BN

ارشاد احمد عارف



مال بچائیں یا کھال


لیفٹیننٹ جنرل(ر) جاوید اقبال اور بریگیڈیئر (ر) راجہ رضوان کی سزائوں کا اعلان ہوا تو ہر انصاف پسند اور محب وطن شہری نے پاک فوج کے احتسابی نظام کی تعریف کی مگر پاکستان میں سول بالادستی کے نام نہاد علمبرداروں اور’’ فوج سمیت کوئی احتساب سے بالاتر نہیں‘‘ کا نعرہ لگانے والے بعض سیاستدانوں‘ دانشوروں‘ تجزیہ کاروں‘ وکیلوں اور سول سوسائٹی کے ارکان کو سانپ سونگھ گیا‘ حرف تحسین تو خیر کیا بلند ہونا تھا‘ جھوٹے منہ کسی نے یہ بھی نہ کہا کہ جنرل قمر جاوید باجوہ کی زیر قیادت پاک فوج نے قومی مفادات کو نقصان پہنچانے والے
اتوار 02 جون 2019ء

منزل ہے کہاں تیری؟

جمعه 31 مئی 2019ء
ارشاد احمد عارف
علی وزیر کے پروڈکشن آرڈر کا مطالبہ کرنیوالے بلاول بھٹو بے چارے کو کیا معلوم کہ اس معاملے پر ان کی والدہ محترمہ بے نظیر بھٹو نے اپنے سپیکر مخدوم یوسف رضا گیلانی سے کیا سلوک کیا تھا؟یوسف رضا گیلانی کا قصور یہ تھا کہ اس نے اپوزیشن کے مطالبے اور پیپلز پارٹی کے وفاقی وزراء ‘ وزیر داخلہ نصیر اللہ بابر‘ وزیر قانون اقبال حیدر اور وزیر تعلیم سید خورشید شاہ کے مشورے پر شیخ رشید احمد‘ شیخ طاہر رشید اور حاجی محمد بوٹا کے پروڈکشن آرڈر جاری کئے اور رول90کے تحت قومی اسمبلی کے اجلاس میں شرکت کی
مزید پڑھیے


حذ راے چیرہ دستیاں

جمعرات 30 مئی 2019ء
ارشاد احمد عارف
یوم تکبیر کے موقع پر مسلم لیگ (ن) کی نائب صدر مریم نواز شریف کی تقریر سن کرخوشی ہوئی‘ عمران خان کو مہرہ تو قرار دیا مگر خلائی مخلوق کا نہیں‘ خار کمرکیمپ حادثہ کی ذمہ داری بھی انہوں نے سکیورٹی فورسز پر نہ ڈالی حالانکہ ایک روز قبل وہ اپنی ٹویٹ میں بلاول بھٹو کی طرح محسن داوڑ اور علی وزیرکو بے گناہ اور سکیورٹی اداروں کو قصور وار قرار دے چکی تھیں۔ یوم تکبیر پر انہوں نے یہ تک کہہ ڈالا کہ عمران خان نے سانحہ وزیرستان پر جوابدہی کے لئے فوج کو اکیلا چھوڑ دیا جبکہ آپریشن
مزید پڑھیے


میرے اندر عدو‘میرے باہر عدو

منگل 28 مئی 2019ء
ارشاد احمد عارف
1971ء کی طرح پاکستانی ریاست ایک بار پھر اندرونی اور بیرونی دشمنوں کے نرغے میں ہے‘ حفیظ تائب مرحوم نے جب برسوں قبل کہا ؎ دشمن جاں ہوا میرا اپنا لہو‘میرے اندر عدو‘ میرے باہر عدو ماجرائے تحیر ہے پر سیدنی‘ صورت حال ہے دیدنی یا نبیؐ تو حالات اتنے خراب تھے نہ اندر و باہر کے دشمنوں کے حوصلے اس قدر بلند۔ گزشتہ روز میرانشاہ کے علاقے میں افسوسناک حادثہ‘ انہی دشمنوں کی کارستانی ہے۔ شمالی وزیرستان دہشت گردوں کی آماجگاہ بنا‘ یہاں خودکش بمباروں کی تربیت گاہیں قائم ہوئیں‘ خودکش جیکٹیں اور مختلف قسم کا بارودی
مزید پڑھیے


تمہارے سینے میں دل تو ہو گا؟

جمعه 24 مئی 2019ء
ارشاد احمد عارف
پہلے قصور کی معصوم زینب اور اب اسلام آباد کی مظلوم فرشتہ واقعہ کی تفصیل سن کر کلیجہ منہ کو آتا ہے‘ لاش ملی تو صرف درندہ صفت چچا زاد بھائی نے کم سن بچی کو نہیں نوچا تھا بلکہ جنگلی جانوروں نے بھی خوب بھنبھوڑا اور جسم کے کئی حصے چباڈالے۔ یہ واقعہ وزیر اعظم کی ذاتی قیام گاہ بنی گالہ کے قریب پیش آیا‘ وفاقی دارالحکومت میں سکیورٹی معمول سے زیادہ سخت ہوتی ہے اور بنی گالہ ریڈ زون۔ پھر بھی مظلوم بچی اغوا ہوئی‘ والدین رپٹ درج کرانے تھانے پہنچے تو بدبخت پولیس اہلکار کا جواب تھا
مزید پڑھیے




کوہان کا ڈر ہے

جمعرات 23 مئی 2019ء
ارشاد احمد عارف
پاکستان کی ابتر معاشی صورتحال کا ملبہ موجودہ حکومت کی بدانتظامی‘ناتجربہ کاری اور ناقص ٹیم پر ڈال بھی دیں تو اس سوال کا جواب ملنا مشکل ہے کہ آئی ایم ایف قرضہ کی شرائط میں روزبروز اضافہ کیوں کر رہا ہے‘ تازہ ترین شرط یہ ہے کہ عوامی جمہوری چین اور سعودی عرب تین سال تک اپنے قرض واپس نہ لینے کی یقین دہانی کرائیں جبکہ پاکستان بار بار کہہ چکا ہے کہ وہ آئی ایم ایف سے لیا گیا قرضہ‘ دوست ممالک بالخصوص چین کو ادائیگی کے لئے استعمال نہیں کرے گا۔ دور کی کوڑی لانے والے آئی ایم
مزید پڑھیے


ایک تجربہ اور سہی

منگل 21 مئی 2019ء
ارشاد احمد عارف
بلا شبہ یہ اپوزیشن کا متاثر کن اجتماع تھا۔ یہ کہنا مشکل ہے کہ ساری سیاسی اور مذہبی جماعتیں پیپلز پارٹی اور مسلم لیگ(ن) کے ایجنڈے سے متفق ہیں‘ بعض ان میں سے افطار ڈنر میں شریک ہوئیں اور کچھ حکومت سے بہتر سودے بازی کے لئے۔ اختر مینگل گروپ تاحال حکومت کا اتحادی ہے اور شکوہ و شکایات کے باوجود اتحاد کا حصہ رہنے پر مُصر۔ جماعت اسلامی ایم ایم اے سے شاکی ہے اور کسی بھی ایسی احتجاجی تحریک کا حصہ بننے سے انکاری جو موجودہ جمہوری ڈھانچے کو زمین بوس کر دے۔ اکیلے مولانا فضل الرحمن اسلام
مزید پڑھیے


مایوسی

اتوار 19 مئی 2019ء
ارشاد احمد عارف
محترمہ مریم نواز بلاول بھٹو سے مل کر احتجاجی تحریک پہلے شروع کرتی ہیں یا بنک دستاویزات کے مطابق میاں نواز شریف اور ان کی سیاسی جانشین کے خلاف تحقیقات کانیا پنڈورا بکس جلدکھلتاہے؟ یہ سوال واقف حال حلقوں میں شدومد سے زیر بحث ہے۔ مہنگائی کی صورت میں اپوزیشن کے ہاتھ ایک جینوئن عوامی ایشو آ گیا ہے۔ ادویات‘ پٹرول‘ گیس اور چینی کی مہنگائی میں حکومت کی بدانتظامی کا دخل ہے اور ناتجربہ کار حکمرانوں نے ابھی تک یہ سوچنے کی زحمت گوارا نہیں کی کہ عام آدمی منطق و استدلال سے کم‘ مہنگائی سے متاثر ہوتا ہے۔
مزید پڑھیے


ناتجربہ کاری یا نالائقی

جمعه 17 مئی 2019ء
ارشاد احمد عارف
1965ء کی جنگ ستمبر شروع ہوئی تو لاہور اور دوسرے بڑے شہروں میں گندم‘ چینی‘ چاول کی ذخیرہ اندوزی کے سبب اشیائے ضروریہ کی مہنگائی ہونے لگی۔ مغربی پاکستان کے گورنر امیر محمد خان کو پتہ چلا تو انہوں نے صوبے کے بڑے صنعتکاروں اور تاجروں کو دفتر لاٹ صاحب طلب کیا‘ سامنے پڑا اخبار اٹھایا‘ مہنگائی کی خبر پڑھی اور مونچھوں کو تائو دیتے ہوئے کہا ’’آج شام تک مارکیٹوں میں اشیائے ضروریہ کی بہتات نہ ہوئی‘ قیمتیں 5ستمبر کی سطح پر واپس نہ آئیں‘ تو سوچ لو کہ میں آپ سے کیا سلوک کروں گا‘‘؟ یہ کہہ کر
مزید پڑھیے


ٹیکس جرمانہ یا کار ثواب؟

جمعرات 16 مئی 2019ء
ارشاد احمد عارف
ایک ایسا ملک ٹیکسوں کے حصول میں ناکام کیوں؟ جس کے عوام کی فیاضی اور ایثار کا زمانہ معترف ہے 2005ء میں خوفناک زلزلہ آیا اور 2010ء میں بدترین سیلاب نے خیبر پختونخواہ ‘ پنجاب اور سندھ کو لپیٹ میں لیا تو عوام کے جذبہ ایثار و فیاضی نے دنیا کو حیران کیا‘ میں زلزلے کے کم و بیش دو اڑھائی ہفتہ بعد آزاد کشمیر گیا تو مری سے کوہالہ تک امدادی سازو سامان سے لدے کنٹینروں ٹرکوں اور ویگنوں کی قطار نظر آئی ۔مظفر آباد‘ باغ‘ بالا کوٹ اور جن دیگر مقامات پر جانے کا موقع ملا ‘امدادی کیمپوں
مزید پڑھیے