Common frontend top

سینیٹر(ر)طارق چوہدری


جہانِ وفا


حیرت سے تک رہا ہے جہان وفا مجھے، میں امت کی بیداری پر یقین رکھتا ہوں‘ مجھے پورا یقین ہے کہ شہید زندہ ہیں‘ وہ کبھی مرے ہی نہیں تھے‘ وہ کبھی مریں گے بھی نہیں‘ دنیا میں یہی شہداء امت کو جگائیں گے‘ ہم نہیں بس شہداء ہی اس کو جگا پائیں گے‘ اللہ ہمیں ہدایت دے کہ ہم مسلمان بن کر زندگی گزاریں۔ مسلمان ہونا آسان نہیں اور مسلمان ہو کر مرنا اور بھی مشکل ہے۔ سب سے مشکل کام اللہ کی راہ میں شہید ہونا ہے لیکن ہم اسی مشکل کی خواہش رکھتے ہیں‘ ہم اللہ سے کیا
اتوار 21 جولائی 2024ء مزید پڑھیے

صرف شفاف انتخابات!

اتوار 14 جولائی 2024ء
سینیٹر(ر)طارق چوہدری
پاکستان کے موجودہ بحران کا کوئی دوسرا حل نہیں سوائے شفاف انتخابات کے اور یہ شفاف انتخابات کروائے گا کون؟ اس کا جواب ہے تحریک انصاف کی حکومت نئے انتخابات کا اعلان کرے گی اور یہ انتخابات عدلیہ کی نگرانی میں ہونگے وہ دن دور نہیں جب ہر ادارہ اپنی غلطیاں درست کرے گا۔2013ء کے الیکشن میں چیف جسٹس افتخار چوہدری نے صدر پاکستان بننے کے لالچ میں عدلیہ کو استعمال اور بدنام کیا اس سال اکتوبر کے بعد بننے والے چیف جسٹس اپنے ادارے کی ساکھ بحال کریں گے۔ اگلے سال نومبر کے بعد باقی ادارے بھی نیک کام
مزید پڑھیے


مشکل ترین لوگ!

هفته 13 جولائی 2024ء
سینیٹر(ر)طارق چوہدری
تاریخ خود کو دہراتی ہے، مگر ہم بھول جاتے ہیں، جیسے بچہ بھول جاتا ہے، دشمن کو مگر اک اک زخم کی یاد آرہی ہے، جو مشکل ترین نسل کے بچوں نے دیئے ہیں، پہلے افغانستان میں، آج غزہ میں، تاریخ جو سبق ہزاروں برس میں دہرایا کرتی تھی اب عشروں میں دہرانے لگی ہے۔ 1980ء کا پہلا سورج کا بل میں روسی افواج کو حیرت سے دیکھ رہا تھا، کیل کانٹے سے لیس، جدید ترین اسلحہ سے مسلح، ٹینکوں، بکتر بند گاڑیوں، بھاری توپوں، سروں پر سایہ فگن ہیلی کاپٹر اور جنگی طیاروں، آگ برساتے جدید میزائل، یہ
مزید پڑھیے


کچھ بھی ٹھیک نہیں ہے

اتوار 07 جولائی 2024ء
سینیٹر(ر)طارق چوہدری
کسی دن آپ تنہائی میں بیٹھ کر قیام پاکستان کے بعد کی اپنی تاریخ پر غور کریں تو شروع دن سے آج تک کچھ بھی اچھا نظر نہیں آئے گا‘ انفرادی زندگی اور فرد کی کارکردگی کی بات نہیں کر رہا‘ سیاست‘ حکومت ‘ ریاست کے اداروں کی بات ہو رہی ہے‘ ہم نے عوامی جلسوں میں بڑے سیاستدانوں کی تقریروں میں سنا‘ اخبارات کے مضامین میں پڑھا‘ کتابوں کے صفحات میں دیکھا کہ قائداعظم محمد علی جناحؒ نے کہا تھا ’’میری جیب میں سب کھوٹے سکے ہیں‘‘ اور یہ بھی کہ ’’میں نے اور میرے ٹائپ رائٹر نے پاکستان
مزید پڑھیے


مگر ہم بھول جاتے ہیں

اتوار 30 جون 2024ء
سینیٹر(ر)طارق چوہدری
تاریخ خود کو دہراتی ہے‘ مگر ہم بھول جاتے ہیں۔ صرف تیس برس‘ بوسنیا کے بعد غزہ۔خورشید بودلہ صاحب ہمارے پرانے دوست ہیں اتنے پرانے کہ ان کی دوستی میں ’’چہل سال عمر عزیزت گزشت‘‘ ان کی طرف سے بہت کم ’’پوسٹ شیئر‘‘ (پیغامات کا تبادلہ) ہوتا ہے لیکن ان کا پیغام ہمیشہ بامعنی اور بامقصد ہوتا ہے اس بار انہوں نے ’’شیخ حویدی‘‘ کے حوالے سے ماضی قریب کے تاریخی واقعہ کا ذکر کیا ہے‘ تاریخ خود کو دہراتی ہے‘ مگر ہم بھول جاتے ہیں‘ جیسے بچہ بھول جاتا ہے‘ اکثر سننے میں آتا ہے کہ ماضی کو بھول
مزید پڑھیے



مظلوم ہیرو!

اتوار 23 جون 2024ء
سینیٹر(ر)طارق چوہدری
عید کا تیسرا دن دیرینہ دوستوں کی محفل میں گزارا‘ پروفیسر غنی جاوید‘ اشرف مہار اور جمیل احسن گل، بڑھتی عمر کے ساتھ دوستوں سے ملاقاتوں میں وقفہ زیادہ اور دورانیہ کم ہوتا جا رہا ہے‘ سب ہی سست اور کاہل ہوئے جاتے ہیں‘ پروفیسر غنی نے اس سال جنوری میں اپنی پہلی سالگرہ منائی وہ بھی نوے(90) برس کی عمر میں‘ باقی ہم تینوں حاضرین 75بہاریں دیکھنے کے بعد جون کی بے بارش تپش کا سامنا کر رہے ہیں‘ جس محفل میں جس مجلس میں پروفیسر ہوں وہاں ہمیشہ اسٹرالوجی کے حوالے سے پاکستان کی صورت حال زیر بحث
مزید پڑھیے


مظلوم ہیرو!

اتوار 16 جون 2024ء
سینیٹر(ر)طارق چوہدری
قائد اعظم کے بعد کوئی دوسرا نہیں جس نے پاکستان کے لئے ڈاکٹر عبدالقدیر سے بڑھ کر خدمات انجام دی ہوں۔ قائد نے پاکستان بنایا مگر وہ غیر محفوظ تھا تاوقتیکہ اس کے گرد ایٹمی حصار نہ بنا دیا گیا۔ یہ حصار کوئی دوسرا قائم نہیں کر سکتا تھا ڈاکٹر خان کے لئے یہ سب آسان نہیں تھا انہوں نے جان پر کھیل کے جان جوکھم میں ڈال کر ایسا کیا ۔ ڈاکٹر عبدالقدیر خاں بڑا آدمی تھا بہت بڑا پیار کے قابل احترام کے لائق وہ تھا ہی ایسا کہ اسے چاہا جائے اتنا ہی جتنا کہ لوگ
مزید پڑھیے


حسینؓ !کربلا میں ہے

جمعرات 13 جون 2024ء
سینیٹر(ر)طارق چوہدری
میں نے اسلام قبول کرنے کے بعد جیسا پڑھا تھا ویسا ہی پایا۔ میں نے پڑھا کہ محمد ﷺ تمہارے لئے مکمل ضابطۂ حیات ہیں‘ ان کی زندگی کو پڑھا تو بالکل ایسا ہی پایا‘ لیکن ایک چیز کے بارے میں جو پڑھا اسے آج تک تلاش کر رہا ہوں مگر وہ کہیں مل نہیں پا رہی‘ فرمایا:تمام مسلمان آپس میں بھائی بھائی ہیں لیکن جب سے میں نے اسلام قبول کیا تو میں نے دیکھا کہ کوئی مسلمان کسی کا بھائی نہیں ہے ۔ہماری چالیس ہزار لاشیں گرا دی گئیں تو بھی کسی کی آنکھ میں ایک آنسونہیں آیا‘
مزید پڑھیے


مظلوم ہیرو

اتوار 09 جون 2024ء
سینیٹر(ر)طارق چوہدری
اگست 1988ء ضیاء الحق طیارہ حادثے کے چند دن بعد کی بات ہے پروفیسر غنی جاوید کو نام بتائے بغیر دو افراد کی تاریخ پیدائش لکھوائیں اور زائچہ بنانے کی درخواست کی ان دنوں پروفیسر پروفیشنل اسٹرالوجر نہیں تھے‘ اسٹرالوجی پر انہوں نے ڈھیروں کتابیں جمع کر رکھی تھیں ان کا مطالعہ بھی وسیع تھا ہم چکوال سے اسلام آباد کی طرف سفر میں تھے اس لئے کاغذ پر لکیریں کھینچنے کا وقت بھی نہیں تھا وہ بہت دیر خاموشی سے سوچتے رہے دل ہی دل میں کچھ حساب کیا پھر بولے تفصیل سے بات تو ہوسٹل پہنچ کر کتابیں
مزید پڑھیے


مظلوم ہیرو

اتوار 02 جون 2024ء
سینیٹر(ر)طارق چوہدری
عمر بھر سنگ زنی کرتے رہے اہل وطن یہ الگ بات کہ دفنائیں گے اعزاز کے ساتھ پاکستان کی قومی زندگی میں قائد اعظم کے بعد ہمارا ہیرو یا محسن ہو سکتا ہے تو وہ ڈاکٹر عبدالقدیر کے سوا کوئی دوسرا ہو ہی نہیں سکتا‘ مگر ہمارے محسن نے اپنوں کے ہاتھوں ناقابل بیان دکھ اٹھائے۔ زخم کھائے ہیں۔ وجیہ و شکیل خوش وضع‘ خوش اخلاق ‘ خوش اطوار‘ کی پاکستان کو مضبوط‘ ناقابل شکست اور خوشحال بنانے کے لئے اس کے ارادوں کی کوئی حد نہیں تھی مگر سیاسی شعبدہ باز‘ طالع آزما ڈکٹیٹر‘ امریکی لے پالک‘ اور ناکام حاسد سائنس
مزید پڑھیے








اہم خبریں