BN

آصف محمود


مقدس پارلیمان۔۔۔صرف بالغاں کے لیے؟


دل پر ہاتھ رکھ کر بتائیے کیا آپ معزز پارلیمان میں ہونے والی گفتگو اپنے اہل خانہ کے ساتھ بیٹھ کر سن سکتے ہیں؟ جناب سپیکراس معاملے میں اگر خود کو بے بس پاتے ہیں تو کیا پی ٹی وی سے کہا جائے پارلیمان کی کارروائی نشر کرنے سے پہلے تنبیہہ جاری کر دیا کرے کہ یہ کارروائی صرف بالغان کیلئے ہے اور بچوں کو اس نشریات سے دور رکھا جائے؟ سینیٹر نگہت مرز ا روایت کرتی ہیں کہ اجلاس نبٹا کر وہ کراچی پہنچیں تو ان کی کم سن نواسی کہنے لگی : ’’ نانو جن لوگوں میں آپ
جمعرات 24  ستمبر 2020ء

واہ مولاناواہ

منگل 22  ستمبر 2020ء
آصف محمود
چشمِ وا مولانا کی گرویدہ ہو چکی ہے،عزیمت اور جمہوریت اب ان کے ہاتھوں میں ہے اور وہ اپنی جرات رندانہ سے برنگ شعلہ دہک رہے ہیں۔ حزب اختلاف کی اے پی سی میں وہ کسی شیر کی طرح دھاڑ رہے ہوتے ہیں کہ اسمبلیوں سے استعفے دو اور ان کے حلیف مان کر نہیں دیتے۔ ان کی یہ دلاوری دیکھ کر ان کے وابستگان پکار پکار کر کہہ رہے ہیں: واہ مولانا واہ۔ آپ بولتے ہیں تو مہر عالم تاب کا منظر کھل جاتا ہے۔ میرے جیسے طالب علم کا معاملہ مگر اور ہے کہ دل کو کئی کہانیاں
مزید پڑھیے


میاں صاحب کا خطاب ۔۔۔۔خواجہ آصف کا نصاب

پیر 21  ستمبر 2020ء
آصف محمود
اے پی سی سے میاں نواز شریف کے خطاب سے خواجہ آصف وجد میں آ گئے کہ دربار اجڑ بھی جائیں تو اہل دربار کی عادتیں نہیں جاتیں۔فرمایا : یہ خطاب نصاب میں شامل کیا جانا چاہیے۔اب جب ’’ بیانیہ‘‘ نصاب کی صورت گری پر مچل ہی گیا ہے تو لازم ہے ایک طالب علم کے طور پر ہم بھی اپنی معروضات پیش کر دیں۔ نصاب میں نہ سہی ، کیا جب کہیں حاشیے میں ہی جگہ مل جائے ۔ میاں صاحب نے اصول پسندی کے رجز تو بہت کہہ دیے ۔ یہ تو یقینا متن میں لکھے جائیں گے۔
مزید پڑھیے


اچھی تحریر کیا ہوتی ہے؟

جمعرات 17  ستمبر 2020ء
آصف محمود
اچھی تحریر کیا ہوتی ہے؟مدت ہوئی یہ سوال کسی سے پوچھا تھا۔یہ رہنے دیجیے کہ کس سے پوچھا تھا۔ جواب آیا: ’’ اچھی تحریر وہ ہے جسے لکھتے ہوئے آپ شبِ فراق میں کھڑے ہوں اور لکھ لیں تو روزِ انتظار آ جائے، جو لکھتے ہوئے بھی آپ پر بیت جائے اور لکھنے کے بعد پڑھتے ہوئے بھی وہ آپ پر بیت جائے۔آپ لکھنے کے بعد اپنی ہی تحریر بار بار پڑھ سکتے ہیں اور وہ آپ کو لطف دیتی ہے تو وہ اچھی تحریر ہے ورنہ آپ بلاوجہ مشقت اٹھا رہے ہیں‘‘ دلی اجڑی توسوگوار غالب نے کیا کچھ لکھ
مزید پڑھیے


عرب اسرائیل قربت : اوورسیزپاکستانیوں کے لیے ایک چیلنج

منگل 15  ستمبر 2020ء
آصف محمود
خلیجی ممالک اور اسرائیل ایک دوسرے کے قریب آ رہے ہیں۔اس قربت میں ان پاکستانیوں کے لیے بہت بڑا چیلنج موجود ہے جو خلیجی ممالک میں کام کر رہے ہیں۔ ذرا سی غلطی اور جذباتیت ان محنت کش پاکستانیوں کے لیے ایسا بحران پیدا کر سکتی ہے جو پاکستانی معیشت کی چولیں ہلا سکتا ہے۔ سوال یہ ہے کیا وزارت خارجہ اور اوورسیز کی وزارت کو اس ابھرتے چیلنج کی سنگینی اور معنویت کا کچھ احساس ہے اور کیا اس چیلنج سے نبٹنے کے لیے ہم نے کسی بھی سطح پر کوئی تیاری کر رکھی ہے؟ سید کلیم اللہ بخاری تحریک
مزید پڑھیے



موٹر وے سانحہ: چند گزارشات

هفته 12  ستمبر 2020ء
آصف محمود
موٹر وے پر سانحے کی صورت جو قیامت اتری اس کو تین زاویوں سے دیکھنے کی ضرورت ہے: انتظامی، قانونی اور سماجی۔ آئیے ان تینوں کا مختصر ترین جائزہ لیتے ہیں۔ حادثہ موٹر وے کے ساتھ لنک روڈ پر ہوا ۔سوال یہ ہے کہ ٹال پلازے سے باہر کا حصہ جو بسا اوقات کئی کلومیٹر پر مشتمل ہوتا ہے کس کی عملداری میں ہے؟ اسلام آباد ہی کو دیکھ لیجیے ٹال پلازے سے پشاور موڑ تک قریبا آٹھ کلومیٹر کا فاصلہ ہے ، لاہور موٹر وے سے گوجرانولہ کا لنک روڈ تو اذیت کی حد تک طویل ہے۔ یہاں کبھی
مزید پڑھیے


اسلام آباد کی ہائوسنگ سوسائیٹیاں ، بے بس عوام اور لاتعلق حکومت

منگل 08  ستمبر 2020ء
آصف محمود
اسلام آباد پھیل رہا ہے۔ایک دارالحکومت نے پھیلنا ہی ہوتا ہے۔ یہ پھیلائو اپنے ساتھ بہت سارے چیلنجز لا رہا ہے۔نئی نئی ہائوسنگ سوسائٹیاں بن رہی ہیں۔مرضی کے ضابطے ہیں ۔کوئی پوچھنے والا نہیں۔ عوام بے بس ہیں اور حکومت ایک طرف لاتعلق بیٹھی دہی کے ساتھ کلچہ کھا رہی ہے۔ آدمی حیرت سے سوچتا ہے کیا دارالحکومت ایسے آباد ہوتے ہیں؟ نیو ایئر پورٹ کے اطراف ہائوسنگ کالونیوں کا ایک جہاں آباد ہو چکا ہے۔ کچھ نجی ہیں اور کچھ سرکاری۔سارا شہر ان کے بینرز اور ہورڈنگز سے بھرا پڑا ہے۔ایک سوسائٹی نے مجھے بہت متاثر کیا۔عین موٹر وے کے
مزید پڑھیے


بلاول صاحب :امداد لیں مگر حساب دیں

هفته 05  ستمبر 2020ء
آصف محمود
بلاول صاحب کو وفاق سے مزید رقم کی توقع ہے اور ان کا مطالبہ ہے لوگوں کی مشکلات کم کرنے کے لیے ان کی مدد کی جائے۔ سوال مگر یہ ہے کہ اٹھارویں ترمیم کے بعد صوبے اپنے وسائل لے چکے ہیں تو اب وفاق سے مزید رقم کی توقع اور امداد کا مطالبہ کس لیے؟ کیا اس سوال سے جمہوریت کو کالی کھانسی ، نزلہ اور زکام جیسی دیگر مہلک بیماریاں لاحق ہونے کا خطرہ ہے کہ اٹھارویں ترمیم میں حاصل ہونے والے وسائل کہاں گئے کہ اب وفاق سے مدد مانگی جا رہی ہے؟ اٹھارویں ترمیم کے سب
مزید پڑھیے


تحریک انصاف کو ’’ تحریک انصاف‘‘ کی ضرورت ہے

جمعرات 03  ستمبر 2020ء
آصف محمود
تحریک انصاف کی حکومت کی اصل طاقت ’’ تحریک انصاف‘‘ ہے اور تحریک انصاف بھان متی کے اس کنبے کا نام نہیں ہے جسے وفاقی کابینہ کہتے ہیں۔ تحریک انصاف اس امید کا نام ہے جو دیرینہ کارکنان کی آنکھوں میں دیے کی صورت جگمگاتی ہے۔ الیاس مہربان کو دیکھتا ہوں تو صدیق الفاروق یاد آتے ہیں یا یوں کہہ لیجیے صدیق الفاروق کو دیکھتا ہوں تو الیاس مہربان یاد آتے ہیں۔مشرف دور میں نیب نے صدیق الفاروق کو اٹھالیا۔ معاملہ عدالت میں پہنچا تو عدالت نے نیب کے پراسیکیوٹر سے سوال کیا صدیق الفاروق کہاں ہیں؟ پراسیکیوٹر غالبا فاروق
مزید پڑھیے


کراچی کے مسائل پر سیاست کیوں نہ کی جائے؟

منگل 01  ستمبر 2020ء
آصف محمود
جناب شاہد خاقان عباسی نے قوم کی رہنمائی فرماتے ہوئے ارشاد فرمایا ہے کہ کراچی کے مسائل پر سیاست نہ کی جائے اور مجھ جیسا طالب علم حیرت سے بیٹھا سوچ رہا ہے کہ پھر کیا کوٹلی ستیاں کے کریانہ سٹور پر پڑی چنے کی دال کے بھائو پر سیاست کی جائے؟ اہل سیاست کے تضادات کراچی کی بارشوں سے زیادہ سنگین ہوتے جا رہے ہیں اور ان میں سے کراچی میں کھڑے پانی سے زیادہ تعفن اٹھ رہا ہے۔ جناب شاہد خاقان عباسی میدان سیاست کا ایک اہم کردار ہیں۔ ان کی بنیادی پہچان یہی سیاست ہے ورنہ تحصیل راولپنڈی
مزید پڑھیے