خاور نعیم ہاشمی



زبان خلق نقارہ خدا


میں نہیں سمجھتا کہ عمران خان کی حکومت دنوں کے اندر اندر فارغ ہونے والی ہے،دوسری جانب مہنگائی سے ٹرانسپیرنسی انٹر نیشنل کی کرپشن رپورٹ تک کسی چیز کی تردید بھی نہیں کی جا سکتی، سوائے خود وزیر اعظم کے ان کے کسی وزیر، مشیریا پارٹی لیڈر نے بھی مہنگائی اور کرپشن کے الزامات مسترد نہیں کئے، ہاں فردوس عاشق اعوان نے غیر منتخب مشیر اطلاعات ہونے کے حوالے سے ضرور وزیر اعظم کی زبان بولی، ٹرانسپیرنسی انٹر نیشنل کی رپورٹ میں وہی لکھا ہوا ہے جو ق لیگ کے سینئیر راہنما کامل علی آغا نے چار ہفتے پہلے ایک
پیر 27 جنوری 2020ء

شاہی خاندان میں ایک اور بغاوت

اتوار 19 جنوری 2020ء
خاور نعیم ہاشمی
آنجہانی لیڈی ڈیانا کا بیٹا شہزادہ ہیری جس طرح اپنی بیوی میگھن مارکل کے ساتھ شاہی محل سے فرار ہوا اس نے پوری دنیا کو چونکا کر رکھ دیا، گھر سے فرار اور وہ بھی بیوی کے ساتھ ایسا تو جھونپڑیوں میں بھی شاذ و نادر ہی ہوتا ہے، ملکہ نے پوتے کے اس اقدام کا برا منایا ، بہت غصے میں آئیں پورے شاہی خاندان کا اجلاس طلب کر لیا لیکن بالآخر اپنے پوتے کو معاف کر دیا اور اسے آزادی کے ساتھ زندہ رہنے کی اجازت دیدی، کیونکہ باغی شہزادے کی رگوں میں اس کا اپنا خون
مزید پڑھیے


دنیا کا نقشہ بدلنے جا رہا ہے

جمعه 10 جنوری 2020ء
خاور نعیم ہاشمی
دنیا بدلنے جا رہی ہے، دنیا کا نقشہ بدلنے جا رہا ہے اور اس ہونی کو کوئی نہیں ٹال سکتا، آج ہمیشہ ماضی کا حصہ بنتا چلا آیا ہے، یہ قانون فطرت ہے، ہماری پچھلی تین نسلیں تاریخ پڑھتی چلی آئی ہیں اب وہ خود تاریخ کا حصہ بن جائیں گی، الحمد للہ پاکستان قائم و دائم رہے گا، سبز ہلالی پرچم لہلہاتا رہے گا لیکن یہ پاکستان نئے دور کا حصہ ہوگا جو معرض وجود میں آ رہا ہے، ہمیں آج سوچنا پڑے گا کہ کیا مشرق وسطی کا نقشہ تبدیل کرنے کا وقت سر پر آن پہنچا ہے،
مزید پڑھیے


بدلہ لیا جائے گا، مگر کس سے؟

اتوار 05 جنوری 2020ء
خاور نعیم ہاشمی
امریکہ نے بغداد میں ایران کی دوسری طاقتور ترین شخصیت جنرل قاسم سلیمانی کو قتل کرکے مشرق وسطی میں اپنی تھانیداری کو تسلیم کرانے کی جو سعی کی ہے وہ تیسری عالمی جنگ کی بنیاد رکھنے کا الارم ہے، مشرق وسطی میں لگی ہوئی آگ کو بھڑکنے سے اب روکنا ممکن نہیں رہا، بے شک اس وقت ایران معاشی زبوں حالی کا شکار ہے لیکن آیت اللہ خامنہ ای کا یہ بیان کہ،،، بدلہ لیا جائے گا،، محض دھمکی کے زمرے میں نہیں لیا جانا چاہئیے، امریکہ نے خود کو ہی نہیں پورے عالم کو خطرات سے دوچار کر
مزید پڑھیے


اخبارات میں کوئی مافیا نہیں

جمعه 03 جنوری 2020ء
خاور نعیم ہاشمی
وزیر اعظم عمران خان میڈیا کے حوالے سے جن غلط فہمیوں کا شکار ہیں ان میں یہ امربھی شامل ہے کہ پرنٹ میڈیا میں ،، مافیا،، بیٹھا ہوا ہے جو ان کی حکومت پر تنقید کرتا ہے یا ان کے خیال میں ان کی حکومت کا مخالف ہے، یہ کوئی پہلی حکومت نہیں ہے جسے میڈیا سے شکایت ہے، ہر دور حکومت میں پرنٹ ہو یا الیکٹرانک ، کسی نہ کسی طور زیر عتاب رہا ہے، میرے سامنے اس وقت میڈیا کا تصور میڈیا ورکرز ہیں جو پچانوے فیصد سے زائد غیر جانبدار ہوتے ہیں، ہاں! ان کارکنوں میں گھسی
مزید پڑھیے




ایک شکست خوردہ پریس کانفرنس

جمعه 27 دسمبر 2019ء
خاور نعیم ہاشمی
پاکستان کی سیاسی اور آمرانہ تاریخ کے ہر دور میں وزیروں اور مشیروں کو جھوٹ بولتے ہوئے دیکھتے چلے آئے ہیں لیکن جس ڈھٹائی سے وزیر مملکت شہریار آفریدی نے پریس کانفرنس کی اس کی شاید ماضی میں کوئی نظیر نہ مل سکے، ان کے پاس کہنے کے لئے کچھ تھا اور نہ میڈیا کے کسی سوال کا جواب تھا، لگتا تھا ایک جھنجلایا ہوا شخص صحافیوں کے ہتھے چڑھ گیا ہے، وہ ایک موقع پر ہنسے بھی تو کھسیانی بلی کی طرح دکھائی دیے، لگتا تھا کہ وزیر اعظم سے خوب ڈانٹ پڑی ہے، شہر یار آفریدی اگر سچے
مزید پڑھیے


تاریخ نے بولنا شروع کر دیا

اتوار 22 دسمبر 2019ء
خاور نعیم ہاشمی
کچھ دوستوں کا خیال ہے کہ سنگین غداری کیس میں سابق آرمی چیف ریٹائرڈ اور جلا وطنی میں سخت بیمار پرویز مشرف کو سزائے موت کے فیصلے والا سین گزر چکا ہے اور سزائے موت کے تفصیلی فیصلے کا سین اتنا زیادہ پھیل چکا ہے کہ اگلا سین سسپنس بن چکا ہے، لگتا ہے کہ سسپنس والا تیسرا سین نمودار ہونے میں کم از کم ایک ہفتہ تو لگے گا ، لیکن میں اس تھیوری کو نہیں مانتا میرے خیال میں تو جو فیصلے ہو چکے وہ بدلے نہیں جائیں گے، پرویز مشرف سزا کیس میں نا شائستہ اور نا
مزید پڑھیے


کیا ہو رہا ؟؟؟

جمعه 20 دسمبر 2019ء
خاور نعیم ہاشمی
جو کچھ بھی ہو رہا ہے، اچھا نہیں ہو رہا، پاکستان میں پہلی بار اہم ترین دو قومی اداروں کے مابین تصادم سے بھی بڑھ کر حالات ہیں، سپریم کورٹ کے جنرل ریٹائرڈ پرویز مشرف کے خلاف تفصیلی فیصلے نے تو گویا جلتی پر تیل چھڑک دیا ہے، سوچا تھا کہ جمعہ کا کالم گول کردوں اور قارئین سے اتوار کو مخاطب ہوں، امکان نظر آرہا ہے کہ جب جمعہ کو کالم چھپے گا تو کہیں سب کچھ ہی نہ بدل چکا ہو،،، تفصیلی فیصلے میں لاش کو تین دن تک ڈی چوک میں لٹکانے کے حکم نے سو بچوں
مزید پڑھیے


ڈکٹیٹروں کے بچے جمہوریت کی علامت !

اتوار 15 دسمبر 2019ء
خاور نعیم ہاشمی
حیران ہوں، پریشان ہوں، کچھ سمجھ میں نہیں آ رہا ، کیا کروں؟ دماغ میں جو اتھل پتھل جاری ہے اسے ختم کیسے کیا جائے؟ جو سوالات سر اٹھا رہے ہیں ان کے جواب کس سے حاصل کروں؟ مسلسل ان سوچوں میں غلطاں ہوں کہ کیا یہ وہی وکیل ہیں، کیا یہ وہی وکلاء برادری ہے جو اس ملک میں ڈکٹیٹروں کے خلاف اور جمہوریت کی بحالی کی تحریکوں میں ہراول دستہ ہوا کرتی تھی؟ مفاد پرست اور عوام دشمن وکلاء کے کئی گروپ بھی ہماری زندگی میں سامنے آتے رہے ہیں، آمریت کا ساتھ دینے والی بعض سیاسی اور
مزید پڑھیے


ایک تھا جلال

جمعه 13 دسمبر 2019ء
خاور نعیم ہاشمی
یہ پچاس کی دہائی کے آخری دو تین سالوں کی بات ہے، میں پانچ سال کا اور میرا بھائی تین سال کا تھا، صبح ناشتہ کے بعد ہماری ماں ہم دونوں بھائیوں کو نہلانا دھلانا شروع کر دیتی تھیں، سردیوں کی دوپہروں میں وہ ہمیں گھر کی چھت پر لے جاتیں، چارپائی پر بٹھا کر روزانہ نیا لباس پہناتیں اور ہمارے بال سنوارتیں، مجھے کہتیں، تمہارے بال لمبے ہیں اس لئے ان پر چڑیا بنا رہی ہوں، اسی دوران بارہ، تیرہ سال کا ایک گورا چٹا پٹھان لڑکا ہمارے گھر میں داخل ہوتا اور ہم دونوں بھائیوں کو چھت سے
مزید پڑھیے