اسلام آباد،لاہور ، نیویارک ( خبر نگار خصوصی، نامہ نگار ، جنرل رپورٹر ،کامرس رپورٹر، ،مانیٹرنگ ڈیسک، نیوزایجنسیاں ) ملک بھر میں کورونا وائرس کے مزید 756کیس سامنے آگئے جبکہ 13مریض جاں بحق ہوگئے ۔ پنجاب کے وزیر صنعت اسلم اقبال اور وزیر زراعت حسین جہانیاں بھی کورونا کا شکار ہوگئے جبکہ چیئرمین پی این ڈی بورڈ حامد یعقوب شیخ ،سیکرٹری صنعت اور سیکرٹری زراعت کا ٹیسٹ بھی مثبت آگیا۔نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر کے مطابق ملک بھر میں کورونا متاثرین کی تعداد 321218جبکہ اموات 6614ہوگئیں۔ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک بھر میں31862 ٹیسٹ کیے گئے ،11 مریض ہسپتالوں میں جبکہ 2 مریض گھروں میں قرنطینہ کے دوران جاں بحق ہوئے ۔پنجاب میں 7ہلاکتیں ہوئیں جبکہ 223نئے کیسز کی تصدیق ہوئی ۔ ترجمان پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کیئر کیمطابق لاہور 96، راولپنڈی،ملتان 7،سرگودھا 6، خانیوال 3،گجرات،فیصل آباد ،بھکر 2،2،ننکانہ ،شیخوپورہ، نارووال ،منڈی بہاؤالدین، وہاڑی ، رحیمیار خان ،میانوالی ،خوشاب ، مظفر گڑھ ساہیوال اور اوکاڑہ میں ایک ایک کیس رپورٹ ہوا۔ وفاقی دارالحکومت کے مزید دو تعلیمی اداروں میں کورونا کیسز کی تصدیق ہوئی ۔ دونوں تعلیمی اداروں کوسیل کرنے کا حکمنامہ جاری کردیا گیا۔گورنمنٹ پرائمری سکول ستارہ کالونی کی انتظامیہ نے محکمہ سکول ایجوکیشن کے احکامات ہوا میں اڑا دیے ۔ پابندی کے باجود سکول میں دوسری شفٹ لگائی جارہی ۔سکول انتظامیہ کا کہنا ہے علاقے میں دو سکول ہیں ،ستارہ کالونی ون کا سکول کرایہ کی عمارت میں تھا ، اسکے بچوں کو ستارہ کالونی ٹو سکول کی عمارت میں پڑھایا جارہا ہے ۔ادھر دنیا بھر میں کورونا متاثرین 39061447جبکہ اموات1100586ہو گئیں۔امریکہ میں متاثرین 82لاکھ جبکہ بھارت میں 74لاکھ کے قریب پہنچ گئے ۔چینی شہر چنگڈاؤ میں ابتک قریب 10 ملین افراد کے کورونا ٹیسٹ کیے جا چکے ۔ چنگڈاؤ کے ڈپٹی میئر لوآن چِن کے مطابق 9.9 ملین نمونے اکٹھے کیے گئے جبکہ 7.6 ملین ٹیسٹوں کے نتائج بھی آچکے ۔ ان کا کہنا تھا اس شہر میں محض 13مصدقہ کیس ہیں۔لندن میں کورونا کیسز بڑھنے پر پابندیاں سخت کرنے کا اعلان کیا گیا ہے جبکہ کورونا خطرے کا الرٹ ہائی لیول پر کر دیا گیا ، غیر ضروری سفر کیساتھ شہریوں کے ایک دوسرے کے گھروں میں جانے اور ریستوران میں ایک ساتھ بیٹھنے پر پابندی ہوگی جس کا اطلاق آج رات سے ہوگا۔پولینڈ میں حکومت نے ملک بھر میں جزوی لاک ڈاؤن کا اعلان کر دیا۔یونیسکو نے اس خدشے کا اظہار کیا ہے کہ کورونا وبا کے بعد تعلیمی ادارے کھلنے پر دنیا بھر میں ایک کروڑ10 لاکھ لڑکیاں دوبارہ سکول نہیں جا پائیں گی۔انسانی حقوق کیلئے سرگرم بین الاقوامی ادارے فریڈم ہائوس کیمطابق دنیا بھرکی حکومتیں وبا کو جواز بناکر اس کا استعمال لوگوں پر نگرانی کا دائرہ بڑھانے اور آن لائن ناراضی کو دبانے کیلئے کررہی ہیں۔رپورٹ کے مطابق چین مسلسل چھٹے سال سب سے خراب رینکنگ پانے والا ملک ہے ۔رپورٹ کے مطابق جن ملکوں میں حکام نے انٹرنیٹ پر کسی نہ کسی طرح کی پابندی عائد کر رکھی ہے ان میں بھارت، میانمار، کرغیزستان ، روانڈا شامل ہیں۔رینکنگ کے لحاظ سے امریکہ ان ملکوں میں شامل ہے جہاں انٹرنیٹ آزاد ہے تاہم ٹرمپ انتظامیہ کے ذریعہ سوشل میڈیا کیلئے نافذ بعض ضابطوں کی وجہ سے اس کے سکور میں بھی گراوٹ آئی ہے ۔