Common frontend top

سینیٹر(ر)طارق چوہدری


پٹرول بم کس نے پھینکا؟


پٹرول بم سے بھی بڑا واقعہ یہ ہے کہ صدر مملکت سے ہونے والی گفتگو کون ریکارڈ کر رہا ہے؟ اور یہ ریکارڈ شدہ بات چیت بیک وقت سارے نظام ابلاغ تک کس نے پہنچائی؟ کس کے ایماء پر بنیادی مسئلے اور اصل خطرے کو نظرانداز کرکے ایک غیر اہم اور فروعی مسئلہ موضوع بحث لایا گیا‘ کسی نے بھی یہ سوال نہیں اٹھایا کہ یہ بم پھینکا کس نے؟ عمران خاں کی روائت اور ہدایات کے برعکس جلائو‘ گھیرائو کا فائدہ کس کو ہو سکتا ہے؟ 25مئی کے احتجاج کے دوران لاہور سے نکلنے والوں قافلوں پر جو پرامن
اتوار 19 مارچ 2023ء مزید پڑھیے

چوہدری سرور اور چھیداں!

جمعرات 16 مارچ 2023ء
سینیٹر(ر)طارق چوہدری
یہ ہوائی کسی دشمن نے اڑائی ہو گی‘ پہلا تاثر یہی تھا جب یہ سنا کہ چوہدری سرور لندن سے پاکستان آنے والے ہیں اور وہ پاکستان کی سیاست میں اپنا متحرک کردار ادا کرنے کے لئے چوہدری شجاعت حسین کی مسلم لیگ عرف ق میں شامل ہو رہے ہیں: کون ویرانے میں دیکھے گا بہار پھول جنگل میں کھلے کن کے لئے؟ 1985ء کی غیر جماعتی پارلیمنٹ منتخب ہو کر آئی، اس لئے کہ مارشل لاء کے ضوابط کے مطابق سیاسی جماعتوں کو الیکشن کی اجازت نہیں دی گئی تھی‘ قومی اسمبلی کے پہلے اجلاس میں جس کے سپیکر فخر امام منتخب
مزید پڑھیے


کیا عمران خان لاوارث ہے؟

اتوار 12 مارچ 2023ء
سینیٹر(ر)طارق چوہدری
لاوارث تو ظل شاہ(علی بلال) بھی نہیں ہے‘ اس کا وارث صبر اور شکر کرنے والا بوڑھا باپ ہی نہیں عمران خان بھی ہے‘ جی ہاں! علی بلال شہید کا خونِ ناحق عمران خان پر قرض ہے‘ عمران خان کی وساطت سے 80فیصد پاکستانیوں پر بھی قرض ہے جو قطار در قطار اس کے آگے اور پیچھے سیسہ پلائی دیوار کی طرح کھڑے ہیں ۔علی بلال قتل(شہادت) ان کے سینوں میں زہر آلود خنجر کی طرح پیوست ہو گئی ہے‘ انصاف کے کان بہرے اور محافظ اندھے ہو جائیں تو ورثا کے اندر انتقام کی آگ دہکتے لگتی ہے‘ جس
مزید پڑھیے


چیئرمین نیب آفتاب سلطان!

اتوار 26 فروری 2023ء
سینیٹر(ر)طارق چوہدری
چیئرمین نیب آفتاب سلطان نے اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا‘ کیا اس میں کچھ تعجب کی بات ہے؟ تعجب تو جب تھا اگر انہوں نے استعفیٰ نہیں دیا ہوتا‘ آفتاب بیورو کریٹ تو ہیں مگر وہ قمر الزمان نہیں جو ریڑھ کی ہڈی سے محروم ہونے کے سبب اپنے پائوں پر کھڑے نہیں ہو سکتے‘ آفتاب سلطان مضبوط قوت ارادی کے ساتھ بہادر انسان ہیں‘ اپنی عزت نفس کے لئے حساس ‘ اپنے اور خاندان کے نام و نمود پاس اور لحاظ رکھنے والے‘ 21جولائی 2022ء کو چیئرمین نیب کی حیثیت سے ان کی تقرری کی خبر اخبارات میں
مزید پڑھیے


اَ سْفَلَ سَافِلِیْنَ

اتوار 19 فروری 2023ء
سینیٹر(ر)طارق چوہدری
قرآن کریم کی سورۃ ’’الیتّن‘‘ میں ارشاد باری تعالیٰ ہے اللہ کے نام سے جو بے انتہا مہربان اور رحم فرمانے والا ہے، قسم ہے انجیر اور زیتون کی اور طورِ سینا اور اس پر امن شہر(مکّہ) کی ہم نے انسان کو بہترین ساخت پر پیدا کیا پھر اس الٹا پھیر کر ہم نے سب نیچوں سے نیچ کر دیا۔سوائے ان لوگوں کے جو ایمان لائے اور نیک عمل کرتے رہے کہ ان کے لئے کبھی ختم نہ ہونے والا اجر ہے۔پس(اے نبی) اس کے بعد کون جزا اور سزا کے معاملہ میں تم کو جھٹلا سکتا ہے۔مگر یہی انسان
مزید پڑھیے



محاسبہ

اتوار 12 فروری 2023ء
سینیٹر(ر)طارق چوہدری
جمعہ کی شام سات بجے کسی ٹیلی ویژن پروگرام میں شبر زیدی پاکستان کی تشویشناک معاشی صورت حال پر اظہار خیال کر رہے تھے۔ان کا کہنا تھا کہ ہمارے ملک کی اقتصادی حالت خطرے کی حد تک پہنچ چکی‘ ہم ٹیکنیکل ڈیفالٹ کر چکے ہیں‘ جس طرح کے خطرے میں ہم گِھر چکے ہیں، سیاستدانوں کو اس کا کچھ علم اور احساس نہیں‘ سیاسی جماعتوں کے پاس معیشت دان ہیں نہ ماہرین اقتصادیات، جو انہیں حالات کی صحیح خبر دے سکیں‘ اقتصادی بدحالی کا سب سے پہلا اثر پاکستان کی افواج پر آئے گا‘ قومی سلامتی(خدانخواستہ) خطرے میں پڑ سکتی
مزید پڑھیے


انجام بھی دیکھو گے

اتوار 05 فروری 2023ء
سینیٹر(ر)طارق چوہدری
آغاز سے واقف ہو‘انجام بھی دیکھو گے جس مرض کی آپ صحیح تشخیص نہ کر سکیں، اس کا علاج تجویز کرنا ممکن ہی نہیں‘ ایسا ہی کچھ مسئلہ ہمارے قومی امراض اور مسائل کا ہے‘یہی امر مانع لکھنے لکھانے میں ہے‘ ایک مشکل یہ بھی ہے کہ مریض یا اس کے لواحقین معالج یا مسیحا کو مریض کی اصل کیفیت اور وجہ بتانے سے ڈرتے ہیں کہ معالج تند خو ہے مرض کے بڑھ جانے اور لاعلاج ہونے کی وجہ معالج خود بھی ہے جس نے ابتداء میں معمولی مرض کا بھونڈے اور غلط طریقے سے علاج کیا۔ نامناسب ادویا‘
مزید پڑھیے


فواد چوہدری‘پورے اترے

جمعه 03 فروری 2023ء
سینیٹر(ر)طارق چوہدری
اگر فواد چودھری وزیر اعلیٰ ہوتے؟ جن دنوں پنجاب کی وزارت اعلیٰ کے لئے گھمسان کا رن تھا‘ انہی دنوں اس عنوان کے ساتھ کالم لکھنے کا ارادہ تھا لیکن ارادہ تکمیل تک نہ پہنچا۔2018ء انتخابات کے وقت حالات غیر معمولی غور و فکر کا تقاضا کرتے تھے‘ عمران خاں کو مرکز اور پنجاب میں اگرچہ اپنے مخالفین پر برتری حاصل تھی لیکن حکومت سازی کے لئے مطلوب اکثریت نہیں تھی اس لئے انہیں بعض چھوٹے گروپوں اور آزاد ممبران اسمبلی کو ساتھ ملا کر مخلوط حکومت بنانا پڑی، اس طرح کی کمزور حکومت کے ساتھ کوئی قابل قدر کارنامہ
مزید پڑھیے


خان کی زندگی ناگزیر ہے!

اتوار 29 جنوری 2023ء
سینیٹر(ر)طارق چوہدری
عمران خاں نہیں پاکستان خطرے میں ہے‘ عمران خاں کی جان اور ذات کو جو بھی خطرات لاحق ہیں،وہ اس لئے کہ وہ خاں پاکستان کے جانے ان جانے بدخواہوں کی راہ میں مضبوط اور فیصلہ کن مزاحمت کا نام ہے‘ اس مزاحمت کو راہ سے ہٹائے بغیر دشمنوں کے لئے مذموم مقاصد میں کامیابی ممکن نہیں‘ جب کہا جائے کہ پاکستان خطرے میں ہے‘ تو کتنے ہی قلمکار جو ہر کسی کے لئے ہمہ وقت کرائے پر دستیاب رہتے ہیں، قلم کی تلوار سونت کر میدان میں اتر آتے ہیں، یہ کہتے ہوئے کہ پون صدی سے ہم یہی
مزید پڑھیے


کون ہارا؟

اتوار 15 جنوری 2023ء
سینیٹر(ر)طارق چوہدری
یار لوگ کہتے ہیں 13 رکنی اتحاد اور چودھویں چوہدری شجاعت حسین، سب ہار گئے۔ مگر 2013ء سے 2022ء تک یہ جیتے کب تھے جو اب ہار گئے؟ 2013ء کے انتخابات میں بھی انہیں عبرتناک شکست ہوئی تھی‘ عمران خاں کی تحریک انصاف کے مقابلے میں بری طرح ہار گئے تھے مگر ریفری کی بددیانتی کی وجہ سے اعلان فتح ہارے ہوئوں کے حصے میں آیا‘ اس میدان میں تھرڈ امپائر کا کوئی وجود نہیں چنانچہ سب اپیلیں رائیگاں گئیں اور عمران خاں کو پارلیمنٹ بنچوں پر بھی چھوٹے حصے دار کے طور پر مانا گیا۔اسٹیبلشمنٹ کی پراکسی پانچ برس
مزید پڑھیے








اہم خبریں