Common frontend top

افتخار گیلانی


الیکشن کا کاروبار اور کارپوریٹ ادارے


پارلیمانی جمہوریت کی داغ بیل ڈالنے والوں کے خواب و خیال میں نہ رہا ہوگا، کہ اس نظام کا اہم ستون یعنی الیکشن جنوبی ایشیا میں خاص طور پر کاروبار کا روپ دھار کرکے بلیک مارکیٹ سے زیادہ وسیع اور دست غیب سے بھی زیادہ طلسماتی بن سکتا ہے۔ مجھے یاد ہے کہ جب بھارت میں الیکشن کمیشن نے پارلیمانی انتخابات لڑنے والے امیدواروں کیلئے خرچہ کرنے کی حد کو 75لاکھ اور بڑے حلقوں میں 95لاکھ کی، تو ایک دن میں نے دارلحکومت دہلی میں اپنے حلقہ جنوبی دہلی کا دورہ کرکے معلوم کرنے کی کوشش کی ، کہ ایک
بدھ 27 مارچ 2024ء مزید پڑھیے

کیا مودی جنوبی بھارت کو فتح کر پائیں گے؟……(3)

جمعه 22 مارچ 2024ء
افتخار گیلانی
چاہے ڈیفنس یا سپیس کے انجینئریا سائنسدان ہوں، تو اکثر جنوبی بھارت سے ہی تعلق رکھتے ہیں، اس لئے سائنس سے تعلق رکھنے والے ادار ے یا لیبارٹریز بھی اسی خطے میں ہیں۔ جنوب میں پہلے سے ہی کئی اقتصادی کلسٹرز ہیں جن کی فی کس آمدنی $3000 سالانہ سے زیادہ ہے، شمالی بھارت میں اس طرح کی فی کس آمدن صرف دارالحکومت دہلی کے آس پاس اور گجرات کے چند علاقوں تک محدود ہے۔ تلنگانہ نے توگزشتہ چھ سالوں میں اپنی فی کس آمدنی دوگنی یعنی $4000 کر دی ہے۔ جنوبی بھارت کے سیاست دانوں کو بھی
مزید پڑھیے


کیا مودی جنوبی بھارت کو فتح کر پائیں گے؟……(2)

جمعرات 21 مارچ 2024ء
افتخار گیلانی
ایودھیا میں بابری مسجد کی جگہ رام مندر کی تعمیر ، کشمیر کی خصوصی حثیت کا خاتمہ اور شہریت قانون میں ترمیم جیسے ایشوز کو لیکر ہی بی جے پی اسوقت فی الحال میدان میں ہے۔ 2019کے برعکس اس وقت بی جے پی کے پاس کوئی بڑا جذباتی ایشو نہیں ہے۔ 2019میں پلوامہ کشمیر میں حفاظتی دستوں پر حملہ اور پھر بالا کوٹ پر بھارتی فضائیہ کی کاروائی نے ایک ہیجا ن ملک میں برپا کردیا تھا، جس کا مودی نے خاطر خواہ فائدہ اٹھا کر ایوان میں 303نشستیں حاصل کیں۔ ان میں سے 224 نشستوں پر شمالی بھارت
مزید پڑھیے


کیا مودی جنوبی بھارت کو فتح کر پائیں گے؟

بدھ 20 مارچ 2024ء
افتخار گیلانی
بھارت میں الیکشن کمیشن نے سات مرحلوں پر محیط عام انتخابات کا شیڈول جاری کر دیا ہے۔ پہلے مرحلے میں 19اپریل کو ووٹ ڈالے جائینگے، جبکہ آخری مرحلے میں یکم جون کو ووٹنگ ہوگی۔ووٹوں کی گنتی اور نتائج کا اعلان چار جون کو کیا جائیگا۔ یعنی پہلے اور ساتویں مرحلے کے درمیان 44دن کا وقفہ ہوگا، اور اگر انتخابات کے شیڈول کے اعلان سے مدت کو شامل کیا جائے، تو سیاسی پارٹیوں کو 79دن اب تک کی سب سے طویل ترین انتخابی مہم چلانی پڑے گی۔ شیڈول کے اعلان کے ساتھ ہی انتخابی ضابطہ اخلاق کا بھی نفاذ ہوگیا ہے،
مزید پڑھیے


مودی کا دورہ سرینگر اور انتخابی بگل

بدھ 13 مارچ 2024ء
افتخار گیلانی
بھارت میں جلد ہی عام انتخابات کابگل بجنے والا ہے ۔امید ہے کہ اپریل اور مئی میں کئی مرحلوں میں ان کو مکمل کیا جائیگا۔ ویسے تو حکمران ہندو قوم پرست بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) ہمیشہ ہی انتخابی کمپین کے موڈ میں رہتی ہے مگر اس بار 7 مارچ کو سرینگر کے بخشی سٹیڈیم میں عوامی جلسہ سے خطاب کرکے وزیر اعظم نریند ر مودی نے یہ عندیہ دیا ہے کہ ووٹروں کو لبھانے کیلئے کشمیر کا بھرپور استعمال کیا جائیگا۔ 2019کے انتخابات میں پاکستان کو سبق سکھانے کو انتخابی موضوع بنایا گیا
مزید پڑھیے



ملت کا درد مندشفیق الرحٰمن برق چلا گیا۔۔۔(2)

جمعرات 07 مارچ 2024ء
افتخار گیلانی
‘‘ سرائے ترین محلہ میں ہی ایک شخص نے بتا یا کہ کس طرح جب ان کے بھائی کو پولیس پکڑ کر لے گئی تھی، تو آدھی رات کوبرق صاحب ان کے اہل خانہ کے ساتھ پولیس اسٹیشن پہنچے اور رات بھر وہیں رہے، تاآنکہ صبح اس کو اپنے ساتھ رہا کروا کے گھر لاکر ہی دم لیا۔ اس سے یہ بات بھی نقش ہوگئی،کہ مقامی طور پر مسلمانوں کا ایشو تعمیر و ترقی کے بجائے پولیس اور فرقہ وارانہ تنظیموں سے بچاو ہی ان کی ترجیح ہے۔ رام پور میں اعظم خان نے ترقیاتی کام توکروا ئے
مزید پڑھیے


ملت کا درد مندشفیق الرحمن برق چلا گیا

بدھ 06 مارچ 2024ء
افتخار گیلانی
غالباً1999میں، پارلیمنٹ کے جس سیشن میں وزیر اعظم اٹل بہاری واجپائی کی تیرہ ماہ کی حکومت ایک ووٹ سے تحریک اعتماد ہار گئی ، تو انہی دنوں میں نے باقاعدہ بھارتی پارلیمان کی کارروائی کور کرنا شروع کردی تھی۔ گراونڈ فلور پر سینٹرل ہال سے متصل ریڈنگ روم (جو ان دنوں لائبریری ہوتی تھی)کے ایک کونے میں نورانی چہرے والا ایک شخص ظہر اور عصر کی نماز پڑھتے ہوئے نظر آتا تھا۔ اس کے آتے ہی اسٹاف ایک کونے میں سفید چادر بچھاتے تھے اور وہ وہاں سر بہ سجود ہو جاتے تھے۔ یہ ریڈنگ روم برطانوی دور اقتدار
مزید پڑھیے


چناروں کے سائے ،شارجہ میں کرکٹ اور کشمیر ……(2)

جمعرات 29 فروری 2024ء
افتخار گیلانی
2011 میں بھی کرکٹ ورلڈ کپ کے دوران، وزیر اعظم منموہن سنگھ نے اپنے پاکستانی ہم منصب یوسف رضا گیلانی کو صوبہ پنجاب کے موہالی میں اپنے ساتھ میچ دیکھنے کی دعوت دی۔ اس سے تعلقات میں نسبتاً بہتری آئی، جو 2008 میں ممبئی میں ہونے والے حملوں کے بعد نچلی سطح پر آگئے تھے۔ سفارتی آلے کے طور کرکٹ کے استعمال کی تاریخ تو ویسے 1952 سے ہی شروع ہوئی۔ تقسیم کے فسادات اور کشمیر پر دونوں ملکوں کے درمیان جنگ کے بعد دونوں ممالک کے رہنماؤں نے محسوس کیا کہ کھیل سے عوام کے درمیان رابطہ بحال ہو
مزید پڑھیے


چناروں کے سائے ،شارجہ میں کرکٹ اور کشمیر

بدھ 28 فروری 2024ء
افتخار گیلانی
ساحل سمندراور پہاڑو ں کے دامن سے غروب آفتاب کے دلکش نظارے کا لطف اٹھانے کے مواقع تو کئی بار نصیب ہوئے ہیں،مگر ابھی حال ہی میں متحدہ عرب امارات کی ریاست شارجہ میں جا کر معلوم ہوا کہ ریگستان میں بھی یہ نظارہ کچھ کم مسحور کن نہیں ہوتا ہے۔جب اس سنہری ریت اور صحرا کی یخ بستہ رات میں فلڈ لائٹس کے نیچے کرکٹ کا اسٹیج سجا ہو، تو کھیل کے علاوہ سیاسی ہم آہنگی، رابطوں اور تعامل کا ذریعہ بنے، تو اس کا لطف ہی دوبالا ہو جاتا ہے۔ وزیر اعظم نریندر مودی جب امارات کے
مزید پڑھیے


پاکستانی انتخابی نتائج اور بھارتی مبصرین کی آراء

بدھ 14 فروری 2024ء
افتخار گیلانی
چند بر س قبل بھارتی دارالحکومت دہلی میں صحافیوں کی ایک انجمن کا الیکشن ہو رہا تھا،جس میں ایک سینئر صحافی کپور صاحب کو دوستوں نے صدارتی کرسی پر بٹھانے کیلئے میدان میں اتارا۔ وہ اس کے اہل بھی تھے۔ ان کے مقابل دو اور امیدوار بھی تھے، مگر چونکہ کپور صاحب خاصے سینئر اور سبھی کے کام آنے والے مقبول صحافی تھے، اس لئے ان کا جیتنا ایک رسمی کارروائی لگتی تھی۔پریس انفارمیشن بیورو میں کسی صحافی کا کام پھنسا ہو ہوتا تھا، تو کپور صاحب حاضر۔کسی وزیر کے ساتھ ملاقات طے نہیں ہوتے تھی، تو کپور صاحب
مزید پڑھیے








اہم خبریں