BN

ادب



مسرور مرثیہ

اتوار 10 نومبر 2019ء

اشفاق احمد 

بادشاہ اور وزیر ، دونوں ایک ساتھ، جان کے خوف کے مارے، سرکنڈے کی بیڑ میں چھپے بیٹھے تھے اور باغی انہیں ڈھونڈ رہے تھے۔ جب باغیوں کے ژوئیں ژوئیں کرتے نیزے ان کے اردگرد آ کر گرتے تو دونوں سہم کر ایک دوسرے کے ساتھ چمٹ جاتے۔ تلاش کرتے باغیوں کے کتے، لگڑ بگڑ، لومڑ اور پالتوں بجو تخت چھوڑ کر بھاگ جانے والے بادشاہ کی کھوج میں اپنے مالکوں کا ساتھ دے رہے تھے، لیکن دونوں ہی ناکام تھے… باغی بھی اور ان کے پالتو جانور بھی۔ سرکنڈے کے جنگل میں ہر طرف تیز دھار استرے اگے
مزید پڑھیے


گئے وقت کا ملبہ

اتوار 11  اگست 2019ء

ذکیہ مشہدی

’ابا…‘‘ یہ چھوٹا سا، مختصر ترین لفظ عارف کے گلے میں ایک بڑا سا گولہ بن کر پھنس گیا۔

’’ابا…‘‘ اس نے بدقت تمام ہمت جمع کی۔

بڑی سی انگنائی، برآمدے کے کھمبے، ایک محراب میں ٹھکی میخ میں لٹکا مٹھو کا پنجرہ۔ یہ وہی مٹھو ہے کیا جو عارف نے پالا تھا اور اس کے گھر چھوڑنے کے وقت یہاںٹنگا رہتا تھا اور جسے منو ماموں نے گالیاں سکھائی تھیں تو ابا نے سخت ناراض ہو کر اماں کے پورے خاندان کا بخیہ ادھیڑ کر رکھ دیا تھا؟ لیکن طوطے کتنی بھی لمبی عمر پاتے ہوں، چالیس برس تک تو
مزید پڑھیے