BN

ظہور دھریجہ



وزیراعظم اوروزیراعلیٰ کی توجہ کے لئے


یہ ناقابل تردید حقیقت ہے کہ اس وقت مرکز اور پنجاب میں تحریک انصاف سرائیکی وسیب کے ووٹوں سے بر سر اقتدار ہے ، تحریک انصاف نے صوبے اور وسیب کی محرومیوں کے خاتمے کے نعرے پر ووٹ لئے مگر اقتدار میں آنے کے بعد وہ سب کچھ بھول گئی۔ سابق وزیراعظم میر بلخ شیر خان مزاری کا پاکستان کی سیاست میں ایک نام ہے ‘ انہوںنے الیکشن سے پہلے صوبہ محاذ بنایا ، وہ صوبہ محاذ کے سینئر ترین رہنما تھے ، اب ان کے پوتے میر دوست محمد خان مزاری پنجاب اسمبلی کے ڈپٹی سپیکر ہیں ۔ پچھلے
جمعه 06 مارچ 2020ء

برسوں کی اسیری سے رہا ہونے لگے ہیں

بدھ 04 مارچ 2020ء
ظہور دھریجہ
دو دن قبل روزنامہ 92 نیوز میں میرا کالم ’’ سرائیکی کلچرل ڈے سرکاری سطح پر منایا جائے ‘‘ شائع ہوا تو اس کا بہت اچھا رسپانس آیا اور بندہ ناچیز کو حوصلہ ہوا کہ نہ صرف یہ کہ کالم پڑھا جاتا ہے بلکہ اس پر رد عمل بھی سامنے آتا ہے ۔ مجھے خوشی ہوئی کہ سیکرٹری اطلاعات و ثقافت محترم راجہ جہانگیر انور نے فون کیا اور میرے موقف کی تائید کرتے ہوئے کہا کہ حکومت پنجاب سرائیکی کلچرل ڈے بھی منائے گی ، اس سلسلے میں متعلقہ شعبہ جات اور وسیب کے آرٹس کونسلوں کو ہدایت
مزید پڑھیے


ایک اور خواجہ غریب نواز کی ضرورت

منگل 03 مارچ 2020ء
ظہور دھریجہ
ہندوستان میں مودی سرکار نے جس طرح انسانوں خصوصاً مسلمانوں کے خلاف ظلم اور بربریت کا طوفان برپا کر رکھا ہے تو وہ زمانہ یاد آ رہا ہے 800 سال پہلے ہندو انتہا پسندی اس قدر عروج پر پہنچی ہوئی تھی کہ برہمن چھوٹی ذات کے ہندوؤں پر ظلم کرتے تھے تو اسی اثناء میں ہندوستان میں ایک شخصیت جنم لیا ، جس نے بلا رنگ ، نسل و مذہب تمام دھتکارے ہوئوں کو اپنی آغوش میں لیا ۔ آج ایک بار پھر سے ہندوستان کو ایک ایسے ہی خواجہ غریب نواز کی ضرورت ہے جو انسانوں کو غیر انسانی
مزید پڑھیے


امریکہ افغان طالبان معاہدہ

پیر 02 مارچ 2020ء
ظہور دھریجہ
روزنامہ 92 نیوز کی خبر کے مطابق افغانستان میں 19 سالہ طویل جنگ کے خاتمے کی جانب اہم پیشرفت ہو گئی۔ دوحہ میں امریکہ اور افغان طالبان کے درمیان تاریخی امن معاہدہ طے پا گیا۔ امریکہ کی طرف سے زلمے خلیل زاد اور افغان طالبان کی جانب سے ملاء عبدالغنی برادر نے دستخط کئے۔ معاہدے پر دستخط کے بعد امریکی اور افغان طالبان کے نمائندوں نے گرم جوشی سے مصافحہ کیا۔ جاری کئے گئے اعلامیہ کے مطابق امریکہ اور اتحادی 14 ماہ تک افغانستان سے افواج نکال لیں گے، امریکہ معاہدہ کے 135 روز میں فوجیوں کی تعداد 8600 تک کم
مزید پڑھیے


سرائیکی کلچرل ڈے سرکاری سطح پر منایا جائے

اتوار 01 مارچ 2020ء
ظہور دھریجہ
عدم برداشت اور انتہا پسندی کے پر آشوب دور میں انسان دوستی پر مبنی ثقافتی اقدار کو پروموٹ کرنے کی ضرورت ہے ۔دسمبر میں سندھی کلچرل ڈے منایا گیا سندھی کلچرل ڈے کس طرح وجود میں آیا؟ اسے جاننے کی ضرورت ہے ، واقعہ اس طرح ہے کہ سابق صدر آصف زرداری اقوام متحدہ سندھی اجرک اور سندھی ٹوپی پہن کر گئے تو ایک ٹی وی اینکر نے ان کے اس عمل کو غیر مہذب قرار دیا ۔جس پر سندھ میں احتجاج ہوا اور سندھیوں نے سندھی ٹوپی اور سندھی اجرک کا دن منانے کا فیصلہ کیا اور وہی دن
مزید پڑھیے




خواجہ فرید روہی امن میلہ

هفته 29 فروری 2020ء
ظہور دھریجہ
چولستان میں 22 واں سالانہ خواجہ فرید روہی امن میلہ گزشتہ روزجھوک فرید چولستان میں منعقد ہوا۔ اس میلے کا آغاز 21 سال قبل سجادہ نشین دربار عالیہ خواجہ فریدؒ خواجہ معین الدین کوریجہ نے شروع کیا ۔اب دیکھتے ہی دیکھتے یہ میلہ چولستان کے بہت بڑے ایونٹ کی حیثیت اختیار کر گیا ۔ میلے میں تصوف سمینار ، سرائیکی مشاعرہ ، قوالی ، کافی رنگ ، سرائیکی ثقافتی رنگوں کے ساتھ ساتھ مختلف تقریبات شامل تھیں، میڈیکل کیمپ بھی لگایا گیا ۔ میلے میں ملک بھر سے عقیدت مندوں نے شرکت کی ۔ دربار فرید کے سجادہ نشین
مزید پڑھیے


کرونا وائرس کہاں سے آیا؟

جمعرات 27 فروری 2020ء
ظہور دھریجہ
کیا کرونا وائرس امریکا کے مخالف ممالک کو دیا ہوا ایک تحفہ ہے ؟ یہ ایک حل طلب سوال ہے ۔ اس حوالے سے آگے بات کریں گے ۔ سرِ دست میں یہ عرض کرنا چاہتا ہوں کہ کرونا وائرس چین کے بعد افغانستان، کویت، بحرین ، عراق اورایران پہنچ گیا ۔ جہاں درجنوں ہلاکتوں کی اطلاع ملی ہے ۔ پاکستان میں اس کے ممکنہ پھیلاؤ کو روکنے کے لیے پاک ایران بارڈر چوتھے روز بھی مکمل طور پر بند ہے، تفتان بارڈر پر طبی عملے کی جانب سے اسکریننگ کا عمل جاری ہے۔ پاکستان نے زائرین کے ایران جانے
مزید پڑھیے


وسیب کی محرومیوں کا ذمہ دار جاگیرداری نظام

بدھ 26 فروری 2020ء
ظہور دھریجہ
سرائیکی وسیب کاعام آدمی سخت مایوسی کا شکار ہے ۔اقتدار وسیب کے جاگیرداروں اور تمنداروں کے پاس ہونے کے باوجود مسئلے حل نہیں ہورہے۔اس لئے اس بات کی ضرورت ہے کہ جاگیرداری اور تمنداری کا خاتمہ کیا جائے۔خصوصاً جاگیردارانہ سوچ جب تک ختم نہیں ہوگی اس وقت تک وسیب کے مسئلے حل نہیں ہونگے۔نواب مشتاق خان گورمانی ، ملک خضر حیات ٹوانہ ، ممتاز خان دولتانہ ، نواب آف کالا باغ ملک امیر محمد خان ، ملک غلام مصطفی کھر ، نواب صادق حسین قریشی ، نواب عباس خان عباسی ، مخدوم سجاد قریشی ، فاروق خان لغاری ، سید
مزید پڑھیے


’’ بات مشکل سے بات ہوتی ہے ‘‘

منگل 25 فروری 2020ء
ظہور دھریجہ
سرائیکی وسیب کے جاگیردار ہمیشہ اسمبلیوں میں رہے مگر وہ اسمبلی میں بات نہیں کرتے اس کی ایک وجہ موروثی سیاست بھی ہے ،نسل درنسل سیاست میں آنیوالے جاگیرداوں کی اولادوں نے کبھی سیاسی تربیت کی ضرورت محسوس نہیں کی اور نہ ہی انہیں بات کرنے کا سلیقہ آتا ہے ۔ایک شاعر نے کیا خوب کہا بات ہیرا ہے ، بات موتی ہے بات لاکھوں کی لاج ہوتی ہے بات ہر بات کو نہیں کہتے بات مشکل سے بات ہوتی ہے ’’ رہنماؤں ‘‘ کے جم غفیر میں ایک شخص ایسا بھی ہے جو بات کرنے کا سلیقہ جانتا ہے ، اس شخص کا
مزید پڑھیے


پاکستانی زبانوں پر توجہ کی ضرورت

پیر 24 فروری 2020ء
ظہور دھریجہ
21۔فروری،ماں بولی کا عالمی دن پوری دنیاکی طرح پاکستان میں بھی منایا گیا ۔مختلف شہروں میں تقریبات ہوئیں ،جیسا کہ سرائیکی وسیب کے مرکزی شہر ملتان ،ڈی آئی خان ،بہاولپور،ڈی جی خان کے ساتھ ساتھ خان پور اور دھریجہ نگر میں بھی ماں بولی کا عالمی دن منایا گیا ۔اس موقع پر سیمینار ،ورکشاپ ،کانفرنسیں منعقد ہوئیں بعدمقامات پر امن ریلیاں بھی برآمدہوئیں ۔آج سے کچھ عرصہ پہلے پاکستانی زبانوں کو علاقائی زبانیں کہا جاتا تھا مگر حکومت پاکستان کے ادارے اکادمی ادبیات نے فیلصہ کیا کہ پاکستانی زبانوں کو علاقائی زبانیں کہنے کی بجائے پاکستانی زبانیں کہا جائے۔یہ ایک
مزید پڑھیے