تفصیلی فیصلہ ملنے تک: بلاول سمیت کسی کو ای سی ایل سے نہ نکالنے کا فیصلہ

جمعه 11 جنوری 2019ء





اسلام آباد (خصوصی نیوز رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک، اے پی پی) وفاقی کابینہ نے ای سی ایل جائزہ کمیٹی کی جانب سے 20افراد کے نام ای سی ایل سے نکالنے کی سفارش مسترد کر دی ،جعلی اکائونٹس معاملے میں172 افراد کے نام ای سی ایل میں برقرار ہیں،سپریم کورٹ کے تفصیلی فیصلے کے بعد ای سی ایل میں ڈالے گئے ناموں کا جائزہ یا فیصلے پر نظر ثانی کی اپیل دائر کرسکتے ہیں ،وفاقی کابینہ نے ائیر مارشل ارشد محمود کو پی آئی اے کے سی ای او ،شاہ رخ نصرت کو ڈی جی سول ایوی ایشن اور کمشنر اسلام آباد عامر علی احمد کو سی ڈی اے چیئرمین کااضافی چارج ، ریئر ایڈمرل اطہر کو ایم ڈی کراچی شپ یارڈ انجینئرنگ ،صالح محمد کو سیکرٹری ٹریڈ ڈیولپمنٹ بمعہ ڈویلپمنٹ کمپنی کراچی کا اضافی چارج ،عائشہ عزیز کو ایم ڈی انوسمنٹ کمپنی تعینات کرنے اورٹوبیکو بورڈ میں دو ہفتوں کی توسیع کے علاوہ سولر پاورٹیرف جنریشن کی منظوری دیدی ،وزیراعظم ہائوس میں 44ہزار بجلی کی یونٹس کے استعمال پر وزیر اعظم نے نوٹس لیتے ہوئے آڈٹ کا حکم دیدیا ،وزیراعظم نے ہدایات دی ہیں کہ اوورسیز پاکستانوں کے لئے روزگار کے مواقع پیدا کرنے کے لئے 48گھنٹوں میں نیگیٹوکیٹیگری فہرست فراہم اور وزارت پٹرولیم گیس کے حوالے سے جامع پالیسی لائی جائے ۔ وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت وفاقی کابینہ اجلاس ہوا میں جس میں 26 نکاتی ایجنڈے پر غور کیا گیا، اجلاس میں منی لانڈرنگ کیس کی جے آئی ٹی رپورٹ کا معاملہ بھی زیربحث آیا اور مختلف افراد کے نام ای سی ایل میں رکھنے اور نکالنے کے بارے میں تجاویز پیش کی گئیں،وفاقی کابینہ نے پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اور وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کا نام ای سی ایل سے نکالنے کا فیصلہ موخر کرتے ہوئے کہا کہ اس معاملے پر سپریم کورٹ کے تحریری فیصلے کا انتظار کیا جائے گا، معاملہ آئندہ اجلاس میں دوبارہ زیرغور آئے گا۔جمعرات کو وزیر اطلاعات ونشریات چودھری فواد حسین وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد وزیر شماریات خسرو بختیاراور سیکرٹری شماریات ڈویژن کے ہمراہ میڈیا کو بریفنگ دے رہے تھے ، فواد حسین نے کہا کہ جعلی اکائونٹس کا معاملہ 2015میں شروع ہواجس میں سندھ حکومت کی اہم شخصیات بشمول وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شا ہ،آصف زرداری ،فریال تالپور اس سکینڈل میں مرکزی کردار ہیں ،سندھ حکومت کے اربوں روپے بذریعہ مراد علی شاہ ،اومنی گروپ ،دبئی ،لندن ،پیرس اور دیگر ممالک تک پہنچے ہیں ،جعلی اکائونٹس کی تحقیقاتی رپورٹ 2018میں تحقیقاتی رپورٹ پیش کی گئی جس میں جے آئی ٹی کی سفارش پر 172افراد کے نام کابینہ نے ای سی ایل میں ڈالے تھے ،وزارت داخلہ کی ای سی ایل جائزہ کمیٹی نے کابینہ کے اجلاس کے دوران 20لوگوں کے نام نکالنے کی سفارش کی جسے کابینہ نے مسترد کر دیا ،وزارت قانون و انصاف نے کابینہ کو بتایا کہ سپریم کورٹ کا تفصیلی فیصلہ تاحال موصول نہیں ہوا ،اجلاس میں فیصلہ ہوا کہ عدالتی فیصلے کا جائزہ لینے کے بعد ای سی ایل میں ڈالے گئے ناموں کا جائز ہ لینے یا عدالتی فیصلے پر نظر ثانی اپیل دائر کرنے کا فیصلہ کیا جائے گا ، ای سی ایل میں شامل ناموں کا ایک کمیٹی جائزہ لے گی، فواد حسین نے کہا کہ معاشی پالیسوں کے ثمرات آنے شروع ہوگئے ،دسمبر 2018سے اب تک پرائیویٹ سیکٹر نے بینکوں سے 504ارب روپے کے قرض حاصل کیے ہیں، پچھلے سال 304ارب کے قرض حاصل کیے گئے تھے ،ایکسپورٹ میں اضافہ معاشی پالیسی کا اہم جزو ہے ،ایک ماہ میں برآمدت میں 4.5فیصد اضافہ اور درآمدات میں 8.5فیصد کمی ہوئی ،وزیراعظم نے وزارت پٹرولیم کو ہدایت دی کہ وہ گیس کے حوالے سے جامع پالیسی سامنے لائیں ،اس وقت ملکی مجمو عی آبادی کا 28فیصد سوئی گیس (سسٹم گیس) ،63فیصد ایل پی جی استعمال کر تے ہیں ، وفاقی کابینہ نے فیصلہ کیا کہ پی آئی اے ،سی ڈی اے کے علاوہ ڈویلپمنٹ اتھارٹیز کے سربراہی پرائیویٹ سیکٹر کو دی جائے گی تا کہ ماہر لوگ آگے آئیں اور پیشہ وارانہ کام کو سنبھالیں ۔اس موقع پر وزیر مخدوم خسروبختیارنے کہا کہ اپوزیشن جماعتیں مہنگائی کا بے بنیاد واویلا کررہی ہیں، پی پی دور میں افراط زر میں 11.2فیصد اضافہ ہوا،ماضی کی حکومتوں کے پہلے مالی سال مہنگائی کی شرح میں اضافہ ہوا،منافع خوری کی حوصلہ شکنی کر رہے ہیں، قیمتوں کے تعین کے نظام کو صوبائی حکومتیں بہتر بنائیں،حکومت نے مہنگائی کا بوجھ عوام پر نہ ڈالنے کا فیصلہ کیا ہے ،حکومت مختلف پروگراموں کے ذریعے مہنگائی کا بوجھ کم کریگی۔ادھرنجی ٹی وی سے گفتگومیں فوادچودھری نے کہاعمران خان کے مقدمے کا زرداری نوازمقدمات سے مقابلہ نہیں ،عمران خان کے خلاف کیسز سے نیب کی توقیر میں اضافہ نہیں ہوتا،کسی مہذب ملک میں تصور کیاجا سکتاہے کہ وزیراعظم پر ایسا مقدمہ چلے ؟عمران خان پر مقدمہ توازن سے باہر ہے ،نیب کو مقدمہ فوری ختم کرنا چاہیے ، پی ٹی آئی نہیں حکومت چاہتی ہے کہ بلاول،مرادعلی شاہ کے نام ای سی ایل میں رہیں۔ 

 

 



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں