اشرف شریف



’’منطق الطیر، جدید‘‘ ناول، تاریخ اور عشق


ریل کی پٹڑی پر ہوا ابلتی ہوئی محسوس ہو رہی تھی۔ حرارت کی لہریں تھیں جو کبھی نیچے سے اوپر کو اٹھتی اور کبھی اوپر سے نیچے کی جانب اترتی معلوم ہوتیں۔ گائوں میں چھوٹی چھوٹی نہروں کے کنارے کچے راستے اس موسم میں دھول سے اٹ جاتے ہیں۔ کیکر پیلے پھولوں کی چادر اتار کر پھلیوں کے گہنے کانوں میں آویزاں کر لیتے ہیں۔ ٹاہلیوں کی چھائوں فاختائوں کا ٹھکانہ بنتی ہے۔ گھاس حبس کی باس دیتا ہے اور سانپ راتوں کو باہر نکل آتے ہیں۔ میری یہ لفظی تصویریں منطق الطیر، جدید کی تصویروںکے سامنے ہیچ ہیں۔ ہم زمین
پیر 10 جون 2019ء

اپوزیشن کی احتجاجی قوت کا تجزیہ

پیر 03 جون 2019ء
اشرف شریف
اپوزیشن نے تحریک انصاف کی حکومت کو گرانے کے لئے ماحول بنانا شروع کر دیا ہے۔ افطار پارٹی میں مولانا فضل الرحمن شہ بالا بنے ہوئے تھے۔ مسلم لیگ ن جانتی ہے اس کے کارکن احتجاجی تحریک نہیں چلا سکتے۔ حمزہ شہباز کا ونگ جانے کیوں مریم نواز کے مقرر کئے گئے عہدیداروں سے ناراض ہے۔ پنجاب میں ملک احمد خان کی جگہ عظمیٰ بخاری کو پارٹی ترجمان بنا کرداخلی تقسیم گہری کر دی گئی ہے۔ بلا شبہ ن لیگ کو ووٹ نواز شریف کے نام پر پڑتے ہیں مگر پس پردہ انتظامات اور ڈیل کا کام شہباز شریف کے
مزید پڑھیے


مودی‘ ہندو توا اور دو قومی نظریہ

پیر 27 مئی 2019ء
اشرف شریف
فورٹ ولیم کالج کی خدمات کے نتیجے میں ہمیں انگریزی و سنسکرت کا بہترین ادب پڑھنے کا موقع ملا۔ فورٹ ولیم کی کوکھ سے دو قومی نظریہ ابھرا اور پھر بہت سے برسوں کے بعد بھارتیہ جنتا پارٹی قائم ہوئی۔ معلوم ہوا کہ زبان کو تقسیم کر کے کسی بھی آبادی کو تقسیم کیا جا سکتا ہے۔ مذہب ‘ ثقافت اور نجی زندگی کا اختلاف پہلے سے موجود تھا مگر جب دیو ناگری اور فارسی رسم الخط ہندو اور مسلمان کی شناخت بنے تو صدیوں کے تعصبات اور نفرتیں ابھر کر سامنے آنے لگیں۔ کانگرس قائم ہوئی تو سرسید نے
مزید پڑھیے


گھاس اگانے کے دن

پیر 20 مئی 2019ء
اشرف شریف
ذوالفقار علی بھٹو نے جب بھارت کے مقابلے میں ایٹمی پروگرام شروع کرتے وقت کہا کہ ’’گھاس کھا لیں گے مگر ایٹم بم بنائیں گے‘‘ تو قوم نے اسے محاورہ جان کر واہ واہ کی۔ لاہور میں جب اسلامی کانفرنس ہوئی تو اس میںشاہ فیصل، معمر قذافی اور بھٹو کی تکون خاص طور پر مرکز نگاہ رہی۔ تینوں نے اپنے ملکوں اور مسلم اُمہ کیلئے ’’گھاس کھانے‘‘ کا اعلان کیا اور تینوں کی موت افسوسناک طریقے سے ہوئی۔ نواز شریف تو خیر عالمی سیاست کی نزاکتوں سے واقف ہی نہیں۔ اس جہل کا انہیں فائدہ ہوا کہ ان کی ہر
مزید پڑھیے


روزہ دار بیٹیاں

پیر 13 مئی 2019ء
اشرف شریف
مناہل اپنی زندگی کا پہلا روزہ رکھ رہی تھی۔ پچھلے برس روزے کی ضد کیا کرتی۔ اس سے گزشتہ سال بھی روزہ رکھنے پر اصرار‘ دو سال چڑی روزہ کہہ کر سحری کے وقت کھلایا اور صبح افطار کرا دیا۔ اس بار چڑی روزے کا کہا تو فوراً انکار آ گیا۔ رات سونے سے پہلے صورت حال یہ کر دی کہ اس کی ماں اور مجھے ماننا پڑی۔ میں نے پہلا روزہ رکھا تو میری نانی اماں نے دودھ میں جلیبیاں ڈال کر دی تھیں۔ مجھے رات جلیبیاں نہ مل سکیں ۔ بیٹی کے لیے ماں نے کچھ اہتمام کیا
مزید پڑھیے




ریاست اور شریف خاندان میں تعلق

پیر 06 مئی 2019ء
اشرف شریف
جنرل پرویز مشرف سے معاہدہ کر کے نواز شریف جدہ جا چکے تھے۔ پاکستان میں پارٹی کے معاملات نام کو جاوید ہاشمی کی صدارت میں سونپ دیے گئے تھے مگر عملاً بہت سے مخبر براہ راست سرور پیلس جدہ کو رپورٹ کرتے تھے۔ مسلم لیگ ن کے ایک کارکن کے ساتھ سروسز ہسپتال میں معائنے کے لئے آئے جاوید ہاشمی سے ملنے گیا۔ جاوید ہاشمی ان دنوں حراست میں تھے۔ جس روز انہوں نے ہسپتال آنا ہوتا لیگی کارکن اور میڈیا کے لوگ انہیں ملنے آ جاتے۔ میں نے جاوید ہاشمی کی گفتگو سنی۔ وہاں موجود کارکنوں کی باتیں سنیں
مزید پڑھیے


عمران کے خلاف تحریک کی باتیں

پیر 29 اپریل 2019ء
اشرف شریف
کپتان ایک غیر روائتی آدمی ہے۔ ویسے ہمارے سماج میں روایتی اور غیر روائتی کی شناخت عرصہ ہوا دھندلا چکی ہے۔ روائت سے جڑا ہوا شاعر ہو تو وہ اساتذہ کے رنگ میں شعر کہتا ہے۔ شعری خیالات کو باندھتا ہے اور لفظیاتت کے ہنر کو استعمال کرتا ہے۔ کرکٹ کا روائتی کھلاڑی ہو تو بھلا مانس بنا رہتا ہے‘ بیٹ کو قدیم کلاسیکل شاٹس کے لئے مہارت سے استعمال کرتا ہے۔ سٹائل‘ تحمل اور صاف ستھری کرکٹ کو ترجیح دیتا ہے ۔ بائولر ہو تو روائتی انداز میں غصہ ظاہر کرنے کے لئے باونسر پر اکتفا کرتا ہے۔ کچھ
مزید پڑھیے


طالبان کی ہوشیاری اور دوحہ بیٹھک کی ناکامی

پیر 22 اپریل 2019ء
اشرف شریف
دوحہ میں افغان طالبان اور کابل حکومت کے نمائندوں کے درمیان مذاکرات ملتوی ہونے پر امریکہ کے خصوصی نمائندے زلمے خلیل زاد بڑے مایوس ہوئے ہیں۔ اس مایوسی کی وجہ مذاکرات کا التوا نہیں بلکہ امریکہ کی ان کوششوں کی ناکامی ہے جو وہ کابل حکومت کو تنازع کا فریق بنانے کے لئے کر رہا ہے۔ افغان طالبان کی طرف سے کابل حکومت کی بجائے صرف امریکہ سے مذاکرات کی ضد امریکہ کے لئے آزمائش ہے۔ امریکی حکام اگر اشرف غنی حکومت کے بغیر طالبان سے انخلا کے معاملات طے کرتے ہیں تو تاریخی دستاویزات میں انہیں براہ راست ایک
مزید پڑھیے


عمران حکومت سے اتحادیوں کی توقعات

پیر 15 اپریل 2019ء
اشرف شریف
سوال اہم تھا‘ جواب اس سے بھی اہم آیاعمران خان اگر ریاستی اسٹیبلشمنٹ کو اتنا ہی عزیز تھے تو انہیں پندرہ سولہ نشستیں جتوا کر اتحادیوں کی بلیک میلنگ سے آزاد نہیں رکھا جا سکتا تھا۔جواب ایک سینئر صحافی کو ملا! ’’آپ اسی سے اندازہ کریں کہ عمران خان کو کامیاب کرانے کا الزام اگر درست ہوتا تو یہ پندرہ نشستیں بھی دلوائی جا سکتی تھیں‘‘۔ اس سوال کا تعلق عمران خان کے اتحادیوں مسلم لیگ ق ‘ایم کیو ایم اور گرینڈ ڈیمو کریٹک الائنس کے ساتھ تعلقات سے ہے۔ آج تک ملک میں کام تو ہوا نہیں۔ بس مسائل
مزید پڑھیے


مذاکرات کا نیا مرحلہ اور طالبان نمائندوں کی فہرست

پیر 08 اپریل 2019ء
اشرف شریف
امریکہ کے نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد پاکستان آئے بظاہر انہوں نے طالبان کوسفری سہولیات دینے کے لئے پاکستان سے درخواست کی۔ امریکہ کا خیال ہے کہ پاکستان اگر طالبان کو امریکہ سے مذاکرات پر آمادہ کر سکتا ہے تو پھر طالبان کو افغان حکومت سے بات کرنے پر بھی رضا مند کر سکتا ہے۔ زلمے خلیل زاد پاکستان سے یہی بات کرنے آئے۔ ایک انگریزی معاصر کا کہنا ہے کہ اگلے چند روز میں شروع ہونے والے تازہ مذاکراتی مرحلے میں افغان حکومت کے نمائندے شرکت کریں گے۔ دوسری طرف طالبان ذرائع اس خبر کی تردید کر رہے ہیں۔
مزید پڑھیے