ظہور دھریجہ



جنگ ہم ختم کریں گے


ڈیفنس رپورٹرز سے گفتگو کرتے ہوئے ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور کا کہنا ہے کہ فروری 2019ء میں پاک بھارت جنگ دستک دے چکی ہے تاہم افواج پاکستان کی تیاری اور موثر جواب نے امن کا راستہ ہموارکیا ۔پاکستان اور افواج پاکستان ہمیشہ بھارت کو حیرت میں ڈالے گی ۔ پاکستان نے دو دہائیوں میں دہشت گردی کے خلاف بقاء کی جنگ لڑی۔ اگر ہم پر جنگ مسلط کی گئی تو بھرپور جواب دیں گے ،پہلے بھی کہا تھا اب بھی کہتے ہیں کہ جنگ شروع آپ کریں گے مگر ختم ہم کریں گے ۔
اتوار 02 فروری 2020ء

طبقاتی تعلیم کے خاتمے کی ضرورت

هفته 01 فروری 2020ء
ظہور دھریجہ
یہ درست ہے کہ موجودہ حکومت تعلیم کے مسائل پر توجہ دے رہی ہے اور وزیراعظم عمران خان نے یونیورسٹیوں کو فنڈز جاری کرنے کی ہدایت کر دی ہے لیکن اس سے بھی زیادہ توجہ کی ضرورت ہے ، اس کے ساتھ طبقاتی تعلیم کا خاتمہ ہونا چاہئے کہ طبقاتی تعلیم کی وجہ سے غریب طبقہ بہت پیچھے رہ گیا ہے اور واضح طور پر پاکستان کے لوگ دو طبقوں میں منقسم نظر آتے ہیں ۔ غریب لوگ اپنی اولادوں کو انگلش میڈیم پرائیوٹ تعلیمی اداروں میں تعلیم دلانے سے قاصر ہے ، غریبوں کے بچے اردو میڈیم سرکاری سکولوں
مزید پڑھیے


پی ٹی وی فیس پر رد عمل

جمعرات 30 جنوری 2020ء
ظہور دھریجہ
28 جنوری 2020ء روزنامہ 92 نیوز میں ’’ پی ٹی وی فیس میں اضافہ ‘‘ کے عنوان سے میرا کالم شائع ہوا۔ جس پر مختلف مکتبہ فکر کے دوستوں نے رد عمل کا اظہار کیا ۔ خصوصاً پی ٹی وی ذرائع سے جو معلومات حاصل ہوئیں ، وہ ہوشربا ہیں ۔ سب کا کہنا یہ تھا کہ پی ٹی وی فیس میں ناروا اضافے کی تجویز نہ صرف یہ کہ غریب طبقے کو پریشان کرنے کے مترادف ہے بلکہ یہ موجودہ حکومت کے خلاف ایک سوچی سمجھی سکیم بھی ہے ۔ رائے عامہ کے مطابق حکومت کو فیس میں اضافے
مزید پڑھیے


حالات حاضرہ اور قاری

بدھ 29 جنوری 2020ء
ظہور دھریجہ
لوگوں نے اخبار پڑھنا کیوں چھوڑ دیئے ؟ یہ ایک سوال ہے ، اس کی اصل وجہ کمپیوٹر ، انٹرنیٹ اور موبائل فونز بتائی جاتی ہے ، مگر ایک وجہ یہ بھی ہے کہ اخبارات میں خوش خبریں کم اور خشک خبریں زیادہ ہوتی ہیں ۔ اس میں اخبارات کا بھی قصور نہیں کہ ملک میں جو کچھ ہوگا وہی اخبارات میں آئے گا۔ آج کا روزنامہ 92 نیوز میرے سامنے ہے ۔ ایک خبر کے مطابق سپریم کورٹ نے ریلوے خسارہ کیس میں وفاقی وزیر ریلویز شیخ رشید احمد، سیکرٹری ریلویز اور سی ای او ریلویز کو طلب کر
مزید پڑھیے


پی ٹی وی فیس میں اضافہ

منگل 28 جنوری 2020ء
ظہور دھریجہ
92نیوز چینل کی رپورٹ کے مطابق پی ٹی وی بورڈ نے ٹی وی لائسنس فیس 35روپے سے بڑھا کر 100روپے کرنے کی جب سے سمری حکومت کو بھیجی ہے،اس خبر کے بعد غریب طبقے میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے،عام آدمی جوکہ غربت ،بے روزگاری اور مہنگائی کے ہاتھوں پہلے سے پسا ہواہے،کو ریلیف دینے کی بجائے اس پر نت نئے عذاب مسلط کیے جارہے ہیں ،بجلی بلوں کے ساتھ بجلی لائسنس فیس غیر اصولی ہے ،یہ فیس ان غریبوں سے بھی وصول کی جارہی ہے جن کے گھر ٹی وی سیٹ نہیں اور یہ بھی حقیقت ہے کہ
مزید پڑھیے




تحریک آزادی کا مرکز

اتوار 26 جنوری 2020ء
ظہور دھریجہ
تحریک آزادی کی تاریخ نئے سرے سے مرتب کرنے کی ضرورت ہے کہ سرکاری اور درباری تاریخ نویسوں نے تاریخ کے نام پر تاریخی گھپلے کیے ہیں ،ہمارے شہر خان پور کوتاریخ آزادی میں نمایاں مقام حاصل ہے مگر تاریخ کی کسی کتاب یا نصاب میں اس کا تذکرہ نہیں ہے۔خان پور کو تحریک آزادی کا مرکز ہونے کے اعزاز کے ساتھ یہ بھی اعزاز حاصل ہے کہ یہاں سے سب سے پہلے سرائیکی وسیب کے حقوق کی تحریک شروع ہوئی اور یہاں کے ایک سپوت ریاض ہاشمی مرحوم نے بہاول پور صوبے کیلئے بہت کام کیا اور بعد ازاں
مزید پڑھیے


یقین محمد ساجد کی شاعری

جمعه 24 جنوری 2020ء
ظہور دھریجہ
وسیب کی مردم خیز دھرتی ڈیرہ غازی خان سے تعلق رکھنے والے سرائیکی شاعر یقین محمد ساجد کا کلام سنا تھا ، ملاقات نہیں تھی ، یہ بھی سنا تھا کہ مرحوم عظیم صحافی جناب ارشاد احمد عارف کے بھی استاد تھے ۔ خواہش تھی کہ ان کا کلام کتابی صورت میں پڑھنے کو ملے ، پچھلے دنوں ڈی جی خان ڈاکٹر احسان احمد چنگوانی اور اکبر خان ملکانی کے ہاں ایک تقریب کا اہتمام تھا ۔ سٹیج سے اعلان ہوا کہ تقریب کی نظامت کے فرائض ڈاکٹر نعمان طیب چنگوانی سر انجام دیں گے ، ان کے تعارف میں
مزید پڑھیے


چولستان کے فنکار آڈو بھگت کا انتقال

بدھ 22 جنوری 2020ء
ظہور دھریجہ
چولستان کے نامور گلوکار آڈو بھگت گزشتہ روز چک 177 چولستان میں انتقال کر گئے ۔ آنجہانی عالمی شہرت یافتہ فنکار فقیرا بھگت کے استاد تھے۔ انہوں نے چولستانی ثقافت کو پوری دنیا میںمتعارف کرانے میں اہم کردار ادا کیا ۔ آڈو بھگت کے انتقال پر چولستانی فنکار موہن بھگت کا کہنا ہے کہ ان کی وفات سے چولستانی موسیقی کا ایک عہد ختم ہو گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وہ میرے والد فقیرا بھگت کے استاد تھے اور میرے والد کو موسیقی میں جو مقام ملا ان کی وجہ سے ملا ۔ آنجہانی آڈو بھگت نے ریڈیو پاکستان
مزید پڑھیے


معاشی تعلیم کی اہمیت و ضرورت

منگل 21 جنوری 2020ء
ظہور دھریجہ
وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ نوجوانوں کی تعلیم تک آسان رسائی کو یقینی بنانا حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ تمام معاشی مشکلات کے باوجود ہائیر ایجوکیشن کمیشن کے حوالے سے مالی ضروریات کو پورا کیا جائے گا ۔ تعلیم کا بجٹ دو گنا تو ہو سکتا ہے ، کم نہیں ہو سکتا ۔ ہائیر ایجوکیشن کمیشن کے حوالے اجلاس کی صدارت کے دوران گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ مسلم لیگ ن کی حکومت میں تعلیم کا ترقیاتی بجٹ محض 14 ارب روپے تھا ۔ جو ہم نے 29 ارب روپے تک بڑھا دیا ۔ مجموعی طورپر
مزید پڑھیے


اسمبلی کو مذاق نہ بنایا جائے

هفته 18 جنوری 2020ء
ظہور دھریجہ
وزیراعظم عمران خان نے ٹی وی چینل وفاقی وزیر فیصل واوڈا کے آرمی ایکٹ میں ترمیم کے حق میں اپوزیشن کی طرف سے ووٹ دینے بارے ریمارکس پر ناراضگی کا اظہار کیا ہے ۔ لیکن اس اہم مسئلے پر صرف ناراضگی کافی نہیں ، بلکہ واقعے کے ذمہ داران کے خلاف ایکشن ہونا چاہئے ۔ وزیراعظم کو تمام معاملات سے باخبر رہنا چاہئے ، اس واقعے کے علاوہ ایک اور بھی غیر معمولی واقعہ اسمبلی میں رونما ہوا کہ ن لیگ کے رکن اسمبلی رانا ثنا اللہ اور وفاقی وزیر شہریار آفریدی جس طرح اپنے اپنے جھوٹ کو سچ ثابت
مزید پڑھیے