور پولیس کورونا وبا کیخلاف جنگ میں فرنٹ لائن سولجر کا کردار کررہی ہے ۔ترجمان کے مطابق ابتک کورونا سے لاہور پولیس کے 5جوان شہید اور804متاثر ہوچکے ہیں، اس وقت134 پولیس افسر اور جوان گھروں میں قرنطینہ ہیں۔علاوہ ازیں کمشنر لاہور کیپٹن (ر) عثمان کو موصول اوپیز کی خلاف ورزی کی شکایت پر کمشنر سپیشل سکواڈ نے ریسٹورنٹ کو سیل کر دیا۔ کمشنر نے کہا کہ کسی بھی سیل جگہ کو 11اپریل سے پہلے ڈی سیل نہیں کیا جائیگا۔دریں اثناضلعی انتظامیہ لاہور نے کورونا ایس او پیز پر عملدرآمدکے حوالے سے اکتوبر 2020 سے لیکر اب تک کی رپورٹ جاری کر دی ۔ ڈی سی لاہور مدثر ریاض نے کہا کہ ایس او پیز کی خلاف ورزی پر5363 دکانوں، سٹورز اور میرج ہالز کو سیل کیا گیا جبکہ 64 لاکھ 51 ہزار روپے کے جرمانے کئے گئے ۔ 30 مارچ سے لیکر ابتک 163 ایف آئی آرز کا اندراج کرایا گیا اور192گرفتاریاں عمل میں لائی گئیں۔ ترجمان لاہور پولیس کے مطابق شہر کے مختلف علاقوں میں ایس او پیز کی خلاف ورزی اور ماسک کی پابندی نہ کرنے پر مجموعی طور پر1195مقدمات درج کرلئے گئے ۔ چونیاں میں گورنمنٹ گرلز ہائی سکول ہرچوکی کو 2 ٹیچرز کوثر پروین اور سلمیٰ شاہین کو کورونا ہونے پرسیل کر دیا گیا ۔دنیا بھرمیں ہلاکتیں28لاکھ93ہزارسے زائد ہو گئیں۔مقبوضہ کشمیر کے سابق وزیر اعلیٰ ڈاکٹر فاروق عبداﷲ کا کورونا ٹیسٹ ایک بار پھر مثبت آگیا جبکہ عمر عبداﷲ کو بھی ویکسین لگا دی گئی ۔بھارت میں کورونا کا پھیلائو شدت اختیار کر چکا، مزید684اموات اور126248نئے کیس رپورٹ ، گجرات اور پنجاب میں بھی رات کا کرفیو نافذ کردیا گیا۔ مہاراشٹر میں کورونا ویکسین کم پڑنے پر کچھ ویکسی نیشن سنٹر بند کردیئے گئے ۔دہلی ہائی کورٹ نے حکم دیا کہ نجی کاروں میں تنہا سفر کرنیوالوں کو بھی ماسک لازمی لگانا ہوگا۔برطانیہ کے وزیر اعظم بورس جانسن نے 12 اپریل سے ملک کے تفریحی مقامات، ہوٹلز اور کاروباری مراکز کھولنے کا اعلان کر دیا ۔انہوں نے کہا کہ برطانوی عوام نے کورونا کا مشکل دور گزار لیا ۔ ابتک ملک میں31ملین افراد کو کورونا ویکسین لگائی جا چکی ہے ۔