BN

ارشاد احمد عارف



کرونا اور صور اسرافیل


صور اسرافیل علامّ الغیوب اللہ تعالیٰ ہی جانتا ہے کب پھونکا جائے گا؟کرونا کے معمولی جرثومے نے مگر قیامت کی ایک ادنیٰ جھلک دکھا دی ہے‘ یہ قیامت کا منظر نہیں تو کیا ہے کہ چین کے شہر ووہان میں ایک جرثومے نے کئی ہفتے تک تباہی پھیلائے رکھی‘ جدید ترین مواصلاتی نظام بالخصوص خلا میں موجود مصنوعی سیاروں(سیٹلائٹ) کے ذریعے دنیا بھر میں ایک ایک پل پل اور انسان تو انسان چیونٹیوں کی نقل و حرکت سے مکمل آگہی کا دعویدار امریکہ دیکھتی آنکھوں ‘ سنتے کانوں سے اس تباہی کے مناظر اور حضرت انسان کی بے بسی کو
اتوار 29 مارچ 2020ء

بے نظیر بھٹو کا اسیر

جمعه 27 مارچ 2020ء
ارشاد احمد عارف
ڈیپریشن سے بچانے کے لئے کرونا کا ذکر موقوف کرتے ہوئے میجر(ر)آفتاب احمد کی کتاب ’’ہارن کھیڈ فقیرا‘‘ کے چند صفحات قارئین کے ذوق سلیم کی نذر‘ جنرل ضیاء الحق کے اسیر نے بے نظیر بھٹو کے عہد میں اپنی اسیری کا ذکر کیا ہے‘ لکھتے ہیں‘‘ ’’5جنوری 1994ء کو پاکستان کے پھانسی پانے والے وزیر اعظم ذوالفقار علی بھٹو کی سالگرہ کے روز اس کے گھر پہ سندھ پولیس کے وحشیانہ حملے کے نتیجے میں گرفتار بلاہونے کے بعد میں اور میرے گیارہ ساتھی اسیر اب بدنام زمانہ سکھر جیل کی بھٹائی وارڈ میں بند تھے۔ گزشتہ کئی ماہ
مزید پڑھیے


دنیا بدل گئی

جمعرات 26 مارچ 2020ء
ارشاد احمد عارف
حکومت اور قومی اداروں پر تنقید بہت ہو چکی‘ کمزوریاں اجاگر ہوئیں اور لاک ڈائون میں تاخیر کی ذمہ داری وزیر اعظم عمران خان نے قبول کی‘نقطہ نظر اب بھی ان کا یہی ہے کہ لاک ڈائون سے غریب عوام بالخصوص دیہاڑی دار مزدوروں‘ رکشے‘ ریڑھی ‘ چھابڑی والوں کی مشکلات بڑھیں گی اور کرونا کے مقابلے میں مکمل لاک ڈائون شائد زیادہ نقصان دہ ہو‘ توقع یہ تھی کہ پارلیمانی کانفرنس میں اپوزیشن وزیر اعظم کے اس بیانیے کے مدمقابل قابل عمل تجاویز پیش کرے گی مگر لفاظی کے سوا میاں شہباز شریف ‘ بلاول بھٹو اور دیگر لیڈروں
مزید پڑھیے


کرونا وائرس‘ مودی وائرس اور ہم

منگل 24 مارچ 2020ء
ارشاد احمد عارف
پنجاب میں لاک ڈائون کے اعلان کے بعد صرف اسلام آباد کا وفاقی ایریا باقی ہے جہاں عملاً کاروباری سرگرمیاں بند ہیں‘ دفعہ 144نافذ ‘فوج موجود اور آمدو رفت محدود مگر حکومت نے باضابطہ لاک ڈائون کا اعلان نہیں کیا‘ وزیر اعظم عمران خان کی طرف سے لاک ڈائون نہ کرنے کی دلیل کو پیپلز پارٹی کے وزیر اعلیٰ مراد علی شاہ ‘مسلم لیگ کے راجہ فاروق حیدر نے مانا نہ تحریک انصاف کے وزراء اعلیٰ سردار عثمان خان بزدار اور محمود خان قائل ہوئے‘ وقت اور حالات کے تقاضوں کا درست ادراک نہ کرنے والے لیڈر کو اپنے پیروکاروں
مزید پڑھیے


نہ ہو جس کو خیال آپ اپنی حالت کے بدلنے کا

اتوار 22 مارچ 2020ء
ارشاد احمد عارف
صدیوں قبل قحط نے دمشق کے خوش لقا‘ خوش طبع‘ خوش ذوق شہریوں کا جو حال کیا تھا‘ وہ اب کرونا وائرس دنیا کے 185ممالک کے ہنستے بستے باشندوں کا کر رہا ہے ؎ چناں قحط سالے شد اندر دمشق کہ یاراں فراموش کردند عشق (ایک سال دمشق میںایسا خوفناک قحط پڑا کہ لوگ عشق تک بھول گئے)۔ شیخ مصلح الدین سعدی کی ندرت فکر قابل داد ہے کہ عشق میں عموماً انسان کو بھوک پیاس کی پروا نہیں رہتی مگر دمشق میں بھوک نے عشق بھلا دیا۔ کرونا وائرس سے کوئی امیر و طاقتور محفوظ ہے نہ
مزید پڑھیے




کرنے کے کچھ کام

جمعه 20 مارچ 2020ء
ارشاد احمد عارف
تنقید آسان ہے اور الزام تراشی ہمارا قومی مشغلہ ۔ آزمائش کی گھڑی ہے اور قوم کو مقابلے پر تیار کرنے کی ضرورت ۔ہمارے سیاستدان اور حکمران مگراب بھی ایک دوسرے کو نیچا دکھانے کی دیرینہ بیماری میں مبتلا۔ بیان بازی جاری ہے اور وبائی مرض پر سیاسی کاروبار چل رہا ہے۔ دانش مندی کا تقاضا حالانکہ یہ ہے کہ حکومت اور اپوزیشن دونوں چند ہفتے کے لئے سیاسی سرگرمیاں معطل کر کے عوام کی رہنمائی ‘آگہی اور عملی امداد پر توجہ دیں ۔کرونا وائرس نے حملہ پوری انسانی برادری پر کیا ہے ۔کرونا نے گلوبل ویلیج کو حقیقت کا
مزید پڑھیے


موقع

جمعرات 19 مارچ 2020ء
ارشاد احمد عارف
کرونا وائرس نے انسان کو ایک بار پھر سوچنے کا موقع دیا ہے ؎ نہ تھا کچھ تو خدا تھا، کچھ نہ ہوتا تو خدا ہوتا یہ اللہ وحدہ لا شریک تھا جس نے تہذیب و تمدن، سائنس و ٹیکنالوجی کے تصور سے نا آشنا انسان کو چاروں طرف پانی سے گھری زمین پر زندہ رکھا، زندہ رہنے کا گر سکھایا، خداداد عقل کو بروئے لا کر تسخیر کائنات(سائنس و ٹیکنالوجی پر دسترس)کا حوصلہ دیا اور قوانین قدرت پر کاربند رہنے کے فوائد بتلائے۔ سائنس کی ترقی، سائنس دانوں کی خدمات اور ان کے طفیل انسانوں کو کرۂ ارض
مزید پڑھیے


’’مسلمان‘ مصیبت میں گھبرایا نہیں کرتا‘‘

منگل 17 مارچ 2020ء
ارشاد احمد عارف
محدب عدسے کے بغیر نظر نہ آنے والے ایک معمولی جرثومے کرونا وائرس نے اپنی ذہانت‘ بصیرت‘ ہشیاری‘ سائنسی و تکنیکی ایجادات اور جدید حفاظتی انتظامات پر نازاں انسان کو اوقات یاد دلا دی‘ حضرت انسان کی جبلت و سرشت بھی عیاں کی۔ تیسری دنیا میں بسنے والے انسانوں کو تو فرسٹ ورلڈ مہذب سمجھتا نہ مکھی مچھرسے زیادہ اہمیت دیتا ہے‘ خود مذمتی کے مرض میں مبتلا معاشرے کے دانشور بھی دن رات یہی راگ الاپتے ہیں کہ حرص‘ ہوس‘ لالچ‘ خوف اور مفاد خویش تیسری دنیا کے مکینوں کا طرہ امتیاز ہے‘ ترقی یافتہ ممالک کے انسان ہمہ
مزید پڑھیے


خوش رہو اہل وطن ہم تو سفر کرتے ہیں

اتوار 15 مارچ 2020ء
عا رف نظا می
قفل ٹوٹا خدا خدا کر کے جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ منظور ہو گیا‘ یہ جنوبی پنجاب صوبہ بنانے کی طرف پہلا قدم ہے سیکرٹریٹ کے قیام کا اعلان کرتے ہوئے حکومت نے مگر ڈنڈی بھی ماری ۔ طے پایا کہ ایڈیشنل چیف سیکرٹری کا دفتر بہاولپور میں ہو گا اور ایڈیشنل آئی جی پولیس ملتان میں بیٹھے گا ۔ واہگورو کے خالصے یاد آئے ۔ خالصہ کالج کے قیام کا فیصلہ ہوا مگر کالج لاہور میں بنے یا امرتسر میں اس پراختلاف ہو گیا‘ بحث چھڑی توچھڑتی ہی چلی گئی‘ دونوں فریق بضد کہ ان کی مرضی کے شہر میں کالج نہ
مزید پڑھیے


نشہ بڑھتا ہے شرابیں جو شرابوں میں ملیں

جمعرات 12 مارچ 2020ء
ارشاد احمد عارف
عورت مارچ تو ہو گیا سیاستدانوں کی طرف سے مارچ میں مارچ کے دعوے رات کی بات ثابت ہوئے ؎ رات کی بات کا مذکور ہی کیا چھوڑیے رات گئی بات گئی تحریک انصاف کی حکومت پہلے سے زیادہ پُر اعتماد‘ مطمئن ہے‘ پیپلز پارٹی اپنے معاملات سلجھانے میں منہمک اور مسلم لیگ (ن) داخلی انتشار پر قابو پانے میں مشغول۔ منگل کے روز مسلم لیگ پارلیمانی پارٹی کے اجلاس میں پہلی بار ارکان پارلیمنٹ نے اپنی قیادت پر تنقید کی اور میاں شہباز شریف سے وطن واپسی کا مطالبہ کیا۔ بعض تجزیہ کار اور اینکر ہمیں دو تین
مزید پڑھیے