BN

سعود عثمانی



ایک زمرّدی جزیرے کی یاد


پتایا ،سیام یعنی تھائی لینڈ (Thailand)کے ساحل پر مغرب کی طرف رخ کرکے کھڑے ہوں تو دور سمندر میں کچھ زمردی جزیرے دکھائی دیتے ہیں۔ صاف موسم میں بہت صاف۔دھند بھری فضا میں محض ہیولے۔مقامی زبان میں کوہ لارن(Koh Larn) اور سیاحوں کی زبان میں کورل آئی لینڈز(Coral islands)کہلانے والے یہ سرسبز جزیرے خوب صورت ریتلے ساحلوں اور ڈوبتے چڑھتے سورج میں سمندر کے رنگوں کے لیے مشہور ہیں ۔سفید بلکہ کچھ کچھ نقرئی ریت یہاں سے وہاں تک بچھی ہوئی اور جہاں یہ ریت ختم ہو وہاں سے ہریالی شروع۔ ’’پتایا‘‘ سیام کے دارالحکومت بنکاک (Bangkok) کے ٹریفک جام
اتوار 24 فروری 2019ء

عجیب دھوپ ہے دیوار سے اترتی نہیں

اتوار 10 فروری 2019ء
سعود عثمانی
خطیب منزل کراچی بھی ختم ہوئی۔بہت مدت سے اس گھر میں نہیں جاسکا تھا لیکن اس کے باوجود اس کے فروخت ہوجانے اور ملکیت کسی اجنبی ہاتھ میں چلے جانے کا سن کر کوئی تیز دھار سی شے دل پر خراش ڈالتی نکل گئی۔ شاید کچھ دن مزید یہ گھراسی طرح رہے ،لیکن ایک دن نئی بود و باش، نئی ضروریات اور نئے مسائل مل کر اسے ڈھا دیں گے۔یہاں ایک پلاٹ رہ جائے گا اور اس پر نئے خد وخال کی ایک نئی عمارت کھڑی ہوجائے گی۔ایسا ہی ہوگا اور ایسا ہی ہوتا چلا آیا ہے۔ آبائی مکانوں اور جذباتی
مزید پڑھیے


ایک رنگ کا رنگ برنگا موسم

اتوار 03 فروری 2019ء
سعود عثمانی
کیسے لکھتے ہیں بھئی یہ لوگ۔خیر لکھتے تو کسی بھی طرح ہوں لیکن کیا مزے سے لکھتے ہیں۔ایک ہی موسم‘ ایک ہی رنگ چھایا رہتا ہے تحریر کے ارد گرد۔ایک ہی اسلوب، ایک ہی مزاج۔آخر بیمار بھی ہوتے ہوں گے۔ رنجیدگی بھی سایہ ڈالتی ہوگی۔غصے میں بھی آتے ہوں گے۔ دل گرفتگی تو زندگی کے وجود کا سایہ ہے جو ساتھ ساتھ رہتا ہے۔نا امید بھی ہوتے ہوں گے۔ بیزاری بھی تو کبھی حملہ کرتی ہوگی کبھی لکھنے کی طرف طبیعت نہیں بھی آتی ہو گی لیکن دیکھ لیجیے۔کسی کے لکھنے کی عمر پچاس سال۔کسی کی ساٹھ۔کسی کی ستر۔کم
مزید پڑھیے


کیا دکھ ہے اگر معرض ِ اظہار میں آوے

اتوار 27 جنوری 2019ء
سعود عثمانی
شیکسپئیر نے کہا تھا۔ مسکراہٹ اور آنسو ساتھ ساتھ چلتے ہیں ۔(Tear and smile go together) زندگی کا بے لگام گھوڑا تو سرپٹ بھاگتا رہتا ہے۔اسے غرض نہیں کہ اس کے سوار پر کیا گزر تی ہے۔ اس کا ہاتھ باگ پر اور پاؤں رکاب میں ہے یا نہیں۔یہ تو بس ایک دن کسی گہرے گڑھے کے پاس رکے گا اور سوار کو اس میں دے پٹخے گا۔ایک ابدی کیفیت میں چھوڑ جانے کے لیے۔ کچھ بھی کہہ لیں قرار نہیں آتا۔کسی بھی کام میں لگ جائیں ،چین نہیں پڑتا ۔ سانحہ ساہیوال کے معصوم بچوں کی تصویریں دل سے دماغ تک
مزید پڑھیے


اک شخص تھا لیکن کوئی اک شخص نہ تھا میں

اتوار 20 جنوری 2019ء
سعود عثمانی
’’ ـ ابا جی۔ہے سعود عثمانی ہین۔مفتی شفیع صاحب دے پوترے‘ ‘ سفید ریش بزرگ نے سر اٹھایا۔شفقت اور محبت بھرے چہرے پر مہربان خد و خال نمایاں ہوئے۔ پہلے صرف ہونٹوں پر تبسم آیا، پھر پورا چہرا مسکرانے لگا۔انہوں نے مصافحے کے لیے ہاتھ بڑھائے۔ ہاتھوں میں وہی گرمی ،نرمی اور گداز تھا جو استاذ الخطاطین سید نفیس الحسینی کے ہاتھوں سے پھوٹتا تھا۔ جس دن فتح جنگ کے میٹھے اور کھڑتل لہجے میں اظہار الحق صاحب نے پہلی بار میرا تعارف اپنے والد گرامی مولانا ظہور الحق سے کروایا اس کے بعد مزید کم از کم دو موقعوں
مزید پڑھیے




پیرِ تسمہ پا سے رہائی

اتوار 13 جنوری 2019ء
سعود عثمانی
کھڑے کھڑے ٹانگیں دکھ گئیںلیکن قطار آگے سرکنے کا نام ہی نہیں لے رہی تھی۔کاؤنٹر تک رسائی ہوجائے تو بورڈنگ پاس میں زیادہ دیر نہیں لگتی۔ نہ لگنی چاہیے لیکن جو صاحب پونے گھنٹے سے کاؤنٹر پر کھڑے تھے وہ بس کھڑے تھے۔انہیں بورڈنگ پاس مل ہی نہیں رہا تھا کہ دائیں بائیں ہوجاتے۔ان کے پیچھے پندرہ بیس مسافروں کے بعد اپنی باری کا انتظار کرتے ہوئے میں یہ اندازہ لگا رہا تھا کہ ان صاحب کو پون گھنٹہ لگ چکا ہے تو اس حساب سے مجھے کُل کتنا وقت لگے گا۔ 12 ستمبر کی سہ پہر میں جناح ائیر پورٹ
مزید پڑھیے


میرے رشک قمر

اتوار 06 جنوری 2019ء
سعود عثمانی
کسی بڑے ہی استاد کا شعر ہے صنم کہتے ہیں تیری بھی کمر ہے کہاں ہے کس طرف کو ہے کدھر ہے ریل گاڑی اور اس کے سفر سے کس کا رومانس وابستہ نہیں ہوگا۔میرا بھی ریل گاڑی سے یاد ِماضی سے پھوٹتا رومانس ہے۔ شاعروں کا ریل گاڑی سے ایسا ہی رومانس وابستہ ہے۔پہلے منیر نیازی یاد آئے اور پھرپروین شاکر اک تیز تیر تھا کہ لگا اور نکل گیا ماری جو چیخ ریل نے جنگل دہل گیا …… ریل کی سیٹی میں کیسے ہجر کی تمہید تھی اس کو رخصت کرکے گھر لوٹے تو اندازہ ہوا چنانچہ ایک مدت کے بعد
مزید پڑھیے


بھیک نہیں، حق

اتوار 30 دسمبر 2018ء
سعود عثمانی
جناب وزیر اعظم !جناب صدر پاکستان !جناب چیف جسٹس صاحب !ہماری سمجھ میں نہیں آتا کہ کسے گواہ کیا جائے ؟کس سے منصفی طلب کی جائے؟ اس ملک میں ایک مظلوم ہے جسے انصاف کی طلب ہے لیکن تمام اخلاقی اور قانونی تقاضے اور فیصلے حق میں ہونے کے باوجود انصاف اسے کسی طرح مل کر نہیں دیتا۔71سال مقدمہ لڑتے ہوچکے ہیں۔لیکن کبھی کوئی فرد ،کوئی گروہ ،کوئی صوبہ اور کبھی خود وفاق اس کے حق میں حائل ہوجاتا ہے۔یہ ایک ایسی شائستہ مزاج، مہذب ملکہ کا مقدمہ ہے جس کا گھر کاغذات میں اس کے نام ہے لیکن ایک بدیسی
مزید پڑھیے


کچھ علاج اس کا بھی اے شیشہ گراں ہے کہ نہیں

اتوار 23 دسمبر 2018ء
سعود عثمانی
فلوریڈا امریکہ کی وہ جنوبی ریاست ہے جو لاکھوں سیاح ہر سال اپنی طرف کھینچتی ہے۔ خوب صورت موسموں ،درختوں،پھلوں ، آسائشوں، دھوپ بھرے ساحلوں اور نیلے سمندروں کی یہ دنیا اپنا اسیر کرلینے کے لیے مشہور ہے ۔ڈزنی لینڈ والا آرلینڈو ،جیکسن ول،ٹیمپا اور میامی فلوریڈا کے چند مشہور شہر ہیں۔ہم فلوریڈا کی’ ’ ولانو‘ ‘ بیچ پر گھوم رہے تھے کہ ایک ادھیڑ عمر امریکی نے ہم چاروں دوستوںکی تصویر اکٹھے بنانے کی پیشکش کی۔وہ اپنی فیملی کے ساتھ ساحل پر آیا ہوا تھا اور دو ہفتے پہلے کلیو لینڈ کے ایک ہسپتال سے مصنوعی کولہا لگوانے کے
مزید پڑھیے


کرے کوئی ، بھرے کوئی

اتوار 16 دسمبر 2018ء
سعود عثمانی
ایک بے یقینی ایک اداسی کی کیفیت ہے جو شاید ہر دل کو گھیرے ہوئے ہے۔بہت سے دلوں میں ان کیفیات کے ساتھ مایوسی بھی گھیرا ڈال رہی ہے۔تبدیلی کے منتظر بس انتظار کر رہے ہیں۔اور یہ انتظار طویل تر ہوتا جارہا ہے ؎ کیا تیرے انتظار کا حاصل ہے انتظار کیا تیرے انتظار کی حد انتظار ہے کوئی پوچھتا ہے کہ تبدیلی کیا آئی ہے ؟ اور کس ادارے میں آئی ہے ؟ تو سرکاری اعلانات اور اخباری بیانات کے سو اکوئی جواب بن نہیں پڑتا۔عام آدمی کو کس محکمے سے کیا سہولت ملی ہے ؟ کون
مزید پڑھیے