BN

اوریا مقبول جان

القاعدہ۔داعش۔القاعدہ بھارت

پیر 20  اگست 2018ء
آج سے ٹھیک تیس سال قبل گیارہ اگست 1988ء کو پشاور کے ایک مکان میں اسامہ بن لادن نے اپنے چند ہم خیال افراد کو جمع کیا اور عالمی استعمار کے خلاف ایک جہادی گروپ القاعدہ کی بنیاد رکھی۔ القاعدہ عربی میں مختلف معنوں میں استعمال ہوتا ہے جس میں مجلس کے بیٹھنے کی جگہ اور کسی گروہ کے بنیادی ہیڈ کوارٹر تک شامل ہیں۔ یہ تنظیم پاکستان کے شہر پشاور میں اس وقت وجود میں آئی جب روس اپنا بوریا بستر سمیٹ کر افغانستان سے جا رہا تھا اور علاقے میں ایک فتح کی کیفیت برپا تھی۔ ایسے میں
مزید پڑھیے


ڈالر: تماشہ دکھا کر مداری بن گیا

جمعه 17  اگست 2018ء
سید الانبیائﷺنے دور فتن اور قرب قیامت کی نشانیوں میں سے ایک نشانی یہ بتائی کہ ’’ایک وقت بنی آدم پر آئے گا جب کوئی چیز سوائے درہم (چاندی کا سکہ) اور دینار (سونے کا سکہ) کے کام نہ آئے گی (مسند احمد)‘‘۔ آج سے صرف چند سال پہلے تک ماہرین معاشیات و سیاسیات کو میرے آقا مخبر صادقﷺ کی اس حدیث کا یقین نہیں آتا تھا اور یہی حال ان سے مرعوب اسلامی سکالرز کا بھی تھا جو ایسی تمام احادیث کو اوّل تو موضوع (گھڑی ہوئی) قرار دیتے تھے یا ان کی عقلی توجیہات پیش کرتے تھے۔ کاغذ
مزید پڑھیے


زمینداری،مزارعت اور سود …2

بدھ 15  اگست 2018ء
اسلام کی معاشی تعلیمات کو جس طرح جدید سرمایہ دارانہ اور جاگیردارانہ نظام کے زیر اثر تہذیبوں، معاشروں اور حکومتوں نے مسخ کیا ہے اس کی مثال گزشتہ چودہ سو سال کی امت مسلمہ کی تاریخ میں نہیں ملتی۔ جیسے کیمونزم کا خوف پیدا کرکے سرمایہ داری کو جائز قرار دیا گیا اور پھر اس نظام کی خشت اول سودی بنکاری کو "مشرف بہ اسلام" کرنے کی کوشش کی گئی ویسے ہی زمینداروں، جاگیرداروں اور ان کے وسیع و عریض کھیتوں پر کام کرنے والے مزارعوں کی محنت سے حاصل ہونے والی آمدن کو بھی جائز قرار دیا گیا۔ حالانکہ
مزید پڑھیے


زمینداری،مزارعت اور سود…1

پیر 13  اگست 2018ء
ستر کی دہائی کی بات ہے، پوری دنیا دو گروہوں میں تقسیم تھی، سرمایہ دارانہ نظام کی دنیا اور اشتراکی دنیا۔ روس کے بالشویک انقلاب کو آئے تقریبا پچاس سال بیت چکے تھے اور اس وقت اس کے زیراثر ریاستوں کی تعداد بھی درجن سے زیادہ تھی جو دنیا کے ہر براعظم میں موجود تھیں۔ چین میں ماؤزے تنگ کے لانگ مارچ اور لال کتاب کی فتح کو تیس سال ہونے کو آئے تھے۔ اس نظریاتی تقسیم میں مذہبی طبقے کی اکثریت سرمایہ دارانہ نظام کی خاموش حامی تھی اور کیمونسٹ تحریک کو دین، ایمان اور سب سے بڑھ
مزید پڑھیے


عمران خان۔ یکساں نظام تعلیم کا نفاذ… (2)

جمعه 10  اگست 2018ء
عموماً یکساں نظام تعلیم کے نعرے سے یہ مراد لی جاتی ہے کہ اس ملک کے تمام سکولوں کو ان مغرب زدہ انگلش میڈیم سکولوں کے قالب میں ڈھال دیا جائے جن میں اشرافیہ کے بچے تعلیم حاصل کرتے ہیں۔ ہر سکول معیار اور سہولیات کے اعتبار سے ایچی سن اور گرامر کا ہم پلہ ہوجائے اور ہر بچہ پہلے دن سے ہی ان نرسری نظموں (Rhyms) کو گانا شروع کر دے، ان کامکس کو پڑھنے لگے اور اس لباس کو زیب تن کرنے لگے جو دراصل ایچیسن، گرامر یا کسی بھی انگلش میڈیم سکول نے انگریزوں سے مستعار
مزید پڑھیے


عمران خان۔ یکساں نظامِ تعلیم کا نفاذ

بدھ 08  اگست 2018ء

دنیا کی قدیم ترین تہذیبوں سے لے کر آج کے جدید ترین ترقی یافتہ تہذیبی خدوخال کا مطالعہ کیا جائے تو معاشروں کے عروج کی داستانیں ہمیشہ علم کی روشنائی سے تحریر ہوئیں ہیں۔ کوئی ایک قوم بھی ایسی نہیں جس نے اپنی جہالت پر اکتفا کر لیا ہو، علم کے دروازے اپنے پر بند کر لیے ہوں اور ترقی کی ہو۔ فاتحانہ پیش قدمی بھی کبھی مستحکم نہ ہوسکی، اگر اس کے ہمرکاب ان کی علمی ترقی موجود نہ تھی۔ چین، مصر، بابل، ایران، یونان، روم کی قدیم تہذیبیں ہوں، قرون وسطیٰ کے مسلمانوں کی لاکھوں مربع میل پر
مزید پڑھیے


عمران خان…کرنے کا پہلا کام (2)

پیر 06  اگست 2018ء
بیوروکریسی کا قومی زبان اردو میں دفتری معاملات چلانا شاید اتنا مشکل مرحلہ نہیں ہے کیونکہ تاج برطانیہ کے زمانے میں ہر ضلعی ہیڈ کوارٹر میں ایک ورنیکلر برانچ ہوتی تھی جس میں ضلع کے تمام محکموں کا ریکارڈ اردو زبان میں موجود تھا اور آج بھی ملک بھر کا ریونیو ریکارڈ‘ زمین کی پیمائش سے لے کر مالیانہ و آبیانہ تک کے معاملات اردو ریکارڈ ہی کا حصہ ہیں۔ چونکہ انگریز نے برصغیر پر حکومت کرنا تھی اور اسے معلوم تھا کہ اگر اس کے افسران کا رابطہ عوام سے مستحکم نہ رہا ان کے اور عوام کے درمیان
مزید پڑھیے


عمران خان۔۔۔ کرنے کا پہلا کام

جمعه 03  اگست 2018ء
اللہ تعالیٰ مجھے جمہوری نظام کی اس مکروہ گروہ بندی اور تقسیم سے دور رکھے جس میں قرآن و سنت کے دریا کے شناور علماء بھی جب سیاسی پارٹیاں بنا لیتے ہیں تو الیکشن ہارنے کے بعد ان کا پہلا اور آخری مقصد یہ ہوتا ہے کہ جیتنے والی پارٹی یا حکومت کب ناکام ہوتی ہے تاکہ اس کی ناکامی کی لاش پر اپنی کامیابی کی عمارت تعمیر کرسکیں۔ جبکہ ایک اسلامی معاشرے میں رسول اکرم ﷺ کی وہ حدیث ایک راہنما اصول متعین کرتی ہے۔ آپؐ نے فرمایا ’’حضرت انسؓسے مروی ہے، ’’اپنے بھائی کی مدد کرو خواہ
مزید پڑھیے


اسلامی اور جمہوری معاشرے میں فرق

بدھ 01  اگست 2018ء
جمہوری معاشرے اور جمہوری سیاست کا چلن ہے کہ یہ انسانوں کو گروہوں میں تقسیم کرتی ہے، ان کے درمیان مقابلے اور مسابقت کی ایسی کیفیت کو جنم دیتی ہے کہ وہ ایک دوسرے کو نیچا دکھانے کا کوئی موقع ہاتھ سے نہیں جانے دیتے۔ اگر آپ ایک گروہ یا سیاسی پارٹی کو چھوڑ کر بے شک دلیل اور سچائی کی بنیاد پر ہی دوسری پارٹی میں شامل ہوں، آپکو عرف عام میں ’’لوٹا‘‘ اور انگریز معاشرہ جہاں جمہوریت پروان چڑھی، وہاں ’’Turncoat‘‘ یعنی اصول بدلنے والا، زمانہ ساز یا غدار وغیرہ کہا جاتا ہے۔ آپ اگر ایک پارٹی میں
مزید پڑھیے


جمہوریت کا شرک اور متحدہ مجلس عمل

پیر 30 جولائی 2018ء
اگر یہ پریس کانفرنس آصف زرداری، نواز شریف، بلاول، شہباز شریف، اسفندیار ولی یا عمران خان نے کی ہوتی تو مجھے کوئی حیرت نہ ہوتی ان رہنماؤں کی تربیت ایسی ہے اور نہ ہی ان کی سیاست کی اساس ایسے اصولوں پر مبنی ہے۔ یہ تمام لوگ ایک سیاسی نظام کے یرغمال ہیں جس میں عوام کی حاکمیت ہی دراصل ایک مسلم حقیقت ہے۔ پاکستان کا آئین، پارلیمنٹ کی دو تہائی اکثریت کو یہ اختیار دیتا ہے کہ جب، جس وقت اور جیسے چاہے آئین کی کسی بھی اسلامی شق کو نکال کر باہر پھینک دے اور پارلیمنٹ کی
مزید پڑھیے