لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)تحریک انصاف کے رہنما ولید اقبال نے کہاہے کہ کرپشن اور قرضوں سے متعلق کمیشن تو صرف اورصرف حقائق سامنے لائیگا ، باقی کارروائی تو ایف آئی اے ، عدلیہ اور نیب جیسے ادارے ہی کرینگے ۔چینل92 نیوز کے پروگرام’’جواب چاہئے ‘‘میں میزبان ڈاکٹر دانش سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے مزید کہا کہ ابھی کمیشن بناہے نہ اسکے ٹی او آرز لیکن جب سربراہ حکومت اسکی سربراہی کرینگے تو یہ کمیشن اچھا کام کریگا۔بلوچستان عوامی پارٹی کے رہنما انوارالحق کاکڑ نے کہا کہ کمیشن یہ واضح کریگا کہ کس کی قرضوں کے حوالے سے ذمہ داری بنتی ہے ، میں تو کمیشن کے اعلان کو بہت اچھا سمجھتاہوں۔ن لیگ کے رہنما چودھری جعفر اقبال نے کہا کہ عمران خان کو چاہئے تھا کہ وہ کسی اور کے احتساب سے پہلے حفیظ شیخ کی گرفتاری کا اعلان کرتے کیونکہ زرداری کے دور میں وہ وزیر خزانہ تھے انہوں نے لوٹ مار کی ہوگی۔ اسی طرح نذر گوندل ، فردوس عاشق اعوان،بابر اعوان، فواد چودھری سمیت سب کاا حتساب ہوناچاہئے کیونکہ یہ ماضی کی حکومتوں میں شامل رہے ۔میرے نزدیک عمران خان نے ایک اور جھوٹ بولا اور جلد اس پروہ یوٹرن لیں گے ۔ نیب کو چودھری برادران مطلوب تھے لیکن ان کیخلاف تمام کارروائی بند کردی گئی ۔آج تک قومی اسمبلی میں کسی وزیراعظم کو اس طرح لڈی ڈالتے ہوئے نہیں دیکھا۔پیپلزپارٹی کے رہنما حیدر زمان قریشی نے کہا کہ اگر کمیشن بناناہے تو سب سے پہلے عمران خان کے رات کو خطاب پر کمیشن بنایاجائے ۔وزیراعظم اگر حقائق جانناچاہتے ہیں تو اٹھارہ سال کی انکوائری کرائی جائے ۔آمروں کے دور میں بہت ایڈآئی کیا اسکا بھی حساب لیاجائیگا۔ماہر قانون اظہرصدیق نے کہا کہ یہ کمیشن ن لیگ کی حکومت کے دور میں بنائے گئے ایکٹ کے تحت بنایا جائیگا۔اگر ملک کو آگے لیکر جانا ہے تو پھر جلد سے جلد یہ کمیشن بنایاجائے ۔ ولید اقبال