اوریا مقبول جان



یہ محض اتفاق نہیں ہے


کیا یہ محض اتفاق ہے کہ مسلم امہ کا وہ خطہ جہاں آخری بڑی جنگ کے دو میدان سجنے ہیں، اسکے مشرق و مغرب کے دونوں سروں پر گزشتہ بیس سال سے مذہبی شدت پسندی کی لہر عوامی پذیرائی اور جمہوری راستے سے ملک پر قابض ہے اور دن بدن اس شدت پسندی کے ووٹ بینک میں بھی اضافہ ہو رہا ہے اور عوام کی مسلمانوں سے نفرت میں تیزی بھی بڑھتی جا رہی ہے۔ مسلم امہ کا یہ خطہ دراصل اسلامی دنیا کا مرکز و محور ہے جسے "Central Homeland"کہا جا سکتا ہے۔ صحرائے سینا کے مشرقی کنارے
جمعه 12 اپریل 2019ء

یہ لاہور ہائی کورٹ نہیں :جسٹس عظمت سعید

بدھ 10 اپریل 2019ء
اوریا مقبول جان
جامعہ حفصہ اور سانحہ ماڈل ٹاؤن دو ایسے المناک واقعات ہیں کہ ان کا تقابل امرتسر میں 1919ء میں ہونیوالے جلیانوالہ باغ کے قتل عام سے کیا جا سکتا ہے۔ یوں تو راولپنڈی کے لیاقت باغ کے اپوزیشن کے جلسے پر 23 مارچ 1973ء کو "قائد عوام" اور جدید مورخین کی نظر میں "جمہوریت کی آبرو" ذوالفقار علی بھٹو نے اپنی "عظیم" پارٹی کے کارکنوں کے بہروپ میں فیڈرل سیکورٹی فورس سے فائرنگ کروائی تھی۔ نیشنل عوامی پارٹی کے درجنوں لوگ مارے گئے تھے۔ جلیانوالہ باغ کے جنرل ڈائرکے قتل عام سے ذوالفقار علی بھٹو کے لیاقت باغ
مزید پڑھیے


اسلام فوبیا

پیر 08 اپریل 2019ء
اوریا مقبول جان
کیا اسلام اور مسلمان سے دشمنی صرف چند سال پہلے یعنی گیارہ ستمبر 2001 کے ورلڈ ٹریڈ سینٹر پر حملے کے بعد کی پیداوار ہے، جسے میڈیا کے ذریعے جنگی و سیاسی مقاصد کے لیے دنیا بھر میں عام کیا گیا اور اب یہ نیوزی لینڈ میں پچاس مسلمانوں کے قتل عام کے بعد اسکی وزیراعظم کے انسانی رویے سے ختم ہو جائے گی۔ کیا آسٹریلیا کی پارلیمنٹ میں ایک خاتون رکن نے دوسرے مسلمان دشمن رکن پارلیمنٹ کو سخت سنا دیں اور اسے سوشل میڈیا پر پھیلا دیا گیا ، اب اس سے امریکہ کے مغربی ساحلوں سے
مزید پڑھیے


چشم ِمسلم دیکھ لے تفسیرِ حرفِ ینسلون

جمعه 05 اپریل 2019ء
اوریا مقبول جان
کیا یہ سب کچھ حادثاتی طور پر ہو رہا ہے۔ آپ کسی بھی جدید علوم کے ماہر اور حالات حاضرہ کے نقطہ رس سے سوال کریں تو وہ یہی جواب دے گا کہ سائنسی علوم ترقی کی منازل طے کر رہی ہیں اور روز سینکڑوں کے حساب سے نت نئی ایجادات ہو رہی ہیں۔ انسانوں کی غالب اکثریت ہر روز وقوع پذیر ہونے والے واقعات کو ایک معمول کا واقعہ بھی سمجھتی ہے اور ترقی کی اگلی منزل بھی۔یہی وجہ ہے کہ دنیا کسی بیماری پر قابو پا لے ، کسی مرض کا علاج دریافت کر لے ،کسی نئی ٹیکنالوجی
مزید پڑھیے


افسانہ ساز سیکولر لبرل دانشور

بدھ 03 اپریل 2019ء
اوریا مقبول جان
پاکستان کی نظریاتی اساس سے بغض و عناد رکھنے والے سیکولر لبرل طبقے کا بس نہیں چلتا کہ اس ملک کے ہر کونے کھدرے میں کھدائی کر کے ہندوؤں کا کوئی مندر برآمد کیا جائے، اسکی ایک جھوٹی سچی تاریخ گھڑی جائے، اسے کسی بڑے دیوتا کے نام سے منسوب کیا جائے اور پھر اس پر بھارت سے یاتریوں کو بلا کر پوجا کا اہتمام کروایا جائے۔اسطرح پاکستان کو ایک سیکولر، لبرل اور روشن خیال ملک کے طور پر پیش کیا جائے۔ ان تمام احباب نے ایک اصطلاح پر تخلیق کر رکھی ہے "قائد اعظم کا پاکستان"۔ انکے نزدیک
مزید پڑھیے




خواب ِغفلت کا شکار امت ِمسلمہ

پیر 01 اپریل 2019ء
اوریا مقبول جان
خواب غفلت اور کسے کہتے ہیں۔ کیا اس کرہ ارض پر بسنے والے ڈیڑھ ارب سے زیادہ مسلمانوں کو اس بات کا ذرا سا بھی اندازہ ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کے یروشلم کو اسرائیل کا دارالحکومت تسلیم کرتے ہوئے، وہاں امریکی سفارتخانہ منتقل کرنے کے بعد گولان کی مقبوضہ پہاڑیوں کو اسرائیل کا قانونی حصہ تسلیم کرنا، ایک ایسا قدم ہے کہ جس سے اب اس جنگ کے نقاروں کی آواز بہت بلند ہو چکی ہے جس کا خواب ہر یہودی بچہ اس دن سے دیکھ رہا ہے جس دن سے انکے پیغمبر لیسعیاہ (lsaih) نے یہ بشارت دی
مزید پڑھیے


دہشت پسند میڈیا

جمعه 29 مارچ 2019ء
اوریا مقبول جان
گذشتہ چند ہفتوں میں نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن کی میڈیا میں خوب پذیرائی ہوئی ،لیکن اسکے ساتھ ساتھ جس طرح پوری مسلم امہ کو شرم دلائی گئی ہے، اس کے رویوں پر لعنت ملامت کی گئی ہے اور اسے دنیا کی سب سے جاہل، بد تہذیب اور اجڈ و گنوار ثابت کرنے کی کوشش کی گئی ہے ایسا کچھ کسی کیلئے بالکل حیران کن نہیں تھا۔ اس لیے کہ کسی شخص کو ہیرو بنانے اور کسی فرد کو غلط ثابت کرنے کا دھندہ ہی تو ہے جس نے اس دنیا کا امن غارت کر رکھا ہے اور یہ
مزید پڑھیے


دو رنگی چھوڑ کر یک رنگ ہوجا

بدھ 27 مارچ 2019ء
اوریا مقبول جان
مشرکین کے درمیان مستقل رہائش اختیار کرنے کا معاملہ نہ تو معاشی و معاشرتی مسئلہ ہے اور نہ ہی علاقائی، یہ خالصتا سید الانبیاء ﷺ کی ایک واضح ہدایت کی تشریح کا معاملہ ہے، اس لیے اس پر گفتگو سے پہلے قلم سے وہ تمام تعصبات نکال پھینکنا ضروری ہے جن میں سب سے اہم مال اور اولاد کی محبت ہے۔ شریعت کو بیان کرتے ہوئے اور اس کا دفاع کرتے ہوئے اگر اس کی زد میں اولاد کا طرز عمل آتا ہو یا مالی مفاد تو پھر قرآن پاک میں دی گئی اس وارننگ "تمہارے مال اور تمہاری اولاد
مزید پڑھیے


ڈونلڈ ٹرمپ قیادت: سیاسی نہیں مذہبی بیانیہ

پیر 25 مارچ 2019ء
اوریا مقبول جان
یہ فقرہ کسی مسجد کے مولوی یا چرچ کے پادری نے نہیں بولا کہ سارے لبرل سیکولر اس کے پیچھے ہاتھ دھو کر پڑ جائیں کہ مذہبی لوگ ایک تو قصے کہانیوں میں کھوئے رہتے ہیں اور دوسرا ان کا ایک گروہ قیامت سے پہلے ہونے والی بڑی جنگوں سے ڈرا کر انسانوں کا خون خشک کرتا رہتا ہے۔ یہ فقرہ دنیا کی طاقتور ترین سپر پاور امریکہ کے وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے بولا ہے۔ یوں تو وہ شخص امریکی فوج میں رہا، انکی بدنام زمانہ خفیہ ایجنسی سی آئی اے کا ڈائریکٹر رہا لیکن اس نے قانون کی
مزید پڑھیے


بے رحم روشن خیال دنیا

جمعه 22 مارچ 2019ء
اوریا مقبول جان
اگر ایسا واقعہ دنیا کے کسی بھی ترقی یافتہ، نیم ترقی یافتہ یا پسماندہ ملک میں بھی پیش آیا ہوتا تو پوری دنیا کے ممالک اپنے شہریوں کی جان و مال کی حفاظت کی خاطر انہیں اس ملک کا سفر کرنے سے منع کر دیتے۔ کوئی اس بات کا تصور بھی کر سکتا ہے کہ 14 اکتوبر 1883 ء میں شروع ہونے والی ٹرین ،اورینٹ ایکسپریس جو استنبول سے پیرس تک ایک صدی سے بھی زیادہ دیر چلتی رہی اور آج بھی اس کے متبادل کے طور پر لاتعداد ٹرینیں یورپ اور ایشیا کو ملاتی ہیں، ان میں سے کسی
مزید پڑھیے