BN

ذوالفقار چودھری



تشدد پسندی کی طرف بڑھتی دنیا


جنگ چھیڑنا، وقت کا انتخاب اور اصول طے کرنا ہمیشہ طاقت ور کا اختیار رہا ہے۔ کمزور تو اپنے دفاع اور بقا کے لئے صرف مزاحم ہوتا ہے اور طاقت کی چکی میں پس کر تقسیم در تقسیم کے ذریعے کمزور سے کمزور تر ہوتا جاتا ہے۔ انسانی ترقی کا کرشمہ مگر یہ ہے کہ دو عظیم جنگوں کے زخم چاٹتے یورپ سے طاقت کا مرکز امریکہ منتقل ہوا تو ملکوں کو فتح کرنے اور اقوام کو غلام بنانے کی پالیسی کمزور اور کٹھ پتلی حکمرانوں کے ذریعے اقوام کو ذہنی غلام بنا کر طاقت اور وسائل بڑھانے کی حکمت
اتوار 25  اگست 2019ء

امن کے نام پر مسلم کش عالمی ایجنڈا

اتوار 18  اگست 2019ء
ذوالفقار چودھری
جبر کے کھیت میں امن کے پھول نہیں کھلتے‘ نفرت کی جھاڑیاں اگتی ہیں۔ سماج کے اجتماعی شعور میں نفرت کا لاوا بغاوت بن کر ظلم کی سنگلاخ چٹانوں کو چیر کر پھوٹتا ہے۔ آج مسلمان دہشت گردی کی جنگ کا ایندھن بھی ہیںاور دہشت گردی کا لیبل لگا کردنیا نسل کشی بھی ان ہی کی کر رہی ہے۔ تاریخ مظلوم اور ظالم کاقصہ بیان نہیں کرتی،فاتح کی جیت کے گیت گاتی ہے۔برطانوی مورخ آرنولڈ ٹوائن بی نے 1961ء میں کینیڈا کی مک گل یونیورسٹی میں اسرائیل کے عربوں پر مظالم کا تذکرہ ہوئے کہا تھا: نازیوں نے 60لاکھ
مزید پڑھیے


آزادیٔ کشمیر کی قیمت

اتوار 11  اگست 2019ء
ذوالفقار چودھری
آزادی کی قیمت خون ہے اور ہمیشہ انسانی خون ہی رہے گی۔ آزادی کی راہ میں جان دینے والے کبھی نہیں مرتے بھلے ہی منوں مٹی تلے دفن ہوں مگر ان کا جذبہ آزادی اور عزم و حوصلہ ہزاروں لاکھوں زندہ آزادی کے متوالوں کی رگوں میں لہو بن کر دوڑتا ہے۔ تحریک پاکستان کی شمع بھی شہیدوں کے خون سے روشن ہوئی تھی جس نے آگے چل کر وہ چراغ جلائے جن کی روشنی میں مسلمانان برصغیر نے منزل پاکستان کی صورت میں حاصل کی۔ پھر ہجرت کا سفر بھی ایک آگ اور خون کا دریا تھا جو عبور
مزید پڑھیے


جمہوریت کو خطرہ مگر کس سے؟

اتوار 04  اگست 2019ء
ذوالفقار چودھری
جمہوریت سماج کے اجتماعی سیاسی شعور کی پختگی کا نام ہے۔ انتخابات اور منتخب حکومتیں اس کا ایک جزو لازم۔ اجتماعی شعور ارتقاء کی بھٹی میں ہی پختہ ہوتا ہے۔ ایسا نہیں کہ بٹن دبائیں اور دماغ روشن ہو جائیں۔ جمہوریت انتخابات کا نام ہوتا تو حسنی مبارک‘ صدام حسین اور انور سادات کو تاریخ آمروں میں شمار نہ کرتی۔ کیمبرج ڈکشنری کے مطابق’’جمہوریت عوام میں آزادی اور مساوات کا یقین اور اس یقین پر قائم ہونے والی حکومتوں کا نام ہے‘‘۔ پاکستانی سیاسی اشرافیہ کا المیہ یہ ہے کہ انتخابات خرید کر اپنی بادشاہت قائم کرنے کو جمہوریت تسلیم کروانے
مزید پڑھیے


جناب وزیر اعظم خلوص نیت سے بڑھتے جائیے

اتوار 28 جولائی 2019ء
ذوالفقار چودھری
زمانہ ہارنے والوں کا ماتم نہیں جیتنے والوں کے گیت گاتا ہے۔ ریاستوں کے تعلقات جذبات اور مہربانی پر نہیں باہم مفادات کی بنیادوں پراستوار ہوتے ہیں دنیا بھر کی حکومتیں اور ان کی ریاستی مشینری دیگر ریاستوں سے تعاون بڑھانے کے لئے اختلافات اور تضادات میں مفادات تلاش کرنے پر توانائی صرف کرتی ہیں‘ ایسی ہی ایک کوشش وزیر اعظم عمران خان کی عسکری قیادت کے ساتھ دورہ امریکہ کے دوران ثمرآور ہوئی۔ پاکستانی قیادت کے دورہ امریکہ کی کامیابیوں نے عالمی منظر نامے پر ہلچل مچائی تو ہمسایہ ملک بھارت میں طوفان برپا کر دیا۔ ملکی اور غیر
مزید پڑھیے