BN

اثر چوہان



’’27 اکتوبر 1958ء ۔ اُلّو ۔ ؔرات کے شہبازؔ؟‘‘


معزز قارئین!۔ آج 26 اکتوبر ہے ۔ کل 27 اکتوبر ہوگا ، جب آزاد کشمیر ، مقبوضہ کشمیر اور پاکستان سمیت دُنیا بھر میں آباد کشمیری اور پاکستانی فرزندان و دُختران ، حسب ِروایت ’’مسلم اکثریتی ریاست جموں و کشمیر ‘‘پر بھارت کے قبضے کی یاد سوگ اور احتجاج کے طور پر یوم سیاہ منائیں گے ۔ اِس موضوع پر کل بات کریں گے، لیکن، آج مَیں پختہ عُمر کے پاکستانیوں کی یاددہانی اور نئی نسل کی آگاہی کے لئے 27 اکتوبر 1958ء کا تذکرہ کروں گا اور اُس سے پہلے 7اکتوبر 1958ء کا ۔ 7 اکتوبر 1958ء کو
هفته 26 اکتوبر 2019ء

نواز شریفؔ، زرداریؔ صاحبان!"Health is Wealth"

جمعه 25 اکتوبر 2019ء
اثر چوہان
اردو زبان کی ایک ضرب اُلمِثل کے مطابق ’’ جان ہے تو جہان ہے ، ’’ یعنی اگر رُوحِ زندگی ہے تو ، دُنیا کا سب کچھ ہے ۔ اُستاد شاعر میر تقی میر ؔنے نہ جانے اپنے کس پیارےؔ کو مخاطب کرتے ہُوئے کہا تھا کہ … مِیرعَمد اً بھی ، کوئی مرتا ہے؟ جان ؔ ہے تو، جہانؔ ہے پیارے! معزز قارئین!۔ موت برحق ہے ۔ ہر اِنسان کو ( ہر جاندار کو بھی ) ایک نہ ایک دِن مرنا ہوتا ہے لیکن، مرزا اسد اللہ خان غالبؔ نے شاید اپنے دَور کے مُغل (شاعر) بادشاہ بہادر شاہ ظفر
مزید پڑھیے


بی اماؔںؒ، مادرِ ؔملّت ؒ، مادرِ جمہورؔیت اور آپی جی ؔ!‘‘

بدھ 23 اکتوبر 2019ء
اثر چوہان
آج 23 اکتوبر ہے ۔ آج سابق وزیراعظم ذوالفقار علی بھٹو کی بیوہ، بیگم نصرت بھٹو کی آٹھویں برسی ہے۔ 23 اکتوبر 2011ء کو جب دُبئی میں علیل ؔبیگم نصرت بھٹو کا انتقال ہُوا تھا تو، اُن کے پاس ’’ پاکستان پیپلز پارٹی‘‘ کا عہدہ ؔنہیں تھا اور نہ ہی پارٹی کا کوئی عہدیداؔر؟۔ 23 اکتوبر2015ء کو بھٹو مرحوم کے ’’روحانی فرزند‘‘ ۔ آصف علی زرداری ، صدرِ پاکستان تھے اور اُنہوں نے بیگم نصرت بھٹو کی چوتھی برسی پر اپنی خوش دامنؔ کو ’’مادرِ جمہوریت‘‘ کا خطاب دِیا تھا۔ معزز قارئین!۔ مؤرخین کے مطابق چھٹی صدی قبل از مسیح یونان
مزید پڑھیے


’’بارگاہِ بری سرؔکارؒ میں اور متفرقاؔت ِ اسلام آباد!‘‘

منگل 22 اکتوبر 2019ء
اثر چوہان
معزز قارئین!۔ لاہور میں میرے والدین اور بڑی بیگم اختر بانو چوہان کی قبریں ہیں اور اسلام آباد میں چھوٹی بیگم نجمہ اثر چوہان کی ۔ اِس لحاظ سے مَیں سالہا سال سے لاہور میں حضرت داتا گنج بخش سیّد علی ہجویریؒ اور اسلام آباد میں سیّد شاہ عبداُللطیف کاظمی ، قادریؒ کی کفالت میں زندگی بسر کر رہا ہُوں ۔ تین روز پہلے مَیں نے اپنی بیٹی عاصمہ ، اُس کے شوہر معظم ریاض چودھری اور بیٹے علی امام کے ساتھ اسلام آباد میں سیکٹر "H-8" کے قبرستان میں نجمہ اثر چوہان کی قبر پر حاضری دِی تو،
مزید پڑھیے


’’آزادی مارؔچ میں ، قائداعظمؒ زندہؔ باد کا نعرہ؟‘‘

پیر 21 اکتوبر 2019ء
اثر چوہان
معزز قارئین!۔ مجھے نہیں معلوم کہ امیر جمعیت عُلماء اسلام (فضل اُلرحمن گروپ) کی قیادت میں( ضرب اُلمِثل کے مطابق) آزادیؔ مارچ کا اونٹؔ کس کروٹ بیٹھے گا؟۔ وضعداری کے تقاضے کے تحت فضل اُلرحمن صاحب نے اپنی جمعیت کے دوسرے لیڈروں عبداُلغفور حیدری، سینیٹر طلحہ محمود اور امجد خان صاحبان کے ہمراہ پاکستان مسلم لیگ ( ق) کے صدر چودھری شجاعت حسین اور سپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویز الٰہی سے ملاقات میں فضل اُلرحمن صاحب نے اپنی یہ شرط دُہرائی ہے کہ ’’ (عمران خان کی ) حکومت پہلے مستعفی ہو ، ہم پھر مذاکرات کریں گے!‘‘۔ 20 اکتوبر
مزید پڑھیے




’’خواجہ غریبؔ نوازؒ ، حُسینیتؔ ؑ اور فیضِ عاؔلم ؒ !‘‘

اتوار 20 اکتوبر 2019ء
اثر چوہان
معزز قارئین!۔ آج 20 صفر اُلمظفر ہے اور آج پاکستان سمیت دُنیا بھر کے مسلمانوں، نواسۂ رسولؐ ، سیّد اُلشہداء امام عالی مقام، حضرت امام حُسین علیہ السلام اور اُن کے 72 ساتھیوں ۔ شُہدائے کربلا کے یوم ختم ، چہلم کے موقع پر ، عقیدت و احترام سے تقریبات منعقد کر رہے ہیں اور 18صفر اُلمظفر سے آج تک لاہور میں ، آسودۂ خاک ، سیّد علی ہجویری، حضرت داتا گنج بخش ؒ کے 976 ویں سالانہ عُرس مبارک کے تیسرے روز دُنیا کے مختلف ممالک سے حاضری دینے والے عقیدت مند۔ ’’ فیض عالم‘‘ سے برکتیں سمیٹتے
مزید پڑھیے


جب ’’قائد ِ ملّت ؒ ‘‘نے ، پنڈ ت نہرو ؔکو مُکّا دِکھایا!

بدھ 16 اکتوبر 2019ء
اثر چوہان
آج بانیٔ پاکستان قائداعظم محمد علی جناحؒ کے دست راست ، تحریک پاکستان کے نامور قائد اور پاکستان کے پہلے وزیراعظم ’’قائد ِ ملّتؒ ‘‘68 ویں برسی ہے ۔16 اکتوبر 1951ء کو راولپنڈی کے کمپنی باغ (اب لیاقت باغ) میں ’’قائدِ ملّتؒ ‘‘ کو ڈیوٹی پر موجود پولیس انسپکٹرسیدؔ اکبر نے 2 گولیاں چلا کر اُنہیں شہید کردِیا تھا ، پھر راولپنڈی کے سپرنٹنڈنٹ آف پولیس نجم خان نے پولیس اہلکاروں کو حکم دِیا کہ ’’ گولی چلانے والے ( قاتل ) کو فوراً مار ڈالو ، پھرسیدؔ اکبر ہلاک ہوگیا، پھر پتہ نہیں چل سکا کہ ’’
مزید پڑھیے


’’یادگاری لوحِ مفتی محموؔد کو ، وزیراعظم ہائوس سے ؔاُکھاڑ یں !‘‘

پیر 14 اکتوبر 2019ء
اثر چوہان
معزز قارئین!۔ آج 14 اکتوبر کو امیر جمعیت عُلماء اسلام ( فضل اُلرحمن گروپ )کے والدِ مرحوم مفتی محمود صاحب کی 39 ویں برسی ہے ۔ مجھے نہیں معلوم ؟ کہ ’’ مفتی صاحب کے وُرثا ء ، اُن کی برسی کو کس طرح منائیں گے؟لیکن، پرانی نسل کو یاد دِلانے اور نئی نسل کو آگاہ کرنے کے لئے ، تحریک ِ پاکستان میں مفتی محمود کے کردار کو واضح کرنا ضروری ہے ۔ انگریزوں اور ہندوئوں نے تو، قیام پاکستان کی مخالفت کی ہی تھی لیکن، ہندوئوں کی مُتعصب جماعت ’’ انڈین نیشنل کانگریس‘‘ کے باپو ؔ ۔
مزید پڑھیے


’’فضل اُلرحمن صاحب دُولھاؔ اور حسین نواز شہ بالاؔ؟‘‘

اتوار 13 اکتوبر 2019ء
اثر چوہان
معزز قارئین!۔ 11 اکتوبر کے قومی اخبارات میں ، دامادِ میاں نواز شریف ، کیپٹن (ر) محمد صفدر کے حوالے سے ایک بیان شائع ہُوا تھا کہ ’’ مولانا فضل اُلرحمن ، آزادی مارچ کے دُولھا ؔہیں اور ہم اُن کے ساتھ ہیں‘‘۔اُنہوں نے یہ بھی کہا تھا کہ ’’ مسلم لیگ (ن) کے تمام راہنما ، میاں نواز شریف کی قیادت میں ایک "Page" (صفحہ) پر ہیں اور جیل میں میاں نواز شریف اور مریم نواز بڑے حوصلے میں ہیں اوراُن کے ذہن میں "Clear" ہے کہ ’’ ہم نے آزادی مارچ میں شرکت کرنا ہے اور وہ سب
مزید پڑھیے


بھٹو کی جمہوریت زدہ ؔ، میری اہلیہ کی برسی؟

جمعه 11 اکتوبر 2019ء
اثر چوہان
معزز قارئین!۔ 30 نومبر 1967ء کو ، لاہور میں ڈاکٹر مبشر حسن کے گھر ، جنابِ ذوالفقار علی بھٹو کی چیئرمین شِپ میں جو، اُن کے دو اڑھائی سو دوستوں اور عقیدت مندوں نے ’’ پاکستان پیپلز پارٹی‘‘ قائم کی تو ، اُس کے چار راہنما اصولوں میںایک راہنما اصول تھا کہ ’’ جمہوریت ہماری سیاست ہے ‘‘ لیکن جنابِ بھٹو جب تک حیات رہے ، اُنہوں نے اپنی پارٹی میں بھی کبھی ’’ جمہوریت کو پھلنےؔ ، پھولنے نہیں دِیا، البتہ ایک بار ۔ صِرف ایک بار ، اپنی وزارتِ عظمیٰ کے دور میں ، اپنی اہلیہ ’’
مزید پڑھیے