Common frontend top

ارشاد احمد عارف


’’سندس کے والدین کیا کرتے‘‘


سندس نامی خاتون کی نازیبا ویڈیو بنانے کا معاملہ سامنے آیا تو اس قبیح جرم کے مرتکب عثمان مرزا کی مذمت ہر سطح پر ہوئی‘حکومت‘سول سوسائٹی اور میڈیا نے صدائے احتجاج بلند کی‘عثمان مرزا گرفتار ہوا اور عوامی دبائو پر سرعت سے کیس کی سماعت ہوئی مگر گزشتہ روز متاثرہ لڑکی نے عثمان مرزا کو پہچاننے اور اب تک کی کارروائی کو تسلیم کرنے سے انکار کر دیا‘سوشل میڈیا پر ہاہا کار مچ گئی کہ متاثرہ خاتون اور اس کے ورثا نے بااثر ملزم سے چند ٹکوں کے عوض مُک مکا کر کے میڈیا‘سول سوسائٹی اور اپنے ہمدردوں‘حامیوں کی ناک
جمعرات 13 جنوری 2022ء مزید پڑھیے

تمہارے سینے میں دل تو ہو گا

منگل 11 جنوری 2022ء
ارشاد احمد عارف
سانحہ مری محض قدرتی حادثہ تھا‘نااہلی اور غفلت کا شاخسانہ یا بے حسّی کا مظہر؟جتنے منہ اتنی باتیں‘مگر میری ناقص رائے میں پنجاب کے صحت افزا مقام مری کے معاملات کی دیکھ بھال کرنے والے اداروں کی مجرمانہ نااہلی‘صوبائی حکومت کی روائتی غفلت اور سہل پسندی‘قومی و صوبائی ڈیزاسٹر مینجمنٹ کی بے حسّی نے حادثے کو جنم دیا۔ تئیس قیمتی جانیں ضائع ہو گئیں‘افسوس ناک بلکہ شرمناک پہلو مگر یہ ہے کہ تئیس معصوم شہریوں کی شہادت پر حکمران ذمہ داری قبول کرنے کے بجائے تاویلیں گھڑ رہے ہیں ۔ ؎ حادثے سے بڑا سانحہ یہ ہوا لوگ
مزید پڑھیے


تمہیں کہو کہ یہ انداز گفتگو کیا ہے؟

جمعرات 06 جنوری 2022ء
ارشاد احمد عارف
محترمہ مریم نواز شریف اور جناب پرویز رشید کی ٹیلی فونک گفتگومیں بعض قابل احترام تجزیہ کاروں کا تذکرہ سن کر بہت سے دوستوں کو صدمہ پہنچا‘حیرت اور صدمے کی ملی جلی کیفیت میں دوستوں نے مسلم لیگ (ن) سے معذرت کا مطالبہ کیا مگر ہنوز ان میں سے کسی کی خواہش پوری ہوئی نہ مستقبل قریب میںتوقع کی جا سکتی ہے۔صحافیوں اور سیاستدانوں کے مابین ’’دوستی اور نفرت‘‘ کا رشتہ ہے ’’گھوڑا گھاس سے دوستی کرے گا تو کھائیگا کیا؟‘‘ کے مصداق دونوں ایک دوسرے کی ضرورت ہیں اور دونوں کے مفادات باہم متصادم‘کہا تو فوجی آمروں کے بارے
مزید پڑھیے


یہ ہوائی کسی دشمن نے اڑائی ہو گی

هفته 01 جنوری 2022ء
ارشاد احمد عارف
بازار سیاست میں افواہوں‘قیس آرائیوں‘خواہشات اور توقعات کی گرم بازاری اپنی جگہ مگر جنوری فروری میں میاں نواز شریف کی برضا و رغبت اور فاتحانہ واپسی؟ میری ناقص رائے میں ؎ ا یں خیال است و محال است و جنوں۔ میڈیا مینجمنٹ میں شریف خاندان اور مسلم لیگ(ن) کا کوئی ثانی نہیں‘قابل داد اور لائق تحسین۔غیر رسمی‘خیر سگالی ملاقاتوں کو دو طرفہ پیغام رسانی اور سیاسی جوڑ توڑ کے طور پر پیش کرنا اور پر سے پرندہ اڑانا کوئی ان سے سیکھے‘ قومی اسمبلی کے سابق سپیکر سردار ایاز صادق لندن گئے‘اپنے قائد سے ملے اور
مزید پڑھیے


یہ ہوائی کسی دشمن نے اڑائی ہو گی

جمعرات 30 دسمبر 2021ء
ارشاد احمد عارف
بازار سیاست میں افواہوں‘قیس آرائیوں‘خواہشات اور توقعات کی گرم بازاری اپنی جگہ مگر جنوری فروری میں میاں نواز شریف کی برضا و رغبت اور فاتحانہ واپسی؟ میری ناقص رائے میں ؎ ا یں خیال است و محال است و جنوں۔ میڈیا مینجمنٹ میں شریف خاندان اور مسلم لیگ(ن) کا کوئی ثانی نہیں‘قابل داد اور لائق تحسین۔غیر رسمی‘خیر سگالی ملاقاتوں کو دو طرفہ پیغام رسانی اور سیاسی جوڑ توڑ کے طور پر پیش کرنا اور پر سے پرندہ اڑانا کوئی ان سے سیکھے‘ قومی اسمبلی کے سابق سپیکر سردار ایاز صادق لندن گئے‘اپنے قائد سے ملے اور
مزید پڑھیے



دن پھرے ہیں فقط وزیروں کے

جمعه 24 دسمبر 2021ء
ارشاد احمد عارف
بلّی کے بھاگو ںچھینکا ٹوٹا‘تحریک انصاف خیبر پختونخوا میں بلدیاتی انتخابات کا پہلا مرحلہ کیا ہاری‘ اپوزیشن وفاقی حکومت کے خاتمے کی باتیں کرنے لگی‘بیس بلدیاتی اداروں کی سربراہی کا تاج مولانا فضل الرحمن کے نامزد امیدواروں کے سر پر سجا‘ خوشی سے باچھیں مسلم لیگ اور پیپلز پارٹی کی قیادت کی کھلی ہیں‘فواد چودھری اور شہباز گل اسی باعث بیگانی شادی میں عبداللہ دیوانہ کی پھبتی کس رہے ہیں۔سترہ اضلاع کی مختلف تحصیلوں میں شکست پر تحریک انصاف کا ردعمل ذمہ دارانہ رہا‘عمران خان اور ان کے ساتھیوں نے حیلوں بہانوں کے بجائے ہوشربا مہنگائی اور ٹکٹوں کی غلط
مزید پڑھیے


ناکامی کی ہیٹ ٹرک

منگل 21 دسمبر 2021ء
ارشاد احمد عارف
پہلے ڈسکہ‘خوشاب اور کراچی کے ضمنی انتخابات‘پھر کنٹونمنٹ میں بلدیاتی چنائو اور اب خیبر پختونخواہ کے بلدیاتی انتخابات میں تحریک انصاف کی شکست‘ایک طوفان کی طرح اٹھنے اور مسلم لیگ (ن) ‘پیپلز پارٹی کو روند کر اقتدار کے ایوانوں میں داخل ہونے والی جماعت نے انتخابی ناکامی کی ہیٹ ٹرک مکمل کر لی‘یہ عبرت کی جا ہے تماشہ نہیں ہے‘2018ء کے انتخابات کے بعد تحریک انصاف نے خیبر پختونخواہ میں دوسری باراقتدار سنبھالا تو اس کے کارناموں میں دو نمایاں تھے۔قابل رشک بلدیاتی نظام اور عوام دوست پولیس۔ 2018ء کے انتخابات میں پنجاب کے علاوہ دیگر صوبوں میں ووٹروں نے عمران
مزید پڑھیے


کثرت اور برکت

منگل 07 دسمبر 2021ء
ارشاد احمد عارف
ایک غائبانہ خیر اندیش اور مہربان حاجی میاں منظور احمد نے یہ واقعہ شیئر کیا ہے‘ لکھتے ہیں: ’’ہماری فیکٹری کے قریب ایک ناشتہ پوائنٹ ہے۔ اکثر وہاں ناشتہ کرنے جاتے ہیں۔ ناشتے والے کے پاس کافی رش ہوتا ہے۔ میں نے کئی مرتبہ مشاہدہ کیا کہ ایک شخص آتا اور بھیڑ کا فائدہ اٹھا کر چپکے سے پیسے دیئے بغیر نکل جاتا ہے۔ ایک دن جب وہ کھانا کھا رہا تھا تو میں نے چپکے سے ناشتہ پوائنٹ کے مالک کو بتا دیا کہ ’’وہ والا بھائی‘‘ ناشتہ کر کے بغیر بل دئیے رش کا فائدہ اْٹھا کر نکل جاتا ہے۔آج
مزید پڑھیے


روز قیامت حضورﷺ کو کیا منہ دکھائیں گے؟

اتوار 05 دسمبر 2021ء
ارشاد احمد عارف
زبان گنگ ہے ‘قلم مفلوج‘ روح زخمی ہے‘ دماغ شل اور ندامت کا احساس ہے کہ قلب و نظر کو چھلنی کیے دیتا ہے۔ایک پوسٹر پر لکھے مقدس نعرے کی بے حرمتی کے الزام میں ہجوم نے عدالت کا روپ دھارا‘خود ہی مدعی اور گواہ بنا اور پاکستان میں خدمات انجام دینے والے سری لنکا کے شہری کو موت کی سزا سنائی‘سزا پر عملدرآمد کے بعد لاش سرعام جلا دی۔کسی محدث‘ فقیہہ اور مفسر نے نہیں‘رحمت دو عالمﷺ نے غیر مسلموں کے بارے میں اصول وضع فرمائے ‘آپ ﷺ نے جنگ موتہ کے لئے لشکر روانہ کیا تو امیر کو
مزید پڑھیے


دودھ کی رکھوالی

جمعرات 02 دسمبر 2021ء
ارشاد احمد عارف
ایم این اے ریاض فتیانہ کو سچ بولنا مہنگا پڑ گیا‘انہوں نے گلاسگو کی ایک کانفرنس میں وزارت ماحولیات کے کرتا دھرتا افراد کی بیوی بچوں‘اور اپنے چہیتوں کے ساتھ شرکت‘باہمی توتکار اور پاکستانی مفادات سے روگردانی کا بھانڈا قومی اسمبلی کی کمیٹی میں پھوڑا تو عام خیال یہی تھا کہ انہیں سادگی کفایت شعاری اور دیانتداری کے علمبردار حکمران کی طرف سے داد ملے گی اور جن لوگوں نے ملک و قوم کے سرمائے پر عیاشی کی ‘وہ سزا پائیں گے ‘مگر اُلٹاریاض فتیانہ کو شوکاز نوٹس جاری ہو گیا کہ قومی خزانے کو حلوائی کی دکان سمجھ کر‘‘نانا
مزید پڑھیے








اہم خبریں