لاہور، قصور، الہ آباد ، چونیاں ( کرائم رپورٹر، ڈسٹرکٹ رپورٹر، نامہ نگار، تحصیل رپورٹر ) قصور کی تحصیل چونیاں کے نواحی علاقے کنگن پور میں پولیس نے شراب فروشی کے الزم میں گرفتار ملزم کو تشدد کرکے قتل کردیا، ورثا اور میت کو کنگن پور روڈ پر رکھ کر زبردست احتجاج کیا، ڈی پی او قصور عبد الغفار قیصرانی کے نوٹس پر مقدمہ درج کرکے اے ایس آئی سمیت 3 پولیس اہلکاروں کو حوالات میں بند کردیا گیا، پولیس نے موقف اختیار کیا کہ شراب فروش کی موت تشدد سے نہیں بلکہ دل کا دورہ پڑنے سے ہوئی ہے ، پولیس چوکی شام کوٹ کی حدود گاؤں ڈھٹے سے شراب فروشی کے الزام میں محمد ارشد کو گرفتار کیا گیا تھا جسے پولیس نے مبینہ طور پر تشدد کرکے مار دیا، چوکی انچارج سید علی رضا گیلانی نے کہا ہم نے تشدد نہیں کیا، شامکوٹ ڈھٹے کا 55 سالہ ارشد 5 بچوں کا باپ تھا، ورثا نے الزام عائد کیا چوکی انچارج اے ایس آئی علی رضا نے اسے گرفتار کیا، اسے مارنے کے بعد نعش ٹی ایچ کیو ہسپتال چونیاں میں چھوڑ کر فرار ہوگئے ، ورثا نے نعش ڈی ایس پی آفس کے سامنے رکھ کر احتجاج کیا، اہل علاقہ کے مطابق ارشد کا منشیات فروشی سے تعلق نہیں اور وہ زمینداری کرتا ہے ۔ ملزمان کیخلاف کارروائی کی یقین دہانی پر احتجاج ختم کیا گیا۔ آئی جی پنجاب نے نوٹس لیکر ڈی پی او قصور سے رپورٹ طلب کرلی۔