BN

عارف نظامی

دلیرانہ فیصلوں کی ضرورت!

پیر 20  اگست 2018ء
25 جو لائی کو ووٹنگ کے ذریعے شروع ہونے والا انتقال اقتدار کا عمل مکمل ہو چکا۔ تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان وزیراعظم کا حلف اٹھاچکے ہیں اور پنجاب میں جس کے بارے میں کافی سسپنس تھا بالآخر تحریک انصاف کے عثمان بزدار وزیراعلیٰ بن گئے عثمان بزدارکی اچانک نامزدگی پر تحریک انصاف کے ارکان بھی حیران و ششدر رہ گئے۔ سند ھ میں پیپلزپارٹی کے مراد علی شاہ، خیبر پختونخوا میں تحریک انصاف کے محمود خان اور بلوچستان میںبلوچستان عوامی پارٹی کے جام کمال وزارت اعلیٰ کے منصب سنبھال چکے ہیں۔ ویسے تو انتخابات کے بعد جیتنے والی
مزید پڑھیے


ووٹ کی عزت؟

هفته 18  اگست 2018ء
جناح کنونشن سینٹر اسلام آباد میں حسب سابق یوم آزادی کی سب سے بڑی تقریب میں صدر ممنون حسین جوان کی بطور صدر الوداعی تقریب تھی روایتی بات کی کہ پاکستان کی ترقی کا رازووٹ کی طاقت میں مضمر ہے۔ صدر مملکت کے اس نکتے سے کسی کو اختلاف نہیں ہو سکتا کہ پاکستان کاوجود ہی قائد اعظم محمد علی جناحؒ کی جمہوری کاوشوں کا نتیجہ ہے اور اس میں بھی کوئی شک نہیں کہ وطن عزیز کا قیام ووٹوں کے ہی مرہون منت ہے لیکن پاکستان میں سات دہائیوں سے ووٹ کی جو بے توقیری ہوئی ہے وہ بھی
مزید پڑھیے


یہ وہ سحر تو نہیں؟

بدھ 15  اگست 2018ء
پاکستان کی 13ویں قومی اسمبلی نے حلف اٹھا لیا ۔ باقی مراحل کی تکمیل کے بعد عمران خان ہفتہ کو وزیراعظم کا حلف بھی اٹھا لیں گے ۔یہ قومی اسمبلی اس لحاظ سے منفرد ہے کہ متوقع وزیراعظم اور ان کی جماعت تبدیلی کے علمبردار ہیں لیکن جس تبدیلی کا ڈنکے کی چوٹ پر دعویٰ کیا جا رہا ہے ،موجودہ صورتحال میں نظر آنا شروع نہیں ہوئی اور جیسے نامساعد ملکی حالات ہیں ان میں کوئی بڑا انقلاب برپا ہوتا بھی نظر نہیں آتا ۔قومی اسمبلی کی رکنیت کا حلف اٹھانے والوں میں پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو ،شریک چیئرمین
مزید پڑھیے


اقتصادی ایمرجنسی اور تعاون

پیر 13  اگست 2018ء
قومی اسمبلی کے نو منتخب ارکان آج حلف اٹھا رہے ہیں ۔سپیکر اور ڈپٹی سپیکر کا چناؤ بھی ہو جائے گا اور توقع ہے کہ18اگست کو صدر ممنون حسین عمران خان سے وزارت عظمیٰ کا حلف لے لیں گے ۔تحریک انصاف کی اپیل پر صدر ممنون حسین نے اپنا برطانیہ کا دورہ موخر کر دیا ہے ،ممنون حسین خود بھی8ستمبر کو اپنی آئینی میعاد پوری کر کے سبکدوش ہو رہے ہیں۔ نہ جانے ایسے موقع پر جبکہ اسمبلیاں انتخابات کے ذریعے معرض وجود میں آ رہی ہیں ،نئے وزیراعظم اور کابینہ نے حلف اٹھانا ہے انھیں غیر ملکی دورے کی
مزید پڑھیے


اپوزیشن کے تعاون کے بغیر …

جمعه 10  اگست 2018ء
بالآخر وہ سوانگ جوکرپشن کی پاداش میں میاں نواز شریف کی نااہلی سے شروع ہواتھاکا ڈراپ سین ہونے والا ہے۔ عام انتخابات میں جزوی کامیابی اور آزاد امیدواروں نیز کچھ چھوٹے گروپوں کو ساتھ ملا کر پاکستان تحریک انصاف بالآخر وفاق میں حکومت بنانے کے قابل ہو گئی۔ ان شاء اللہ 18 اگست کو خان صاحب بطور وزیراعظم حلف اٹھا لیں گے اور اس طرح پاکستان میں تبدیلی لانے کیلئے ایجنڈے پر کاربند ہونگے۔ ویسے تو متحدہ اپوزیشن کا ’جعلی انتخابات نامنظور‘ کے حوالے سے الیکشن کمیشن کے سامنے احتجاج فلاپ شو ہی رہا۔ یقینا اس علامتی احتجاج جس میں
مزید پڑھیے


لیڈر شپ کا کڑا امتحان۔۔۔(4)

بدھ 08  اگست 2018ء
اگرچہ ہمارا دعویٰ ہے کہ ہم نے دہشت گردی کو جڑ سے اکھاڑ پھینکا ہے لیکن زمینی حقائق قدرے مختلف ہیں ۔یہ درست ہے کہ سکیورٹی اداروں کی کاوشوں کی بنا پر دہشت گردی کے واقعات میں نمایاں کمی ہوئی ہے۔ 2007ء میں گلوبل ٹیررازم انڈیکس میں پاکستان چوتھے نمبر پر تھا جو اب پانچویں نمبر پر ہے۔ گزشتہ برس دہشت گردی سے ہونے والی اموات میں بارہ فیصد کمی ہوئی ہے اور 956افراد اس کی بھینٹ چڑھ گئے جو گزشتہ دہائی میں سب سے کم تعداد تھی۔ لیکن اعداد وشمار کے گورکھ دھندے میں پڑے بغیر دیکھا جائے تو
مزید پڑھیے


لیڈر شپ کا کڑا امتحان:3

پیر 06  اگست 2018ء
یہ بات تو مسلمہ ہے کہ تحریک انصاف کی متوقع حکومت کو اندرونی اور بیرونی گوناگوں اورگھمبیر مسائل کا سامنا کرنا پڑے گا ۔یہ بھی کوئی نئی خبر نہیں ہے کہ خزانہ خالی ہے ۔ گورننس نہ ہونے کے برابر ہے اور ملک شتربے مہارکی طرح چل رہا ہے۔ نگران حکومت کے عبوری انتظام کے طور پر اختیارات محدود ہوتے ہیں اور وہ ایک حد سے آگے جا کر بنیادی پالیسی فیصلے نہیں کر سکتی ۔ خارجہ اور سکیورٹی پالیسی کو ہی لیجئے ۔نگران وزیر خارجہ عبداللہ حسین ہارون نے جب منصب سنبھالا اس کے بعد شاید پہلی بار گوہر
مزید پڑھیے


لیڈر شپ کا کڑا امتحان :2

هفته 04  اگست 2018ء
عام انتخابات کو دس روز گزر گئے تاحال مرکز اور صوبوں میں حکومتوں اور حکومتی عہدیداروں کا باضابطہ فیصلہ نہیں ہو سکا ۔اگرچہ خیبر پختونخوا میں 67نشستیں جیت کر تحریک انصاف کو بھاری مینڈیٹ ملا ہے ، وہاں بھی وزیر اعلیٰ کانام حتمی طور پر سامنے نہیں آیا۔ یہ بات تو پکی ہے کہ سابق وزیر اعلیٰ پرویز خٹک کو ان کی خواہش کے برعکس صوبہ نہیں دیا گیا حالانکہ وہ کہہ سکتے ہیں کہ یہ کامیابی ان کے حسن کارکردگی کی بنا پر ہی ہے۔ اس کے باوجود کہ جہانگیر ترین جہاز میں ڈھوڈھو کر ایم این ایز اور
مزید پڑھیے


لیڈر شپ کا کڑا امتحان 1

بدھ 01  اگست 2018ء

تحریک انصاف اور مسلم لیگ (ن) دونوں حکومت سازی کیلئے سرپٹ دوڑ رہی ہیں۔جہانگیر ترین کی کاوشوں اور کچھ اس تاثر کی بنا پر کہ عمران خان لاڈلے ہیں آزاد ارکان ان کی طرف زیادہ مائل ہیں۔ چودھری پرویز الٰہی کی تو ویسے ہی چاندی ہو گئی ہے، نہ جانے کیا سوچ کر مشاہد حسین نے چودھری برادران سے رابطہ کیا اور ان سے مسلم لیگ ن کیلئے ارکان کی حمایت مانگ لی ۔ چودھری برادران گزشتہ دہائی میں مسلم لیگ (ن) کے زیر عتاب رہے ہیں، وہ مشاہد حسین سے خاص طور پر ناراض ہیں کیونکہ چوہدری شجاعت حسین
مزید پڑھیے


مینڈیٹ چرانا آسان نہیں

اتوار 29 جولائی 2018ء
جناب شیخ کا قدم یوں بھی ہے اور یوں بھی، شہباز شریف جنہوں نے پولنگ کے بعد رات گئے ہنگامی پریس کانفرنس میں دھاندلی کا الزام لگا کر انتخابی نتائج مسترد کرتے ہوئے کہا تھاکہ کروڑوں لوگوں کے مینڈیٹ کی توہین کی گئی‘ ناانصافی برداشت نہیں کریں گے، اگلے روز ہی اڈیالہ جیل میں میاں نوازشریف سے ملاقات کے بعد آئینی جد وجہد کرنے کا اعلان کردیااور پھرآل پارٹیز کانفرنس کے شریک میزبان بن گئے۔ ادھر ان کے صاحبزادے حمزہ شہباز پنجاب میں حکومت بنانے کے لیے جوڑ توڑ کرنے میں مصروف ہیں۔ اصولی طور پر مسلم لیگ(ن) کو قومی
مزید پڑھیے