BN

احسان الرحمٰن


سانحات کی طویل سوگوار قطار


برطانوی تاریخ چرچل کے ذکر کے بغیر آگے نہیں بڑھتی چرچل پر آکر مورخ کا قلم کسی اڑیل گھوڑے کی طرح رک جاتا ہے۔ چرچل نے دوسری جنگ عظیم میں اپنا دفتر کیمبرج یونیورسٹی کے ایک کمرے میں منتقل کرلیا تھاایک صبح اسکا ماتحت دوڑتا ہواآیایا اور بتایا کہ جرمن فوجیں برطانیہ کے سر پر پہنچ گئی ہیں،جرمن طیارے خوفناک بمباری کر رہے ہیں، برطانیہ کی سلامتی کو شدید خطرہ ہے۔چرچل بہت مضبوط اعصاب کامالک تھا اس نے اطمینان سے یہ سب سنا اورسگار کا طویل کش لیتے ہوئے برطانوی آرمی چیف کا پوچھانہ ائیر فورس چیف کو فون کیا
جمعرات 09 دسمبر 2021ء مزید پڑھیے

’’حلوہ پکاؤ۔۔۔‘‘

جمعرات 25 نومبر 2021ء
احسان الرحمٰن
پرانے زمانے کی بات ہے کہتے ہیں ایک ملک کے بادشاہ کا آخری وقت آگیا،سارے وزیر مشیر بادشاہ کے آس پاس جمع ہوگئے وہ سب متفکر تھے کہ اب ملک کیسے چلے گا ،بادشاہ کون ہوگا کہ بادشاہ کی کوئی اولاد نہ تھی سب اسی سوچ میں تھے کہ بادشاہ سلامت نے آخری ہچکی لی اور چل بسے ،بادشاہ کی آخری رسومات کے بعد سب سب سر جوڑ کر بیٹھ گئے ،طے یہ ہوا کہ سورج کی پہلی کرن کے ساتھ ہی جو بھی شخص شہر پناہ میں داخل ہوگا وہ بادشاہ ہوگا ،دوسرے دن سارے وزیر مشیر اپنے بادشاہ
مزید پڑھیے


ہم وطنو! شاباش!

پیر 15 نومبر 2021ء
احسان الرحمٰن
ایسانہیں لگ رہا ہے کہ جیسے سینما پر ایک ہی فلم لگی ہوئی ہے جو اترنے کا نام نہیںلے رہی ،فلم بینوں کو بھی شاباش ہے کہ ان کا دل نہیں بھر رہافلم کا ہر شو کھڑکی توڑ ہوتا ہے ۔مجھے یاد ہے ایک عام آدمی آج جن مسائل پر ماتم کناں ہے تین دہائیاں پہلے بھی وہ انہی پراپنی چھاتی پیٹ رہا تھا کچھ اور عرض کرنے سے پہلے ایک کہانی سنئے کہتے ہیں۔ ایک بادشاہ کو اپنی بادشاہت کی فکر لاحق ہوگئی ،سبب رعایا کی بدحالی تھی ،کھیت کھلیانوں میں جو کچھ اگتا اس کے تین حصے
مزید پڑھیے


’’ انہا ں نوں کی پتہ…‘‘

منگل 02 نومبر 2021ء
احسان الرحمٰن
وہ درمیانی قدو قامت کا ایک عمر رسیدہ شخص تھا ۔اس نے ہاتھ کے اشارے سے لفٹ مانگی ،میں بھی سڑک پر دوڑتی فراٹے بھرتی گاڑی والوں کی طرح جلدی میں تھا اسے نظر انداز کر کے آگے بڑھنے کو تھابلکہ سچ یہ ہے میں آگے جا چکا تھا لیکن اس سے پہلے میری نظر اسکے چہرے پر پڑی وہ بڑی امید سے مجھے دیکھ رہا تھا۔ میری نظریں اسکی نظروں سے ملیں اور بے اختیار بریک پر دباؤ بڑھ گیا۔ میں رک گیا وہ مجھے رکا دیکھ کر جلدی جلدی قدم اٹھانے کی ناکام کوشش کرتے ہوئے میرے پاس
مزید پڑھیے


مہنگائی کاعذاب

پیر 11 اکتوبر 2021ء
احسان الرحمٰن
جاوید ہمارے دفتر کا ڈرائیور ہے،راولپنڈی میں پیر ودھائی کے پاس کسی کچی آبادی جیسے علاقے میں دو کمروں کے مکان میں اپنے چار بچوں،دکھوں کی ماری بیوی او رافلاس زدہ ماحول میں رہتا ہے۔ اس کا مدقوق چہرہ ، پچکے گال ، دھنسی ہوئی آنکھیں اورجھکے کاندھے اسے بنی ریاست کی ’’خوشحالی ‘‘ کی چلتی پھرتی تصویر بتاتے ہیں۔ا پنی پریشانیوں مشکلات کے باوجود جاوید وقت پردفتر پہنچتا ہے، چھٹی کے وقت اکثردفتر کے سامنے کھڑا ملتا ہے مجھے سمجھ نہیں آتی تھی کہ جاوید وقت پر چھٹی کرکے گھر کیوں نہیں جاتا، دفتر کے سامنے کھڑا کیوں
مزید پڑھیے



جیسنڈا نے ٹھیک کیا

پیر 20  ستمبر 2021ء
احسان الرحمٰن
نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم کا میچ سے چند منٹ پہلے میدان میں نہ آنے اور وطن واپسی کے فیصلے پر آپ کو حیرت ہوئی ہوگی مجھے نہیں ہوئی ،آپ کی حیرت بھی دور ہوجائے گی ذرا میرے ساتھ کلینڈر کے ورق الٹ کر اٹھائیس جنوری 1993ء کی سرد صبح امریکی ریاست ورجینیا پہنچیں جہاں سی آئی اے ہیڈ آفس کے سامنے فائرنگ میں دنیا کی طاقتور ترین ایجنسی کے دو اہلکار قتل ہوجاتے ہیں ،یہ نائن الیون سے پہلے امریکہ کے لئے دہشت گردی کا سب سے بڑا واقعہ تھا جس میں قاتل ایسے غائب ہوا جیسے اسے زمین کھا
مزید پڑھیے


’’اصل مسئلہ ‘‘

پیر 13  ستمبر 2021ء
احسان الرحمٰن
یہ چھ برس پہلے کی بات ہے ،میں کراچی کی تھکا دینے والی زندگی سے عاجز آکر اسلام آبادآنے کے لئے پر تول رہا تھا، یہ ایک مشکل فیصلہ تھا لیکن کراچی میں پانی، بجلی ،ٹریفک ،صفائی ستھرائی کے مسائل نے زندگی مشکل ترین بنا رکھی تھی۔ میں اسلام آباد کا حال احوال لینے کے لئے آیا اور اپنے دوست بریگیڈئیر باسط کو اپنی آمد کی اطلاع دی ، سندھ رینجرز میں انکے پاس لیاری ،رنچھوڑ لین جیسے ہنگامہ خیز علاقے تھے ،انہی دنوں باسط بھائی سے مراسم ہوئے جو دوستی میں بدل گئے ،وہ کراچی سے راولپنڈی آگئے تھے
مزید پڑھیے


’’الوداع اے قائد حریت الوداع‘‘

اتوار 05  ستمبر 2021ء
احسان الرحمٰن
اگر کبھی مجھے کائنات کا مصور بہادری ، بے خوفی،ہمت ،حوصلہ ،کمٹمنٹ ،یقین ،جوش اور نظرئے سے رومانس کو مجسم کرنے کا اختیاردیتا تو میں سیدھا سری نگر کے حیدرپورہ میں سید علی گیلانی کے گھر پہنچ جاتا ،سید علی شاہ گیلانی سے میری کبھی ملاقات نہیں ہوئی صرف ایک بار فون پر ہی بات ہوئی ہے اور وہ لمحے میری زندگی کا اثاثہ ہو گئے ،علی گیلانی چلتا پھرتا پاکستان تھے وہ ایک متحرک اور منزل سے پہلے ختم نہ ہونے والی کمٹمنٹ تھے ،ان کے نزدیک پاکستان ماں کی آغوش اور باپ کا وہ کاندھا تھا جس پر
مزید پڑھیے


’’سینتیس برس بعد ماں سے ملاقات‘‘

جمعرات 02  ستمبر 2021ء
احسان الرحمٰن
برسوں پہلے جامعہ کراچی کے شعبہ اردو کے محترم استادجناب رفیق مرحوم مجھے سمجھا رہے تھے کہ زبان اظہار و ابلاغ کا موثرترین ذریعہ تو ہے لیکن مکمل نہیںتب میں سوچتا تھا کہ یہ بھی بھلا کیا بات ہوئی لیکن آج جب میں نے بنگلہ دیش میں ’’زاہدہ‘‘ کو اپنی ماں کی چھاتی سے لگ کر روتے دیکھا تو مجھے سر رفیق مرحوم کی کہی بات سمجھ آگئی ۔ نانی کے نام سے مشہور اماں کا اصل نام زاہدہ ہے ،زاہدہ بنگلہ دیش کے کھلنا شہر کے کسی نواحی گاؤں میں سادہ سی زندگی گزار رہی تھی ۔گھر میں غربت
مزید پڑھیے


’’اصل ہدف ہم ہیں ‘‘

جمعرات 26  اگست 2021ء
احسان الرحمٰن
اب یہی ہونے لگا ہے کہ بدقسمتی سے یہاں کسی خاتون سے بدتمیزی کا کوئی واقعہ رپورٹ ہوتاہے اور وہاں ’’روشن خیال بریگیڈ‘‘اپنی تاریک سوچ کی توپیں دم کرنے کے لئے سوشل میڈیا پر صف آراء ہوجاتا ہے ،خدانخواستہ اگر ملزم داڑھی والا ہو تو پھر معلم مدرس ہدف بنتا ہے او ر اگرملزم کسی دفتر کا صاحب ،بابو یا مسٹر ہو تو تب نشانہ مرد ذات ہوتی ہے۔ سوشل میڈیا کی مختلف ویب سائٹس پر پہلا جملہ ہی یہی ہوتا ہے کہ یہ مرد ہوتے ہی ایسے ہیں ،انہوں نے معاشرے میں اپنی اجارہ داری بنا رکھی ہے۔معذرت کے
مزید پڑھیے








اہم خبریں