کوئٹہ، پنجگور،کراچی (سٹاف رپورٹر، نامہ نگار، خ ن، مانیٹرنگ ڈیسک ) کوئٹہ میں بس سٹاپ پر بم حملے میں 3 افراد جاں بحق اور 25 زخمی ہوگئے ، پنجگور میں ایف سی چیک پوسٹ پر شرپسندوں کے حملے میں صوبیدار شہید ہوگیا، فورسز کی جوابی کارروائی میں 3حملہ آورمارے گئے ، مستونگ میں نامعلوم افراد کی فائرنگ سے لیویز اہلکارزخمی ہوگیا، وزیراعلیٰ جام کمال، گورنر جسٹس (ر) امان اﷲ یاسین زئی اور سیاسی ومذہبی رہنمائوں نے واقعے کی مذمت کی ہے ۔تفصیلات کے مطابق مشرقی بائی پاس شیر جان بس سٹاپ کے قریب سائیکل میں نصب بم دھماکے کے نتیجے میں منظور احمد ،رحمت سمیت تین افراد جاں بحق ،25زخمی ہو گئے جن میں سے بعض کی حالت تشویشناک ہے ، دھماکے سے قریبی دکانوں اور گاڑیوں کو نقصان پہنچا جبکہ پنجگور سے کراچی جانے والے مسافر کوچ میں سوار 3دہشت گردوں نے چیکنگ کے دوران ایف سی اہلکاروں پر فائرنگ کر کے چوکی کے اندر گھس کر اہلکاروں کو یرغمال بنایا جس پر فورسز کی بھاری نفری موقع پر پہنچ گئی،علاقے کو سیل کردیا گیا، چیک پوسٹ کو چاروں اطراف سے گھیر کرکارروائی کی گئی، کئی گھنٹے تک فائرنگ کا تبادلہ ہوا جس میں ایف سی صوبیدار قمر عباس شہید اور سپاہی پذیر احمد شدید زخمی جبکہ تینوں حملہ آور اور خالد نین اﷲ شاہ میر ہلاک ہوگئے جو کورنگی کراچی کے رہائشی بتائے جاتے ہیں۔کوئٹہ کے علاقے مستونگ روڈ پر مسلح افراد نے فائرنگ کر کے لیویز اہلکار نور احمد کو زخمی کر دیا ۔تربت میں فورسزکے آپریشن کے دوران کالعدم لشکری جھنگوی کادہشتگرشیخ ممتاز عرف فرعون ہلاک ہو گیا ،شیخ ممتاز2017میں کراچی جیل سے فرارہواتھا،دہشت گرداہلکاروں کی ٹارگٹ کلنگ اور دیگرکیسزمیں پولیس کو مطلوب تھا۔ شمالی وزیرستان میں بارودی سرنگ کا دھماکہ ہوا جس سے ایک بچہ شدید زخمی ہو گیا۔ دتہ خیل کے علاقہ منظر خیل میں 12 سالہ عبدالمتین دریاٹوچی میں سو کھی لکڑیاں جمع کررہا تھا کہ اچانک اُس کا پاؤں بارودی مواد پر آ گیا ۔