BN

افتخار گیلانی

بھارت:پڑوسی ممالک کیلئے عطیہ یا عفریت


نومبر 2014 ء کو کھٹمنڈو میں سارک سربراہ کانفرنس اور بعد میں بنگلہ دیش کے دورہ کے موقع پر بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے کہا تھا کہ ان کے انتخابی نعرے’’سب کا ساتھ ، سب کا وکاس(ترقی)‘‘ کا اطلاق پڑوسی ممالک پر بھی ہوتا ہے۔ یعنی بھارت کی ترقی و خوشحالی میں وہ پورے جنوبی ایشیا ء کو شامل کروانا چاہتے ہیں۔ مگر پچھلے ساڑھے چار سالوں کی بھارت کی خارجہ اور سکیورٹی پالیسی نیز حقائق و واقعات کا تجزیہ کرنے سے پتہ چلتا ہے کہ ایک حساس پڑوسی کے برعکس بھارت نے اس خطے میں اپنے آپ کو
منگل 18  ستمبر 2018ء

امریکی وزیر خارجہ کا دورہ اور بھارت پاک تعلقات

منگل 11  ستمبر 2018ء
افتخار گیلانی
پچھلے ہفتے پاکستان کی نئی حکومت نے خطہ کے دورے پر آئے امریکی وزیر خارجہ مائیکل رچرڈ پومپیوکے ذریعے بھارت کو خیر سگالی کا پیغام پہنچانے کی کوشش کی۔ وزیر اعظم عمران خان اور وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے امریکی حکام کو باور کرانے کی سعی کی کہ انکی حکومت پڑوسی ممالک کے ساتھ امن اور اس خطے میں استحکام کی خواہاں ہے اور ان سے درخواست کی کہ چونکہ امریکی وفد اسلام آباد کے بعد براہ راست دہلی وارد ہورہا ہے، اسلئے بھارت کی نریندر مودی حکومت کو مذاکرات کی میز پر آنے پر آمادہ کریں۔بھارت میں
مزید پڑھیے


آزاد ی ٔاظہارِ رائے بنام اسلام و مسلمان…(2)

بدھ 05  ستمبر 2018ء
افتخار گیلانی
جب ان کی اس روش کے خلاف کوئی آواز اٹھاتا ہے تو ہمدردی بٹورنے کیلئے اظہار آزادی رائے کو آڑ بناکر مسلمانوں کے رویہ کو نشانہ بناتے ہیں۔ وہ ناموس رسالت ؐکے حق میں مسلمانوں کے ردعمل کو جمہوریت کے لئے خطرناک بتاتے ہیں۔ مگر یہی نام نہا ددانشور‘ ادیب ‘ مصنفین اور ٹی وی اینکر اپنے ملک کے اندر ہی اظہار رائے کی آزادی کا گلاگھونٹے جانے کے متعدد واقعات پر چپ سادھ لیتے ہیں ‘ گویا انہیں سانپ سونگھ جاتا ہے۔ابھی جس طرح پورے ملک میں انسانی حقوق کے کارکنوں کے گھروں پر چھاپے مار کر
مزید پڑھیے


آزاد ی ٔاظہارِ رائے بنام اسلام و مسلمان

منگل 04  ستمبر 2018ء
افتخار گیلانی
مقدس شہر یروشلم کے مغربی حصہ میں ہولوکاسٹ میوزم کا دورہ کرنے کے بعد انتہائی شقی القلب شخص ہی اپنے آنسو روک پاتا ہے یا یہودیوں پر جرمن نازیوں کے ذریعے برپا ظلم و ستم کو صحیح ٹھہرا پائیگا۔ چند برس قبل جب میں نے اس میوزیم کا دورہ کیا، تو استقبالیہ کاونٹر کے پاس کانوں میں لگانے والی کمنٹری مشینیں فراہم کروانے کے بعد ہماری بھارتی نژاد اسرائیلی گائیڈنے اندر رہنمائی کرنے سے معذوری ظاہر کی اور مشورہ دیا کہ اس میوزم کو انفرادی طور پر ، آزاد ذہن کے ساتھ بغیر نگرانی یا رہنمائی کے دیکھنا مناسب ہے۔
مزید پڑھیے


کلدیپ نیئر : بہتر رشتوں کا نقیب چلا گیا …(2)

بدھ 29  اگست 2018ء
افتخار گیلانی
ایک طرح سے کلدیپ نیئر کی صحافت کا آغاز انجام سے ہوا۔ ڈیڑھ سال وہاں کام کرنے کے بعد پرانی دہلی میں ہی ایک دوسرے اخبار وحدت کی ادارت میں چلے گئے۔ اسی دوران آفس سے متصل ایک کٹیا نما کمرے میں وہ ایک بزرگ شخص کو کھانستے ہوئے دیکھ کر دق ہوتے تھے اور غصہ بھی ہوتے تھے کہ یہ شخص اپنا علاج کیوں نہیں کراتا ہے۔ اس کٹیا میں کتابوں کا انبار بھی لگا ہو ا تھا۔ معلوم ہوا کہ دمہ کے مریض یہ بزرگ کوئی اور نہیں بلکہ مولانا حسرت موہانی ہیں۔ وہ آئین ساز اسمبلی کے
مزید پڑھیے


کلدیپ نیئر : بہتر رشتوں کا نقیب چلا گیا

منگل 28  اگست 2018ء
افتخار گیلانی
کسی پنڈت نے پیش گوئی کی تھی کہ اگست کا مہینہ بھار ت کیلئے بھاری ہوگا۔ لگتا ہے کہ یہ پیش گوئی حرف بہ حرف سچ ثابت ہورہی ہے۔ نہ صرف جنوبی صوبہ کیرالا میں سیلاب سے تباہی ہو ئی ہے، بلکہ سرکردہ افراد کی اموات کا گویا ایک سلسلہ سا شروع ہو گیا۔ ابھی تامل ناڈو کے سابق وزیر اعلیٰ کروناندھی کی موت کا سوگ جاری تھا ، کہ مغربی بنگال سے خبر آئی کہ بائیں بازو کے لیڈر اور سابق اسپیکر سومناتھ چٹرجی چل بسے۔ ابھی انکی تعزیت کا سلسلہ جاری تھا کہ سابق وزیرا عظم اٹل بہاری
مزید پڑھیے


واجپائی :معتدل یا موقع پرست سیاستدان؟ 3

اتوار 26  اگست 2018ء
افتخار گیلانی
اور رات 8بجے کے بعد آرام کرنے چلے جاتے تھے۔ ان کے اس شیڈول کی وجہ سے انکے غیر ملکی دورے بھی تین دن کے بجائے پانچ دن رکھے جاتے تھے، جس کی وجہ سے وفد کے ساتھ آئے افسران اور میڈیا کو کھل کر شہر دیکھنے اور شاپنگ کا موقعہ ملتا تھا۔ نیویارک کے اس دورہ کے دوران واجپائی کی ملاقات اسرائیلی وزیر اعظم بنیامین نیتن یاہو کے ساتھ بھی طے تھی۔ نیتن ہاہو بھی پہلی بار 1996ئمیں اقتدار میں آئے تھے۔ یہ بھی ایک دلچسپ امر ہے کہ تل ابیب اور دہلی میں سخت گیر دائیں بازوعناصر
مزید پڑھیے


واجپائی :معتدل یا موقع پرست سیاستدان؟ (2)

بدھ 22  اگست 2018ء
افتخار گیلانی

اسی طرح مارچ 2003ء میں جب امریکی صدر جارج بش نے عراق پر فوج کشی کی تو ان کا اصرار تھا کہ بھارت بھی برطانیہ، آسٹریلیااور پولینڈ کی طرح فوجی تعاون دے۔ بی جے پی اور حکومت کے اندر کئی لیڈران اس کے حق میں تھے۔ ان کا خیال تھا کہ جوہری دھماکوں کے بعد بھارت پر جواعلیٰ تکنیک حاصل کرنے پر پابندیا ں عائد ہیں، عراق میں امریکہ کی معاونت کرکے وہ ختم ہوسکتی ہیں۔ پارلیمنٹ کا بجٹ اجلاس جاری تھا اور اسپر خاصی بحث ہو رہی تھی۔ جب پارلیمنٹ 22دن کیلئے وقفہ میں چلی گئی تو اسی دوران
مزید پڑھیے


واجپائی :معتدل یا موقع پرست سیاستدان؟

منگل 21  اگست 2018ء
افتخار گیلانی
بھارت کے سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپائی طویل علالت کے بعد گزشتہ ہفتہ دہلی میں چل بسے۔ و ہ تین بار وزیر اعظم رہے اور غالباً پاکستان کا تین بار دورہ کرنے والے واحد بھارتی لیڈر بھی تھے۔ گو کہ ان کا شمار ہندو قوم پرست بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے اعتدال پسند لیڈروں میں ہوتا ہے، مگر بتایا جا تا ہے کہ بی جے پی اور اسکی مربی تنظیم راشٹریہ سیویم سیوک سنگھ ( آر ایس ایس) نے باضابط ایک منصوبہ کے تحت ان کو کانگریس اور دیگر سوشلسٹ لیڈروں کے مقابل ایک مکھوٹہ کی طرح
مزید پڑھیے


بھارت میں تامل سیاست کا مستقبل…2

بدھ 15  اگست 2018ء
افتخار گیلانی
گو کہ کہ دونوں تامل پارٹیاں اپنے صوبہ کو حق خود اختیاری تو نہیں دلا سکیں، مگر انہوں نے اس کو خوشحال بنانے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی۔ صوبہ کو وسائل مہیا کروانے کیلئے انہوں نے دہلی میں اپنے اثر و رسوخ کا بھر پور استعمال کیا۔ اقتصادی لحاظ سے تامل ناڈو اسوقت بھارت کے ترقی یافتہ صوبوں میں شامل ہے۔ زراعت میں خود کفالت کے علاوہ یہاں صنعتوں کا جال بچھا ہو اہے۔ بھارت کی دو ٹریلین ڈالر کی معیشت میں اسکا حصہ 210بلین ڈالر ہے۔ بھارت میں جہاں اوسط فی کس آمدن 86ہزار سالانہ ہے، وہیں اس
مزید پڑھیے