BN

ایل این جی ریفرنس : شریک ملزموں نے ریلیف مانگ لیا، نیب کی وزارت قانون کی رائے تک نئے آرڈیننس کے تحت فیصلے نہ کرنے کی ہدایت

بدھ 13 اکتوبر 2021ء





اسلام آباد (92 نیوزرپورٹ)نیب ترمیمی آرڈیننس کی تشریح کے سلسلے میں نیب نے اہم قانونی نکات پروزارت قانون سے رائے طلب کرلی،وزارت قانون کی رائے آنے تک تمام بیوروز کو نئے آرڈیننس کے تحت فیصلوں سے روک دیاگیا،چیئرمین نیب کی منظوری سے پراسیکیوٹرجنرل نے تمام ریجنل بیوروزکوخط ارسال کردیا،خط میں کہاگیاہے کہ وزارت قانون کی رائے آنے تک نئے آرڈیننس کے تحت کوئی فیصلہ نہ کیاجائے ،ریجنل بیوروزکوئی رائے یاتجاویزدیناچاہیں توجلد فراہم کریں،نیب ذرائع کے مطابق آرڈیننس کااطلاق کب سے ہوگا؟ تما م نکات پروزارت قانون سے رائے لی جائے گی۔ اسلام آباد ( نامہ نگار،92 نیوزرپورٹ) نیب ترمیمی آرڈیننس کے تحت ایک اور بڑے کیس میں ریلیف کی درخواست آگئی۔ ایل این جی ریفرنس کے شریک ملزموں نے اعتراضات اٹھاتے ہوئے ریفرنس ختم کرنے کی استدعا کر دی۔ایل این جی ریفرنس کی سماعت کے دوران احتساب عدالت جج کو نیب ترمیمی آرڈیننس کی کاپی پیش کی گئی۔احتساب عدالت کے جج محمد اعظم خان کی عدالت میں زیر سماعت ایل این جی ریفرنس میں سابق وزیر اعظم شاہدخاقان اور مفتاح اسماعیل کے وکلا کی جانب سے نیب آرڈیننس کے تحت استثنیٰ کی درخواست میں حصہ بننے سے انکار پر دیگر شریک ملزمان کی طرف سے نئے نیب ترمیمی آرڈیننس کے تحت ریفرنس خارج کرنے کی استدعا کی گئی ،جس پر عدالت نے نیب سے جواب طلب کرلیا ۔گزشتہ روز سماعت کے دوران شاہد خاقان عباسی اور دیگر عدالت پیش ہوئے ، اس موقع پروکلاء صفائی کی طرف سے نیب ترمیمی آرڈیننس کی کاپی عدالت پیش کی گئی اور ریفرنس ختم کرنے کی استدعا کرتے ہوئے کہاگیا کہ نیب کا نیا آرڈیننس آیا ہمیں جائزہ لینے کا وقت دیاجائے ۔بیرسٹر ظفر اللہ نے کہاکہ راجہ پرویز اشرف کا کیس 2010 میں بنا، 2019 میں ترمیمی آرڈیننس آیا اور ریلیف ملا، آرڈیننس کے بعد نیب اور احتساب عدالت کا دائرہ اختیار ختم کردیا گیا ۔ اس موقع پر نیب پراسیکیوٹر نے اعتراض کرتے ہوئے کہاکہ کابینہ فیصلوں کو جو نیب سے استثنیٰ دیاگیا وہ6 اکتوبر کے بعد ہوگا،دوران سماعت شاہدخاقان عباسی اور مفتاح اسماعیل کے وکلا نے نئے نیب آرڈیننس کے تحت درخواست کا حصہ بننے سے انکار کردیا،عدالت نے دیگر شریک ملزمان کی استدعا پر نیب سے مفصل جواب طلب کرتے ہوئے کہاکہ آئندہ سماعت پر تمام وکلاء کے دلائل سن کر فیصلہ کریں گے اور سماعت 26اکتوبر تک کیلئے ملتوی کردی گئی۔ ایک اور کیس میں نیب آرڈیننس کے تحت بریت کی درخواست دائر کر دی گئی ۔ احتساب عدالت میں زیر سماعت سرمایہ کاری کے نام پر لوٹنے کے کیس میں نجی کمپنی آل پاکستان پراجیکٹ کے مالک آدم امین چوہدری کے خلاف کیس میں نئے نیب آرڈیننس کے تحت بریت کی درخواست دے دی گئی۔عدالت نے ملزم آدم امین کے جوڈیشل میں توسیع کرتے ہوئے سماعت 26 اکتوبر تک ملتوی کردی۔

 

 



آپ کیلئے تجویز کردہ خبریں










اہم خبریں