Common frontend top

سعدیہ قریشی


زیتون،کھجور اور امن کی عید کے ذائقے


جنگ سے تباہ حال لاکھوں فلسطینی رفح کی خیمہ بستیوں میں عید الفطر کا دن کس کسمپرسی میں گزار رہے ہیں یہ سوچ کر ہی آنکھیں بھر آتی ہیں۔ جنگ، تباہی اور بدامنی، فلسطینیوں کی زندگی کا حصہ رہی ہے۔ مگر فلسطینی بھی کسی اور مٹی کے بنے کمال کے لوگ ہیں۔ جنگ کے طویل خزاں رسیدہ موسموں میں جب جب امن کے وقفے آئے یہ زندگی کی طرف ایسے لوٹ جاتے ہیں جیسے راستے میں کبھی جنگ اور تباہی کے پڑاؤ نہ آئے ہوں۔ ایمان کے مضبوط ترین درجے پر مسلمان دیکھنے ہوں تو اہل فلسطین کو دیکھ لیں۔
بدھ 10 اپریل 2024ء مزید پڑھیے

دل کی وحشت کا اثر کم ہو تو شاید ہاتھ آئے

اتوار 07 اپریل 2024ء
سعدیہ قریشی
اس بار بہارکی آمد میرے دل پر دستک دیتی رہی اور میں جو بہار کی آمد پر اپنے اندر ایک خوشی اور تازگی سے بھری زندگی کی اک لہر محسوس کرتی ہوں , اس بہار فلسطین کے ان پھولوں کے لیے اداس رہی جو کٹ کٹ کر القدس کی مقدس سرزمین پر گرتے رہے۔ ہائے ہائے بہار فلسطین میں اور ہی ڈھنگ میں آئی ہے لہو میں بھیگی۔۔وحشت ناک موسموں میں باغ کے باغ اجاڑتی۔تتلیوں کے پروں پر لکھا مہینہ مارچ بھی اسی اداسی میں گزر گیا۔سرد موسم کے بعد رت بدلنے کی نوید لے کے آتا بہار
مزید پڑھیے


دعا:خزائن رحمت کی کنجی

جمعه 05 اپریل 2024ء
سعدیہ قریشی
محترم استاد احمد جاوید کہتے ہیں کہ اگر کبھی یہ دیکھنا ہو کہ میرا اللہ سے تعلق کیا ہے تو اپنی دعا کے کنٹینٹ پر نظر ڈالو اور اس دعا میں اپنی کیفیت کے اتار چڑھاو کو دیکھو میں کیا چیزیں اللہ سے زیادہ مانگتا ہوں اور کیا مانگنے میں میرا دل زیادہ لگتا ہے۔آپ پر اپنی پوری حقیقت اور اللہ کے ساتھ تعلق کھل کے سامنے آجائے گاکہ میں نے ساری عمر کوئی ایسا سجدہ کیا ہے کہ جس نے مجھے مسجود کے قدم کا لمس فراہم کر دیا ہو میں نے ساری عمر اللہ کو اللہ سے
مزید پڑھیے


عید تو غزہ میں بھی آئے گی

بدھ 03 اپریل 2024ء
سعدیہ قریشی
عید تو غزہ میں بھی آئے گی مگر کس حال میں کہ اس کا تصور ہی رونگٹے کھڑے کر دینے کو کافی ہے۔اسی خیال نے رمضان بھر چین نہیں لینے دیا ایک چبھن مسلسل محسوس ہوتی رہی۔رمضان اس حوالے سے بہت عجیب گزرا اس میں گزشتہ رمضانوں جیسی خوشی کا عنصر غائب تھا۔رمضان المبارک ہمیشہ سے بڑے عقیدت و احترام اور خوشی سے منانے کی روایت ہمارے ہاں موجود رہی ہے۔رمضان المبارک کی آمد سے پہلے شعبان ہی میں تیاریوں کا سلسلہ شروع ہو جاتا ہے ۔ دینے دلانے کے لیے خریداری کا آغاز ہو جاتا ہے، تحائف جن
مزید پڑھیے


گوگل ڈوڈل اور تصویری صحافت !

اتوار 31 مارچ 2024ء
سعدیہ قریشی
کیا آپ نے کبھی غور کیا ہے کہ گوگل کے ویب پیج پر ان کا لوگو کبھی کسی خاص دن کے موقع پر تبدیل کیوں ہو جاتا ہے . مثلاً پاکستان کا یوم آزادی ہو تو گوگل کا یہ لوگو سبز اور سفید رنگ میں پاکستان کے پرچم کی تصویر کے ساتھ نظر آتا ہے۔ اسی طرح آٹھ فروری 2024ء کو پاکستان میں عام انتخابات کے موقع پر بھی گوگل نے پاکستان کی جغرافیائی حدود میں اپنے آفیشل لوگو کو تبدیل کیا اسے گوگل ڈوڈل کی اصطلاح کا نام دیا گیا ہے۔گوگل آفس میں اس کا باقاعدہ
مزید پڑھیے



راگنی کی کھوج میں

بدھ 27 مارچ 2024ء
سعدیہ قریشی
نجیبہ عارف کی آپ بیتی کو میں نے ابھی گزرے سرما کی راتوں میں پڑھا اور بہت دنوں تک اس کی گرفت میں رہی۔ کتاب انتہائی دلچسپ ہے۔اس کی نثر بہت طاقتور ہے۔زندگی کی بہت سی ان کہی حقیقتوں کو اور روح میں سر اٹھاتے سوالوں کو جس سچائی اور قادر الکلامی سے انہوں نے سچ سچ بیان کیا ہے وہ بہت پر اثر ہے۔ اس کتاب کی بنیادی طور پر دو سطحیں ہیں، ایک تو اس کی اوپری سطح ہے، جس میں تحریر کا جمالیاتی اور تخلیقی حسن ہے اور وہ کشش جو ایسی آپ بیتی میں ہوتی جسے لکھنے
مزید پڑھیے


مسلم دنیا کے مردہ ضمیر کے نام

اتوار 24 مارچ 2024ء
سعدیہ قریشی
یہ تقریر فن خطابت اور متن کی فصاحت و بلاغت کاایک شاندار نمونہ ہے۔ کاش کہ او آئی سی کا ایک ہنگامی اجلاس بلایا جائے، جس میں 57 مسلمان ملکوں کے نمائندے موجود ہوں اور ایک بڑی سکرین پر اس ویڈیو کو سنایا بھی جائے اور دکھایا بھی جائے اور اس وقت تک یہ عمل دہرایا جائے جب تک ستاون اسلامی ملکوں کے نمائندوں کے ضمیر نہیں جاگتے۔ پھر ایک خیال آیا کہ عرب لیگ کے ممبر ملکوں کے نمائندوں کا ایک اجلاس ہو اور اس اجلاس کایک نکاتی ایجنڈا اسی تقریر کی سماعت گری ہو۔کیا خبر کے جذبہ ایمانی
مزید پڑھیے


مجرم لاڈلے ، محنت کش سوتیلے

جمعه 22 مارچ 2024ء
سعدیہ قریشی
مجرموں کے ساتھ بہترین سلوک، سرکار کے خزانے سے ان کی زندگی کو سہولت آمیز کرنے کے لیے عملی اقدامات ، پنجاب کی جیلوں میں قید ہزاروں مجرموں کے لیے سرکار کا خزانہ حاضر ہے ،جبکہ یہیں پنجاب میں لاکھوں محنت کش سرکار کے سوتیلے پن کا شکار غربت اور افلاس کی گھٹن میں زندگی جبر مسلسل کی طرح کاٹ رہے ہیں۔،وزیراعلی مریم نواز شریف کا حالیہ کوٹ لکھپت جیل کا دورہ اس کی تازہ ترین مثال ہے۔ جب وزیراعلی قیدی خواتین کو پلیٹیں پیش کر رہی تھیں تو مجھے اپنا وہ پرانا کالم یاد آگیا جو میں نے اسی
مزید پڑھیے


عافیہ کے لیے عافیت کی کوشش !

بدھ 20 مارچ 2024ء
سعدیہ قریشی
کم و بیش ہر برس مارچ میں ایک کالم عافیہ صدیقی کے حوالے سے ضرور لکھا جاتا ہے ۔یہ کالم کیا ایک دستک ہوتی ہے ۔جو اس وقت کے اہل اختیار اور صاحب دربار کے ضمیروں پر دی جاتی ہے۔اپنے بے مایا سے لفظوں کے ساتھ اہل اختیار کے دروازے پر یہ دستک دینا مجھ پر فرض بھی ہے اور ایک قرض بھی۔ محمد ایوب عافیہ رہائی موومنٹ کے گلوبل کوارڈینیٹر ہیں۔ عافیہ کے مسئلے کو وہ ہر لحاظ سے میڈیا کا حصہ بنائے رکھنے کی کوشش کرتے ہیں۔ کیونکہ ہماری بد قسمتی یہ ہے کہ یہاں کوئی سسٹم
مزید پڑھیے


دانشورانہ املاک پر ڈاکہ قابل تعزیر کیوں نہیں؟

اتوار 17 مارچ 2024ء
سعدیہ قریشی
"تصویر ادھوری رہتی ہے" کہ عنوان سے گزشتہ دنوں امبانی فیملی پر ایک کالم لکھا جو اللہ کے کرم سے بے حد وائرل ہوا ۔اس کی ایک وجہ یہ تھی کہ لوگوں نے امبانی کی ٹریلین ڈالرز دولت کے کی گود میں چمچماتی زندگی کے گلیمر موجود اس کمی اور ادھورے پن کو دیکھا جسے دولت پورا نہیں کرسکی اور مسائل کے گرداب میں پھنسی اپنی زندگیوں میں موجود اللہ کی ان شمار نعمتوں کو محسوس کیا جسے ہل من مزید کی ہوس میں ہم نظر انداز کرتے ہیں۔بہرحال لفظوں کو قبولیت ملی اور کالم سوشل میڈیا پر سینکڑوں
مزید پڑھیے








اہم خبریں