BN

اشرف شریف



کتنے گریباں چاک ہوں گے


موسم بدلا رت گدرائی اہل جنوں بے باک ہوئے ظہیر کاشمیری کی یہ غزل تو موسم بہار کی آمد کا مضمون باندھتی ہے لیکن مجھے لگتا ہے کہ دس ماہ گرمی کی لپیٹ میں رہنے والے ہم لوگوں کے لیے سردیاں وہی لطف لاتی ہیں کہ جنون میں بے باک ہونے کو جی چاہتا ہے۔ اس بے باکی کے ساتھ ہوش ضروری ہے وگرنہ خواہ مخواہ جی چاہے گا کہ اس تصفیے کی حقیقت جانی جائے جس کے نتیجے میں پاکستان کو بیٹھے بٹھائے 38ارب روپے مل گئے۔ کسی کی جیب سے اتنی بڑی رقم نکلی ہے تو معاملہ ایسا سادہ تو
جمعرات 05 دسمبر 2019ء

آگ لگی ہمری جھونپڑیا میں

پیر 02 دسمبر 2019ء
اشرف شریف
کبھی سوچا؟ ہم ،پوری قوم سنسنی خیزی کے نشے کی لت میں پڑ چکے ہیں۔ ہم میں سے کچھ لوگ اس بات پر خوشی سے پرجوش ہو جاتے ہیں کہ ہمارے گھر میں آگ لگی ہے۔ آگ لگی ہمری جھونپڑیا میں ہم گائے رے ملہار چلیں کچھ تاریخی معلومات کو دیکھتے ہیں،جس طرح برصغیر میں قدیم عمارتیں ماش کی دال، پتھر اور گارے سے تیار مرکب سے تعمیر ہوئیں اس طرح سیمنٹ کو سب سے پہلے اہل یونان نے استعمال کیا۔ یہ تین صدی قبل از مسیح کی بات ہے۔ یونانیوں نے پتہ چلایا کہ ریت، گول پتھروں اور کئی طرح کے دوسرے
مزید پڑھیے


گہرے سماجی شعور کی شاعرانہ جہتیں

جمعرات 28 نومبر 2019ء
اشرف شریف
ماہیا اور بولی پنجاب کے کھیتوں اور دیہات میں سرسوں کی طرح اُگتی اصناف ہیں۔ یہ رنگ کسان کے پسینے، گندم کی رنگت، مٹی کی محبت اور لفظوں کی روح بن کر بکھرتا ہے۔ جدید مضامین اور شہری زندگی کے اثرات نے ہماری شاعری کو اردو کی تکلفاتی زبان کی جانب مائل کیا۔ پنجابی نظم نے بہرحال اردو سے بڑھ کر آفاقی موضوعات کو جگہ دی، جنوبی افریقہ، کینیڈا اور انگلینڈ ہی نہیں مشرقی اور مغربی پنجاب کے دماغ بھی بہت زرخیز ہیں۔ ماہیا اور بولیاں موزوں طبع پنجابیوں کی من پسند اصناف ہیں۔ آزاد حسین گجراتیؔ نے اپنی موزوں طبیعت
مزید پڑھیے


دنیا کیا سے کیا ہو جائے گی

پیر 25 نومبر 2019ء
اشرف شریف
دنیا وہی ہے ۔ کائنات بھی وہی ہے جو ہزاروں اور لاکھوں سال سے موجود ہے۔ اس کو بدلتا دیکھنے والی آنکھ اور شعور کس چیز کو تبدیلی سمجھتے ہیں اس کا انحصار معاشرے کی عمومی سوچ پر ہے۔ کسی ایک صاحب دل کی آنکھ اورتجزیہ بسا اوقات اپنے پورے عہد کا شعور بن کر سامنے آتا ہے یا پھر پورا معاشرہ’’موت کا منظر‘‘ کا اسیر ہو سکتا ہے۔ مستقبل کی جنگوں اور قوم کی نشاۃ ثانیہ پر پیشگوئیاں کی جاتی ہیں۔ سیلاب آنا، خوفناک جنگیں، کسی عظیم بادشاہ کا عہد اقتدار، کسی خاص قوم کا زوال یا عروج، یہ
مزید پڑھیے


تاریخ سے کون مدد لے گا؟

پیر 18 نومبر 2019ء
اشرف شریف
تاریخ کی کوئی اچھی کتاب دو ہزار روپے میں مل سکتی ہے۔ پہلی حیرت یہی ہو گی کہ دو ہزار میں ایسی کتاب مل گئی جس کا ایک ایک لفظ لاکھوں روپے کا ہے۔ تاریخ آپ کو بتائے گی کہ عالیشان محلوں میں رہنے والے مسلمانوں کے ایک خلیفہ بیت المقدس میں بطور فاتح ایسے داخل ہوئے کہ خود اونٹ کی رسی پکڑ کر پیدل چل رہے تھے اور ساتھی اپنی باری کے موجب سوار تھا۔ بظاہر معمولی سا واقعہ اس وقت ایک عظیم الشان تاریخی روشنائی بن جاتا ہے جب ہمیں معلوم ہوا ہے کہ دوسری جنگ عظیم میں
مزید پڑھیے




جناب وزیر اعظم!چند لمحے

هفته 16 نومبر 2019ء
اشرف شریف
سینٹ کی سٹینڈنگ کمیٹی برائے سمندر پار پاکستانیزکے سامنے ایک رپورٹ پیش کی گئی ہے۔ رپورٹ کیا ہے‘ سیدھی سیدھی ایف آئی آر کہیں جو ماضی کے حکمرانوں اور ان کی اولادوں پر بنتی ہے۔ وزارت خارجہ کے افسر سید زاہد رضا نے کمیٹی کو بتایا کہ بیرونی ممالک میں غیر قانونی قیام رکھنے والے پاکستانی وطن واپسی کی بجائے ان ممالک میں ذلت آمیز مزدوری اور جیل میں رہنے کو ترجیح دے رہے ہیں۔ کمیٹی کو بتایا گیا کہ بوسنیا ہرزگوینا کے جنگل کیمپ میں چار ہزار پاکستانی مقیم ہیں۔ یہ کیمپ بوسنیا میں پاکستانی مشن سے چار سو
مزید پڑھیے


طوطا حلوہ کھاتا جائے

پیر 04 نومبر 2019ء
اشرف شریف
سیاست کتنی بے رحم ہوتی ہے۔ شیرجیسے درندے سے زیادہ۔ مولانا کیا بیچتے تھے؟ ریاستی اداروں سے ماضی کی شراکت داری کے راز‘ مدارس کے طلباء کی عقیدت و سرفروشی‘کچھ حسینوں کے خطوط اور کچھ تصاویر بتاں۔ادارے کب کسی سے بلیک میل ہوتے ہیں‘ مدارس کے طلباء کے علاوہ مارچ میں کوئی نہیںتھا۔ اسے سیاسی مارچ نہیں مدرسہ مارچ کہا جا سکتا ہے۔ چند روز قبل جس زبان سے لاکھوں کے مجمع کی بات کی جا رہی تھی وہ مسلم لیگ ن اور پیپلز پارٹی سے ناراضی کا اظہار کر رہی تھی کہ ان کے لیڈر اور کارکن مارچ میں نہیں
مزید پڑھیے


نردھن کے دھن گردھاری

پیر 28 اکتوبر 2019ء
اشرف شریف
تذکرہ غوثیہ حضرت سید غوث علی شاہ پانی پتی کے ملفوظات و حالات کا بیان ہے۔ اس کتاب کی تالیف حضرت کے مرید مولانا شاہ گل حسن نے کی جبکہ ترتیب مولانا اسمعیل میرٹھی نے فرمائی،بڑی سبق آموز حکایتوں سے بھر پور کتاب ہے۔ ایک حکایت ہے گرو اور اس کا چیلا سفر کرتے کرتے‘ منزلیں مارتے ایک شہر میں پہنچے۔ شہر میں ہر چیز ایک روپے کلو تھی۔ دیسی گھی اور بناسپتی گھی دونوں کی قیمت ایک روپیہ تھی۔ گاجر ایک روپے کلو اور سیب بھی ایک روپے میں کلو۔ گورو نے چیلے سے کہا یہاں سے فوراً کوچ
مزید پڑھیے


ایک شہزادہ اک شہزادی

پیر 21 اکتوبر 2019ء
اشرف شریف
کہانیوں میںشہزادہ بہادر ہوتا ہے اور شہزادی ہمیشہ خوبصورت۔ باوقار‘ نرم دل اور عوام کی محبوب۔ پرنس ولیم کی والدہ پاکستانیوں کی محبوب تھیں۔ لیڈی ڈائنا نے شوکت خانم ہسپتال کے لئے فنڈز جمع کرنے میں مدد دی۔ پرنس ولیم نو آبادیاتی حکمران خاندان کے چشم و چراغ کی بجائے اپنی والدہ لیڈی ڈائنا کی نسبت سے پاکستانیوں میں مقبول ہیں جبکہ ان کی اہلیہ شہزادی کیتھرین (کیٹ مڈلٹن) نے لیڈی ڈائنا کی طرح کینسر کے مریض بچوں، ایس او ایس ویلج میں مقیم یتیم بچوں اور شہزادیوں سے محبت کرنے والے‘ خواب دیکھنے والے ان پاکستانیوں کو مسحور کر
مزید پڑھیے


مجھے یقین ہے سردی میں مارے جائو گے

پیر 14 اکتوبر 2019ء
اشرف شریف
سردی اترتی ہے‘ جانے آسمان کی کھڑکیوں سے کون یخ ہوائوں کو زمین زادوں کے گھر بھیج دیتا ہے۔ سردی اترتی ہے‘ تو کئی دل عشق کی گرمی سے دہکنے لگتے ہیں اور کچھ آنکھیںدہلیز پر گلیشئر ہو جاتی ہیں۔ سردی اترتی ہے تو شہر میں گرم ملبوسات کی مہنگی دکانوں پر رش بڑھ جاتا ہے۔ سردی اترتی ہے تو کئی بے لباس جسموں کو اترن کی آس آ گھیرتی ہے۔ اس بار سردی اترے گی تو ہو سکتا ہے اسلام آباد میں پارلیمنٹ کے سامنے کوئی دھرنادیئے بیٹھا ہو۔ قالین سے آراستہ فرش‘ کھڑکیوں سے جھانکتے گلاب‘ سالویا اور گل
مزید پڑھیے