Common frontend top

ذوالفقار چوہدری


نواز شریف کا مودی جی کو صائب مشورہ!!


برصغیر کی تاریخ میں سماج اور سیاست کے ممتاز گرو چانکیہ کوتلیہ نے یہ ضرور کہا ہے کہ ہمسائے کا ہمسایہ بہترین دوست ہوتا ہے مگر یہ نہیں کہا کہ ہمسائے کوفتح یا تباہ کئے بغیر ترقی اور خوشحالی ممکن نہیں۔ ہندوستان کے پہلے وزیرِاعظم جواہر لال نہرو چانکیہ کو اپنا روحانی گرو کہا کرتے تھے۔شاید اسی لئے بھارت کی خارجہ پالیسی پر چانکیہ کی فلاسفی کے اثرات کا عکس پوری طرح موجود ہیں۔ نہرو سے لے کر مودی تک بھارت کے حکمرانوں نے پاکستان اور بھارتی مسلمانوںکے سامنے دوستی محبت بھائی چارے اور امن کا ہاتھ تو
جمعه 14 جون 2024ء مزید پڑھیے

حکمرانوں کی مرضی کے مطابق فیصلوں کی خواہش!

جمعرات 06 جون 2024ء
ذوالفقار چوہدری
وارن ای برگر نے کہا ہے کہ ججز کو عوام کی رائے کے بجائے قانون کی بنیاد پر حکمرانی کا حکم دینا ہوتا ہے اس لئے انہیں حکمرانوں کے دباؤ سے بالکل لاتعلق رہنا چاہیے۔ طاقتوروں کے اپنی ضرورت اور خواہش کے مطابق فیصلے کروانے کے واقعات سے تاریخ بھری پڑی ہے۔طاقت ہمیشہ خود کو قانون سے مستثنیٰ تصور کرتی ہے۔ عدالتوں پر حکمرانوں کی خواہشات کے مطابق فیصلے کرنے پر الزامات بھی لگتے رہے اور انصاف پر کھڑے رہنے والوں کو نشان عبرت بنانے کی کوششیں بھی۔ دور کیوں جائیںجمہوریت اور انصاف کے چیمپیئن امریکہ میں بھی سابق
مزید پڑھیے


وجود اور شناخت کی جنگ لڑتے خواجہ سرا !!

جمعه 31 مئی 2024ء
ذوالفقار چوہدری
ڈیوڈ گوگنس نے کہا ’’ انسان اپنی شناخت اور وجود منوانے کے لئے ساری دنیا یہاں تک کہ خود سے بھی لڑ سکتا ہے‘‘۔ انسان کس قسم کی اور کیوں شناخت کا متمنی ہوتا ہے؟ جواب یہ ہے کہ ایسی شناخت جو انسان کو اسے دوسروں سے منفرد کرے اس کی تکریم میں اضافہ کرے۔انسان تکریم اور سوسائٹی کی توجہ حاصل کرنے کے لئے کیا کیا کر سکتا ہے اس کا اندازہ ہندو مذہب کی ایک دیومالیائی داستان سے لگایا جا سکتا ہے۔ وشنو پران پہلی صدی قبل مسیح کے دوران تحریر کیا گیا اس کے
مزید پڑھیے


لوٹ مار کی بساط اور کلیپٹو کریسی

جمعه 24 مئی 2024ء
ذوالفقار چوہدری
منگولیا کے سابق صدر تشیاغین البجدورج نے کرپشن کو ترقی کی حقیقی دشمن کہا ہے۔ دنیا بھر کے ممالک میں امور مملکت افسر شاہی یا حکومتی مشینری ملکی قوانین کے تحت چلاتی ہے۔ جمہوری ممالک میں حکمران جماعت کا کام بیوروکریسی کو پالیسی دینا اور اس پالیسی کے مطابق امور کی انجام دہی کی نگرانی ہوتا ہے۔ حکومتی امور میں فیصلہ سازی کے لئے بھی ایک ضابطہ کار طے ہے اس سے مفر نہیں کہ حکمران جماعت یا اس کے ارکان کے پاس نا صرف فیصلوں کی منظوری کا اختیار ہوتا ہے بلکہ یہ لوگ فیصلوں پر اثرانداز بھی
مزید پڑھیے


ماورائے عدالت قتل، پولیس اور ہمارا نظام انصاف

جمعه 17 مئی 2024ء
ذوالفقار چوہدری
سابق چیف جسٹس افتخار چوہدری کی معزولی کے بعد وکلاء تحریک کے دوران اعتزاز احسن بڑے زور و شور سے اپنی ایک نظم پڑھا کرتے تھے جس کے چند اشعار کچھ یوں ہیں دنیا کی تاریخ گواہ ہے عدل بنا جمہور نہ ہو گا آخری شعر تھا ریاست ہو گی ماں کے جیسی ہر شہری سے پیار کرے گی ماں جیسی ریاست کے خواب نے اس نظم کے ہر شعر میںایک نئی امید کا پیغام رکھا دیا تھا ۔ وکلا تحریک میں عوام کی شمولیت اور قربانیوں کے پیچھے یہی امید اورخواب کا پیغام تھا کہ ملک و قوم کی ترقی عدلیہ
مزید پڑھیے



غیر ممکن ہے حالات کی گتھی سلجھے!

جمعرات 09 مئی 2024ء
ذوالفقار چوہدری
دوسری جنگ عظیم میں جب جرمنی کے حملوں سے برطانیہ کے بڑے شہر تباہ ہو رہے تھے کسی نے چرچل سے سوال کیا کہ برطانیہ یہ جنگ ہار جائے گا؟ چرچل نے پوچھا کیا برطانیہ کی عدالتوں میں انصاف ہو رہا ہے؟ جواب ملا برطانیہ کی عدالتیں مبنی بر انصاف فیصلے کر رہی ہیں۔ چرچل نے کہا اگر برطانیہ کی عدالتیں انصاف کر رہی ہیں تو برطانیہ کو دنیا کی کوئی طاقت شکست نہیں دے سکتی۔ چرچل کا برطانیہ میںانصاف پر یقین اپنی جگہ مگر تاج برطانیہ کے محکوم ہندوستان کے سیاسی لیڈرمولانا ابو الکلام آزاد کا کہنا
مزید پڑھیے


ایرانی صدر کا دورہ اور اقبال کا خواب!

جمعرات 25 اپریل 2024ء
ذوالفقار چوہدری
ایرانی صدر ڈاکٹر ابراہیم رئیسی دورہ پاکستان مکمل کرکے واپس روانہ ہو گئے۔ اس دورے کی اہمیت کا اندازہ ایرانی صدر کے پاکستان میں قیام کے دوران امریکہ عہدیداروں کے پیٹ میں اٹھتے مروڑوں سے بخوبی لگایا جا سکتا ہے ۔ دو برادر اسلامی ممالک کے تعلقات کے بارے میں امریکہ کے پیچ وتاب کو علامہ اقبال کے دو اشعار سے سمجھا جا سکتا ہے۔ پانی بھی مسخرّ ہے، ہوا بھی ہے مسخرّ کیا ہو جو نگاہِ فلکِ پِیر بدل جائے جب اقبال نے یہ اشعار کہے تھے اس وقت پہلی جنگ عظیم میں سلطنت عثمانیہ کی شکست کے بعد
مزید پڑھیے


نواز شریف کی ریلیف دینے کی خواہش اور بیوروکریسی

جمعرات 18 اپریل 2024ء
ذوالفقار چوہدری
لیزا کیش ہینس نے کہا ہے کہ قیادت کا کام دوسروں کی کسی خاص فیصلے کی طرف رہنمائی کرنا ہے جس سے وہ خود کو بااختیار اور مکمل محسوس کریں ایسا کیونکر ممکن ہو سکتا ہے یہ اوپر نفری نے بتایا۔’’قیادت ایسا صرف اپنے نیچے کام کرنے والوں کو ہمدردی کا احساس دلا کر اور ان سے غیر مشروط تعلق بنا کر ہی کر سکتی ہے‘‘۔ بدقسمتی سے پاکستانیوں کو قیام پاکستان کے بعد کالونیل سسٹم کی تربیت یافتہ بیورو کریسی ملی جس کی ٹریننگ عوام کی خدمت نہیں بلکہ ایک غلام قوم کو زیر نگین رکھنے کی تھی اور
مزید پڑھیے


ملک صرف ایٹم بم سے ہی تباہ نہیں ہوتے!!

جمعرات 04 اپریل 2024ء
ذوالفقار چوہدری
گھانا کے عالمی شہرت یافتہ دانشور اور درجنوں کتب کے مصنف اسرائیل مزیدآیبور نے کہا ہے ’’ملک صرف ایٹم بم سے ہی تباہ نہیں ہوتے بلکہ جس ملک کے حکمرانوں کو اپنی جیب عوام کی زندگیوں اور بہبود سے زیادہ عزیز ہو ان کی کرپشن سے بھی ملک تباہ ہو جاتے ہیں۔ کرپشن کے حوالے سے یہ بات تسلیم شدہ ہے کہ یہ شروع بھی اوپر سے ہوتی ہے اورختم بھی طاقتوروں کے احتساب سے ہو سکتی ہے۔ ہمارے اہل اقتدار ملک میں کرپشن کے خاتمے کے دعویدار ہیں اور انسداد بدعنوانی کے لیے ایک نہیں، تین
مزید پڑھیے


پیرا میڈیکس ملازمین کی پنشن اور اے جی آفس کا رویہ!

جمعرات 28 مارچ 2024ء
ذوالفقار چوہدری
معروف امریکی مصنف سوسان ملیر نے ریٹائرمنٹ کا مطلب بہت ہی کم وسائل میں خوشیاں تلاش کرنا بتایا ہے۔ ویسے تو دنیا بھر بالخصوص ترقی پذیر ممالک میں پبلک سیکٹرمیں تنخواہیں پرائیویٹ سیکٹر کے آٹے میں نمک کے مترادف ہوتی ہیں مگر اس کے باوجود نوجوانوں کی پہلی ترجیح خاص طور پر پاکستانیوں کی سرکاری نوکری ہوتی ہے اور اس کی وجہ سرکار کا اپنے ملازمین کو نجی شعبہ سے قدر بہتر سماجی تحفظ فراہم کرنا ہے۔ سرکاری نوکری میں کم ہی سہی مگر ہر ماہ تنخواہ برابر ملتی ہے ہر سال انکریمنٹ بھی اور تعلقات کے حساب سے ترقی
مزید پڑھیے








اہم خبریں