BN

احمد اعجاز


باغِ گلِ سرخ اور افتخار عارف


پاکستان کی سماجی و سیاسی تاریخ میں ستر کی دہائی کو یہ امتیاز ہے کہ اس دہائی میں سماجی سطح پر ایک ایسے رومانس نے جنم لیا ،جس نے اُس عہد کے سوچنے اور غوروفکر کرنے والے افراد کے اندر سنہرے خوابوں کی پنیری لگادی،اگرچہ رومانس سے جڑے خواب مذکورہ دہائی میں ہی بکھر گئے تھے ،مگر آج اکیسویں صدی کی تیسری دہائی میں اُن خوابوں کی پرچھائیاں موجود ہیں۔ستر کی دہائی کے شعراواُدبا راتوں کو جاگتے،خواب دیکھتے،اُمیدوں بھری شعری و نثری کائنات تخلیق کرتے اورہمہ وقت ایک خاص قسم کے رومانس کے سحر میں رہتے۔جس دور میں راتیں جاگیں
پیر 21 جون 2021ء مزید پڑھیے

ہم دیکھ رہے ہیں!

جمعرات 17 جون 2021ء
احمد اعجاز
آپ نے بجٹ سیشن میں گھروں میں بیٹھی ہوئی مائوں ،بہنوں اور بیٹیوں کو ’’بڑھ چڑھ‘‘کر جو گالیاں دیں،ہم نے سنی ہیں اورہم آپ کا اندازِ سیاست دیکھ رہے ہیں۔ شیخ سعدی کو ایک شخص سے ملنے کی بڑی چاہ تھی۔اُنھوں نے اُس شخص کی فہم و فراست اور ذہنی بالیدگی کا بڑا تذکرہ سن رکھا تھا ،مگر ملاقات نہیں ہوپارہی تھی۔ہر شخص سے وہ اُن کا پوچھ چکے تھے ،مگر قسمت ملوا نہیں پارہی تھی۔ایک دن شیخ سعدی کہیں جارہے تھے کہ راستے میں ایک شخص نے روک کر کہا، محترم !آپ جس ہستی کو ملنے کا اشتیاق رکھتے ہیں
مزید پڑھیے


ریت کے ٹیلوں میں سکول جاتے بچوں کا مقدر

هفته 12 جون 2021ء
احمد اعجاز
ہمیںبتایا گیا تھا کہ اس صحرائی سفر میں چند ایک چھوٹے بڑے ریت کے ٹیلے آئیں گے، پھر میدانی علاقہ شروع ہوجائے گا،جس میں جھاڑیاں اور صحرائی پودے و پیڑ ہوں گے،پھر ٹاہلیوں کا جنگل آئے گا،بلند و بالا ٹاہلی کی چوٹیوں پر فاختائیں ہوں گی،جو پیار کا دانہ چگتی ہیں اور اَمن کا گیت گاتی ہیں،آگ برساتا سورج ٹاہلی کے گھنے جنگل کے سینے پر اٹک کررہ جائے گا،ہر سُو نرم اور گہرے سائے ہوں گے،یہ جنگل ختم ہوگا تو کشادہ نہر آئے گی ،نہر کا پانی ٹھنڈا اور صاف ہوگا،نہر کے اُس پار سرسبز کھیتوں کی دُنیا شروع
مزید پڑھیے


یہ زندگی تو اِک خواب ہے

پیر 07 جون 2021ء
احمد اعجاز
عمر کے اکتالیس برس بیت جانے کے بعد ،مُجھے پیچھے مُڑ کر دیکھنے کی ضرورت نہیں پڑتی،کہ اکتالیس سال کی گٹھڑی ہمیشہ اُٹھائے رکھی ہے۔معاملہ کچھ یوں رہا،راہِ وفامیں ہرسُو کانٹے،دھوپ زیادہ سائے کم؍لیکن اس پر چلنے والے خوش ہی رہے پچھتائے کم۔اگرچہ ہمارے حصے میں دھوپ زیادہ آئی ،لیکن زندگی کا یہ سفر بہت خوشی خوشی گزاراہے اور گزار رہاہوں،کہ زندگی کے ایک ایک لمحہ کی کوئی قیمت ہی نہیں۔جب بھی مشکل وقت آیاہے تو یہ سوچ کر اُس کا ٹالاکہ کوئی بھی غم،دُکھ،درد زندگی کے وجود کے سامنے کوئی معنی نہیں رکھتا،اگر زندہ ہوں تو یہ غم بھی
مزید پڑھیے


جواداحمد کے لیے دُعا

پیر 31 مئی 2021ء
احمد اعجاز
یہ گذشتہ روز کی بات ہے کہ اسلام آباد کے سیکٹر جی سیون وَن میں چائے کے ڈھابے پر پانچ بجے کے قریب اضافی کرسیاں لگنا شروع ہوگئیں،یہ کرسیاں جو کہ بیس سے پچیس کی تعداد میں تھیں،دیکھتے ہی دیکھتے ترتیب میں لگ گئیں۔یہ اہتمام کرنے والے تین لڑکے تھے ،جن کی عمریں بیس بائیس برس تھیں۔مَیں یہ منظر خاموشی سے دیکھتارہا،یہ گرمیوں کا پہلا دِن تھا ،جب درجہ حرارت چالیس ڈگری کو چھوچکا تھا،تینوں نوجوان کرسیاں لگاتے اور میزوں کی ترتیب ٹھیک کرتے ،پسینہ سے شرابور ہوچکے تھے،پھر ایک اور نوجوان آیا اور اُس نے پیپلزپارٹی کے جھنڈے اور
مزید پڑھیے



وزیرِ اعظم لیہ میں

جمعرات 27 مئی 2021ء
احمد اعجاز
وزیرِ اعظم عمران خان نے لیہ کا دورہ کیا،وزیرِ اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار بھی ہمراہ تھے۔لیہ کی سیاسی تاریخ میں پاکستان پیپلزپارٹی اور مسلم لیگ ن کے اُمیدوار اپنی اپنی باری پر کامیاب ہوتے رہے ہیں۔یہاں اس شہر میں قومی اسمبلی کے دو اور صوبائی اسمبلی کے پانچ حلقے ہیں۔ہر حلقے میں اعلیٰ تعلیمی ادارے موجود ہیں۔تعلیمی سطح پر اس شہر نے خاصی شہرت سمیٹی ہے۔سرکاری تعلیمی ادارے ہوں ،یا نجی، طلبہ وطالبات کو ہمیشہ اعلیٰ سٹاف میسر رہا ہے ،جس کی وجہ سے لیہ کے طلباوطالبات نے متعدد تعلیمی اعزازات اپنے نام کیے ہیں۔لیہ میں صحت کے مراکز بھی
مزید پڑھیے


مسلم لیگ ن کا المیہ اور جہانگیر ترین

پیر 24 مئی 2021ء
احمد اعجاز
دوہزار اَٹھارہ کے عام انتخابات سے ذراقبل اور میاں نوازشریف کے لندن جانے کے بعداور پھر پی ڈی ایم کے قیام کے ساتھ سیاسی وسماجی سطح پر پی ایم ایل این نے ایک مختلف سیاسی جماعت کا تاثر قائم کروایا۔ مسلم لیگ ن کی سیاسی تاریخ میں یہ ایک نیا موڑ تھا، مسلم لیگ ن کے مختلف سیاسی جماعت ہونے کے تاثر نے سیاسی ورکر ز کے اندر رومانوی طرز کا تحرک پیدا کیا،شاید یہی وجہ تھی کہ اس دوران ضمنی انتخابات میں اس کا ووٹرز زیادہ سرگرم دکھائی دیا۔کراچی کے ضمنی الیکشن میں ن لیگ کی کارکردگی قطعی بُری
مزید پڑھیے


ہم خیال گروپ کی تشکیل اور چند سوالات

جمعرات 20 مئی 2021ء
احمد اعجاز
جہانگیر خان ترین ہم خیال گروپ کی تشکیل نے چند سوالات کو جنم دیا ہے۔یہ سوالات سیاسی نظام اور سیاسی پارٹیوں سے وابستہ ہیں۔سیاسی پارٹیوں سے کیا غلطیاں ہوتی ہیں کہ اُن کے اندر سے گروپ تشکیل پاتے ہیںیا اُن کی تشکیل کی جاتی ہے؟پاکستان تحریکِ انصاف ایک ایسی پارٹی ہے ،جس کے اندر سے کسی نئے گروپ کی تشکیل کا گمان تک نہیں تھا،اس کی وجہ یہ ہے کہ عمران خان نے ہمیشہ اپنی جدوجہد کو سیاسی وسماجی تبدیلی سے جوڑا ہے۔عمران خان اور اُن کی سیاسی پارٹی کے بارے یہ تصور پایا جاتا ہے کہ یہ روایتی سیاسی
مزید پڑھیے


خوشاب کا ضمنی الیکشن اور دونوں پارٹیاں

هفته 08 مئی 2021ء
احمد اعجاز
خوشاب کے صوبائی حلقہ پی پی چوراسی کے ضمنی الیکشن میں مسلم لیگ ن نے کامیابی سمیٹی ہے۔اس کامیابی کو میاں شہباز شریف نے میاں نواز شریف کی قیادت میں ترقی کا ووٹ قراردیا ہے۔اس اَمر سے پہلو تہی نہیں کی جاسکتی کہ اس حلقے میں پی ایم ایل این بطور پارٹی اپنا ووٹ بینک رکھتی ہے۔مگر محض پارٹی ووٹ بینک سے اس حلقے سے الیکشن نہ ماضی میں جیتاجاتارہا ،نہ ہی اب ایسا ممکن ہواہے۔یہ حلقہ پنجاب کے دیگر دیہی حلقوں جیسی ساخت رکھتا ہے ،یہاں کا سیاسی کلچر تین طرح کے ووٹ(شخصی،برادری و دھڑا بندی اور پارٹی)سے ترتیب
مزید پڑھیے


این اے 249:ہارجیت کا جائزہ

پیر 03 مئی 2021ء
احمد اعجاز
اُنتیس اپریل کو ہونے والا ،این اے 249کا ضمنی الیکشن کئی حوالوں سے اہمیت رکھتا ہے۔یہاں کل ووٹرز کی تعداد تین لاکھ اُنتالیس ہزار پانچ سو اکانوے تھی جبکہ جن ووٹرز نے ووٹ ڈلا،اُن کی تعداد تہتر ہزارچارسواکہتر تھی۔اس طرح لگ بھگ اکیس فیصد ووٹرز نے ووٹ ڈالا۔ووٹ نہ ڈالنے والوں نے ایسا کیوں کیا؟ا س کی کئی وجوہات ہوسکتی ہیں۔جیسا کہ سیاسی جماعتوں اور آزاد اُمیدواروں سے ووٹرز کا دِل اُوب جانا،ماضی کے منتخب نمائندوں کی کارکردگی سے ووٹرز کی مایوسی میں اضافہ ہونا،موجودہ نمائندوں کا خود کو اہل ثابت کرنے کے بہتر دعوے نہ کرسکنا،ووٹرز کا یہ احساس
مزید پڑھیے








اہم خبریں