BN

سجاد میر


چڑیوں کا چو گا


غضب خدا کا چڑیوں کا چوگابھی مہنگا ہو گیا۔ انسان کیا کھائیں گے۔ میری اہلیہ گھر کی چھت پر چڑیوں کے لئے دانہ ڈالتی ہے، وہ علیل تھی تو اسے ہسپتال میں صرف ایک بات یاد تھی کہ آیا ان بے زبانوں کو خوراک دی جا رہی ہے۔ ان پرندوں کو عام طور پر جوار کا دانہ ڈالا جاتا ہے۔ رمضان سے پہلے یہ 65روپے کلو تھا آج 95روپے ہے۔ ہو سکتا ہے ہول سیل میں سستا مل جائے۔ ہم گزشتہ دنوں مرغی کے گوشت کا واویلا کرتے رہے۔اس خطے کا من بھاتا کھابا بکرے کا گوشت ہے جو اس
پیر 21 جون 2021ء مزید پڑھیے

آخر سچ ہے کیا!

هفته 19 جون 2021ء
سجاد میر
دھڑا دھڑ بجٹ آ رہے ہیں اور ان کی آڑ میں بڑے بڑے دعوے ہو رہے ہیں۔ ایک طرف حکومت کا کہنا ہے کہ اس نے گویا ملک کا مقدر بدل کر رکھ دیا ہے۔ قومی معیشت جو چند روز پہلے بستر مرگ پر تھی‘ اب حیات نو پا چکی ہے۔ مقابلہ پہلے والوں کے ساتھ کیا جا رہا ہے کہ انہوں نے ملک کو تباہ حال چھوڑا تھا۔ ہم نے اسے دوبارہ پائوں پر کھڑا کر دیا ہے۔اعداد و شمار کا انبار لگایا جا رہا ہے۔ جو اب میں بھی بڑے بڑے دعوے ہو رہے ہیں۔ اعداد و شمار
مزید پڑھیے


سندھ کا 70فیصد

هفته 12 جون 2021ء
سجاد میر
آج اگر میں بجٹ پر لکھوں تو یہ میرا پچاسواں بجٹ ہو گا۔ پہلی بار میں نے بھٹو صاحب کے نئے پاکستان کے پہلے بجٹ پر تفصیلی گفتگو کی تھی جو مری کی خنک فضائوں سے ڈاکٹر مبشر حسن نے پیش کیا تھا۔ آدھے پاکستان کا بجٹ اتنا ہی تھا جتنا ایک سال پہلے پورے پاکستان کا بجٹ ہوا کرتا تھا بھٹو صاحب نے آتے ہی ڈالر کی قیمت کو اس طرح بڑھایا جس طرح ان دنوں ہمارے اب والے نئے پاکستان کے کرتا دھرتائوں نے بڑھایا ہے۔ مجھے یاد پڑتا ہے آج ہم جتنے ہزار کا بجٹ پیش کر
مزید پڑھیے


سندھ‘وفاق اور پنجاب

پیر 07 جون 2021ء
سجاد میر
اس بات کے دو پہلو ہیں‘ سندھ کے وزیر اعلیٰ مراد علی شاہ نے مرکز سے تقاضا کیا ہے کہ وہ آئندہ بجٹ میں وفاق کے ترقیاتی پروگرام میں جو سندھ کا حصہ رکھ رہے ہیں‘ وہ پنجاب کی نسبت بہت کم ہے۔ اس میں اضافہ کیا جائے اس مطالبے کی اچھی بات تو یہ ہے کہ وفاق کی اکائیاں اگر اپنے حقوق کے لئے آواز اٹھاتی ہیں تو یہ مثبت بات ہو گی اور منفی بات یہ ہے کہ یہ بیان پیپلز پارٹی کے اسی رویے کا عکاس ہے جو وہ سندھ کارڈ کے طور پر استعمال کر رہی
مزید پڑھیے


ترقی کی سیاست

جمعرات 03 جون 2021ء
سجاد میر
خاکم بدہن، ترقی کا نعرہ ہمیں ماضی میں تو راس نہیں آیا۔ ایوب خان کے مشیروں نے مشورہ دیا کہ حضور والا آپ کو دس سال شہنشاہی کرتے ہو چکے ہیں۔ بہتر ہوگا کہ آپ عشرہ ترقی منائیں۔ پھر کیا ہوا؟ یہ سب جانتے ہیں۔ اب جانے کس سیانے نے ہمارے وزیراعظم کو مشورہ دیا ہے کہ آپ کیوں کہتے ہیں کہ ہمیں حالات کو سمجھنے میں وقت لگا ہے‘ اب ہم کچھ کر کے دکھائیں گے۔ آپ کہیں ہم نے بہت ترقی کی ہے۔ اعداد وشمار اہم اکٹھے کئے دیتے ہیں۔ اس میں ایک تکنیکی خلوص بھی شامل تھا۔
مزید پڑھیے



امام ابوالحسن علی شاذلی ؒ

پیر 31 مئی 2021ء
سجاد میر
اس بات کو اب کوئی چالیس برس سے زیادہ ہو چکا ہے جب میرے دل میں یہ وسوسہ پیدا ہوا کہ شاذلی سلسلہ المغرب میں تو بہت مقبول ہیں مگر ان کا فیض مجھ تک تو نہیں پہنچا۔ اس سے میری مراد یہ ہو گی کہ برصغیر میں ان کاسلسلہ کا چلن نہیں ہے مگر میری اناپرست رومانویت نے اسے یوں ادا کیا۔ کر ناخدا کا یوں ہوا کہ دو چار دنوں ہی میں آسمانوں سے اس کا جواب آ گیا۔ میں ایک خاص مقصد کے لیے ایک بزرگ سے ملا‘ انہوں نے ازراہ عنایت مجھے حزب البحر کی اجازت
مزید پڑھیے


سندھ کا مسئلہ

جمعرات 27 مئی 2021ء
سجاد میر
ان دنوں سندھ میں قافلے سرعام لوٹ لئے جاتے تھے۔ قومی شاہراہوں تک پر رات کو سفر کرنا ممکن تھا۔ جب دس بارہ گاڑیاں اکٹھی ہو جاتیں تو ان کے آگے اور پیچھے سکیورٹی کی گاڑیاں حفاظت کے لئے مقرر کی جاتیں جو انہیں اس خطرناک سرزمین سے باہر نکالیں۔ لوگ اغوا کر لئے جاتے‘پھر تاوان کے بدلے رہا ہوتے۔ تاوان کی رقم کے ساتھ ڈاکو ایک عدد راڈو گھڑی اور ایک تھان بوسکی کا مانگتے۔ یہ گویا اس زمانے کی ریت تھی۔ اغوا ہونے والوں کی اکثریت عموماً کراچی سے ہوتی۔ جب ٹرین کوٹری حیدر آباد سے چلتی تو اس
مزید پڑھیے


چار فیصد ،شوکت ترین کا کمال

پیر 24 مئی 2021ء
سجاد میر
حکومت کے ترجمان یہ بتاتے ہوئے پھولے نہیں سما رہے کہ اس سال ہماری شرح نمو 4فیصد تک جا پہنچے گی حالانکہ یہ شرح نمو کوئی قابل قدر نہیں گنی جا سکتی۔ماضی میں 3فیصد شرح نمو پر پھبتی کسی جاتی تھی کہ یہ ہندو گروتھ ریٹ ہے اس لئے کہ بھارت کافی دنوں تک اس حد تک رکا رہا تھا۔ کئی سال تک اس کی شرح نمو یہاں تک پہنچ جاتی تھی۔ پھر بھی جب اچانک پاکستان میں یہ اعلان ہوا کہ ہماری شرح نمو چار فیصد ہوئی جاتی ہے تو ہماری خوشی کا کوئی ٹھکانہ تھا۔یقین نہ آتا تھا
مزید پڑھیے


یروشلم‘ اے یروشلم

جمعرات 20 مئی 2021ء
سجاد میر
یروشلم‘ اے یروشلم‘ شاید مجھے اب پھر کسی صلاح الدین ایوبی کا انتظار ہے جو ہم میں تو نظر نہیں آتا۔ کبھی ہم نے غور کیا برصغیر کے مسلمانوں کے ہیرو کون ہیں اور کیوں ہیں۔ ہم طارق بن زیاد کو سلام کرتے ہیں‘ محمود غزنوی اور محمد بن قاسم کی شان میں مدح سرا ہیں‘ صلاح الدین ایوبی ہمارے لیے ایک لیجنڈ ہیں۔ خلافت راشدہ میں بھی ایک خالد بھی ولید کو چھوڑ کر ہمیں کسی دوسرے کو نہیں جانتے ۔ معلوم ہے اسکی وجہ کیا ہے۔ نکل کر صحرا سے جس نے روما کی سلطنت کو الٹ دیا
مزید پڑھیے


خدمت کے کارخیر

جمعرات 13 مئی 2021ء
سجاد میر
اس کارخیر میں قدرے تاخیر ہو گئی۔ ملکی اور ذاتی معاملات میں الجھا رہا۔اس میں کوئی شک نہیں کہ ملک میں خیر کے بہت سے کام ایسے ہوتے ہیں جن کی بنا پر تعلیم‘صحت کے معاملات خصوصی طور پر ضروریات زندگی کے دوسرے امور ایک سلیقے سے چل رہے ہیں۔ اس ملک میں جب زلزلہ یا سیلاب آیا تو یہ فلاحی تنظیمیں تھیں جو سب سے پہلے بروئے کار آئیں۔ایک تنظیم کا تو اب نام لینا بھی جرم قرار پایا ہے مگر ایسے موقع پر حافظ سعید کے مجاہدوں نے سچ مچ خدمت کا حق ادا کیا۔ الخدمت ہی کے نام
مزید پڑھیے








اہم خبریں