BN

ارشاد احمد عارف


غیرت ہے بڑی چیز


نیوزی لینڈ کرکٹ ٹیم کی بن کھیلے وطن واپسی پر قومی سوگ ابھی ختم نہیں ہوا تھا کہ انگلینڈ کرکٹ بورڈ نے بھی ٹیم بھیجنے سے انکار کر دیا۔ کھیل کو کھیل نہ سمجھنے اور کھیل کے پیچھے کارفرما کھیل پرسنجیدگی سے توجہ نہ دینے کا نتیجہ ہے کہ صرف پاکستان کرکٹ بورڈ ہی نہیں، حکمران بھی حواس باختہ ہیں اور اپوزیشن حکمرانوں کی بے چینی اور بے بسی سے لطف اندوز ہو رہی ہے۔ بلاشبہ صرف پاکستان ہی نہیں برطانوی نو آبادیاتی نظام کا حصہ رہنے والے تمام ممالک میں کرکٹ پسندیدہ کھیل ہے اور ان ممالک کی سماجی
بدھ 22  ستمبر 2021ء مزید پڑھیے

ارتعاش

جمعرات 16  ستمبر 2021ء
ارشاد احمد عارف
امور سیاست و ریاست پر غور و فکر اور بحث کرنے والے دانشوروں اور فلسفیوں نے اچھی حکمرانی کا ایک گُر یہ بھی بیان کیا ہے کہ معاشرے کو پرسکون رکھا جائے‘بلا وجہ ارتعاش پیدا نہ کیا جائے‘معاشرے اور ملک بنیادوں‘دیواروں اور ستونوں پر ایستادہ مسقّف عمارت کی طرح ہوتے ہیں۔ گاہے قدیم اور بوسیدہ عمارتیں اپنی طبعی عمر پوری کرنے کے باوجود محض چھیڑ چھاڑ نہ کرنے اور لیپا پوتی کرتے رہنے کے سبب عرصہ دراز تک قائم رہتی ہیں جبکہ کنکریٹ سے بنی مضبوط عمارتیں دیکھتے ہی دیکھتے ملبے کا ڈھیر بن جاتی ہیں۔ زلزلے کسی عمارت کی بنیادوں
مزید پڑھیے


پاکستان میں قبول اسلام جرم

بدھ 15  ستمبر 2021ء
ارشاد احمد عارف
برصغیر کے بے مثل خطیب سید عطاء اللہ شاہ بخاری نے اپنے ملاقاتی نوجوان طلبہ سے کہا ’’بیٹے آپ داڑھی کیوں نہیں رکھتے‘ یہ سنت رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ہے۔‘‘ ایک حاضر جواب طالب علم فی الفور بولا ’’شاہ جی اسلامیہ کالج میں داڑھی رکھنا مشکل ہے‘ ہم ساتھی غیر مسلم طلبہ کو کیا منہ دکھائیں گے۔‘‘ شاہ جی نے ٹھنڈی سانس بھر کر کہا ’’واقعی بیٹا اسلامیہ کالج میں داڑھی رکھنا مشکل بلکہ ناممکن ہے‘ خالصہ کالج میں آسان ہے جہاں سارے سکھ طلبہ باریش ہیں۔‘‘ ان دنوں مذہب کی جبری تبدیلی کے ایک قانونی بل کے
مزید پڑھیے


اِک آگ کا دریا ہے اور ڈوب کے جانا ہے

جمعه 10  ستمبر 2021ء
ارشاد احمد عارف
آئندہ انتخابات الیکٹرانک مشینوں کے ذریعے کرانے کا حکومتی فیصلہ فی الحال اپوزیشن کو قبول ہے نہ الیکشن کمشن آف پاکستان کو منظور‘حکومت اپوزیشن کے بارے میں یہ کہہ سکتی ے کہ وہ ’’میں نہ مانوں‘‘ کی روائتی پالیسی پر گامزن ہے‘عمران خان نے مدمقابل سیاستدانوں کو اس مقام پر لاکھڑا کیا ہے کہ وہ حکومت کی نیت پر شک کرتے‘اقدامات کی مخالفت کو کارثواب سمجھتے ہیں‘عمران خان اگر کہے کہ سورج مشرق سے نکلتا‘ مغرب میں غروب ہوتا ہے تو اپوزیشن شاید اسے بھی ’’سلیکٹڈ‘‘ کی درفنطنی قرار دے۔ ؎ زاہد ثبوت لائے جو
مزید پڑھیے


یہ دنیا ہے یہاں ہر بات ممکن ہے

جمعرات 09  ستمبر 2021ء
ارشاد احمد عارف
مستقبل میں کیا ہو گا؟علیم و خبیر اللہ ہی بہتر جانتا ہے‘میرا مگر خیال ہے کہ اب میڈیا کی باری ہے‘بیس سال تک اپنی عسکری قوت‘سائنسی ترقی اور ماڈرن ٹیکنالوجی سے ڈرا ڈرا کر امریکہ نے پوری دنیا کا خون خشک کئے رکھا‘پاکستان ہی نہیں ہر مسلم ریاست میں ایک نسل جوان ہوئی جس نے افغانستان میں امریکی ٹیکنالوجی اور عسکری صلاحیت کی شان میں قصیدے سنے‘یقین کیا کہ افغانستان میں طالبان کبھی دوبارہ سر اٹھائیں گے نہ ملا عمر کے عمامہ پوش پیرو کار ایوان اقتدار کے اردگرد پھٹکیں گے‘ افغانستان کے مالک اب حامد کرئی‘عبداللہ عبداللہ‘عبدالرشید دوستم‘
مزید پڑھیے



7ستمبر

منگل 07  ستمبر 2021ء
ارشاد احمد عارف
آج 7ستمبر ہے‘سینتالیس سال قبل اسی روز پاکستانی پارلیمنٹ نے متفقہ تاریخی فیصلہ سے ایک سو سال پرانا مذہبی مناقشہ ختم کیا‘یہ بھی حسن اتفاق ہے کہ پارلیمنٹ کو یہ فیصلہ کرنے کا موقع اس گروہ نے خود فراہم کیا جو عشروں سے مسلسل احتجاج کے باوجود مسلم اکثریت کے سینے پر مونگ دل رہا تھا حالانکہ تصوّر پاکستان کے خالق علامہ اقبال تقسیم برصغیر سے قبل جواہر لال نہرو کے نام ایک خط میں اس اقلیتی گروہ کو اسلام اور ہندوستان کا غدار قرار دے چکے تھے‘1974ء میں تحریک ختم نبوت کا آغاز کیسے ہوا‘ہر طبقہ فکر کے
مزید پڑھیے


کھڑی ڈیندی ہاں سنیہڑے انہاں لوکاں کوں

اتوار 05  ستمبر 2021ء
ارشاد احمد عارف
92سالہ ضعیف العمر‘مختلف جسمانی عوارض کے شکار نحیف و ناتواں سید علی گیلانی کی طبعی موت پر برصغیر پاک و ہند میں سوگ کی کیفیت‘بھارتی حکومت اور مقبوضہ جموں و کشمیر میں تعینات سات لاکھ فوج کی بدحواسی و درندگی سے یہ حقیقت آشکار ہوئی کہ دلیر اور نڈر انسان پہاڑی کا چراغ ہے ۔اپنوں کی عقیدت و محبت کا مرکز اور بیگانوں کے دل و دماغ کی چبھن‘اپنے ایسے فرد فریدکی عزت کرتے اور بیگانے خوف کھاتے ہیں‘موجودہ صدی میں قائد اعظم‘ہوچی منہ‘آیت اللہ خمینی‘نیلسن منڈیلا‘ملا محمد عمر کے بعد سید علی گیلانی نے ثابت کیا کہ بزدل اور
مزید پڑھیے


اسلامی بنیاد پرستی

جمعرات 02  ستمبر 2021ء
ارشاد احمد عارف
پروفیسر محمد منور مرزا مرحوم ماہر اقبالیات کے طور پر عشروں تک عاشقان اقبالؒ کے دلوں کو گرماتے‘روحوں کو تڑپاتے رہے‘اقبالؒ کی طرح اسلام ان کا دیس تھا اور وہ صحیح معنوں میں مصطفویؐ تھے‘ علامہ عبدالستار عاصم کا اللہ تعالیٰ بھلا کرے ‘انہوں نے قلم فائونڈیشن کے نام سے طباعتی ادارہ قائم کر کے نامور اہل قلم کی تحریروں کی اشاعت کا بیڑا اٹھایا ‘ پروفیسر محمد منور مرزا کو بھی نہیں بھولے‘گزشتہ دنوں ’’مشاہدہ حق کی گفتگو‘‘ کے عنوان سے انہوں نے مرزا صاحب کے جنرل ضیاء الحق شہید کے حوالے سے شائع شدہ مضامین کو کتابی شکل
مزید پڑھیے


آپ نے یاد دلایا تومجھے یاد آیا

منگل 31  اگست 2021ء
ارشاد احمد عارف
یہ آج سے بائیس تیس سال پہلے کی بات ہے‘ پاکستان نے پہلی بار غوری میزائل کا تجربہ کیا جس نے خطے میں پاکستان کے سائنس دانوں اور تکنیکی ماہرین کی دھاک بٹھا دی‘ غوری میزائل کے تجربے کے بعد صرف عوام ہی نہیں عسکری ماہرین بھی یہ سوچنے لگے کہ غوری میزائل ابتدا ہے‘ کسی نہ کسی دن پاکستان نیوکلیئر دھماکہ بھی کر گزرے گا کہ درویش منش سائنس دان عبدالقدیر خان نے تیس سال صرف غوری میزائل کی تیاری پر صرف نہیں کئے ‘ ان کی پوٹلی میں اور بھی بہت کچھ ہوگا۔ میں دفتری کام کے سلسلے
مزید پڑھیے


یہ کہاں کی دوستی ہے کہ بنے ہیں دوست ناصح

جمعرات 26  اگست 2021ء
ارشاد احمد عارف
افغان طالبان کو دنیا بھر سے جو مفت مشورے مل رہے ہیں‘انہیں سن اور پڑھ کر لگتاہے کہ پورا کرہ ارض ‘ امن و سکون کا گہوارہ بن چکا ہے‘شمال سے جنوب‘مشرق سے مغرب تک انسانی حقوق بالخصوص خواتین کے حقوق سوفیصد محفوظ ہیں‘صحافی اور صحافت آزاد عام شہری مطمئن و پرسکون‘کہیں ظلم ہے نہ ناانصافی اور امریکہ‘یورپ‘افریقہ‘ایشیا‘ عالم عرب میں ہر جگہ اپنے سیاسی ‘مذہبی ‘نسلی‘ لسانی مخالفین کو کھلے دل سے گلے لگانے کا رواج ہے‘بس ایک افغانستان رہ گیا جہاں گوانتاناموبے اور ابو غریب جیل جیسے عقوبت خانے ڈاکٹر عافیہ صدیقی اور سید علی گیلانی ایسے قیدی
مزید پڑھیے








اہم خبریں