BN

افتخار گیلانی


سرحد کے اطراف دو پارٹیاں ، ایک کہانی ……(2)


چونکہ پنچ مڑی کا اجلاس اس کے فوراً بعد ہی ہوا، اسلئے قرار داد میں طے پایا کہ پارٹی کسی اتحاد کے بغیر اپنے بل بوتے پر سیاسی زمین ہموار کرکے 1988کی پہلی والی پوزیشن میں آنے کی کوشش کرے گی۔ مگر متواتر انتخابات ہارنے اور خاص طور پر 2002میں گجرات کے مسلم کش فسادات سے دلبرداشتہ کمیونسٹ پارٹی آ ف انڈیا (مارکسسٹ ) کے لیڈر آنجہانی ہر کشن سنگھ سرجیت نے سونیا گاندھی کو قائل کیاکہ اکیلے چلنے کی حکمت عملی اور سیاسی زمین کی واپسی کی جدو جہد کے بجائے سیکولر اور لبرل فورسز کو اکٹھا کر
جمعرات 09 دسمبر 2021ء مزید پڑھیے

سرحد کے اطراف دو پارٹیاں ، ایک کہانی

منگل 07 دسمبر 2021ء
افتخار گیلانی
دسمبر کے مہینہ کو جنوبی ایشیا کی سیاسی تاریخ میں ایک کلیدی اہمیت حاصل ہے۔ اسی ماہ میں ہی اس خطے کی دواہم سیاسی جماعتیں انڈین نیشنل کانگریس اور آل انڈیا مسلم لیگ معرض وجود میں آئیں۔ 136سال قبل 28دسمبر 1885کو ایک برطانوی سول سروس آفیسر اور ریفارمر آلائن اوکٹاوئین ہیوم نے وائسرائے لارڈ ڈیفرین کی ایما پر ممبئی میں کانگریس کی داغ بیل ڈالی اور امیش چندر بنرجی کو اسکا پہلا صدر منتخب کیا گیا۔ مسلم لیگ کا قیام 30دسمبر 1906کو موجودہ بنگلہ دیش کے دارالحکومت ڈھاکہ میں عمل میں آیا اور سلطان محمد شاہ آغا خان سوم
مزید پڑھیے


روسی صدر کا دورہ ،بھارتی سفارتکاری کیلئے امتحان

منگل 30 نومبر 2021ء
افتخار گیلانی
اگلے ہفتے روسی صدر ولادیمیر پوتن کا نئی دہلی کاطوفانی دورہ اور اسکے ساتھ ہی جدید ترین ایس۔400 دفاعی میزائلوں کی پہلی کھیپ کی ترسیل، بھارتی سفارت کاری کیلئے امتحان کا مرحلہ ثابت ہو رہا ہے۔بھارتی وزارت خارجہ اس وقت اپنے دیرینہ سرد جنگ کے حلیف روس اور نئے اسٹریٹجک یار امریکہ کے درمیان تعلقات میں توازن قائم رکھنے کے مشکل ترین کام کو انجام دینے میں مصروف ہے۔ بھارت نے پچھلی دو دہائیوں سے گو کہ اپنا تزویراتی قبلہ امریکہ کی طرف موڑ لیا ہے، مگر اسٹاک ہوم انٹرنیشنل پیس ریسرچ کے مطابق ابھی بھی اسکی سالانہ 58فیصد دفاعی
مزید پڑھیے


کشمیر کی ہیبت ناک کہانیاں

منگل 23 نومبر 2021ء
افتخار گیلانی
کوئی شقی القلب انسا ن ہی حیدر پورہ سرینگر میں حال ہی میں ہوئے ’’جعلی مقابلے ‘‘کے دوران ہلاک شدہ محمد الطاف بٹ اور ڈاکٹر مدثر گل کے لواحقین اور انکی کم سن بچیوں کی فریادیں سن کر خون کے آنسو نہ رویا ہوگا۔ ستم ظریفی تو یہ ہے کہ وہ انصاف یا ظالموں کو سزا دینے کی مانگ کرنے کے بجائے الطا ف اور مدثر کی لاشوں کی تدفین اور نماز جنازہ ادا کرنے کا مطالبہ کر رہے تھے۔ عوامی دباوٗ کی وجہ سے بعد میں انکی لاشیں ورثاء کے سپرد تو کی گئیں ، مگر پولیس کی
مزید پڑھیے


ترک ممالک کی تنظیم کا قیام۔ ایک نئے ورلڈ آرڈر کی نوید

منگل 16 نومبر 2021ء
افتخار گیلانی
ترکی کے شہر استنبول میں پچھلے ہفتے ترک زبان بولنے والے ممالک کی تنظیم ترک کونسل کے سربراہان کے اجلاس کے دوران اس تنظیم کو عرب لیگ کی طرز پر باضابط ایک سیاسی فورم کی شکل دی گئی۔ اجلاس کے اختتام پر بتایا گیا کہ ترک کونسل کا نام تبدیل کرکے ترک ریاستوں کی تنظیم رکھ کر اسکو مزیدفعال بناکر تعلقات کو مزید مضبوط اور نئی راہداریاں قائم کرکے اشتراک کی نئی راہیں ڈھونڈی جائیں گی۔ترک وزیر خارجہ مہولت چاوش اوغلو نے کہا کہ کونسل ایک تبدیلی کے منصوبے سے گزر رہی ہے اور عالمی سیاست میں ایشیا کے
مزید پڑھیے



گوانتانامو کی کہانی،ایک کشمیری صحافی کی زبانی…(2)

منگل 09 نومبر 2021ء
افتخار گیلانی
گوانتانامو کو امریکی صدر جارج بش نے قید خانے کے طور پر منتخب کیا تھا، کیونکہ امریکی حدود سے باہر ہونے کی وجہ سے یہ امریکی عدالتوں کی دسترس سے دور ہے۔ لہذا قیدیوں کی فوری ٹرائل کرنے کی ضروت نہں تھی۔ نزاکت کے مطابق اس قید خانے تک پہنچے کیلئے کئی سیکورٹی رکاوٹوں کو عبور کرنا پڑتا ہے۔ ان جزائر تک پہنچے کیلئے پہلے فلوریڈا کے فورٹ لاوڈیرڈیل میں پیش ہونا پڑتا ہے، جہاں جانچ پڑتال کے بعد ہوائی جہاز کے ذریعے گوانتانامو خلیج کے ایک جزیرے لیوارڈ میلے پر موجود ملٹری ایرپورٹ تک لے جایا جاتا ہے۔ سیکورٹی
مزید پڑھیے


گوانتانامو کی کہانی،ایک کشمیری صحافی کی زبانی

پیر 08 نومبر 2021ء
افتخار گیلانی
عراقی جیل ابو غریب ہو یا کشمیر میں کارگو، گوگو لینڈ، ریڈ 16 یا دہلی کی تہاڑ جیل کی قصوری سیل۔ان کا نام ہی خوف و دہشت میں مبتلا کردیتا ہے۔مگر دنیا کی سب سے پرانی جمہوریت، لبرل ازم اور انسانی حقوق کے دعویدار امریکہ نے گوانتانامو قائم کرکے تعدیب کے سبھی ریکارڈ توڑ ڈالے۔ حال ہی میں افغانستان سے امریکی افواج کے انخلا اور پھر ایک امریکی عدالت کی طرف سے گوانتانامو میں قید ایک افغان شہری اسداللہ خان گل کو 14سال بعد بے قصور ٹھہرانے سے یہ تعدیب خانہ ایک بار پھر توجہ کا مرکز بن گیا ہے۔ دہلی
مزید پڑھیے


کشمیر کے گلیشیروں کی تباہی کسی ایٹمی جنگ سے کم نہیں…(2)

بدھ 03 نومبر 2021ء
افتخار گیلانی
دوسری طرف ہندو شدت پسند لیڈروں نے بھی پورے ملک میںمہم شروع کرکے بڑے پیمانے پر ہندووں کو امرناتھ کی یاترا کیلئے راغب کرنا شروع کردیا۔ اتراکھنڈ کے چار دھام کی طرح امر ناتھ کو بھی سیا حت اور بھارت کی شدت پسند قومی سیاست کے ساتھ جوڑنے کی کوششیں کی گئیں۔ پروفیسر کول کے مطابق اگر اس علاقے میں اسی طرح ہزاروں یاتریوں کی آمدورفت کا سلسلہ جاری رہا تو ماحولیات اور گلیشیر کو ناقابل تلافی نقصان پہنچے گا۔لیکن اس مشورے پر کان دھرنے کے بجائے بھارتی حکومت زیادہ سے زیادہ یاتریوں کو بال تل کے راستے ہی
مزید پڑھیے


کشمیر کے گلیشیروں کی تباہی کسی ایٹمی جنگ سے کم نہیں

منگل 02 نومبر 2021ء
افتخار گیلانی
سکاٹ لینڈ کے دارالحکومت گلاسگو میں جہاں اس وقت 26ویں عالمی ماحولیاتی کانفرنس کا آغاز ہو چکا ہے، چاہئے تھاکہ جنوبی ایشیائی ممالک ماحولیاتی مسائل پر کوئی مشترکہ حکمت عملی اپناتے، اس پورے خطے میں ہر سال کہیں خشک سالی، تو کہیں سیلاب، تپش، سمندری طوفان اور اب جاڑوں میں ہوائی آلودگی کی وجہ سے سینکڑو ں افراد لقمہ اجل ہو جاتے ہیں۔ 2009میں کوپن ہیگن میں اسی طرح کی کانفرنس سے قبل اس وقت بھارت کے وزیر ماحولیات جے رام رمیش نے پاکستانی مذاکراتی ٹیم کے سربراہ اقبال خان سے ملاقات کے بعد بتایا تھا کہ دونوں ممالک ماحولیات
مزید پڑھیے


رگھناتھ کستور اور ابن حسام کا کشمیر ……(3)

جمعرات 28 اکتوبر 2021ء
افتخار گیلانی
بقول شیخ محمد عبداللہ ’’پنڈتوں کے جذبہ امتیاز کو تقویت دینے کے لیے آدتیہ ناتھ بھٹ کو ان کی مراعات کا نگہبان مقر ر کیا۔ جنوبی و شمالی کشمیر میں کشمیری پنڈت ہی گورنر بنائے گئے‘‘۔ افغان دورکی ظلم و ستم کی کہانیاں جہاں کشمیر میں زباں زدِ عام ہیں، اس وقت بھی کشمیری پنڈت ظالموں کی صف میں اپنے ہم وطنوں سے کٹ کر کھڑے تھے۔ بلند خان سدوزئی نے کیلاش در پنڈت کو وزیر اعظم بنایا تھا۔ حاجی کریم داد خان نے پنڈت دلا رام کوپیش کار کا عہدہ دیا تھا۔ افغان حکومت کے زوال کے بعد
مزید پڑھیے








اہم خبریں