BN

اوریا مقبول جان

عمران خان:سول سروس ریفارمز


وہ سول سروس جس کی پہچان اہلیت‘ ایمانداری‘ قانون کی بالادستی اور انصاف کی فراہمی تھی‘ آج اپنے قیام کے ڈھائی سو سال بعد وہ نااہلی‘ بے ایمانی‘ سیاسی آقائوں کی فرمائش پر قانون کی ذلت آمیز موت اور عوام سے دور ایک ایسی مخلوق بن چکی ہے جس سے کوئی انصاف کی توقع نہیں رکھتا۔ ایک زمانہ تھا جب ذوالفقار علی بھٹو انتخاب جیت کر بحیثیت وزیر اعظم ٹھٹھہ میں جلسہ کرنے گیا تو عوام نے ان کے سامنے صرف ایک مطالبہ رکھا کہ آغا شاہی کو دوبارہ ڈپٹی کمشنر لگا دیا جائے۔ وہ آغا شاہی جو اس وقت
بدھ 19  ستمبر 2018ء

عمران خان: سول سروس ریفارمز

پیر 17  ستمبر 2018ء
اوریا مقبول جان
ہر سال تقریباً ڈیڑھ سو کے قریب نوجوان پاکستان کے ہر علاقے سے سول سروسز اکیڈیمی لاہور میں ٹریننگ کے لیے آتے ہیں۔ گزشتہ تقریباً چالیس سال سے یہ ادارہ ایک دوردراز علاقے والٹن میں قائم ہے۔ اسے مال روڈ کی خوبصورت اور وسیع و عریض عمارت سے یہاں اس ویرانے میں منتقل کرنے کا سہرا ذوالفقار علی بھٹو کے سر ہے کیونکہ اقتدار میں آنے کے بعد اس کے چند ایک مقاصد میں سے ایک یہ بھی تھا کہ وہ قدیم سول سروس کے ڈھانچے کو تہہ و بالا کر کے اقتدار پر اپنی گرفت مضبوط کرنا چاہتا تھا۔
مزید پڑھیے


عبرت سرائے دہر ہے

جمعه 14  ستمبر 2018ء
اوریا مقبول جان
مجھے صرف اور صرف حسن صہیب مراد کا نوحہ لکھنا ہے۔ اس لیے کہ حکمرانوں کی افسردگی ان لاتعداد لوگوں کو گھیر لیتی ہے جو ان کی عنایاتِ خسروانہ کے امین ہوتے ہیں اور جن کی عمریں ان کے تبسمِ دلاویز کی چمک سے روشن رہی ہوتی ہیں۔ حکمرانوں کی کسمپرسی، بے وطنی اور لاوارثی کی موت کا نقشہ کھینچ کر رونے والوں کی بھی تاریخ میں کوئی کمی نہیں۔ میرے سرہانے جو چند کتابیں مستقل اپنا ٹھکانہ بنائے ہوئے ہیں۔ ان میں ایک خواجہ حسن نظامی کی کتاب ’’بیگمات کے آنسو‘‘ بھی ہے۔ میں جب کبھی کارسرکار کے رعونت
مزید پڑھیے


چین سے مہاتیر محمد کے سوالات اورپاکستان کا سی پیک

بدھ 12  ستمبر 2018ء
اوریا مقبول جان
دنیا بھر میں معلومات کو دو وجوہات کی بنیاد پر خفیہ رکھا جاتا ہے،پہلی وجہ دفاع یا سکیورٹی کی ہے اور یہ طرز عمل نیا نہیں بلکہ شاید جب سے انسان نے ایک دوسرے سے لڑنا شروع کیا ہے، اس نے اپنے داؤ پیچ اور ہتھیار اپنے دشمن سے چھپائے ضرور ہیں، اسی دفاع اور سکیورٹی میں ڈاکے یا چوری چکاری کے خوف سے مال چھپانا، آمدن نہ ظاہر کرنا یا بظاہر ایسا طرز زندگی اختیار کرنا جو لٹیروں کو دعوت گناہ نہ دے، وہ بھی شامل سمجھے جاتے ہیں۔ معلومات کو خفیہ رکھنے کی دوسری وجہ بددیانتی، چوری،
مزید پڑھیے


ریاست مدینہ کا خواب اور جدید معاشی غارت گر

پیر 10  ستمبر 2018ء
اوریا مقبول جان
دنیا کے یہ اعلیٰ دماغ معیشت دان‘ عالمی اقتصادی منظر نامے کے ذہین ترین افراد اور آئی ایم ایف کی بہترین معاشی و اقتصادی ماہرین کی لسٹ کے جگمگاتے ستارے ‘ اگر کسی قابل ہوتے تو دنیا 2008ء کے بدترین معاشی اور مالی بحران کا شکار نہ ہوتی اور اگر ہو بھی گئی تھی تو یہ ذہین ترین افراد اسے اب تک نکال چکے ہوتے۔ جبکہ حیرت کی بات یہ ہے کہ یہ سب کے سب بحرانوں کے خالق ہیں۔ انہیں کی معاشی پالیسیوں کی وجہ سے آج دنیا جس بدترین معاشی بدحالی‘ استحصال اور دولت کے چند ہاتھوں میں
مزید پڑھیے


یورپ کی ایک ہزار سالہ تاریخ کی پہلی پسپائی

جمعه 07  ستمبر 2018ء
اوریا مقبول جان
آج دنیا بھر میں رائج سیکولر اور لبرل نظام تعلیم نے گذشتہ تین صدیوں سے بظاہر ایسے غیر متعصب اور آزاد خیال تاریخ دان اور مورخ پیدا کیے جنہوں نے اسلام اور رسول اکرم ؐکے بارے میں بے شمار تحقیق کی اور ان کی کتابوں سے یوں محسوس ہوتا ہے جیسے انہوں نے اسلام کی بہت بڑی خدمت کی ہو اور وہ سید الانبیاء ﷺ کی ذات سے بہت متاثر تھے۔ یہی وجہ ہے کہ ان مصنفین کی کتابوں کا نہ صرف تمام عالم اسلام میں ترجمہ ہوا بلکہ آج تک ان لوگوں کی کتابوں کے اقتباسات کو اسلام کی
مزید پڑھیے


یورپ کی ایک ہزار سالہ تاریخ کی پہلی پسپائی(2)

بدھ 05  ستمبر 2018ء
اوریا مقبول جان
قرآن وحدیث اور تعلیمات اسلامی کے بارے میں تشکیک پیدا کرنے کاعمل مسیحی یورپ میں ایک سوچے سمجھے منصوبے کے تحت گذشتہ ایک ہزار سال سے جاری ہے۔ لیکن اس سارے عمل کو تحقیق و جستجو کے خوب صورت لبادے میں چھپا کر نہ صرف مغرب کے طالب علموں بلکہ مسلمانوں کے درمیان بھی ایک غیر محسوس طریقے سے پھیلایا گیا۔ یورپ میں جب مذہب بیزاری کی سیکولر تحریک شروع ہوئی تو جہاں عیسائیت، پوپ، چرچ اور حضرت عیسیٰ کی ذات ہدف تنقید بنی، احترام کا پردہ تار تار ہوا تو اسی اصول کی بنیاد پر پیغمبر اسلام
مزید پڑھیے


یورپ کی ایک ہزار سالہ تاریخ کی پہلی پسپائی…(1)

پیر 03  ستمبر 2018ء
اوریا مقبول جان
اسلام، قرآن اور سید الانبیائﷺ کی شخصیت کو مسخ کرکے دنیا کے سامنے پیش کرنے کا آغاز طلوع اسلام کے تقریبا دو سو سال کے بعد شروع ہوا۔جب مسلمان فاتحین نے ایران کی عالمی سلطنت کا مکمل طور پر خاتمہ کردیا اور روم کی سلطنت کے وسیع حصوں مصر، مراکش، شام، الجزائر یہاں تک کہ 711 عیسوی میں اسپین کے بادشاہ روڈرک (Roderik) کو شکست دی ، اور عیسائت کو موجودہ اٹلی یعنی روم اور قسطنطنیہ یعنی موجودہ استنبول تک محدود کر دیا۔ اسی دوران مسلمانوں کی قسطنطنیہ پرمسلسل یلغار جاری تھی کہ روم کے کلیسا نے اسلام اور پیغمبر
مزید پڑھیے


جو عہد صحرائیوں سے باندھا گیا تھا پھر استوار ہوگا

جمعه 31  اگست 2018ء
اوریا مقبول جان
القاعدہ جس کا نام گیارہ ستمبر کے ورلڈ ٹریڈ سنٹر کے واقعہ کے بعد پوری دنیا میں ایک گالی بنا دیا گیا تھا ۔ اس دشنام اور ذرائع ابلاغ کے ذریعے پھیلائی گئی نفرت کی چھتری کے نیچے پناہ لے کر جس طرح گزشتہ سترہ سالوں میں مسلم اْمہ کے معصوم انسانوں کا خون بہایا گیا ہے، اس کی مثال انسانی تاریخ میں کم ہی ملتی ہے۔ یوں تو گذشتہ صرف ایک سو سال میں اس کرہ ارض پر جتنے انسان ہلاک ہوئے، جتنے شہر تباہ و برباد ہوئے اور جتنے گھرانے اجڑے، بے گھر ہوئے ان کی تعداد پوری
مزید پڑھیے


جو عہد صحرائیوں سے باندھا گیا تھا پھر استوار ہوگا …(1)

بدھ 29  اگست 2018ء
اوریا مقبول جان
متضاد نظریات کی حامل دو شخصیات اور میدان عمل کے دو مختلف شہسواروں کی ویڈیوز میرے سامنے ہیں۔ ایک امریکہ کے کسی شہر میں علامہ جاوید احمد غامدی صاحب کی سوال و جواب کی نشست میں ایک سوال کے جواب کی ویڈیو ہے جو تقریباً آٹھ منٹ کی ہے، جبکہ دوسری ویڈیو القاعدہ کے موجودہ سربراہ ڈاکٹر ایمن الظواہری کی پانچ منٹ کی ویڈیو ہے، جو کسی نامعلوم مقام پر ریکارڈ کی گئی ہے۔ ویڈیو کو انگریزی میں عنوان بھی دیا گیا ہے۔ "Battle of awareness and will - The solid structure" (آگہی اور ارادے کی جنگ۔ مضبوط ڈھانچہ )۔
مزید پڑھیے