BN

محمد اظہارالحق

ایک دن اس کا جہاز آ جائے گا


شہروں میں شہر ہے اور بہشتوں میں بہشت! افسوس! شاہ عباس صفوی کو اس شہر کا پتہ نہ تھا ورنہ تبریز کو چھوڑا تو اصفہان کے بجائے یہاں کا رخ کرتا۔ تیمور اسے دیکھتا تو سمرقند کا درجہ دیتا۔ بابر کا گزر ہوتا تو کابل کو یاد کرکے آنسو نہ بہاتا۔ شاہ جہان اسی کو آگرہ بنا لیتا۔ بادشاہ نے بخارا سے دور پڑائو ڈالا۔ واپسی کا نام نہیں لے رہا تھا۔ رودکی نے بخارا کو یاد کرایا تو چل پڑا ؎ بوئی جوئی مولیاں آید ہمی یاد یار مہرباں آید ہمی میر مہ است و بخارا آسماں ماہ سوئی آسماں
منگل 18  ستمبر 2018ء

حلوے کا سرا نہ تلاش کیجیے

هفته 15  ستمبر 2018ء
محمد اظہارالحق
آپ بحث کیے جا رہے ہیں۔ عقل اور منطق کی بنیاد پر دلائل دے رہے ہیں۔ کرپشن کے اعداد و شمار پیش کر رہے ہیں۔ دوسرا شخص زور اس بات پر دے رہا ہے کہ یہ حکمران ولی اللہ تھا کیوں کہ اس کے لیے سعودی حکومت نے کعبۃ اللہ کا دروازہ کھولا تھا۔ آپ مزید دلائل دیتے ہیں اور بتاتے ہیں کہ کس کس طرح قانون کو پامال کیا گیا۔ جوابی دلیل یہ دی جاتی ہے کہ انہوں نے جو کچھ کیا غریب عوام کی خاطر کیا، جو بات آپ بھول رہے ہیں یہ ہے کہ جس سے بحث
مزید پڑھیے


جب لاد چلے گا بنجارا

جمعرات 13  ستمبر 2018ء
محمد اظہارالحق
مکان بنتے دیکھا۔ کل میں نے بھی بنانا ہوگا۔ خوب دلچسپی لی۔ ایک ایک بات پوچھی۔ نقشہ کہاں سے بنوایا؟ ٹھیکہ کسے دیا؟ کمروں کا سائز کیا ہے؟ غسل خانے پر کیا خرچ آیا؟ ٹائلیں لگوائیں یا فرش ماربل کا رکھا؟ سیوریج کے پائپ کون سے برانڈ کے بہترین ہیں؟ نقشہ پاس کیسے ہوگا؟ فلاں راج کی شہرت کیسی ہے؟ ایک ایک تفصیل، سوئچ تک، کنڈی تالوں تک کی۔ شادی کی تقریب میں شرکت کی۔ مجھے بھی بیٹے کی شادی کرنی ہے۔ سب کچھ پوچھا۔ کون سا شادی ہال مناسب ہے۔ کھانے کا مینو کیا تھا؟ زیورات کہاں سے اچھے بنے؟
مزید پڑھیے


ڈی ایم جی کا بیل اور عمران خان

منگل 11  ستمبر 2018ء
محمد اظہارالحق

نہیں! ہرگز نہیں!

عمران خان صاحب اگر اُن پامال شدہ راستوں پر چلتے رہے جن پر اُن کے پیشرو چلے اور ناکام ہوئے تو عمران خان بھی ناکام ہوں گے کیونکہ اللہ کی سنت یہی ہے۔ وہ جو سعدی نے کہا تھا، سوچ سمجھ کر کہا تھا     ؎

ترسم نہ رسی بکعبہ اے اعرابی

کیں رہ کہ تو می روی بہ ترکستان است

ابے او بَدُّو! رُخ تیرا ترکستان کی طرف ہے۔کعبہ کیسے پہنچے گا!

نواز شریف نے ایک ریٹائرڈ، ازکار رفتہ، ضعفِ پیری سے خستہ، بیورو کریٹ کو وزیر اعظم آفس میں نصب کر دیا اس لیے کہ ایک تو وہ خواجہ تھا،
مزید پڑھیے


زمیں گردش میں ہے‘ اس پر مکاں رہتا نہیں ہے

اتوار 09  ستمبر 2018ء
محمد اظہارالحق

بچہ جو ماں کی گود میں پڑا سسک رہا تھا۔ سات آٹھ سال کا لگ رہا تھا مگر تھا پندرہ سولہ سال کا۔ اس کے جسم نے نشوونما نہیں قبول کی تھی۔ اس کا ڈائیلیسز ہورہا تھا۔ یعنی گردے کام نہیں کر رہے تھے اور خون کی صفائی کا کام جو گردے کرتے ہیں‘ مشین کے ذریعے ہورہا تھا۔

ایک اور بیڈ پر ایک خاتون کا ڈائیلیسز ہورہا تھا۔ ایک مریض سے پوچھا کہ کتنے عرصہ سے ڈائیلیسز پر ہے۔ اس نے بتایا‘ تیرہ برس سے۔

ہر طرف مشینیں لگی تھیں۔ مریض لیٹے ہوئے تھے‘ مستعد‘ چاق و چوبند سٹاف‘ ان کی
مزید پڑھیے


بھنویں تنتی ہیں‘ خنجر ہاتھ میں ہے‘ تَن کے بیٹھے ہیں

هفته 08  ستمبر 2018ء
محمد اظہارالحق

ای جی برائون 1862ء میں انگلستان میں پیدا ہوا۔ باپ انجینئر تھا۔ برائون کو ترکی اور ترکی کے باشندوں میں دلچسپی تھی اس لیے اس نے مشرقی زبانیں پڑھنا شروع کر دیں۔1882ء میں اس نے قسطنطنیہ کا سفر کیا۔ پھر اس کی توجہ ایران اور فارسی کی طرف ہو گئی۔1893ء میں اس نے اپنی مشہور کتاب‘‘ایک برس ایرانیوں کے ساتھ‘‘ شائع کی۔ پھر وہ فارسی ادب میں غرق ہو گیاعمرِ عزیز کے بائیس برس لگا کر اس نے چار جلدوں میں ’’لٹریری ہسٹری آف پرشیا‘‘ لکھی جو ایک شہکار ہے۔ ان چار جلدوں میں ایران کی سیاسی تاریخ بھی ہے‘
مزید پڑھیے


راجہ ظفر الحق صاحب کے نام کُھلا خط

جمعرات 06  ستمبر 2018ء
محمد اظہارالحق
رومی نے ہزار افسوس کے ساتھ بتایا تھا کہ شیخ ہاتھ میں چراغ لیے سارے شہر میں گھوما کہ میں شیطانوں اور عفریتوں سے دل برداشتہ ہو گیا ہوں اور اب مجھے کسی انسان کی آرزو ہے! ایک ہاتھ میں کیا‘ دونوں ہتھیلیوں پر چراغ رکھ کر پوری نون لیگ میں گھوم چکے سوائے آپ کے کوئی رجل رشید نہیں نظر آ رہا جس سے گلہ کریں‘ جس کا دامن پکڑ کر کھینچیں‘ جس سے فریاد کریں! آپ کا نام کبھی کسی مالی سکینڈل میں نہیں آیا۔ آپ نے شائستہ سیاست کی اور کبھی کسی کے لیے نازیبا الفاظ استعمال نہیں
مزید پڑھیے


سماجی شعور بازار میں دستیاب نہیں

منگل 04  ستمبر 2018ء
سجاد میر
دارالحکومت میں دو روز پیشتر بھیڑ بکریوں اور گایوں بھینسوں کا ایک انبوہ دیکھا اور اس نتیجے پر پہنچا کہ اس قوم کو قائد اعظم ٹھیک کر سکے نہ عمران خان کر سکتا ہے۔ مہاتیر آ جائے تب بھی اس کا کچھ نہیں بگاڑ سکتا۔ چرچل سے لے کر ڈیگال تک اور اتاترک سے لے کر لی کوان یوتک سب قبروں سے اٹھ کر آ جائیں تب بھی بھیڑ بکریوں گایوں بھینسوں کا یہ ریوڑ انسانوں میں نہیں بدل سکتا! بھیڑ بکریوں اور گایوں بھینسوں کے اس انبوہ کو دیکھ کر اس نتیجے پر بھی پہنچنا پڑا کہ اس قوم کی
مزید پڑھیے


حفیظ جالندھری کی ایک نایاب نظم

اتوار 02  ستمبر 2018ء
محمد اظہارالحق
26اگست کے کالم میں بچوں کے لیے لکھی گئی شاعری کا تذکرہ ہوا۔ لاتعداد ای میلز موصول ہوئیں۔ ایک تو یہ پوچھا گیا کہ صوفی تبسم نے ٹوٹ بٹوٹ کے عنوان سے جو کتاب لکھی وہ کہاں سے ملے گی۔ دوسری فرمائش جو کثیر تعداد میں اندرون ملک اور بیرون ملک سے کی گئی یہ تھی کہ حفیظ جالندھری کی شہرہ آفاق نظم ’’تُڑم تم تُڑم‘‘ انہیں بھیجی جائے۔ ’’ٹوٹ بٹوٹ‘‘ کافی عرصہ آئوٹ آف پرنٹ رہی۔ خوش قسمتی سے اب مارکیٹ میں دستیاب ہے۔ کسی بھی بڑے کتاب فروش کے ہاں سے مل سکتی ہے۔ رہی حفیظ جالندھری کی نظم
مزید پڑھیے


خدا کے لیے جناب وزیراعظم! خدا کے لیے

هفته 01  ستمبر 2018ء
محمد اظہارالحق
آٹھ گھنٹے کی بریفنگ! جی ایچ کیو کے افسروں سے آٹھ گھنٹے معاملات و مسائل کی تفصیل سننا۔ نوٹس لینا۔ سوالات کرنا۔ بحث کرنا۔ آٹھ گھنٹے! چار سو اسی منٹ! یہ عمران خان نے کیا کاروبار شروع کردیا ہے۔ آنے والے وزرائے اعظم کے لیے اتنا مشکل معیار چھوڑ کر گیا تو کیا ہوگا؟ کیا اب وزرائے اعظم کو محنت کرنا پڑے گی! بھائی لوگو! یہ منصب وزیراعظم کا اس لیے نہیں تھا کہ محنت مشقت کی جائے یہ تو لمبی تعطیلات کے لیے تھا۔ جسے فرنگیوں کی زبان میں Paid Holiday کہا جاتا ہے۔ یعنی ایسی تعطیلات کہ تنخواہ بھی ملے، مراعات بھی اور
مزید پڑھیے