BN

عبداللہ طارق سہیل



جمعہ جمعہ سو دن


خیر سے عمران خاں صاحب کی حکومت قائم ہوئے جمعہ جمعہ سو دن ہونے والے ہیں اور احباب پوچھ رہے ہیں کہ ان سو دنوں میں کیا تبدیلی آئی۔ کیا ہوا‘ کیا نہیں ہوا۔ پھر اس سوال کا جواب بھی خود احباب ہی دے رہے ہیں اور اس بارے میں ان کی رائے منقسم ہے۔ مثلاً احباب کا ایک طبقہ بتاتا ہے کہ بہت کچھ ہوا۔ جیسا کہ شیلٹر ہوم (پناہ گاہیں) بنانے کا اعلان ہوا ہے۔ کئی ہزار خاندانوں کے سر سے چھت چھین کر ایک رحم دلی کا اشارہ تو ملا۔ یہ پناہ گاہیں کب بنیں گی۔ اس بارے
جمعرات 15 نومبر 2018ء

ڈگری ڈگری ہوتی ہے اور ترجمان ترجمان

بدھ 14 نومبر 2018ء
عبداللہ طارق سہیل
وفاقی وزیر اطلاعات نے فرمایا ہے کہ نیب نے شہباز شریف کو پکڑا تو اس کے ڈی جی کی ڈگری جعلی ہونے کا شوشا چھوڑ دیا گیا۔ لگتا ہے‘ اطلاعات وزیر موصوف تک پہنچتے پہنچتے اپنا حلیہ بدل لیتی ہیں۔ ایسا ہی ہو گا‘ ورنہ وزیر صاحب ایسا بیان کیوں دیتے جبکہ سب کو معلوم ہے کہ ڈی جی صاحب کی جعلی ڈگری کا مسئلہ تب اٹھا تھا جب نیب نے تین یونیورسٹیوں کے وائس چانسلرز کو گرفتار کیا تھا۔ ایک صاحب نے لکھا تھا‘ انوکھا دیس ہے‘ یہاں جعلی ڈگری والوں کو عہدے ملتے ہیں اور اصلی ڈگری جن کے
مزید پڑھیے


این آر او دونوں نے دیا‘دونوں نے لیا

منگل 13 نومبر 2018ء
عبداللہ طارق سہیل
پچھلے دنوں زرداری صاحب نے انکشاف کیا کہ خان صاحب کا دھرنے والوں سے این آر او ہوا ہے۔ یہی بات ان کے بعد پیپلز پارٹی کے بعض دوسرے لیڈروں نے بھی کی۔ این آر او میں ایک فریق رعایت یا معافی دیتا ہے‘ دوسرا فریق لیتا ہے۔ زرداری صاحب کے بیان سے پتہ نہیں چلتا تھا کہ این آر او دیا کس نے اور لیا کس نے۔ انہوں نے بات این آر او ہونے کی کی۔ یوں ایک الجھن کھڑی ہو گئی۔ لیکن یہ الجھن خود خاں صاحب نے دور فرما دی۔ اپنی جماعت اور کابینہ کے اجلاس میں خطاب فرماتے
مزید پڑھیے


اخراجِ اسلام ازہند حصہ دوئم

پیر 12 نومبر 2018ء
عبداللہ طارق سہیل
الہ آباد بھارت میں ہندو مسلم بھائی چارے کی علامت تھا‘ اس کا نام بی جے پی نے بدل کر پریاگ راج رکھ دیا۔ پھر دہلی کے مشہور ریلوے سٹیشن مغل سرائے کا نام بھی تبدیل کر دیا۔ اب اسے پنڈت دین دیال اپادھیائے کا نام دیا گیا ہے۔ بابری مسجد والے فیض آباد کو بھی ایودھیا بنا دیا۔ ابھی خبریں آ رہی ہیں کہ ریاست گجرات کے سب سے بڑے شہر اور سابق دارالحکومت احمد آباد کا نام کرنادتی رکھنے کی تجویز ہے۔ ریاستی دارالحکومت گاندھی نگر اسی شہر سے کچھ فاصلے پر ہے۔ بات یہاں پر رکی نہیں۔
مزید پڑھیے


سعودی عرب ایٹمی طاقت بننے کی راہ پر

جمعه 09 نومبر 2018ء
عبداللہ طارق سہیل
سعودی عرب نے ایٹمی طاقت بننے کے سفر کی شروعات کر دی ہے۔ وژن 2030ء کے تحت اس نے ایٹمی ریسرچ ری ایکٹر اور ری ایکٹرز بنانے کا اعلان کیا تھا۔ 4نومبر کو ولی عہد نے پہلے سنٹر کا سنگ بنیاد رکھ دیا۔ پورے ایٹمی پروگرام کی تکمیل کے لیے 18برس کا ہدف رکھا گیا ہے لیکن سعودی حوالوں سے سنا جا رہا ہے کہ کم از کم ایٹمی صلاحیت اس سے بہت پہلے حاصل کر لی جائے گی۔ اسی منصوبے کے تحت جنگی طیارے بنانے کا کام بھی شروع کیا جانا ہے۔ امریکہ نے ایٹمی پھیلائو کو روکنے کے لیے
مزید پڑھیے




طویلہ ہی غائب

جمعرات 08 نومبر 2018ء
عبداللہ طارق سہیل
خبر گرم ہے کہ زرداری صاحب بہت جلد، شاید چند دنوں میں گرفتار ہونے والے ہیں۔ ادھر زرداری صاحب بہت پراعتماد، بڑے بے فکر لگ رہے ہیں۔ اس گمان میں ہیں کہ ان کے خلاف کوئی ثبوت نہیں ہے۔ یہ گمان نادانی پر مبنی ہے، اس لیے کہ نئے پاکستان میں ’’ثبوت‘‘ غیر ضروری شے ہے۔ نوازشریف کے خلاف جو ہورہا ہے اسے دیکھ لیں۔ نیب نے یہ کہہ کر سزا سنائی کہ کرپشن کا کوئی ثبوت نہیں ملا اور یاد رہنا چاہیے کہ نیا پاکستان بنے کوئی دوچار مہینے نہیں ہوئے۔ پورا ڈیڑھ سال ہو گیا۔ نیا پاکستان اسی
مزید پڑھیے


دورۂ چین کی جھلکیاں

بدھ 07 نومبر 2018ء
عبداللہ طارق سہیل
دورہ چین مکمل ہوا اور خیر سے خان صاحب گھر کو لوٹے۔ ایک وزیر صاحب نے دورے کو تاریخی قرار دیا ہے۔ محض تاریخی کہنا انصاف نہیں، تاریخی ترین کہنا چاہیے تھا۔ ایک اور وزیر نے دورے کو کامیاب کہا ہے۔ صرف کامیاب کہنا بھی بعید از انصاف ہے، کامیاب ترین کہتے تو بہتر تھا۔ صرف ’’ترین‘‘ کہنے سے البتہ بہتر تصویر ابھرتی۔ ترین سے یاد آیا، پنجاب کے چار پانچ وزرائے اعلیٰ میں سے ایک نے گزشتہ روز جنوبی پنجاب میں ایک بہت بڑے فش فارم کا افتتاح کیا۔ کہا جاتا ہے کہ یہ ملک کا سب سے بڑا
مزید پڑھیے


اور طارق جمیل بچ گئے

منگل 06 نومبر 2018ء
عبداللہ طارق سہیل
دھرنے کے دوران توڑ پھوڑ اور گھیرائو جلائو کرنے والے افراد کی گرفتاریاں شروع ہیں۔ پکڑ دھکڑ اس فوٹیج کو دیکھ کر جاری ہے جو اس دوران سامنے آئی۔ فوٹیج میں نظر آنے والوں کو شناخت کرنا اور پھر ڈھونڈنا ایک مشکل اور طویل عمل ہے اور اس کے نتیجے میں مذہبی جماعت کی ناراضگی بھی مول لینا پڑے گی جو ٹھیک نہیں۔ ممکن ہے کل کلاں کو اس کے تعاون کی پھر ضرورت پیش آ جائے۔ کیوں نہ خان صاحب کے دیرینہ مداح کی تجویز پر عمل کیا جائے جو اس نے گزشتہ روز اپنے ٹی وی پروگرام میں
مزید پڑھیے


دھرنے کے پیچ و خم

پیر 05 نومبر 2018ء
عبداللہ طارق سہیل
تین روزہ دھرنا بالآخر اختتام کو پہنچا دیا گیا۔ اس ڈراپ سین پر یہ تو نہیں کہا جا سکتا کہ رسیدہ لود بلائے ولے بخیر گزشت کیونکہ آج ہی ایک وزیر مراد سعید کا بیان ہے کہ اس تین روزہ دھرنے میں اربوں روپے کا نقصان ہوا۔ ایک اور سرکاری منصب دار کی رپورٹ ہے کہ ان تین دنوں میں معیشت کو 150ارب کا نقصان پہنچا۔ اگر یہ بیان درست ہے تو پھر یہ شکر الحمد اللہ کہنے کا مقام ہے کیونکہ چار سال پہلے بھی ایک دھرنا ہوا تھا جس نے لگ بھگ چھ سو ارب روپے کا نقصان
مزید پڑھیے


لیڈر اور وژن!

جمعه 02 نومبر 2018ء
عبداللہ طارق سہیل
پی ٹی آئی کے لوگوں کو اپنے قائد کے بارے میں یہ تعریفی کلمات کہتے ہوئے اکثر سنا کہ یہ ہوتا ہے لیڈر‘ اسے کہتے ہیں وژن۔ گزشتہ روز اس کی ایک اور شہادت سامنے آ گئی اور یوں سامنے آنے والی شہادتوں کی گنتی کوئی چار ہزار سے پھلانگ گئی۔ ایک ایشو کے حوالے سے مظاہرے وغیرہ ہو رہے تھے۔ مرکزی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے ایک رہنما نے وزیر اعظم اور اداروں کے بارے میں کچھ ایسے فقرے بھی ارشاد فرما دیے جنہیں کوئی ٹی وی چینل نشر نہیں کر سکتا تھا۔ چنانچہ کسی چینل نے ایک فقرہ بھی
مزید پڑھیے