فیصل آباد؍ ڈیرہ غازی خان؍سکھر (خصوصی رپورٹر؍ڈسٹرکٹ رپورٹر؍ بیورو رپورٹ ) ایران سے آنیوالے 150زائرین کو تفتان بارڈر سے جھنگ روڈ پربنائے گئے قرنطینہ سنٹر میں منتقل کردیا گیا۔ جبکہ تین سو زائرین کو راولپنڈی اور گلگت روانہ کر دیا گیا، فیصل آباد منتقلی کے موقع پر سکیورٹی کے سخت انتطامات کئے گئے تھے ،ضلعی پولیس اورانتظامیہ کے ذمہ داران بھی ساتھ موجود تھے ۔دریں اثنا تفتان بارڈر سے 300سے زائد زائرین کا تیسرا قافلہ علی الصبح براستہ سخی سرور ڈی جی خان پہنچ گیا جنہیں ابتدائی ریفریشمنٹ کے بعد مختلف بسوں کے ذریعے راولپنڈی اور گلگت بلتستان روانہ کردیاگیا جبکہ ڈیرہ غازی خان میں قیام پذیر 800 سے زائد زائرین کے خون کے نمونے لئے گئے جن میں سے ابتک 175 زائرین کے ٹیسٹ پازیٹو آئے جنہیں طیب اردوان ہسپتال مظفر گڑھ شفٹ کردیاگیا جبکہ نیگٹو آنے والے تمام زائرین کو دانش سکول اور میر چاکر خان یونیورسٹی میں آئسولیشن میں رکھاگیاہے جنہیں 14روز مکمل کرنے کے بعد اپنے اپنے گھروں کو جانے کی اجازت دیدی جائیگی ۔ادھر محکمہ صحت سکھر نے کرونا وائرس پھیلنے کے خدشات کے پیش نظر 14 مارچ2020 کو تفتان بارڈر سے سکھر قرنطینہ سینٹر منتقل کئے گئے 302 زائرین کے نمونے دوبارہ لینے کا فیصلہ کیا ہے ۔ذرائع کے مطابق پہلے کرائے گئے ٹیسٹ کے مطابق 151 افراد کے پازیٹو اور 151 کے نیگٹو زرلٹ آئے تھے اور ایک مذہبی رہنما کی ہدایت پر دو روز قبل قرنطینہ سینٹرسکھر میں موجود افراد نے باہر نکل کر احتجاج کیا تھااوراس احتجاج کے بعد وائرس پھیلنے کے خدشے کے باعث دوبارہ ٹیسٹ لئے جائیں گے ۔