BN

سجاد میر


مرے وطن ‘تری جنت…


دونوں دعوے درست ہو سکتے ہیں۔یہ بھی کہ جو ہارتا ہے‘ وہ دھاندلی کا شور مچا دیتا ہے اور یہ بھی کہ جس کی مرکز میں حکومت ہوتی ہے‘ وہی کشمیر یا گلگت بلتستان کے الیکشن کا معرکہ مار لیتا ہے۔پہلا دعویٰ ایسا نہیں جس پر لمبی چوڑی بحث فی الوقت کی جائے مگر دوسرے دعوے سے کئی شاخیں پھوٹتی ہیں۔ایک تو یہ کہ کشمیر کے لوگ ایسے مفاد پرست ہیں کہ جس کی حکومت بنتے دیکھتے ہیں‘ اس کی طرف ہو جاتے ہیں۔اس دلیل کا اگلا قدم یہ ہے کہ سب کچھ سارے وسائل سارے فنڈز مرکز کے
جمعرات 29 جولائی 2021ء مزید پڑھیے

ہمارے عارف نظامی

هفته 24 جولائی 2021ء
سجاد میر
دو چار ماہ سے وہ قدرے علیل تو تھے مگر یہ دنیا چھوڑ جائیں گے۔ کسی کو یقین نہ تھا ۔مجھے سمجھ نہیں آتا کہ میں ان سے اپنے تعلق کو کس حوالے سے بیان کروں۔میں برسوں کراچی میں نوائے وقت کا ایڈیٹر رہا ہوں۔ اس لحاظ سے وہ مجید نظامی سے پہلے میرے باس تھے۔ تاہم ان سے ہمیشہ ایک دوستانہ تعلق رہا۔ انہوں نے صحافت کا پیشہ اس وقت اختیار کیا جب میں نے بھی اس میدان میں قدم رکھا۔ وہ یونیورسٹی میں ہم سے ایک آدھ برس جونیئر تھے۔ نوائے وقت اس زمانے میں بحران کا شکار
مزید پڑھیے


وہ ناداں گر گئے سجدوں میں…

جمعرات 15 جولائی 2021ء
سجاد میر
کل برادرم میجر عامر سے بہت دنوں بعد تبادلہ خیال ہوا۔ وہ افغان جنگ ہی میں ایک لیجنڈری حیثیت ہی نہیں رکھتے‘ بلکہ حالات کی نبض کے ایسے شناسا بھی ہیں کہ شاذو نادر ہی کوئی دوسرا ہو گا۔ خیال آیا کہ اس وقت پاکستان جس بنیادی مسئلے سے دوچار ہے اسے ہم ملکی سیاست کے جھمیلوں میں الجھ کر نظر انداز کر رہے ہیں۔ یہ ہے افغانستان سے امریکی افواج کا انخلا جو خطے کی صورت حال بدل سکتا ہے۔ میجر عامر نے چھوٹتے ہی اس پر بڑا بلیغ تبصرہ کیا جو مرے لئے سوچ کے راستوں
مزید پڑھیے


دبستان روایت ( 2)

هفته 10 جولائی 2021ء
سجاد میر
اگر روایت کے معنی ایک طرح کی روحانیت یا تصوف کے لے لئے جائیں تو مطلب یہ نکلتاہے کہ اب اس کو سمجھا جائے کہ اس سے کیا مراد ہے۔ سلیم احمد نے جو بحث کی ہے اس سے اندازہ ہوتا ہے کہ ان لوگوں کی نظر میں یہ تصوف یہ روحانیت دراصل اس بات سے پھوٹتی ہے کہ التوحید واحد،یعنی توحید ایک ہی ہے۔ جہاں بھی توحیدنظر آئے اسے حق پر سمجھو۔ وہ لوگ تو مابعد الطبیات میں ایک نکتہ نکالتے ہیں‘ وہ یہ کہ میٹا فزکس کے آخر میں ایس(s) کو بھی خارج کر کے میٹا فزک کا
مزید پڑھیے


دبستان روایت

جمعرات 08 جولائی 2021ء
سجاد میر
میں نے وعدہ کیا تھا کہ میں دبستان روایت پر چلنے والی حالیہ بحث پر گزارشات کروں گا۔ طبیعت کی کسلمندی کی وجہ سے اس میں تاخیر ہوتی جا رہی ہے۔ آج خود پر جبرکر کے اس پر لکھنے بیٹھا ہوں۔ برصغیر میں حسن عسکری وہ پہلے شخص تھے، جنہوں نے رینے گینوں(استاد عبدالوحد یحییٰ) کا تعارف کرایا۔ انہی کے حوالے سے دبستان روایت کا چرچا ہوا اور شواں مارٹن لنگز وغیرہ ہماری فکری بصیرتوں کا حصہ بنے۔ اس فکر کے خلاف پورے برصغیر میں ترقی پسندوں نے جنگ شروع کردی۔ اس کانتیجہ تھا کہ ہم جیسے ذرا شدومد سے
مزید پڑھیے



چند ضروری باتیں

هفته 03 جولائی 2021ء
سجاد میر
کئی موضوعات ہیں جو مجھ پر قرض ہیں۔ایک تو وحید الدین خاں کی وفات پر کالم نہیں لکھ پایا۔ یہ ایک بھارتی سکالر تھے جو مذہبی موضوعات پر لکھا کرتے تھے۔میں نے انہیں مذہبی سکالر بھی نہیں لکھا اس کی وضاحت ضرور کروں گا۔ تاہم اس عرصے میں بہت سے اہل دانش نے ان پر طبع آزمائی کی ہے اور ان کی لبرل ازم سوچ کو خراج تحسین پیش کیا ہے۔اس میں کوئی شک نہیں کہ 95سال کے اس مرد ضعیف نے بہت جم کر کام کیا ہے۔ تاہم مذہب کو بہت نقصان پہنچایا ہے۔ خیر اس پر الگ سے
مزید پڑھیے


عمران خان کی اچھی باتیں

پیر 28 جون 2021ء
سجاد میر
بات تو تب بنتی ہے جب میں اسے عمران خان کی غلطیاں کہہ کر پکاروں مگر میرا دماغ بھی ذرا ٹیڑھا ہے اس لیے میں شروع ہی میں عمران خان کی چند اچھی باتیں کہہ کر پکار رہا ہوں۔ کیا ہوا دنیا اسے دوسرے نام سے پکارتی ہے۔ ابھی کل کلاں ہی کو عمران نے اسامہ بن لادن کو شہید کہہ دیا تھا۔ دنیا پر قیامت ٹوٹ پڑی تھی۔ اس ملک میں ان لوگوں کی کمی نہیں جو اسامہ کو مجاہد سمجھتے ہیں اور امریکیوں کے ہاتھوں جس طرح اس کی موت واقع ہوئی اس کی مذمت کرتے ہیں۔ عمران
مزید پڑھیے


تارکین وطن کا مقدمہ

جمعرات 24 جون 2021ء
سجاد میر
آج کل ایک بحث تارکین وطن کے حوالے سے چلی ہوئی ہے۔ ایک گروہ اس کی حب الوطنی کا علم بلند کئے ہوئے ہے اور ان کی شان میں مدح سرا ہے۔ دوسرا گروہ کہتا ہے کہ ان کی حب الوطنی میں تو کلام نہیں مگر اس کا یہ مطلب نہیں کہ ملکی معاملات پر ان کی رائے صائب ہو۔ دونوں گروپ یہ گفتگو اس لئے کر رہے ہیں کہ آیا انہیں ووٹ کا حق دیا جائے یا نہیں۔ دوسرا گروہ کہتا ہے کہ ان کے اس حق پر کسی کو اعتراض نہیں‘ وہ اس بار الیکشن کے دنوں میں
مزید پڑھیے


چڑیوں کا چو گا

پیر 21 جون 2021ء
سجاد میر
غضب خدا کا چڑیوں کا چوگابھی مہنگا ہو گیا۔ انسان کیا کھائیں گے۔ میری اہلیہ گھر کی چھت پر چڑیوں کے لئے دانہ ڈالتی ہے، وہ علیل تھی تو اسے ہسپتال میں صرف ایک بات یاد تھی کہ آیا ان بے زبانوں کو خوراک دی جا رہی ہے۔ ان پرندوں کو عام طور پر جوار کا دانہ ڈالا جاتا ہے۔ رمضان سے پہلے یہ 65روپے کلو تھا آج 95روپے ہے۔ ہو سکتا ہے ہول سیل میں سستا مل جائے۔ ہم گزشتہ دنوں مرغی کے گوشت کا واویلا کرتے رہے۔اس خطے کا من بھاتا کھابا بکرے کا گوشت ہے جو اس
مزید پڑھیے


آخر سچ ہے کیا!

هفته 19 جون 2021ء
سجاد میر
دھڑا دھڑ بجٹ آ رہے ہیں اور ان کی آڑ میں بڑے بڑے دعوے ہو رہے ہیں۔ ایک طرف حکومت کا کہنا ہے کہ اس نے گویا ملک کا مقدر بدل کر رکھ دیا ہے۔ قومی معیشت جو چند روز پہلے بستر مرگ پر تھی‘ اب حیات نو پا چکی ہے۔ مقابلہ پہلے والوں کے ساتھ کیا جا رہا ہے کہ انہوں نے ملک کو تباہ حال چھوڑا تھا۔ ہم نے اسے دوبارہ پائوں پر کھڑا کر دیا ہے۔اعداد و شمار کا انبار لگایا جا رہا ہے۔ جو اب میں بھی بڑے بڑے دعوے ہو رہے ہیں۔ اعداد و شمار
مزید پڑھیے








اہم خبریں