BN

اوریا مقبول جان


متاعِ غرور


کیا عبرتناک منظر ہے۔۔۔ دنیا اپنی تمامتر رنگینیوں اور حشر سامانیوں کے ساتھ ہمارے اردگرد موجود ہے، لیکن انسان سے اس سے لطف اندوز ہونے کی صلاحیت چھین لی گئی ہے۔گذشتہ دو ماہ سے ایک بے کیف زندگی ہے جس کا فقط ایک مقصد ہے کہ کب اس قید سے رہائی نصیب ہو گی۔ کئی سو سال کی تگ و دو، محنت اور جستجو سے انسان نے پہیے کی ایجاد سے لے کر ٹیکنالوجی کے بامِ عروج پر پہنچنے تک، فضاؤں میں اڑنے کا خواب پورا کیا، اور آراستہ و پیراستہ ہوائی جہاز آسمان کی بلندیوں میں پرواز کرنے
جمعرات 02 اپریل 2020ء

عبرت پکڑو ۔ اے صاحبانِ بصیرت

اتوار 29 مارچ 2020ء
اوریا مقبول جان
کہاں ہیں وہ سیکولر، لبرل ملحدین جو کہا کرتے تھے کہ یہ اگر اللہ کا عذاب ہے تو امریکہ اور مغربی دنیا میں کیوں نہیں آتا، جہاں فحاشی، عریانی اور جنسی بے راہ روی سمیت تمام برائیاں عروج پر ہیں۔ کدھر ہیں وہ دانشور جو اللہ کے فیصلوں پر طعن وتشنیع کرتے ہوئے کہتے تھے کہ اللہ کا عذاب صرف غریبوں پر ہی کیوں آتا ہے۔ دیکھو!جن ملکوں نے زلزلوں سے بچنے کے لیے انتظامات کرلیے ہیں، وہاں اللہ کا عذاب اگر زلزلے کی صورت آ بھی جائے تو وہ انکا کچھ نہیں بگاڑ سکتا۔ لیکن آج تو اس ٹیکنالوجی
مزید پڑھیے


کیا آخری کڑی ٹوٹ چکی ہے

هفته 28 مارچ 2020ء
اوریا مقبول جان
دنیا کے ہر ضروری سمجھے جانے والے کاروبارِ زندگی کو معمول کے مطابق چلانے کے لئے ''کرونا'' کی اس خوفناک وبا میں بھی انتظامات کیے جا رہے ہیں۔ حتیٰ کہ پوری دنیا پر غیر محسوس طریقے سے حکومت کرنے والے میڈیا کا کسی بھی ملک میں ایک ٹیلی ویژن چینل، ایک ریڈیو سٹیشن یا آباد نشریاتی ادارہ بند نہیں کیا گیا۔ حرمِ کعبہ، مسجد نبوی، کربلا، مشہد، جامعہ مسجد دہلی، الازہر، بادشاہی مسجد لاہور سے لے کر مسلم دنیا میں لاتعداد مساجد کے پہلو میں بے شمار ٹیلی ویژن چینل مسلسل اپنی نشریات جاری رکھے ہوئے ہیں۔ دنیا بھر کی
مزید پڑھیے


موت کے سوداگر

جمعه 27 مارچ 2020ء
اوریا مقبول جان
سید الانبیاء صلی اللہ علیہ وسلم نے اس امت کی تباہی و بربادی کی ایک علامت ''وہن'' کی بیماری بتائی ہے۔ صحابہ کرامؓ نے پوچھا یا رسول اللہﷺ ''وہن'' کیا ہے۔ رسول اکرمﷺ نے فرمایا، ''دنیا سے محبت اور موت کا خوف'' (ابو داؤد:4297)۔ موت ایک ایسی چیز ہے جس کا خوف بندۂ مومن کے دل میں نہیں ہوتا؛ کیونکہ وہ جانتا ہے؛ بلکہ ایمان رکھتا ہے کہ موت اس کی زندگی کا خاتمہ نہیں ہے بلکہ یہ تو اللہ تبارک و تعالیٰ سے ملاقات کی طرف ایک قدم ہے، ایک ذریعہ ہے۔ موت سے بے خوف دل کی علامات
مزید پڑھیے


حکومت میں بیرون ملک کے ماہرین کا وائرس

جمعرات 26 مارچ 2020ء
اوریا مقبول جان
عمران خان صاحب کی وزارتِ عظمیٰ کی انتظامی بیماریوں کی اگر تشخیص کی جائے تو صرف ایک ہی وائرس ''کرونا'' کی طرح پوری حکومت کے انتظامی اور فیصلہ سازی کے ڈھانچے پر قابض نظر آتا ہے اور اس وائرس کا طریقہ واردات بالکل ویسا ہی ہے جیسا انسانی جسم پر حملہ آور کسی بھی وائرس کا ہوتا ہے۔ خان صاحب کی انتظامی بیماری کی وجہ ''بیرون ملک آباد ماہرین'' کا وائرس ہے۔ اس وقت پاکستان کی ساری حکومتی مشینری پر ایسے افراد قابض ہیں جو پاکستان میں زندگی گزارنے، یہاں کے سرد گرم موسم برداشت کرنے، عوام کے مزاج کو
مزید پڑھیے



وباؤں کی کیس ہسٹری

اتوار 22 مارچ 2020ء
اوریا مقبول جان
قدیم طب اور جدید میڈیکل سائنس دونوں، مرض کی تشخیص کیلئے اس کی وجوہات کو جاننا بہت ضروری خیال کرتی ہیں۔ انسان کو لاحق ہونے والے جسمانی اور نفسیاتی امراض کی وجوہات کو دو حصوں میں تقسیم کیا جاتا ہے۔ ایک مکمل طور پر مادی، طبعیاتی یا جسمانی وجوہات ہیں اور دوسری خاندانی، معاشرتی، ذہنی اور روز مرہ کے معمولات سے متعلق وجوہات ہیں۔ مادی وجوہات کے لیے مرض کی علامات دیکھی جاتی ہیں، متعلقہ اعضا اور جسمانی نظام کے ٹیسٹ کروائے جاتے ہیں، تاکہ معلوم ہوسکے کہ جسم کا کون سا عضودرست کام نہیں کر رہا۔ ان تمام حاصل
مزید پڑھیے


فلسفہء عذاب اور سنت الٰہی

هفته 21 مارچ 2020ء
اوریا مقبول جان

ایک زمانہ تھا کہ اگر کہیں کوئی آفت، مصیبت، پریشانی یا بیماری آتی،تو لوگ اپنے اندر جھانکتے،کہ کہیں ان سے کوئی خطا تو سرزد نہیں ہو گئی، کسی قسم کا ظلم یا زیادتی تو نہیں ہوئی، کسی کا حق تو وہ غصب نہیں کیا کہ، آج جس کی وجہ سے ہم پریہ مصیبت نازل ہوئی ہے۔ لوگوں کے دلوں میں یہ تصورپختہ تھا کہ مظلوموں کی فریاد، بستیوں پر عذاب نازل کرتی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ جب 1973ء میں پاکستان میں شدید سیلاب آیا تو اس دور کا خوبصورت شاعرعدیم ہاشمی جو بہت حد تک کیمونسٹ خیالات کا حامی
مزید پڑھیے


وائرس سے جنگ اور اللہ کی ضرورت…(2)

جمعه 20 مارچ 2020ء
اوریا مقبول جان
اس سے پہلے کہ ہم اس ''نسخہ کیمیا'' پر گفتگو کریں جس پر عمل کرنے سے ہماری ذہنی حالت پُرسکون ہو جاتی ہے، ہم خوف و پریشانی کے عالم میں ایک اعلیٰ، ارفع اوراس کائنات کی مالک و مختار ذات پر کامل بھروسہ کر کے اطمینان کی کیفیت میں آجاتے ہیں اور ایسا کرنے سے انسانی جسم میں اہم ترین ''نشریاتی ادارہ'' یعنی ''Hypothalamus'' مطمئن اور پُرسکون ہوجاتا ہے، بہت سے ضروری ہے کہ ہم یہ جان لیں کہ وائرس یا ''کرونا وائرس ''کیا چیز ہے۔ آج کی جدید سائنس اپنی تمام تحقیقی کاوشوں کے بعد اس نتیجے پر پہنچی ہے
مزید پڑھیے


وائرس سے جنگ اور اللہ کی ضرورت…(1)

جمعرات 19 مارچ 2020ء
اوریا مقبول جان

جیسے ہی ہمارے ملک میں کسی قسم کی آفت، مصیبت، پریشانی یا بیماری کا حملہ ہوتا ہے۔ ہمارے کچھ دانشوروں کے دماغوں میں خاموش بیٹھا سائنس اور ٹیکنالوجی کی پرستش کا وائرس جاگ اٹھتا ہے اور وہ ایک دم اخباری کالموں اور ٹیلی ویژن پروگراموں کے ذریعے حملہ آور ہو جاتا ہے اور کوشش کرتا ہے اس پریشانی کے عالم میں لوگوں کو جتنا ممکن ہوسکے، اللہ، دعا اور اس کے ثمرات سے دور لے جاکر انہیں ڈاکٹر، دوا، احتیاط، معیشت، معاشیات اور انتظامات پر بھروسے کی مکمل ترغیب دی جائے۔ ایسے دانشوروں کے دامن میں جس قدر بھی دعا
مزید پڑھیے


طالبان دورِ حکومت: حقائق۔۔۔ (4)

اتوار 15 مارچ 2020ء
اوریا مقبول جان
جو لوگ افغان خصوصاََ پشتون معاشرے کو جانتے ہیں ، انہیں بخوبی علم ہے کہ سود انکی معیشت میں رچا بسا ہوا ہے ۔ برصغیر پاک و ہند کے اکثر شہر ایسے ہیں جہاں آج بھی سود پر قرض دینے والے پشتون یہ کاروبار کرتے ہیں ۔ بلوچستان کے ضلع پشین کے کئی گاؤں ایسے سود خوروں سے آباد ہیں ،جو ممبئی، مدارس یہاں تک کہ برما اور دیگر ممالک میں جاکر آج بھی یہ کاروبار کرتے ہیں ۔ یہ تو ابھی چند سال پہلے تک کی بات ہے جب بلوچستان کے تقریبا ہر پشتون ضلع میں سود کے اس
مزید پڑھیے