BN

اداریہ



راشن تقسیم کمیٹیاں


پنجاب حکومت نے مستحقین میں مفت راشن کے لئے رقم تقسیم کرنے کے لئے کمیٹیاں قائم کر دی ہیں جن کے ذریعے 48گھنٹوں میں 4ہزار روپے فی گھر مستحقین کی دہلیز پر تقسیم کئے جائیں گے۔ حکومت کرونا وائرس کے پھیلائو کو روکنے کیلئے ملک بھر میں مکمل لاک ڈائون سے اس لئے گریزاں تھی کہ ایسا کرنے سے لوگ گھروں میں فاقوں پر مجبور ہو جائیں گے۔ وزیر اعظم عمران خاں بھی متعدد بار مکمل لاک ڈائون سے پہلے لوگوں کے گھروں میں کھانا پہنچانے کا بندوبست کرنے کی بات کرتے رہے ہیں اس مقصد کے لئے وزیر اعظم
منگل 31 مارچ 2020ء

خون کی بیماریوں میں مبتلا بچوں کو نہ بھولیے!

منگل 31 مارچ 2020ء
اداریہ
کرونا وائرس سے لوگوں کی سرگرمیاں اور آمدورفت محدود ہو نے کے باعث خون کا عطیہ کرنے والوں کی تعداد بھی کم ہو گئی ہے۔ اس صورتحال میں تھیلسیمیا، ہیموفیلیااور دوسرے ایسے مریض بچوں کی جان پر بن آئی ہے جنہیں وقفے وقفے سے خون ملنا ضروری ہوتا ہے۔ روزنامہ 92 نیوز کی رپورٹ کے مطابق تعلیمی ادارے، فیکٹریاں، دفاتر اور کام کی دیگرجگہیں چونکہ بند ہیں اسلئے خون عطیہ کرنے والے بھی گھروں تک محدود ہو کر رہ گئے ہیں۔ اس وقت صورتحال یہ ہے کہ بہت سی این جی اوز خون کی بیماریوں میں مبتلا بچوں کیلئے اپنے
مزید پڑھیے


تعمیراتی اور مال برداری سیکٹر کو فعال کرنے کا فیصلہ

منگل 31 مارچ 2020ء
اداریہ
وفاقی حکومت نے تعمیراتی صنعت کو فوری طور پر فعال کرنے‘ مال بردار گاڑیوں کے لئے شاہراہیں کھولنے‘فوڈ سپلائی چین بحال کرنے اور سرمایہ کاروں کو تعمیراتی شعبے میں رعایت دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ وزیر اعظم نے ساتھ ہی ذخیرہ اندوزوں کو انتباہ کیا ہے کہ وہ اگر اپنے مذموم کام سے باز نہ آئے تو ان پر سختی کی جائے گی۔کرونا وائرس کی وجہ سے تمام شعبے دبائو کا شکار ہیں اندریں حالات اگر بہتری کے لئے کچھ تدابیر اختیار کی جا سکتی ہیں تو ان سے ضرور رجوع کیا جانا چاہیے۔ حکومت کی طرف سے ابتدائی فیصلوں
مزید پڑھیے


میڈیا کارکنوں کے لئے حفاظتی کٹس

پیر 30 مارچ 2020ء
اداریہ
وفاق، صوبوں، آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان کے اطلاعات کے وزراء نے کرونا وائرس کو شکست دینے کیلئے صحافیوں کو حفاظتی کٹس فراہم کرنے اور جھوٹی خبروں کے تدارک پر اتفاق کیا ہے۔ طبی اور حفاظتی عملے کی طرح اطلاعاتی شعبے سے وابستہ افراد بھی عوام تک درست خبریں پہنچانے کیلئے کوشاں ہیں لیکن بدقسمتی سے اطلاعاتی شعبے سے وابستہ افراد کے پاس حفاظتی کٹس موجود نہیں ہیں ۔جس کے باعث تین صحافی بھی اس وائرس میں مبتلا ہو گئے ہیں۔ اب وفاق سمیت چاروں صوبوں بشمول آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان کے تمام وزراء اطلاعات نے فرنٹ لائن پر
مزید پڑھیے


پنجاب حکومت کا خوش آئند پیکیج

پیر 30 مارچ 2020ء
اداریہ
پنجاب حکومت نے کرونا وائرس کی وجہ سے پیدا ہونے والی معاشی صورتحال کے پیش نظر صوبے میں 18 ارب روپے کے صوبائی ٹیکسز معاف کر دیئے ہیںجبکہ روزگار کی بندش سے متاثر ہونے والے 25 لاکھ گھرانوں کو 4 ہزار روپے فی گھرانہ ادا کئے جائیں گے۔ کرونا کی وبا روکنے کیلئے حکومت نے ملک بھر میں لاک ڈائون کر رکھا ہے جس کا مقصد لوگوں کو گھروں میں محفوظ رکھ کر اس وبا کو پھیلنے سے روکنا ہے۔ ظاہر ہے لاک ڈائون سے روزی روٹی کے مسائل جنم لے رہے ہیں۔ دیہاڑی دار طبقے کی پریشانیاں بڑھ رہی
مزید پڑھیے




چین کی طرف سے کرونا کے خلاف امداد

پیر 30 مارچ 2020ء
اداریہ
ہر مشکل میں پاکستان کے ساتھ کھڑے رہنے والے دوست چین نے طبی ماہرین اوربڑی مقدارمیں ضروری سامان بھجوایا ہے۔چینی ڈاکٹروں کی8رکنی ٹیم دو ہفتے پاکستان میں قیام کرے گی۔ یہ ٹیم پاکستانی ڈاکٹروں کو کرونا وائرس سے نمٹنے کی تربیت دے گی۔ چین کی طرف سے پاکستان کو جو سامان بھیجا گیا ہے اس میں ایک لاکھ 5ہزار ٹیسٹ کٹس‘77ہزار میڈیکل کور‘10ہزار حفاظتی لباس‘217وینٹی لیٹرز‘ ادویات اور 50ہزار حفاظتی دستانے شامل ہیں۔ پاکستان نے ہنگامی صورت حال سے دوچار پاکستانیوں کے لئے دوست ملک کی امداد پر شکریہ ادا کیا ہے۔ کرونا کئی طرح کے وائرسوں کا خاندان ہے۔ ان
مزید پڑھیے


پنجاب میں دکانیں 8بجے بند کرنے کا فیصلہ

اتوار 29 مارچ 2020ء
اداریہ
وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے کہا ہے کہ جنرل سٹورز اور کریانہ دکانیں صبح 8سے رات 8بجے تک کھلی رہیں گی۔ فیصلے پر آج سے عملدرآمد ہو گا، کسی کو خلاف ورزی کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ حکومت نے ماضی میں کئی مرتبہ بازار شام 8بجے بند کرانے کی کوشش کی تاکہ توانائی کے بحران پر قابو پا لے لیکن یہ کوشش کامیاب نہ ہو سکی۔ اب کرونا وائرس کے پیش نظر حکومت نے صبح 8بجے سے رات آٹھ بجے تک دکانیں بند کرانے کے احکامات جاری کئے ہیں۔ اس سے نہ صرف لوگ گھروں میں
مزید پڑھیے


برآمد ی شعبوں کے لئے ریلیف پیکیج

اتوار 29 مارچ 2020ء
اداریہ
حکومت نے ٹیکسٹائل ‘سپورٹس گڈز، سرجیکل آلات سازی، گارمنٹس اور قالین بافی کی صنعتوں کے لئے 23ارب کے ریلیف پیکیج کی منظوری دی ہے۔ پاکستان کی مجموعی قومی پیداوار میں ٹیکسٹائل کے شعبہ کا حصہ 8.5فیصد ہے جو ملک کی افرادی قوت کے 38فیصد حصہ کو روزگار بھی فراہم کر رہا ہے مگر توانائی بحران کے باعث گزشتہ دو دہائیوں سے یہ اہم شعبہ مسلسل تنزلی کا شکار چلا آ رہا ہے ماضی کی حکومتوں نے اگر قطر سے مہنگی ایل این جی امپورٹ کر کے بجلی اور گیس کی بلا تعطل فراہمی کو یقینی بنایا بھی تو
مزید پڑھیے


بروقت فیصلے ضروری ہیں

اتوار 29 مارچ 2020ء
اداریہ
وزیر اعظم نے کھانے پینے کی اشیا کی قلت کے خدشے سے ملک بھر میں گڈز ٹرانسپورٹ بحال کرنے کی ہدایت کی ہے۔ لاک ڈائون کے دوران عوام کو ضروریات زندگی کی فراہمی کے لئے انہوں نے ٹائیگر فورس قائم کرنے اور ریلیف فنڈ قائم کرنے کا اعلان بھی کیا ہے۔ ٹائیگر فورس کے ساتھ رضا کارانہ خدمات انجام دینے کے آرزو مند نوجوانوں سے کہا گیا ہے کہ وہ 31مارچ سے سٹیزن پورٹل پر اپنی رجسٹریشن کرا سکتے ہیں۔ ٹائیگر فورس کے نوجوان شہریوں کے گھروں تک کھانا پہنچائیں گے۔ وزیر اعظم نے کرونا ریلیف فنڈ سے متعلق بتایا
مزید پڑھیے


خواتین اور نوعمرقیدیوں کی ضمانت کی درخواستیں

هفته 28 مارچ 2020ء
اداریہ
چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ نے کرونا وائرس کے پھیلائو کے خدشہ کے حوالہ سے فیصلہ سناتے ہوئے خواتین ‘ کم عمر اور معمولی جرائم میں ملوث قیدیوں کی ضمانت کے لئے درخواستیں دائر کرنے کا حکم دیاہے۔ اس سلسلہ میں ڈی جی ڈسٹرکٹ جوڈیشری نے صوبے کے تمام سیشن ججز ‘اعلیٰ پولیس حکام‘ ڈپٹی کمشنروں‘ ڈی پی اوز کو مراسلہ بھیجا ہے جس میں کہا گیا ہے کہ معمولی نوعیت کے مقدمات میں قید ملزموں کی ضمانت کی درخواستیں متعلقہ سپرنٹنڈنٹس جیل متعلقہ عدالتوں میں فوری طور پر دائر کریں۔ اس میں شبہ ہی نہیں کہ ملک بھر کی
مزید پڑھیے