BN

سعد الله شاہ


سیاسی جنگ اور فراز کی برسی


اک فسانہ تھا حقیقت کی طرف موڑ دیا ہم تجھے چھوڑ نہیں سکتے تھے پرچھوڑ دیا ہم تو دریا تھے کسی سمت تو بہنا تھا ہمیں کیا خبر کس نے تری سمت ہمیں موڑ دیا آج جب میں لکھنے بیٹھا ہوں تو احمد فراز کی بارہویں برسی ہے تو مجھ پر لازم آتا ہے کہ ان کا تذکرہ چھیڑوں مگر کچھ تازہ تازہ بھی ہے جو مجھے کھینچتا ہے۔ جس بات پر بے ساختہ مجھے ایک ہی وقت میں ہنسی بھی آ رہی ہے اور رونا بھی کہ ایک مرتبہ پھر حکومت کے وزیروں مشیروں اور دانشوروں نے سر جوڑ کر فیصلہ کیا ہے
بدھ 26  اگست 2020ء

کیا کیا بچایا جائے

منگل 25  اگست 2020ء
سعد الله شاہ
نہ کوئی اشک ہے باقی نہ ستارا کوئی اے مرے یار مرے دل کوسہارا کوئی چاند نکلا نہ سربام دیا ہے روشن شب گزرنے کا وسیلہ نہ اشارہ کوئی تو صاحبو!صورت حال تو یہی ہے ریشم کے دھاگے کی الجھنیں سلجھانے کی کوشش کی جا رہی ہے سرا ہی نہیں مل رہا تو کس تار کو کون سے تار سے جدا کیا جائے۔ پہلے صرف نعرہ ہی تھا کہ آئو ملک بچائو اب تو باقاعدہ اس کے آثار نظر آنا شروع ہو گئے ہیں کہ واقعتاً اداروں کو تباہ کیا جا رہا ہے۔آپ سوچتے ہونگے کہ مجھے اس کا خیال آخر کیوں آیا؟ویسے
مزید پڑھیے


کچھ ادب کچھ سیاست

پیر 24  اگست 2020ء
سعد الله شاہ
ہم کہ چہرے پہ نہ لائے کبھی ویرانی کو کیا یہ کافی نہیں ظالم کی پشیمانی کو جس میں مفہوم ہو کوئی نہ کوئی رنگ غزل یار جی آگ لگے ایسی زباں دانی کو اگرچہ سیاست کا بازار گرم ہے اور اس گرم تنور میں آرام کے ساتھ نان لگائے اور پکائے جا سکتے ہیں۔ مگر ایک دلچسپ تذکرہ شعر کے ضمن میں ضرور ہے کہ مقطع میں آ پڑی ہے سخن گسترانہ بات۔ ہمارے ایک دوست نے اپنے کالم میں ایک منفرد اور انوکھا سا شعر درج کیا تو میرا دل چاہا کہ اس نویکلے شعر کا پس منظر اور پیش منظر
مزید پڑھیے


نیا کھیل اور عوام

اتوار 23  اگست 2020ء
سعد الله شاہ
کوئی پلکوں پہ لے کر وفا کے دیے دیکھ بیٹھا ہے رستے میں تیرے لئے کتنی تیزی سے سب کام بڑھنے لگے وقت گھٹتا گیا ہر کسی کے لئے لیجیے تھیلے سے بلی نکل آئی مگر اب وہ پہچانی نہیں جاتی کہ یہ بلی ہے یا کوئی اور جانور ،ہم تو چراغ جلائے راہوں میں منتظر تھے کہ وہ آئیں گے مگر ادھر تو قاصد بھی نہیں آیا۔ میں بات کو الجھانا نہیں چاہتا۔ بلکہ خان صاحب کے نئے مشن یعنی مشن نمبر 2کا تذکرہ کرتے ہیں کہ اب نواز شریف کو واپس لانے کے لئے تگ و دو شروع ہو گئی۔ یہ کیا
مزید پڑھیے


سٹیک ہولڈرز نوجوان!اور وزیر اعظم

هفته 22  اگست 2020ء
سعد الله شاہ
کیوں تماشہ میں سربزم لگانا چاہوں دل کی ہر بات زمانے کو بتانا چاہوں اس کو خوشبو کی طرح ساتھ بھی رکھوں اپنے اور پھر اس کو زمانے سے چھپانا چاہوں ایسا نہیں کہ شاہ محمود قریشی جھیل میں کنکر پھینک کر چھپ گئے اور باقی دائرے شمار کر رہے ہیں محمد عباس مرزا نے پوسٹ لگائی ہے کہ پہلے شیریں مزاری نے وزیر خارجہ کی سرعام بے عزتی کی اور کل شبلی فراز نے کر دی ۔بھئی واہ کیا انداز حکومت ہے‘ مجھے یاد آیا کہ ایک لڑکے حفیظ نے ٹنڈ کروا لی تو وہ تماشا بن گیا۔ اس نے تو ٹنڈ اس
مزید پڑھیے



سبز باغ اور حکومت

جمعه 21  اگست 2020ء
سعد الله شاہ
کیا کہیں ان سے جو خوشبو سے شناسا ہی نہیں کیا کبھی پھول سے بھی نام و نسب پوچھتے ہیں ایک وہ ہیں کہ تعلق سے ہیں یکسر منکر ایک ہم ہیں جدائی کا سبب پوچھتے ہیں عمران خان صاحب فرما رہے ہیں کہ وہ عوام کو نہیں چھوڑیں گے یعنی ان کے ساتھ رہیں گے مگر انصاف کی بات تو یہ ہے کہ وہ عوام سے بھی پوچھ ہی لیں کہ ان کے کیا ارادے ہیں۔ چلیے چھوڑیے ہم آج جلا کٹا کالم نہیں لکھیں گے اگرچہ ہمیں پتہ چلا ہے کہ حکومت چڑیا گھر کا ٹکٹ بھی تیس روپے سے سو
مزید پڑھیے


لمحۂ موجود کی گھمبیرتا اور حکمران

بدھ 19  اگست 2020ء
سعد الله شاہ
شام فراق یار نے ہم کو اداس کر دیا بخت نے اپنے عشق کو حسرت و یاس کر دیا خوئے جفائے ناز پر اپنا سخن ہے منحصر ہم نے تو حرف حرف کو حرف شناس کر دیا سیاست میں یہ تو ہوتا ہے کہ کہیں فرفت تو کہیں وصال۔کوئی دشمن تو کوئی دوست اور کوئی رقیب تو کوئی محبوب ۔یہ سب کچھ سیاست میں بھی ہے اور یہاں بھی محبوب کے نخرے برداشت کرنا پڑتے ہیں اور اگر وہ روٹھ جائے تو اسے منانا بھی پڑتا ہے۔ وہی کہ نوکر کیہیہ تے نخرہ کیہہ!ہم بھی سعودیہ کو منا رہے ہیں اور وہ مان بھی
مزید پڑھیے


2344ارب کی بچت اور نصرت فتح علی خاں

منگل 18  اگست 2020ء
سعد الله شاہ
میری آنکھوں میں چاند اتارا گیا کس محبت سے مجھ کو مارا گیا میرے بازو نہیں رہے میرے لو مرا آخری سہارا گیا محبت پہ کالم آیا تو پذیرائی کی حد ہو گئی ۔ یہ میری نہیں محبت کی پذیرائی تھی اور تو اور شبی الماس نے امریکہ سے کومنٹ کیا کہ لگتا ہے محبت آپ کے پیچھے پڑ گئی ہے اور ساتھ ہی علی معین کا خوبصورت شعر بھی لکھ دیا’’کوئی تعویذ ردِ بلا کا۔ مرے پیچھے محبت پڑ گئی ہے‘‘محبت پہ تو ہزاروں باتیں ہو سکتی ہیں مجھ کو میری ہی اداسی سے نکالے کوئی۔ میں محبت ہوں محبت کو بچا لے
مزید پڑھیے


مٹی سے محبت اور مقصد

پیر 17  اگست 2020ء
سعد الله شاہ
اس کو جب تک میں نہیں جانتا تھا دل محبت کو کہاں مانتا تھا خاک اڑانے میں قباحت کیا تھی یہ تو میں صبح و مسا چھانتا تھا ہم آج محبت کا تذکرہ کریں گے مگر اس سے پیشتر آپ عبدالغفور ایڈووکیٹ کی ایک مزیدار ریسرچ سن لیں کہ انہوں نے غیر شادی کے معنی گوگل سے دیکھے تو وہاں "unworried" لکھا ہوا تھا۔ ہمارے ڈاکٹر ناصر قریشی نے اصلاح کی وہاں غلطی ہو گئی ہوگی وہاں unmarried لکھا ہوگا۔ عبدالغفور نے ثبوت پیش کردیا۔ ویسے یہ بات ہمارے دل کو کیا ہرشادی شدہ کے دل کو لگے گی کہ واقعتاً کہ غیر شادی
مزید پڑھیے


خان صاحب کی تین مبارکیں اور ہم

اتوار 16  اگست 2020ء
سعد الله شاہ
پھر چشم نیم وا سے ترا خواب دیکھنا اور اس کے بعد خود کو تہہ آب دیکھنا ٹوٹا ہے دل کا آئینہ اپنی نگاہ سے اب کیا شکست ذات کے اسباب دیکھنا چلیے جی اب نئے پاکستان سے ایک مرتبہ پھر قائد کے پاکستان کی طرف سفر شروع جس میں صنعتوں اور عوام کو سستی بجلی مہیا کی جائیگی۔ ترے وعدے پر جیے ہم تو یہ جان چھوٹ جانا۔ کہ خوشی سے مر نہ جاتے اگر اعتبار ہوتا۔ پاور کمپنیوں سے معاہدہ ہو گیا۔ ہدف بجلی کی ترسیل اور نظام کے لئے اصلاحات ہیں۔ کورونا کا مقابلہ ہو چکا اور ان کے بقول معیشت
مزید پڑھیے