BN

سجا د جہانیہ


وقت کا متبادل


آپ نے کبھی سوچا کہ یہ سردیاں اور بہ طورِخاص دسمبر ایسا ملال آمیزرومان لئے ہوئے کیوں ہوتا ہے۔ خاص طور پر حْزن پرست تو اس مہینے بڑا ہی حظ اٹھایا کرتے ہیں۔ یہ رْت جہاں دلوں میں میٹھے جذبات پیدا کرتی ہے وہاں پرانی یادوں کو‘ گزرے لمحات کو اور بچھڑے لوگوں کے لمس کو وقت کی قبروں سے نکال کر سامنے لا کھڑا کرتی ہے۔ یادوں کا المیہ یہ ہے کہ جب یہ بن رہی ہوتی ہیں تو ان کی قدروقیمت کا احساس نہیں ہوتا لیکن جب ان کی فلم شوٹ ہو کر ڈبے میں بند ہوجاتی ہے
جمعرات 19 دسمبر 2019ء

ذکر ایم فور موٹروے کا

جمعرات 12 دسمبر 2019ء
سجا د جہانیہ
ابھی کچھ عرصہ پہلے تک یہ سوچنا محال تھا کہ کوئی ملتانی رات کو اپنے گھر میں آرام سے سوئے، صبح اٹھ کے فجرکی نماز پڑھے اور دس ساڑھے دس بجے لاہور کے اپنے صدر دفتر میں ہونے والی میٹنگ میں موجود ہووگرنہ ہوا یہی کرتا تھا کہ صبح 10بجے اگر میٹنگ یا پیشی ہے تو نصف شب کو ملتان سے رختِ سفر باندھا جائے۔کچھ مجھ ایسے سہل پسند اُس سے بھی پہلے سہہ پہر کو نکل کھڑے ہوتے کہ کسی سرائے میں شب بسری کر کے صبح سہولت سے دفتر پہنچا جاسکے۔ پتہ نہیں اب یہ دعا سی پیک
مزید پڑھیے


پیار کا پہلا خط

جمعرات 05 دسمبر 2019ء
سجا د جہانیہ
پہلی ملاقات کی ایک جھجھک ہوتی ہے اوراگر ملاقات ایسی ہو کہ جس میں شوق و نیاز کی کرم فرمائی بھی ہو تو انسان کچھ سِوا ہی تیاری کرتا ہے۔ یہ تو رہی روبہ رو ملاقات، آدھی ملاقات بھی اگر پہلی ہو تو اس کا اہتمام بھی کچھ کم نہیں ہوتا۔ میری عمر کے لوگ وہ زمانہ جانتے ہیں کہ جب خط کو آدھی ملاقات کہا جاتا تھا۔ احباب کو، اقرباء کو‘ اپنے پیاروں کو خط لکھے جاتے اور نامۂ شوق کا تو خیر اہتمام ہی کچھ جدا ہوتا۔ شاعر نے کہا تھا۔ پیار کا پہلا خط لکھنے میں وقت تو
مزید پڑھیے