پشاور(فخرالدین سید) ایف آئی اے کی ٹیم نے ملک بھر میں انتہا ئی مطلوب انسانی سمگلروں کی فہرست تیا ر کر کے ان کے خلاف کر یک ڈائون کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے ،انتہائی مطلوب انسانی سمگلروں کی فہرست صوبائی حکومتوں کو ارسال کی جائے گی ،انسانی سمگلروں میں خواتین کے ساتھ شادی ظاہر کرکے جعلی نکا ح نامے تیا ر کر نے والے گروپ کے شامل ہونے کا بھی انکشاف ہوا ہے جو خواتین کو بیر ون ممالک لے جا کر وہاں فروخت کر دیتے ہیں،ایف آئی اے ذ رائع کے مطابق ابتدائی طور پر 112 انتہائی مطلوب انسانی سمگلر وں کی فہرست تیا ر کی گئی ہے جن میں 58 انسانی سمگلروں کا تعلق پنجا ب، 34 کا تعلق اسلام آباد، 15 کا تعلق سندھ،2 کا تعلق بلوچستان اور 3 کا تعلق خبیر پختونخوا سے بتایا گیا ہے ، انسانی سمگلروں کے کئی کا رندوں کوگرفتار بھی کیا جاچکا ہے جن کے کئی نیٹ روک اور بھی کا م کر رہے ہیں جو لو گوں کو سنہر ے خواب دکھاکر بیرون ممالک نوکریوں کے سبز باغ دکھا کر ان سے خطیر رقم بٹور لیتے ہیں اور بعد میں ان کو مختلف ممالک کے بارڈر پر چھوڑ دیتے ہیں جو اکثر وہاں کی سکیو رٹی فورسز کی گولیوں کا نشانہ بن جاتے ہیں اور متعدد جیلوں میں قید ہو جاتے ہیں،فہرست میں شامل بعض گروپ ایسے بھی ہیں جو خواتین کے لئے ویزے کا بندوبست کر لیتے ہیں اور ان کے سامان میں منشیات رکھ دیتے ہیں جس کی وجہ سے وہ گرفتار ہوکر جیل کی سلاخوں کے پیچھے چلی جاتی ہیں، سمگلروں کی فہرستیں بھی تیار کر لی گئی ہیں جن کے خلاف کریک ڈائون جلد شروع کر لیا جائے گا ، خیا ل کیا جاتا ہے کہ اس فہرست میں بعض انتہائی با اثرلوگ بھی شامل ہیں جن کی آشیر باد سے انسانی سمگلر کاروبار جاری رکھے ہوئے ہیں۔