BN

خاور نعیم ہاشمی



وہ جو باعث شرمندگی ہیں


چھوٹے شہروں اور قصبات میں تو نام نہاد صحافیوں کی بھرمار ہے ہی، لاہور سمیت بڑے شہروں کو بھی ایسے ’’صحافیوں‘‘ سے پناہ حاصل نہیں ہے جنہوں نے اس مقدس پیشے کی حرمت کو کچھ اس طرح پامال کیا ہے کہ اصلی صحافیوں کو بھی کہیں منہ چھپانے کی جگہ نہیں ملتی۔ یہ سلسلہ نیا نہیں شروع ہوا، کئی ان پڑھ اور بلیک میلر لوگ کھلے عام صحافی بنے ہوئے ہیں، ان کی جیبوں میں عجیب و غریب ناموں کے میڈیا ہاؤسز کے کارڈ ہوتے ہیں، اب تو شہر کے کونے کونے ، گلیوں اور بازاروں میں اخبارات و جرائد
اتوار 01  ستمبر 2019ء

میں بہت شرمندہ ہوں

جمعه 30  اگست 2019ء
خاور نعیم ہاشمی
یہ کہانی نہیں میری شرمندگی کی داستان ہے، لوگ مجھے ایک بہادر آدمی سمجھتے ہوں گے لیکن اس واقعہ نے مجھ پر ثابت کر دیا تھا کہ میں کتنا کمزور اور بے بس شخص ہوں،کاش اس دن جب یہ واقعہ رونما ہوا تھا، اس دن کا سورج ہی نمودار نہ ہوتا، کاش میں اس دن بھی سماج سے بغاوت کر دیتا اور ایک بیٹی کے مکالمے پر زندگی قربان کرکے اسے سینے سے لگا لیتا اور اسے اپنے وجود کا حصہ بنا لیتا،پتہ نہیں آج وہ کہاں ہوگی؟ کس حال میں ہوگی؟ پچیس سال بیت گئے ہیں اس سے
مزید پڑھیے


نواز شریف کو ریلیف

اتوار 25  اگست 2019ء
خاور نعیم ہاشمی
عدالت عظمیٰ کی جانب سے نواز شریف کو سات سال قید اور جرمانے کی سزا سنانے والے احتساب عدالت کے جج ارشد ملک کے حوالے سے ویڈیو اسکینڈل کا فیصلہ سامنے آ چکا ہے فیصلے میں اس کے باوجود جج ارشد ملک ویڈیو اسکینڈل پر تحقیقاتی کمیشن بنانے کی استدعا مسترد کر دی گئی ہے کہ کیس کی سماعت کے دوران سپریم کورٹ نے یہ ریمارکس بھی دیے تھے کہ جج ارشد ملک کے ’’مس کنڈکٹ‘‘ سے ہزاروں ججوں کے سر شرم سے جھک گئے ہیں، یہ ریمارکس بھی سامنے آئے کہ مریم نواز کی جانب سے مبینہ ویڈیو
مزید پڑھیے


اے عدم ، احتیاط لوگوں سے

جمعه 23  اگست 2019ء
خاور نعیم ہاشمی
یہ بات ہے اس زمانے کی جب پاکستان میں آزادی صحافت کے لئے دنیا کی سب سے بڑی جنگ لڑی گئی تھی، 1977-1978ء پاکستان فیڈرل یونین آف جرنلسٹس کی قیادت منہاج برنا اور نثار عثمانی جیسے بے باک اور دوٹوک صحافیوں کے ہاتھوں میں تھی، کارکن صحافیوں کی ملک گیر فوج ظفر موج اپنے راہنماؤں پر اندھا اعتماد رکھتی تھی، ایک پر حملہ سب پر حملہ کا تصور ایمان کی حد تک مستحکم تھا، جنرل ضیاء الحق کی آمریت سرکاری میڈیا سے تعلق رکھنے والے صحافیوں کو بھی سنسر شپ کے خلاف جدوجہد میں شامل ہونے سے نہیں روک سکی
مزید پڑھیے


ایک خط ، من وعن

بدھ 21  اگست 2019ء
خاور نعیم ہاشمی
(شوکت مہر صاحب ایک سینئر وکیل، قانون دان ،مفکر اور دانشور ہیں، انہیں صرف تاریخ سے ہی نہیں، شعر و ادب ، موسیقی اور سیاست سے بھی گہرا لگاؤ ہے۔ پیانو بڑا زبردست بجاتے ہیں، بہت بے باک اور جی دار دوست ہیں۔ دنیا بھر سے معلومات کے ذخیرے ان کے پاس ہیں، حالات حاضرہ پر گہری نگاہ رکھتے ہیں، شوکت مہر صاحب نے ہمیں ایک مکتوب بھجوایا ہے جسے ہم آج کے کالم میں من و عن شائع کر رہے ہیں) ٭٭٭٭٭ 1973ء میں جب عرب، اسرائیل جنگ دیوار پر لکھی جا چکی تھی۔ جنگ سے پہلے ایک امریکی
مزید پڑھیے




کہیں دیر نہ ہو جائے

اتوار 18  اگست 2019ء
خاور نعیم ہاشمی
مقبوضہ جموں و کشمیر اور لداخ کو بھارتی اکائی ڈیکلیئر کرنے کے خلاف اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کا اجلاس سولہ اگست کو ہوا، ایک دن پہلے سلامتی کونسل کی خاتون صدر(جو کہ اقوام متحدہ میں پولینڈ کی سفیر ہیں) کا ایک بیان میری نظروں سے گزرا جس نے مجھے چونکا کر رکھ دیا ، ان کا کہنا تھا کہ سلامتی کونسل کے اجلاس میں مقبوضہ کشمیر کی صورتحال کا جائزہ لئے جانے کا امکان ہے، سلامتی کونسل در اصل دنیا کے پانچ طاقت ور ترین ممالک، امریکہ، چین، برطانیہ،روس اور فرانس کے گٹھ جوڑ کا نام ہے، سلامتی کونسل
مزید پڑھیے


اداس بکرے کی قربانی

جمعه 16  اگست 2019ء
خاور نعیم ہاشمی
مجھے وہ پہلی ہی نظر میں بھا گیا تھا، بہت خوبصورت، بہت معصوم، زیادہ بھاؤ تاؤ کئے بغیر ہی اس بکرے کو قربانی کے لئے خرید لیا۔ مجھے بکرے کی تلاش میں منڈی جانے کا تردد نہیں کرنا پڑا تھا۔ بیوپاری ہمارے گھر کے قریب ہی مل گیا تھا، میں نے رقم کی ادائیگی کے بعد بکرے کی رسی اپنے ہاتھ میں پکڑی اور پیدل ہی گھر کی جانب چل پڑا۔ زیادہ سے زیادہ ایک فرلانگ کا فاصلہ بکرے نے بڑے سکون سے دوست کی طرح طے کیا۔ گھر کے دروازے پر پہنچ کر اسے اندر داخل کرنے کی بھی
مزید پڑھیے


زندگی اے زندگی

اتوار 11  اگست 2019ء
خاور نعیم ہاشمی
بجائے اس کے کہ میں مقبوضہ کشمیر کو بھارتی اکائی میں شامل کرنے کے شرمناک اقدام پر بلوائے گئے پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس کی کارروائی پر کچھ لکھوں، مناسب ہے کہ آپ کو مقبوضہ کشمیر کے ایک نوجوان شاعر کے جذبات سے روشناس کرادوں، نوجوان کشمیری شاعر کا یہ کلام کئی سال پرانا ہے اورآج کل انٹر نیٹ پر اسے خوب پذیرائی مل رہی ہے، مقبوضہ کشمیر میں بھارت بہتر سال تک کیا کیا مظالم ڈھاتا رہا؟ یہ شاعری اس کی ہو بہو تصویر ہے، اگر میں نے پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس کے حوالے سے تصویر کشی کی تو ڈرتا
مزید پڑھیے


ماڈلنگ کو بھی مہنگائی مار گئی

جمعه 09  اگست 2019ء
خاور نعیم ہاشمی
کسی زمانے میں بچے بڑے ہو کر ڈاکٹر، وکیل یا انجینئر بننے کے خواب دیکھا کرتے تھے، اور ایسے ہی خواب اپنے بچوں کے لئے ان کے والدین چنا بھی کرتے تھے، پھر سن دو ہزار دو کے بعد بچوں اور نوجوانوں کے لئے برقی صحافت پسندیدہ ترین کیرئیر بن گیا‘ ٹی وی جرنلزم نے جہاں کئی اینکرز اور صحافیوں کو مالا مال کیا وہیں سب سے بڑی لاٹری نکلی کمرشل اشتہارات کیلئے کام کرنے والی ماڈل گرلز کی، اس لاٹری میں حصہ وصول کیا ماڈلنگ کرنے والے لڑکوں نے بھی، مگر بہت زیادہ نہیں۔ ماڈلنگ آج سینکڑوں،
مزید پڑھیے


1947ء کی جنگ کشمیر

بدھ 07  اگست 2019ء
خاور نعیم ہاشمی
بھارت اپنی خباثت کا مظاہرہ کرتے ہوئے لداخ، جموں اور مقبوضہ کشمیر کی خصوصی آئینی حیثیت ختم کرکے اسے اپنی اکائی بنا چکا ہے، 15اگست تک اور خطرناک خبریں بھی سامنے آ سکتی ہیں، خدشہ یہ ہے کہ دوسرے مرحلے میں کشمیر سے کشمیریوں کو بے وطن کر دیا جائیگا، کشمیر کی جنگجو، دلیر بچیوں کے اغوا اور انہیں غائب کرنے کا عمل شروع ہوگا، بچوں، بوڑھوں اور جوانوں کا قتل عام ہوگا،جو بچ جائیں گے انہیں دیس نکالا دے دیا جائے گا، مجھے اس ساری صورتحال میں شہباز شریف کی یہ بات انتہائی معنی خیز لگی کہ امریکی
مزید پڑھیے