ارشاد احمد عارف


کورونا اور ٹڈی دل میں پھنسی حکومت


کورونا پر قابو پانے کی حکومتی کوششوں کو جس عمدگی اور چابکدستی سے باشعورعوام نے ناکام بنایا‘وہ قابل داد نہ سہی ‘بے مثال ضرورہے‘ کورونا کو بازاروں‘دفتروں ‘مذہبی مقامات اور گلیوں سے گھسیٹ کر گھروں میں لانے کی جو تگ و دو ہم نے کی کسی دوسری قوم نے بایدو شاید‘ حکومت نے بھی تنگ آ کر کاروبار کھولا اور ٹرانسپورٹ چلا دی‘ پندرہ مئی سے اب تک عوام کا موج میلہ جاری ہے‘ تاجروں کے من کی مراد پوری ہو رہی ہے اور کورونا کے حوالے سے ایس او پیز پر عملدرآمد توقعات کے عین مطابق عنقا‘ پندرہ روز
اتوار 31 مئی 2020ء

یوم تکبیر پر آمریت اور جمہوریت کی لایعنی بحث

جمعه 29 مئی 2020ء
ارشاد احمد عارف
دو سال سے پاکستان میں یوم تکبیر اس شان و شوکت سے نہیں منایا جاتا جس کا یہ دن حقدار ہے۔ قومی تاریخ میں 28مئی( 1998ء )ہر لحاظ سے قابل فخر اور یادگار دن ہے‘1971ء میں بھارت نے پاکستان کو دولخت کر کے قوم کو احساس جرم میں مبتلا کیا‘ سقوط ڈھاکہ کی خفت مٹانے کے لئے قوم کو اٹھائیس سال انتظار کرنا پڑا‘ بلا شبہ ایٹمی پروگرام کا آغاز ذوالفقار علی بھٹو نے کیا‘ ایک قوم پرست رہنما کے طور پر وہ ایٹمی پروگرام کو ملکی دفاع کا ضامن سمجھتے تھے‘ ڈاکٹر عبدالقدیر خان انہی کی دعوت پر پاکستان
مزید پڑھیے


نہ گفتگو سے‘نہ وہ شاعری سے جائیگا

جمعرات 28 مئی 2020ء
ارشاد احمد عارف
چین نے وہی کیا جو ایک آزاد‘خود مختار ‘خود دار اور غیرت مند ریاست کو زیبا ہے‘ بھارت کے حکمرانوں کی خو غلامانہ ہے‘ صرف نریندر مودی نہیں1947ء سے اب تک برسر اقتدار آنے والے تمام حکمرانوں کا یہی وطیرہ رہا‘ کمزور کے گلے پڑ جائو‘ طاقتور سے واسطہ پڑے تو پائوں پکڑو اور جان بچائو‘ بھارت نے مقبوضہ کشمیر کی طرح لداخ کا سٹیٹس تبدیل کرنے کی کوشش کی اور اس کے فوجیوں نے لداخ کی سرحد پر متنازعہ علاقے میں خرمستیاں شروع کر دیں‘ چین نے ایک دو بار وارننگ دی مگر غالباً امریکی شہ پرظبھارتی حکومت نے
مزید پڑھیے


وقت کرتا ہے پرورش برسوں

اتوار 24 مئی 2020ء
ارشاد احمد عارف
دس سال میں چار فضائی حادثے اور ایک ہزار کے قریب جانوں کا ضیاع۔ یہ بطور ریاست پاکستان اور اس کے اداروں سول ایوی ایشن و پی آئی اے کے لئے باعث بدنامی و ندامت ہے‘ دنیا بھر میں ہوائی سفر محفوظ ترین سمجھا جاتا ہے مگر پاکستان میں غیر محفوظ ہو کر رہ گیا‘ پی آئی اے ایک زمانے میں دنیا کی بہترین ایئر لائن تھی‘1962ء میں ایشیا کے صرف دو ممالک کی ایئر لائنز کے پاس جیٹ طیارے تھے ان میں سے ایک پاکستان تھا‘ دوسرا جاپان۔ جناب فیض احمد فیض نے پی آئی اے کے لئے ’’باکمال
مزید پڑھیے


جس کا کام اُسی کو ساجھے

جمعه 22 مئی 2020ء
ارشاد احمد عارف
یک نہ شد دو شد‘ عید کی خوشیوں میں کھنڈت ڈالنے کے لئے پشاور کے مفتی شہاب الدین پوپلزئی کافی نہ تھے کہ وفاقی وزیر سائنس فواد چودھری بھی آ نکلے۔ عید محض ایک تہوار نہیں‘ نماز عید کی ادائیگی مذہبی فریضہ ہے کلمہ گو رمضان المبارک کے اختتام پر اظہار تشکر کے لئے جس کا اہتمام کرتے ہیں‘ رمضان ختم ہونے سے قبل عید کا انعقاد اور یکم شوال کے دن روزہ رکھنا شرعاً ممنوع ہے۔ اسی باعث نماز روزے کے پابند مسلمان عیدالفطر کی ادائیگی کے لئے رویت ہلال کو یقینی بناتے ہیں کہ اپنے مہینے بھر کی
مزید پڑھیے



ایک ڈرامے کی مار

جمعرات 21 مئی 2020ء
ارشاد احمد عارف
رمضان المبارک اس بار معمول کے مطابق پاکستانی عوام کی اکثریت کے لئے خیرو برکت اور دائمی مسرّت کا پیغام لایا‘ کورونا کی وجہ سے کلمہ گو مسلمان ویسے بھی توبہ و استغفار میں مشغول تھے‘ بیت اللہ اور مسجد نبوی کے علاوہ عالم اسلام میں مساجد کی بندش سے افسردہ لوگوں کو یہ پریشانی لاحق تھی کہ اللہ تعالیٰ نے معلوم نہیں کن گناہوں اور خطائوں کی پاداش میں ہم پر اپنی رحمت کے دروازے بند کر دیے‘ یہ اللہ تعالیٰ کے ذکر سے مُنہ موڑنے کا نتیجہ ہے ناشکری کا عذاب یا اس کے محبوب ﷺ کی تعلیمات
مزید پڑھیے


دنیا بدلی، دنیا کا مزاج بدلا

منگل 19 مئی 2020ء
ارشاد احمد عارف
بالآخر سپریم کورٹ آف پاکستان نے عوام،کاروباری برادری اور حکومت کی مشکل آسان کر دی، ’’جان ہے تو جہان ہے‘‘ کے بجائے ’’چمڑی جائے پر دمڑی نہ جائے‘‘ کے محاورے پر یقین رکھنے والے ’’باشعور‘‘ عوام اور تاجر کاروبار کی بندش سے تنگ تھے، بجا کہ طویل عرصہ تک کاروبار بند رکھا جا سکتا ہے نہ معمولات زندگی منجمد، مگر پاکستان میں لاک ڈائون ہوا کب؟ تین دن تک لوگ خوف کا شکار رہے اور گھروں سے باہر نکلتے ہچکچائے، بقیہ ڈیڑھ دو ماہ کے دوران معمولات زندگی کم و بیش بحال ہو گئے۔ سماجی فاصلے اور سینیٹائزر، فیس ماسک،
مزید پڑھیے


بحران سے موقع پیدا کرنا

جمعه 15 مئی 2020ء
ارشاد احمد عارف
گاہے پریشان ہوتی ہے‘ یوں لگتا ہے ریاست کرپٹ‘ بلیک میلر اور عوام دشمن مافیا کے سامنے گھٹنے ٹیک رہی ہے‘ منی لانڈرنگ اور قومی خزانے کی لوٹ کھسوٹ کے مرتکب افراد کو سزا ملی نہ اب تک کسی سزا یافتہ مجرم سے لوٹی دولت اگلوائی گئی لیکن جب تک جنگ جاری ہے‘ نیب کا ادارہ اور عمران خان کا عزم برقرار ہے‘ کسی ملزم اور مجرم کے خلاف آخری اور حتمی فیصلہ نہیں آتا‘ پہلے کی طرح وہ باعزت بری ہو کر عوام کے سامنے فتح کا نشان نہیں بناتا مایوسی کی گنجائش نہیں‘ مایوسی ویسے بھی گناہ ہے
مزید پڑھیے


کچھ سانوں مرن دا شوق وی سی

جمعرات 14 مئی 2020ء
ارشاد احمد عارف
لاہور کی مصروف بازاروں میں خریداروں کا ہجوم ہے اور حکومت کے طے کردہ ایس او پیز کی مٹی پلید ہو رہی ہے۔ یہ خلاف توقع ہے نہ غیر معمولی واقعہ! مایوسی صرف ان خوش فہموں کو ہوئی جن کا خیال تھا کہ کاروباراور بازار کھلے کے بعد دکاندار اور خریدار احتیاطی تدابیر کو ملحوظ رکھیں گے صرف نوجوان اور ادھیڑ عمر کے دستانے اور ماسک پہنے‘ سینائٹزر کی شیشیاں ہاتھ میں پکڑے مرد و خواتین بازاروں کا رخ کریں گے‘ عجلت میں انتہائی ضرورت کی اشیا خرید کر گھروں کو لوٹ جائیں گے ‘کوئی بزرگ ان کے ساتھ ہو
مزید پڑھیے


چھیڑیاچِڑ

بدھ 13 مئی 2020ء
ارشاد احمد عارف
ارطغرل ڈرامہ پاکستان میں بعض لوگوں کی ویسی ہی چڑ بنتا جا رہا ہے جیسی چین امریکی صدر ٹرمپ کے لیے، ٹرمپ کا معاملہ یہ ہے کہ جب ووہان میں کورونا وائرس نے سر اُٹھایا اور ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن نے اس موذی مرض کے عالمی وبا میں بدلنے کا اندیشہ ظاہر کیا تو امریکی صدر نے عوامی جمہوریہ چین کا مذاق اڑانا شروع کر دیا، ڈاکٹر فاوچی نے جو ان دنوں امریکی صدر کے مشیر تھے، ڈبلیو ایچ او کے مؤقف کی تائید کی تو امریکی صدر اس پر بھی چڑھ دوڑے، اسے چین سے مرعوب اور امریکی ریاست و
مزید پڑھیے