BN

عمر قاضی



خورشید شاہ کے بعد


پیپلز پارٹی کے سابق وفاقی وزیر اور حاضر ایم این اے کی گرفتاری کے افواہ گزشتہ روز حقیقت بن گئی۔ آصف زرداری؛ فریال تالپور اور آغا سراج درانی کے بعد خورشید شاہ کی گرفتاری پیپلز پارٹی کی چوتھی بڑی وکٹ گرنے کے مترادف ہے۔ آصف زرداری کی وجہ شہرت اور وجہ طاقت بینظیر بھٹو سے ان کا ازدواجی رشتہ تھا ۔ بینظیر بھٹو جب تک زندہ تھیں تب تک فریال تالپور انتہائی لو پروفائل میں رہیں۔ بینظیر بھٹو کے بعد فریال تالپور کی سندھ میں حیثیت ڈی فیکٹو وزیر اعلی کی تھی۔ جب کہ سراج درانی بھی آصف زرداری کے
جمعه 20  ستمبر 2019ء

کراچی کمیٹی اور سندھ کارڈ

جمعه 13  ستمبر 2019ء
عمر قاضی
سندھ میں ایک بار پھر لسانی سیاست کا بھوت بوتل سے نکلنے کی کوشش کر رہا ہے۔ وفاقی حکومت کی طرف سے کراچی کے مسائل حل کرنے کے سلسلے میں ایک عدد کمیٹی کیا بنائی گئی اس ایشو کو لیکر پیپلز پارٹی نے زمین اور آسمان ایک کرنے میں کوئی کسر نہیں چھوڑی۔ یہ بھی حقیقت ہے کہ مذکورہ کمیٹی میں جس طرح سندھی اور دیگر زبانیں بولنے والے اہلیان کراچی کو نمائندگی دی جاتی تو شاید صورتحال یہ رخ پیش نہ کرتی کہ پیپلز پارٹی یہ کہنے کا موقع میسر ہوجاتا کہ وفاقی حکومت کراچی پر قبضہ کرنے کی
مزید پڑھیے


سندھ کی سرزمین اور غم حسین ؓ کاسفر

جمعه 06  ستمبر 2019ء
عمر قاضی
سندھ صوفیاء کی دھرتی ہے۔ تاریخ گواہ ہے کہ اس سرزمین پر کبھی تعصب کے کسی پودے نے جڑ نہیں پکڑی۔ سندھ کے صوفیاء کرام شاہ عبد الطیف بھٹائی سے اپنے کلام کی روشنی لیتے ہیں۔ شاہ لطیف کے کلام میں فرقہ واریت پر کڑی تنقید موجود ہے۔ شاہ لطیف کا پیغام وحدت کا پیغام ہے۔ شاہ لطیف کے کلام میں سب کو ایک ہوجانے کی پکار ہے۔ ایک شعر میں شاہ لطیف فرماتے ہیں: ’’وہ ایک دوسرے سے جڑ کر جھنڈ بنا کر اڑتے ہیں انسانوں دیکھو پرندوں میں کتنا پیار ہے‘‘ شاہ لطیف کی شاعری میں مختلف سوچوں اور دائروں میں
مزید پڑھیے


پیپلز پارٹی میں فارورڈ بلاک

جمعه 30  اگست 2019ء
عمر قاضی
جس دن پیپلز پارٹی نے سندھ میں تیسری بار حکومت بنائی تھی، اس دن سے پیپلز پارٹی میں فارورڈ بلاک کی باتیں ہونا شروع ہوئیں۔ وہ باتیں اب تک چل رہی ہے۔ سندھی زبان میں کہاوت ہے کہ ’’کنوؤں اور لوگوں کے منہ کون بند کرسکتا ہے؟‘‘ اب اس کہاوت میں کچھ ترمیم کی ضرورت ہے۔ کیوں کہ کنوؤں کے منہ تو کسی طور پر بند بھی ہوسکتے ہیں مگر لوگوں کے منہ بند کرنا ممکن نہیں۔ خاص طور اس صورت میں جب سوشل میڈیا ہر پل ایک نئے افواہ کا پرندہ اڑاتا ہے۔سوشل میڈیا کے بس میں ہو تو
مزید پڑھیے


سندھ اور ڈاکو راج

جمعه 23  اگست 2019ء
عمر قاضی
سندھی زبان کے مشہور لوک فنکار جگر جلال لاڑکانہ سے کشمور کی طرف جاتے ہوئے ڈرامائی طور پر اغوا ہو گئے۔وہ کسی پروگرام کے سلسلے میں وہاں جا رہے تھے جہاں عام طور پرلوگ نہیں جاتے۔ کیوں کہ وہاں دریائے سندھ کے کنارے پر موجود جنگل میں ڈاکو بستے ہیں۔ وہ ڈاکو عام طور پر وہاں کے مقامی لوگوں کو تنگ نہیں کرتے۔ وہ علاقے سے باہر کے لوگ اغوا کرکے لاتے ہیںیا وہاں پر اپنے شکار کے لیے جال بچھاتے ہیں۔ اس بار بھی ایسا ہی ہوا۔ جگر جلال نامی فنکار کو سندھ کے جنگلوں میں بسنے والے ڈاکوؤں
مزید پڑھیے




بارش کے بعد تھر کا منظر

جمعه 16  اگست 2019ء
عمر قاضی
صحافیوں اور کالم نگاروں کے بارے میں اکثر یہ سوچا جاتا ہے کہ ہم کو اچھی چیزیں نظر نہیں آتیں۔ وہ بری خبروں کے منتظر رہتے ہیں۔ یہ الزام سچ نہیں ہے۔ صحافی اور کالم نگار نہ صرف اس معاشرے کا حصہ ہیں بلکہ اس معاشرے کا حساس حصہ ہیں۔وہ صرف بری خبروں سے متاثر نہیں ہوتے ۔ ان کو اچھی خبریں شاید دوسروں سے زیادہ بہتر محسوس ہوتی ہیں۔ اگر یہ بات سچ نہ ہوتی تو آج کا کالم سندھ میں ہونے والی بارشوں کے بعد کراچی سے لیکر حیدرآباد تک اور ٹھٹہ سے لیکر بدین تک ناقص نظام
مزید پڑھیے


اتحاد اورانتشار

جمعه 09  اگست 2019ء
عمر قاضی
قائد اعظم محمد علی جناح نے جن نکات پر چلنے کی ہدایت کی تھی ان میں پہلا نکتہ تھا ’’اتحاد‘‘۔ اتحاد ایک ایسی نعمت ہے جس سے کبھی کسی قوم کو محروم نہیں ہونا چاہئیے۔ ایک قوم اور ایک ملک کو اتحاد کی ہر وقت ضرورت رہتی ہے مگر قومی سفر میں کچھ موڑ ایسے آتے ہیں جہاں اتحاد کی سب سے زیادہ ضرورت ہوتی ہے۔ جس وقت کسی قوم کی سلامتی خطرے میں ہو۔ جس وقت ملکی سرحدوں پر دشمن سازشی حملوں میں مصروف ہوں۔ جس وقت دشمن فوجیوں کے بوٹوں کی آہٹ بغیر کان لگائے بھی سنی
مزید پڑھیے


بول میری مچھلی کتنا پانی؟

جمعه 02  اگست 2019ء
عمر قاضی
کراچی اور حیدرآباد والے دو چار برس بارش کی دعا نہیں مانگیں گے۔ سندھ کے دونوں بڑے شہروں کے باسیوں کو بڑا شوق تھا کہ وہ بادلوں کو برستے دیکھیں۔ ان کو معلوم نہیں تھا کہ وہ جن شہروں میں بستے ہوئے بارش کی دعا مانگ رہے ہیں وہ شہر لینڈ مافیا اور بلڈر مافیا کی ملی بھگت سے ایسی صورت اختیار کر چکے ہیں کہ بارش کی رحمت ان کی لیے زحمت بن جائے گی۔ گزشتہ دو دن کے دوران ہونے والی بارش نے ان جدید اور پرکشش مکانات اور فلیٹوں کی اصلیت کھول کر رکھ دی جس میں
مزید پڑھیے


زرداری اور سرداری

جمعه 26 جولائی 2019ء
عمر قاضی
کیا وہ صرف ایک سیٹ کی بات تھی؟ اگر گھوٹکی کے ضمنی انتخاب کا معاملہ ایک سیٹ تک محدود ہوتا تو بلاول بھٹو زرداری اپنی ذاتی اور سیاسی زندگی کے دس روز سکھر ڈویژن کو نہ دیتا۔ یہ وہ دن تھے جب آصف زرداری کی گرفتاری عمل میں آئی تھی اور فریال تالپور کا گھر سب جیل بن گیا تھا۔ مگر بلاول کو پھر بھی ہدایت تھی کہ وہ اپنی چھوٹی بہن کے ساتھ سکھر میں ڈیرہ ڈال کر بیٹھ جائے۔ کیوں کہ وہاں سندھ کے سابق وزیر اعلی اور تحریک انصاف کے وفاقی وزیر علی محمد مہر کے انتقال
مزید پڑھیے


آگ میں پھول

جمعه 19 جولائی 2019ء
عمر قاضی
ہماری سیاست تو عرصہ دراز سے زوال کا شکار ہے اب ہمارا ادب بھی وادی زوال میں غروب ہوتا جا رہا ہے۔ پاک دھرتی کے پیارے شاعر حمایت علی کی وفات پر یہ خیال صرف اس دریدہ دل میں ہی نہیں بلکہ بہت ساری اداس آنکھوں کے آنگن میں اترا ہوگا۔ جن لوگوں نے حمایت علی شاعرکی کلام کو روبرو سنا ہوگا ان کو معلوم ہوگا کہ شاعری پڑھنے سے زیادہ سننے کی چیز ہے۔ اب تو ہمارے معاشرے میں وہ مشاعروں کی ثقافت بھی بجھتی جا رہی ہے جب شاعر اور پرستار تتلیوں تتلیوں اور جگنوئوں کی طرح دور
مزید پڑھیے