BN

اسداللہ خان


مائنس ون


اگر عمران خان پر مائنس ون کے فارمولے کا اطلاق کہیں زیر غور ہے تو یہ بات باعث حیرت اس لیے ہے کہ عمران خان دو سال میں ہونے والے قومی سطح کے فیصلوں کے یقیناتنہا ذمہ دار نہیں ۔بڑے معاشی فیصلے ہوں ، آئی ایم ایف کے پاس جانے کا فیصلہ ہویا اہم وزارتوں کی تقسیم کا معاملہ ، عمران خان نے کوئی بھی فیصلہ تنہا نہیںکیا۔معاشی مسائل کے حل کے لیے تو اعلی عسکری قیادت براہ راست کاروباری اور صنعتی شخصیات سے ملاقاتیں کرتی رہی ہیں۔کورونا سے نمٹنے کے لیے بنائی جانے والی حکمت عملی ، لاک ڈائون
هفته 04 جولائی 2020ء

ٹیکس دے کر ہمیں ملتا کیا ہے ؟

جمعرات 02 جولائی 2020ء
اسداللہ خان
ذرا سوچیے آپ ایک دن میں کہاں کہاں ٹیکس دیتے ہیں۔ آپ صبح سو کر اٹھے، لائیٹ آن کی ، بجلی پہ ٹیکس ادا کیا، باتھ روم گئے ، نلکا کھولا تو پانی پہ ٹیکس ادا کیا، صابن استعمال کیا تو صابن پہ ٹیکس دیا، دانت صاف کیے تو برش اور ٹوتھ پیسٹ پر ٹیکس دیا، شیو بنائی تو ریزر ،شیونگ فوم اور آفٹر شیو لوشن پہ ٹیکس دیا۔ آفس جانے کے لیے جو کپڑے اور جوتے آپ نے پہنے اس پر 17 فیصد کے حساب سے سیلز ٹیکس آپ ادا کر چکے ہیں۔ ناشتے کی میز پر بیٹھے تو انڈے
مزید پڑھیے


سرکاری یونیورسٹیوں کو سیاسی بنانے کا منصوبہ

هفته 27 جون 2020ء
اسداللہ خان
یہ رونا تو ہم روتے ہی رہتے ہیں کہ پبلک سیکٹر یونیورسٹیزتباہی کے دہانے پر پہنچ رہی ہیں۔ ماہرین تعلیم اکثر یونیورسٹیز کے کمزور نظام ، اقربا پروری، میرٹ کی خلاف ورزی، بد عنوانی اور غیر قانونی بھرتیوں کے مسئلے کا ذکر کرتے ہوئے تجویز کرتے ہیں کہ یونیورسٹیوں میں سیاسی مداخلت ختم کرتے ہوئے انہیں زیادہ سے زیادہ خود مختار بنایا جائے۔ یوں کمزوریوں کو دور کرنے کے لیے جن باتوں پہ غور ہونا چاہیے تھا وہ یہ کہ2008 کے بعد بننے والی جن یونیورسٹیز کے سنڈیکیٹ کی سربراہی وزیر تعلیم کرتے ہیں انہیں ہٹا کر یہ ذمہ داری
مزید پڑھیے


فواد چودھری نے غلط کہا ؟

جمعرات 25 جون 2020ء
اسداللہ خان
تین دن ہو گئے ، عمران خان سمیت اب تک ایک بھی شخص نے فواد چودھری کی اس بات سے اختلاف نہیں کیا کہ حکومت عوامی توقعات پر پورا اترنے میں ناکام ہو گئی ہے ۔ کسی نے فواد چودھری کی اس بات سے اختلاف نہیں کیا کہ عوام نے تحریک انصاف کو ہلکے پھلکے نٹ بولٹ تبدیل کرنے کے لیے منتخب نہیں کیا بلکہ نظام تبدیل کرنے کے لیے منتخب کیا ہے ۔ عمران خان سمیت کسی نے فواد چودھری کی اس بات سے اختلاف نہیں کیا اور کرنے کی گنجائش بھی نہیں کہ موجودہ حکومت ماضی کی حکومتوں
مزید پڑھیے


میں ایک لاہوریا ہوں ، نرے کا نرا جاہل

هفته 20 جون 2020ء
اسداللہ خان
میں ایک لاہوریا ہوں۔لاہور میں پیدا ہوا،یہیں پلا بڑھا، یہیں کے تعلیمی اداروں سے تعلیم حاصل کی لیکن ہوں نرے کا نرا جاہل۔ میں صرف اپنی ذات میں ہی جاہل نہیں ہوں بلکہ اسے ثواب سمجھ کر بانٹتا پھرتا ہوں۔ جہالت سے بھری میری شخصیت میں تاثیر اتنی ہے کہ میں ان لوگوں کو بھی اپنی لپیٹ میں لے لیتا ہوں جو لاہوریے نہیں بھی ہیں۔اب آپ کو کیا لگتا ہے ڈیرہ غازی خان، چکوال، فیصل آباد اور دوسرے شہروں سے تعلق رکھنے والے صوبائی وزرا ء وزیر اعظم کے دورہ لاہور کے دوران ان سے ملتے ہوئے ماسک کیوں
مزید پڑھیے



اپنی ناکامی کا ملبہ دوسروں پر مت ڈالیں

جمعرات 18 جون 2020ء
اسداللہ خان
بلاول اور مراد علی شاہ کا سارامقدمہ ایک ہی نکتے پہ کھڑا ہے اور وہ یہ کہ پیپلز پارٹی تو سخت لاک ڈائون کی حامی تھی مگر وفاقی حکومت نے مخالفت کی اور اس کی کوششوں کوسبوتاژ کیا۔ وفاقی حکومت کی کمزوریاں اپنی جگہ لیکن پیپلز پارٹی اپنی نااہلی اور کمزوری سے دھیان بٹا کر مکمل ذمہ داری دوسروں پر کیسے ڈال سکتی ہے؟ درست ہے کہ عمران خان لاک ڈائون کا فیصلہ کرنے میں ہچکچاہٹ کا شکار تھے مگر جب مکمل لاک ڈائون کا فیصلہ ہو گیا، ریل بند کر دی گئی، قومی شاہرائوں کا رابطہ سندھ سے کاٹ دیا
مزید پڑھیے


کچن گارڈننگ

هفته 13 جون 2020ء
اسداللہ خان
چلیے چھوڑیے بجٹ کو ، بہت بحث ہو گئی اس پر، پچھلے دو ہفتے سے میں بھی بلا ناغہ بجٹ پر ہی پروگرام کر رہا تھا۔ معاشی تجزیہ کار جو تصویر کھینچ رہے ہیں اسے سن کر تو ڈپریشن ہونے لگتا ہے ۔ ڈپریشن قوت مدافعت کے لیے نہایت مضر ہے ۔ ویسے بھی کورونا کے حالات میں قوت مدافعت کا بحال رہنا بہت ضروری ہے ۔ سنا ہے دو ہفتے کا لاک ڈائون پھر آ رہا ہے ۔ لہذا بجٹ کے اعدادووشمار میں الجھ کر سر کھپانے کے بجائے یہ سوچیں کہ اگلے دو ہفتے میں ورک فرام ہوم
مزید پڑھیے


کیا کورونا نے معیشت کو بیمار کیا؟

جمعرات 11 جون 2020ء
اسداللہ خان
پچھلے گیارہ مہینے میںگیارہ سو ارب یعنی 1.1 کھرب کے ریکارڈ نوٹ چھاپے گئے ہیں۔ اس سے پہلے پاکستان کی تاریخ میں ایک سال کی مدت میں چھاپے جانے والے زیادہ سے زیادہ نوٹ 777 ملین کے تھے جو اسحاق ڈار صاحب کے زمانے میں 2016-17 میں چھاپے گئے تھے۔ نوٹ چھاپنے سے کیا ہوتا ہے اس کا اندازہ آپ اس بات سے لگائیں کہ اگر 490 ارب روپے کے نوٹ چھاپے جائیں تو افراط زر یعنی مہنگائی کی شرح ایک فیصد تک بڑھ جاتی ہے ۔ اب پچھلے ایک سال میں مہنگائی کتنی بڑھی ہے اس کا اندازہ آپ
مزید پڑھیے


امریکہ کے بعد کی دنیا

هفته 06 جون 2020ء
اسداللہ خان
دنیا تبدیل ہو رہی ہے۔ طاقت کے نئے مراکز وجود میں آ رہے ہیں، امریکہ سپر پاور کا درجہ کھو رہاہے۔اور یہ صرف کورونا وائرس آنے کے بعدیا ایک سیاہ فام امریکی جارج فلوئیڈ کی ہلاکت کے نتیجے میں شروع ہونے والے ہنگاموں کے بعد نہیں ہوا ،کورونا سے پہلے بھی تھوڑا تھوڑا کر کے بہت کچھ ہو چکا۔ کئی سال پہلے مشہور صحافی فرید زکریا نے اپنی ایک کتاب ’’Post AmericanWorld ‘‘ میں اس جانب توجہ دلاتے ہوئے لکھا تھا کہ دنیا ایک ایسے مرحلے میں داخل ہو رہی ہے جہاں امریکہ سپر پاور نہیں رہے گا۔ انہوں نے
مزید پڑھیے


شہباز شریف جواب دے کیوں نہیں دیتے ؟

جمعرات 04 جون 2020ء
اسداللہ خان
شہباز شریف چند سوالوں کا جواب دے کر جان چھڑا کیو ں نہیں لیتے۔ سادہ سے کچھ سوال ہیں ۔انہی بس یہ بتانا ہے کہ ان کے ڈائریکٹر برائے سیاسی امور نثار احمد گل کی گڈ نیچر کمپنی پرائیویٹ لیمیٹڈ سے اپریل 2017 میں باری باری 16.3 ملین، پھر 47 لاکھ اور پھر ایک کروڑ روپے شہباز شریف کے اکاونٹ میں کیوں منتقل ہوئے۔ شہباز شریف کو بس یہ بتانا ہے کہ فضل داد عباسی ان کی اہلیہ محترمہ تہمینہ درانی کو پہنچائی جانے والی رقم گڈ نیچر کمپنی سے کیوں حاصل کیا کرتا تھا۔ انہیں بس یہ بتانا ہے
مزید پڑھیے