نیوٹریشن

 

میرے پاس ایسی کئی خواتین آتی ہیں جن کے مطابق ان کے جسم پر کسی قسم کی ڈائیٹ اور ورزش اثر نہیں کرتی۔ان کے پاس ہر بات کا ایک ہی جواب ہو تا ہے ’’میں کچھ بھی کر لوں میرا وزن کم نہیں ہو تا۔‘‘ہم ایک دن دانت صاف نہ کریں تو منہ سے بُو آنے لگتی ہے۔زیادہ دن صاف نہ کریں تو منہ کے جراثیم انفیکشن کا باعث بن جاتے ہیں۔اسی طرح قدرت کے نظام کو سمجھوبھلے لوگوں اور اپنے جسم کو بھی ذرا اہمیت دینا شروع کرو۔ اپنے جسم کے مطابق کھائیں۔کسی بھی چیز کی زیادتی آپ کو نقصان دیتی ہے چاہے وہ غذا ہی کیو ںنہ ہو۔ بس اتنا یاد رکھیں اگر آپ ایک جگہ ہر روزصفائی کرتی ہیں تو وہ جگہ ایک دِن لازمی صاف ہو جاتی ہے! لیکن کہانی ختم نہیں ہوتی!کیا یہ جھاڑپونچھ بند کر دینی چاہئے۔ کیا یہاں دوبارہ مٹی نہیں آئے گی؟ نہیں ایسا ممکن نہیں ہے آپ کو لازمی صفائی کرنا ہو گی، چاہے روز،نہ کریں لیکن ایک دن چھوڑ کر لازم کرنا ہو گی۔ اسی طرح ڈائیٹ کا بھی یہی اصول ہے۔اچھی غذاؤں کو ہمیشہ کے لئے اپنی زندگی میں شامل کریں۔وزن کو گھٹانے کے لیے جسم میں موجود چربی کے ذخیرے کو خرچ کرنا پڑتا ہے۔ اُس کا طریقہ یہی ہے کہ آپ اپنی خوراک کم کریں اور ورزش کے ذریعے چربی گھٹائیں۔ کھانے میں چکنائی والی اشیاء سے مکمل پرہیز کریں۔ نشاستہ دار غذائوں کا استعمال کم کریں مثلاً چاول، چپاتی، سفید ڈبل روٹی، خمیری روٹی اور نان وغیرہ۔ریشہ دار غذائوں یعنی فائبر کا استعمال بڑھادیں۔ دودھ کی بالائی اتار کر استعمال کریں۔ آپ تمام ایسی غذائیں چھوڑ دیں جن میں شکر موجود ہو مثلاً بیکری کی اشیاء مٹھائی، گولیاں، ٹافیاں، چاکلیٹ، کیک، پیسٹری، میٹھے بسکٹ، پھلوں کے مربے، جیلی، خشک میوے، میٹھے مشروبات وغیرہ۔ سفید گوشت استعمال کریں اور خوراک میں سرخ لوبیا، دالیں، چنے، سبزیاں اور پھل ضرور شامل کریں۔ پھلوں کو لیتے وقت اس بات کا خاص خیال رکھیں کہ جو پھل چھلکے کے ساتھ کھائے جا سکتے ہیں، اُن کو چھلکے کے ساتھ کھالیں۔ پھلوں کے جوس میں سالم پھل کی نسبت کیلوریز زیادہ اور غذائی ریشہ (Dietary fibre) کم ہوتا ہے، جس کی وجہ سے پھلوں کے جوس وزن کم کرنے میں اتنے معاون ثابت نہیں ہوتے۔ دن میں 3-2 لیٹر پانی ضرور پئیں اور گرمی کے موسم میں اگر آپ پانی میں لیموں اور پودینہ بھی شامل کر لیں تو بہتر ہے۔